03:01 pm
حکومت نے احساس ایمرجنسی کیش پروگرام کا طریقہ کار بغیر کسی پیشگی اعلان کے تبدیل کردیا

حکومت نے احساس ایمرجنسی کیش پروگرام کا طریقہ کار بغیر کسی پیشگی اعلان کے تبدیل کردیا

03:01 pm


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) حکومت کی جانب سے کورونا وائرس لاک ڈاؤن سے متاثرہ ایک کروڑ 20 لاکھ افراد کو فی خاندان 12 ہزار روپے کی امدادی رقم دینے کا اعلان کیا گیا اور بدھ 8 اپریل سے شروع ہوگئی تھی. تاہم رقوم کی تقسیم وزیر اعظم کے بار بار اعلان کردہ طریقہ کار کے تحت موبائل فون اکاؤنٹس میں منتقل کرنے کی بجائے ملک بھر میں سرکاری عمارات میں مراکزقائم کرکے تقسیم کی جارہی ہیں.
ان مراکزمیں شہریوں کی بڑی تعداد اور انہیں کنٹرول میں رکھنے کے لیے پولیس اور قانون نافذکرنے والے اداروں کے اہلکاروں کی موجودگی سے وائرس کے پھیلاؤ کا خطرمزید بڑھ جاتا ہے ‘اس کے
علاوہ مجبور شہریوں کی عزت نفس بھی مجروح ہورہی ہے . بہت سارے شہری حکومت ان مراکزتک اپنی عزت نفس کی خاطر گئے ہی نہیں ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے تو کہا تھا کہ انہیں موبائل فون اکاؤنٹس میں رقوم منتقل کردی جائیں گی جبکہ اب حکومت ایک پھر یو ٹرن لیتے ہوئے اپنی اعلان کردہ طریقہ کار میں ترمیم کرتے ہوئے شہریوں کو رقوم کی وصولی کے لیے احساس پروگرام کے تحت قائم کردہ مراکزمیں بلایا جارہا ہے. لاہور کے ایک مرکزسے رقم وصول کرنے والی ایک خاتون نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ انہیں صبح نو بجے بلایا گیا تھا اور تین بجے کے بعد ان کی باری آئی انہوں نے بتایا کہ میڈیا کی رسائی کے ایریا تک تو سب ٹھیک نظر ٓاتا ہے مگر خاص حد کے بعد صرف انہیں ہی جانے کی اجازت دی جاتی ہے جنہیں رقوم کی وصولی کے لیے بلایا گیا ہو انہوں نے بتایا کہ وہاں نہ صفائی کا خیال ہے عملے میں کچھ افراد نے ڈسپوزیبل دستانے پہن رکھے ہیں مگر شاید وہ صبح سے وہی دستانے پہن کر کھڑا تھا اسی طرح بائیو میٹرک کے لیے رکھی مشینوں کی بھی صفائی کا کوئی انتظام نہیں انہوں نے کہا کہ یہ درست کے کہ کمروں کے اندر ایک وقت میں سے دو افراد کوہی جانے کی اجازت ہے مگر انتظار گاہ میں بیٹھے لوگوں میں سماجی دوری کے اصول کا کوئی انتظام نہیں اور نہ ہی پینے کے پانی کے لیے ڈسپوزیبل گلاس ہیں . انہوں نے بتایا کہ ہم تو یہ تصور کرکے گئے تھے کہ ہم30/40منٹ میں واپس آجائیں گے اس لیے اپنا گلاس یا پانی کی بوتل ساتھ نہیں لے گئے مگر حکومت کو تو علم ہے انہوں نے پیغام یہ چند الفاظ کا اضافہ کیوں نہیں کیا کہ آپ اپنے لیے پینے کے پانی یا گلاس کا بندوبست کرکے لائیں. یاد رہے کہ جب یہ پروگرام شروع کیا گیا تھا توکورونا ایمرجنسی احساس کیش فنڈ کے لیے ایک ایس ایم ایس سروس شروع کی گئی تھی جس کے تحت مستحق افراد کو 4 ماہ کے لیے 12 ہزار روپے دینے کا اعلان کیا گیا تھا‘ احساس پروگرام کی سربراہ ثانیہ نشتر اور وزیر اعظم بار بار یہ کہتے رہے کہ ایس ایم ایس کے ذریعے بجھوائے گئے شناختی کارڈ نمبر سے نادرا کے ڈیٹا بیس سے چیک کیا جائے گا کہ آیا یہ شخص امداد کا اہل ہے بھی یا نہیںاس مقصد کے لیے نادرا میں ڈبل چیک سسٹم بنایا گیا ہے. اس کے لیے وفاقی حکومت اور پنجاب حکومت کی جانب سے بہت بڑی تشہیری مہم بھی چلائی گئی کہ نادرا میں اس شخص کے متعلق یہ چیک کیا جائے گا کہ اس کے اکاؤنٹ میں کوئی بڑی رقم تو موجود نہیں یا پھر اس کے نام کوئی جائیداد تو نہیں اس کے بعد اگر وہ شخص اہل ہوگا تو اگلے سسٹم میں انٹری ہوگی جہاں کوائف کی تصدیق کے بعد اس شخص کو پیغام چلا جائے گا کہ آپ فلاں تاریخ کو بینک سے جا کر پیسے لے سکتے ہیں. تاہم اب حکومت نے یوٹرن لیتے ہوئے اپنے ہی اعلان کروہ طریقہ کار کو بدل دیا جس ہے جس میں ایک امدادی رقم کی سلپ پر درخواست گزار کی تصویر شائع کرنا جن میں سے کئی سلپس کی حکومت اور وزیر اعظم کے آفیشل ٹوئٹر اور دیگر سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر تشہیر کی گئی جبکہ وزیراعظم بار بار کہہ چکے تھے کہ حاجت مندوں کی عزت نفس کا خیال رکھتے ہوئے تشہیرسے گریزکیا جائے گا اور امدادی رقوم ان کے گھروں تک پہنچائی جائیں گی. مبصرین کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے طریقہ کار تبدیل کرنے سے نہ صرف حکمران جماعت کے اراکین پارلیمان ووٹروں پر اثر انداز ہونگے بلکہ ماضی میں پیپلزپارٹی کے بے نظیر انکم پروگرام کی طرح اس میں بھی کرپشن کا عنصر شامل ہونے کا خدشہ ہے . بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام میں بھی بائیو میٹرک اور نادرا کی اس میں شمولیت کے باوجود اربوں روپے کی کرپشن ہوئی طریقہ کار میں اچانک غیر اعلانیہ تبدیلی سے کرپشن کے امکانات میں اضافہ ہوگیا ہے ادھر مختلف اداروں کی جانب سے امدادی رقوم میں کٹوتی کی خبریں بھی منظر عام پر آچکی ہیں . ثانیہ نشتر نے غیرملکی نشریاتی ادارے کو بتایا تھاکہ اس پروگرام میں تمام رقوم بائیو میٹرک شناخت کے ذریعے ہی دی جائیں گی مگر پاکستان میں وہ روزانہ کی بنیاد پر جاری ہونے والے اپنے بیانات اور تقاریرمیں امدادی رقوم موبائل فون اکاؤنٹس کے ذریعے دینے کا ہی راگ الاپتی رہیں ‘پاکستان میں تقریبا تمام موبائل فون نیٹ ورک مائیکروبنکنگ چلارہے ہیں اور ہر موبائل فون نمبر ایک اکاؤنٹ نمبر بھی ہے جس پر پورے ملک میں کہیں سے بھی رقم ارسال کی جاسکتی جو موصول کندہ اپناشناختی کارڈدکھا کر اور بائیو میٹرک کرواکر موصول کرسکتا ہے . ملک کے ہر گلی محلے میں ایسی کئی شاپس ہیں جو یہ سہولت فراہم کرتی ہیں یہ یوٹیلٹی بلوں کی وصولی سے لے کر رقم بجھوانے یا وصول کرنے کا کام کرتی ہیں اسی طرح کی سہولت اب لوکل بنکوں میں بھی دستیاب ہے جہاں رقم وصول کرنے والا اپنا اصل شناختی کارڈ دکھا کر اور اس کی کاپی فراہم کرکے اپنی رقم وصول کرسکتا ہے مگر حکومت نے پہلے سے ملک کے ہر گلی محلے میں موجود نیٹ ورک کو استعمال کرنے کی بجائے احساس پروگرام کے خصوصی مراکزقائم کرکے ان پر کروڑوں روپے خرچ کررہی ہے یہی رقم مستحقین کے کام آسکتی تھی. دوسری جانب حکومت کی ترجمان فردوس عاشق اعوان نے کہا تھا کہ ایمرجنسی کیش پروگرام کے تحت 144 ارب روپے ایک کروڑ 20 لاکھ خاندانوں میں تقسیم ہوں گے‘ان کا کہنا تھا کہ عوام کو ریلیف دینے کے اس تاریخی اقدام کے ثمرات چاروں صوبوں، گلگت بلتستان اور پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کے مستحق گھرانوں تک پہنچیں گے فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ امداد کی فراہمی کے لیے جانچ پڑتال کا موثر طریقہ کار اپنایا گیا ہے تاکہ شفافیت کے عمل پر کوئی انگلی نہ اٹھا سکے. وزیراعظم عمران خان نے کہاتھا کہ ہمارے پاس ایک کروڑ 20 لاکھ خاندان رجسٹرڈ ہیں ہم احساس پروگرام کے ڈیٹا کے ذریعے لوگوں کو کیش ٹرانسفر کریں گے ان کا کہنا تھا کہ امریکا اور یورپ کے تمام مزدور رجسٹرڈ ہیں لیکن پاکستان میں 80 فی صد مزدور رجسٹرڈ نہیں ہیں ہمیں اپنے مزدور طبقے تک پہنچنا ہے . تاہم تحریک انصاف کی حکومت نے کسی پیشگی اعلان کے اچانک پروگرام کا پورا طریقہ کار ہی بدل دیا اور کئی سو کروڑ کی تشہیری مہم کو ایک جھٹکے میں کوڑے دان میں پھینکتے ہوئے احساس پروگرام مراکزقائم کرکے رقوم تقیسم کرنے کا طریقہ کار اختیارکیا جس کے لیے کوئی تشہیری مہم نہیں چلائی گئی .

تازہ ترین خبریں

آرمی چیف کی مدتِ ملازمت میں توسیع۔۔؟ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کھل کر مخالفت کر دی

آرمی چیف کی مدتِ ملازمت میں توسیع۔۔؟ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کھل کر مخالفت کر دی

کورونا وائرس کم عمر بچوں کیلئے مہلک ہو گیا،آئندہ دو سے تین ہفتے خطرناک قرار۔۔والدین کیلئے پریشان کن خبر آگئی

کورونا وائرس کم عمر بچوں کیلئے مہلک ہو گیا،آئندہ دو سے تین ہفتے خطرناک قرار۔۔والدین کیلئے پریشان کن خبر آگئی

بجلی مزید مہنگی ، نیپرا نے پاکستانیوں کر بجلیاں گرادیں، فی یونٹ کتنا اضافہ ہونیوالا ہے؟

بجلی مزید مہنگی ، نیپرا نے پاکستانیوں کر بجلیاں گرادیں، فی یونٹ کتنا اضافہ ہونیوالا ہے؟

ایک بار پھر برفباری کا آغاز،مری جانے کے خواہشمندوں کیلئے ٹریفک پلان جاری کر دیا گیا

ایک بار پھر برفباری کا آغاز،مری جانے کے خواہشمندوں کیلئے ٹریفک پلان جاری کر دیا گیا

کورونا وائرس کے بڑھتے کیسز نے حکومت کو یو ٹرن لینے پر مجبور کر دیا، تعلیمی ادارے 10روز کیلئے بند کر دیئے گئے

کورونا وائرس کے بڑھتے کیسز نے حکومت کو یو ٹرن لینے پر مجبور کر دیا، تعلیمی ادارے 10روز کیلئے بند کر دیئے گئے

کورونا وائرس خطرناک ہو گیا، پاکستان میں اموات میں اچانک کتنا اضافہ ہو گیا؟24گھنٹوں میں تباہی مچ گئی

کورونا وائرس خطرناک ہو گیا، پاکستان میں اموات میں اچانک کتنا اضافہ ہو گیا؟24گھنٹوں میں تباہی مچ گئی

مسلم لیگ (ن)میں وزارتِ عظمیٰ کیلئے کونسے چار نام سامنے آگئے ؟ فہرست دیکھ کر نواز شریف کو غصہ آگیا، تہلکہ خیز دعویٰ

مسلم لیگ (ن)میں وزارتِ عظمیٰ کیلئے کونسے چار نام سامنے آگئے ؟ فہرست دیکھ کر نواز شریف کو غصہ آگیا، تہلکہ خیز دعویٰ

کورونا وائرس بے قابوہو گیا، این سی او سی نے 48گھنٹوں میںلاک ڈائون لگانے کی ہدایت کر دی

کورونا وائرس بے قابوہو گیا، این سی او سی نے 48گھنٹوں میںلاک ڈائون لگانے کی ہدایت کر دی

مداحوں پر بجلیاں گر گئیں، نامور پاکستانی اداکارہ عتیقہ اوڈھو سے متعلق اچانک افسوسناک خبر آگئی

مداحوں پر بجلیاں گر گئیں، نامور پاکستانی اداکارہ عتیقہ اوڈھو سے متعلق اچانک افسوسناک خبر آگئی

سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ۔۔؟ تنخواہ دار طبقے کیلئے بڑی خبر آگئی

سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ۔۔؟ تنخواہ دار طبقے کیلئے بڑی خبر آگئی

مری اور گلیات جانے کاارادہ ترک کر دیں، تین دن مسلسل شدید برفباری کی پیشنگوئی،ایڈوائزری جاری کر دی گئی

مری اور گلیات جانے کاارادہ ترک کر دیں، تین دن مسلسل شدید برفباری کی پیشنگوئی،ایڈوائزری جاری کر دی گئی

سکولوں میں چھٹیوں کا فیصلہ۔۔؟ صوبائی وزیر تعلیم نے اہم بیان جاری کر دیا

سکولوں میں چھٹیوں کا فیصلہ۔۔؟ صوبائی وزیر تعلیم نے اہم بیان جاری کر دیا

پیٹرول کی قیمتوں میں اضافہ واپس۔۔؟ عوامی خواہشات کی ترجمانی کر دی گئی

پیٹرول کی قیمتوں میں اضافہ واپس۔۔؟ عوامی خواہشات کی ترجمانی کر دی گئی

اپوزیشن جتنے مرضی مارچ کر لے، ان ہاؤس تبدیلی آئیگی نہ حکومت ختم ہوگی:شاہ محمود قریشی

اپوزیشن جتنے مرضی مارچ کر لے، ان ہاؤس تبدیلی آئیگی نہ حکومت ختم ہوگی:شاہ محمود قریشی