11:29 am
بینکوں سے قرض لینے والوں کیلئے بڑی خوشخبری

بینکوں سے قرض لینے والوں کیلئے بڑی خوشخبری

11:29 am

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)اسلام آباد ہائی کورٹ نے نجی بینکوں کو اقساط کی وصولی کے لیے لوگوں کو ہراساں کرنے ‏سے روک دیا ،عدالت عالیہ نے نجی بینکوں کو قرضوں کی اقساط کی وصولی سے روکنے کی ‏درخواست سماعت کے لیے منظور ،وفاق سمیت فریقین کو نوٹسز جاری ،عدالت نے سترہ ‏اپریل تک جواب طلب کر لیا ۔نجی بینکوں کو قرضوں کی
اقساط کی وصولی سے روکنے کی ‏درخواست پر سماعت چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے کی ، ‏درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ نیشنل رورل سپورٹ پروگرام کے تحت 75 ہزار ‏روپے کا قرض لیا، نجی کمپنی میں موٹرسائیکل چلا گزر بسر کر رہا ہوں،کرونا وائرس کے لاک ‏ڈاون کے باعث زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی،بینک کی جانب سے قرض کی قسط مانگی جا رہی ‏ہے،میں نے سٹیٹ بینک اور وزیراعظم کو بھی درخواست دی لیکن شنوائی نہیں ہوئی، ‏چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ موجودہ حالات میں لاک ڈاون کے باعث ‏کاروبار بند ہیں، متاثرین کو ریلیف فراہم کرنے کے لیے کیا اقدامات کیے گئے ہیں، یہ ‏ایک شہری کا مسئلہ نہیں یہ اجتماعی معاملہ ہے،ایسے حالات میں سرکار کی ذمہ داری ‏ہے وہ شہریوں کو ریلیف فراہم کرے،سیکرٹری وزارت خزانہ کوئی نمائندہ مقرر کرے جو ‏عدالت کو رپورٹ پیش کرے، اور آئندہ سماعت تک قرضوں کی اقساط وصول کرنے کے ‏لیے شہریوں کو ہراساں نہ کیا ‏جائے،، عدالت نے درخواست باقاعدہ سماعت کے لیے ‏منظور کرتے ہوئے وفاقی حکومت، سیکرٹری وزارت خزانہ، چییرمین این ڈی ایم اے ‏،گورنرسٹیٹ بینک، نیشنل رورل سپورٹ پروگرام کے حکام کو نوٹس جاری کر دیا ، عدالت ‏نے فریقین سے 17 اپریل تک جواب طلب کر تے ہوئے پاکستان کے متحرک نوجوان ‏وکیل عمر گیلانی کو عدالتی معاون مقرر کردیا ہے کیس کیپر مزید سماعت 17 اپریل تک ملتوی کردی گئی۔