05:08 pm
راشن جمع کرکے دوکان پر بیچنے والے کی ویڈیو وائرل

راشن جمع کرکے دوکان پر بیچنے والے کی ویڈیو وائرل

05:08 pm

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک)  کرونا وائرس کے نتیجے میں پیدا ہونے والی بے چینی اور نفسا نفسی کےعالم میں ایک  اچھی بات یہ ہے کہ صاحب ثروت افراد میں ابھی اتنی انسانیت باقی ہے کہ وہ غریب اور مستحق افراد کو ڈھونڈتے اور انھیںراشن پہنچارہے ہیں تاکہ دیہاڑی دار اور مزدور طبقہ کوئی کام کاج نہ ملنے کی وجہ سے کہیں فاقے کاٹنے پر ہی مجبور نہ ہوجائے ۔ لیکن معاشرے کے چند بے ضمیر اور پیشہ ور لوگ ایسے بھی ہیں جوعادی طور پر بڑی ڈھٹائی کے ساتھ امداد اور
عطیات کےلئے ہاتھ پھیلاتے ہیں اور پھر سامان کی ایک بڑی مقدار جمع کرکے اسے آگے فروخت کرناشروع ہو گئے ہیں۔ شہر قائد کراچی میں ایک دوکاندار نے اپنے پاس چار من سامان فروخت کرنے آئے ایسے ہی ایک شخص کی ویڈیوبنا لی ہے۔ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ دوکاندار کسی خفیہ موبائل کیمرے کو آن رکھ کر ساری صورتحال خود ہی بیان کر رہا ہے تاکہ دیکھنے والے سمجھ جائیں۔ دوکاندار اس شخص سے کہتا ہے کہ آپ کو یہ بھگ چار من سامان امداد میں ملا ہے۔ یعنی یہ تقریباً 200کلو راشن امداد میں ملا ہے اور آپ کو اس فروخت کرکے صابن ، شیمپو اور دوسرے لگژری آئٹم لینے آئے ہیں۔لیکن ایسا ہے کہ ایک گھنٹے کے بعد دوبارہ آئیے گا تب تک میرا بھائی دوکان پر آجائے گا وہ بتائے گا کہ سامان کا تبادلہ کرنا ہے یا نہیں۔ ظاہر ہے دوکاندار کا مقصد صرف ویڈیو بنانا ہی تھا ۔ اس لئے اس نے اس گاہک کو ٹال دیا۔ لیکن افسوسناک بات یہ ہے کہ چند پیشہ ور افراد کی ایسی حرکتوں کی وجہ سے مستحق اور حقیقی حق دار لوگوں پر سے بھی مخیر حضرات کا اعتبار اٹھ جاتا ہے۔

تازہ ترین خبریں