05:41 pm
گجرات میں 12 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق

گجرات میں 12 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق

05:41 pm


جلال پور جٹاں (آن لائن ) ضلع گجرات میں ابتدائی طور پر جن 12 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے ان میں اکثریت بیرون ملک سے آنے والے افراد کی ہے جبکہ ان افراد کی طرف سے میل جول کی وجہ سے بھی بعض افراد اس وائر س کا شکار ہوئے ہیں ۔ تفصیل کے مطابق بیرون ملک سے آنے والے افراد کی ایئر پورٹ پر متعلقہ حکام کی طرف سے سکیننگ نہ کئے جانے کی وجہ سے نہ صرف وائرس کو پاکستان میں منتقل کیا بلکہ دوسرے افراد کو بھی وائرس منتقل کرنے کا سبب بنے ۔ چالیس سالہ بشارت علی جو شادیوال کا رہائشی ہے سپین سے پاکستان پہنچا ۔
چار روز کے بعد اس سے رابطہ کیا گیا ۔ اس دوران یہ شخص اپنی فیملی سمیت دیگر افراد کے ساتھ رابطے میں رہا جس کی وجہ سے اس کا بیس سالہ بیٹا آمیش علی بھی وائرس کا شکار ہو چکا ہے ۔ تیسرے مریض ماجد تحسین کا تعلق گمٹی کھاریاں سے ہے جو سپین سے آ نے کے بعد پانچ دن تک گھومتا پھرتا رہا ۔ چوتھے مریض شعیب کا تعلق حسین کالونی گجرات سے ہے جو سپین سے آنے کے بعد تین دن تک میل ملا پ میں رہا ۔ پانچویں مریض حسن کا تعلق گلزار مدینہ گجرات سے ہے جو بیلجیئم سے پاکستان آیا تھا ۔ چھٹا مریض عبدالغفار جو لالہ موسیٰ کا رہائشی ہے دو دن لوگوں سے رابطے میں رہا جس کی وجہ سے اس کا ایک بھائی عبدالستار بھی وائرس کا شکار ہوا ۔ آٹھواں مریض کھاریاں کا محمد وارث ہے جو سعودی عرب سے پاکستان آیا ۔ نواں مریض وحید شادیوال کا رہائشی ہے جس نے بھی خود لیب سے رابطہ کیا اس دوران معاشرے میں گھومتا پھرتا رہا ۔ دسواں مریض غلام عباس اسمبلی کا رہائشی ہے جو ایک ہفتہ تک آزاد نقل و حرکت کرتا رہا ۔ گیارہواں مریض میاں عمران بولا جلال کرنانہ کا رہائشی ہے اور بارہواں مریض کامران شہزاد جو کھاریاں کینٹ کا رہائشی ہے اٹلی سے پاکستان آئے تھے ۔ اگر ان افراد کو متعلقہ ادارے ایئرپورٹ پر ہی روک کر ٹیسٹ کرلیتے تو صورتحال سنگین نہ ہوتی ۔ یہ افراد کتنے افراد میں وائرس منتقل کرنے کا سبب بنے ہیں کے متعلق کچھ نہیں کہا جاسکتا ۔