03:38 pm
آٹا ،چینی اسکینڈل:جہانگیر ترین کو زرعی ٹاسک فورس کی سربراہی سے ہٹادیا گیا

آٹا ،چینی اسکینڈل:جہانگیر ترین کو زرعی ٹاسک فورس کی سربراہی سے ہٹادیا گیا

03:38 pm

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)پی ٹی آئی رہنما شہاز گل نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی رہنام جہانگیرترین کو زرعی ٹاسک فورس کی سربراہی سے ہٹادیا۔اپنے ایک ٹوئٹ میں شہبازگل نے کہا کہ جہانگیرترین کوشوگراسکینڈل کی تحقیقاتی رپورٹ کےتناظرمیں ہٹایاگیا۔شہبازگل کے ٹوئٹ پر ردعمل دیتے ہوئے جہانگیر ترین نے کہا ہے کہ خبریں گردش کررہی ہیں کہ  مجھے زرعی ٹاسک فورس کی سربراہی سے ہٹادیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ مجھے کبھی بھی کسی ٹاسک فورس کا چیئرمین نہیں بنایا گیا۔ اس حوالے سے کسی کے پاس کو ئی نوٹیفکیشن ہے تو سامنے لاسکتا ہے۔پاکستان تحریک انصاف کے سینیئر رہنما جہانگیر خان ترین کو
آٹا و چینی بحران پر وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) کی رپورٹ سامنے آنے کے بعد چیئرمین ٹاسک فورس برائے زراعت کے عہدے سے ہٹا دیا گیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ چینی اور آٹا بحران کے بارے میں رپورٹ آنے کے بعد جہانگیر ترین کو عہدے سے ہٹایا گیا اور یہ بھی کہا گیا ہے کہ جہانگیر ترین کے خلاف مزید کارروائی چینی و آٹا بحران انکوائری کمیشن کی سفارشات کے بعد ہوگی۔اس حوالے سے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور سابق ترجمان برائے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز گل نے ٹوئٹ کی ہے جس میں انہوں نے بتایا ہے کہ جہانگیر ترین کو چیئرمین ٹاسک فورس برائے زراعت کے عہدے سے ہٹادیا گیا ہے۔دوسری جانب جہانگیر ترین نے یہ خبر سامنے آنے کے بعد ٹوئٹر پر جاری بیان میں کہا ہے کہ یہ خبر بالکل بھی درست نہیں۔انہوں نے کہا کہ 'میں کبھی کسی ٹاسک فورس کا چیئرمین رہا ہی نہیں، کوئی مجھے وہ نوٹیفکیشن دکھا سکتا ہے جس میں میری چیئرمین تعیناتی کا ذکر ہو؟ برائے مہربانی اپنی معلومات درست کرلیں'۔خیال رہے کہ 4 اپریل کو وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) کی جانب سے آٹا و چینی بحران کی تحقیقاتی رپورٹ منظر عام پر لائی گئی تھی۔تحقیقاتی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ ملک میں چینی بحران کاسب سے زیادہ فائدہ حکمران جماعت کے اہم رہنما جہانگیر ترین نے اٹھایا، دوسرے نمبر پر وفاقی وزیر خسرو بختیار کے بھائی اور تیسرے نمبر پر حکمران اتحاد میں شامل مونس الٰہی کی کمپنیوں نے فائدہ اٹھایا۔تحقیقاتی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی نااہلی آٹا بحران کی اہم وجہ رہی۔