12:02 pm
نورانی صورت پر نہ جائیں ، یہ باریش پاکستانی کون ہے ، جان کر پاکستانیوں کے غم و غصے کی انتہا نہ رہے گی

نورانی صورت پر نہ جائیں ، یہ باریش پاکستانی کون ہے ، جان کر پاکستانیوں کے غم و غصے کی انتہا نہ رہے گی

12:02 pm


کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک )نورانی صورت پر نہ جائیں ، یہ باریش پاکستانی کون ہے ، جان کر پاکستانیوں کے غم و غصے کی انتہا نہ رہے گی ۔۔۔ کراچی میں ’را‘ کے ایجنٹوں کو رقوم فراہم کرنے والا منیجر گرفتار کر لیا گیا۔تفصیلات کے مطابق وفاقی تحقیقاتی ادارے کے انسداد دہشت گردی ونگ نے کراچی کے علاقے صدر میں کارروائی کے دوران حوالہ ہنڈی کے بین الاقوامی خفیہ نیٹ ورک سے جڑے ملزم یاسین کو گرفتار کر لیا ہے۔ملزم کراچی میں مبینہ طور پر بھارتی خفیہ ایجنسی را کے ایجنٹوں کو بھجوائی گئی رقوم
تقسیم کرتا رہا ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ ملزم یاسین کی گرفتاری پہلے سے پکڑے گئے ملزمان کی نشاندہی پر کی گئی۔ایف آئی اے کے مطابق حوالہ ہنڈی کے خفیہ نیٹ ورک کے ذریعے ملک دشمن عناصر کو رقوم فراہم کی جا رہی تھی۔گرفتار ملزم یاسین منی ایکسچینج کمپنی کے منیجر ہے۔جس کے قبضہ سے لیپ ٹاپ اور موبائل فون بھی برآمد ہوا ہے۔ حوالہ ہنڈی کے بین الاقوامی خفیہ نیٹ ورک سے وابستہ دیگر ملزمان کی تلاش میں بھی چھاپے مارے جارہے ہیں ہیں۔ ملک کے تمام ایئرپورٹس کو ملزمان کی تفصیلات فراہم کر دی گئی ہیں۔واضح رہے کہ 15جولائی کو کراچی میں ایف آئی اے کی بڑی کارروائی سامنے آئی تھی۔ ایف آئی نے بھارتی ایجنسی راء کا سلیپر سیل چلانے والا ملزم گرفتار کیا تھا۔ بتایا گیا کہ گرفتار ملزم ظفر کے قبصے سے دہشتگردی کی منصوبہ بندی کے حوالے سے دستاویزات ملیں، گرفتاری کے بعد ملزم کو عدالت میں پیش کر دیا گیا۔ ملزم کو تعلق ایم کیو ایم لندن ہے بھی ہے جبکہ اسے کراچی کے علاقے عزیزآباد سے گرفتار کیا گیا ۔ ملزم ظفر سے ملنی والی دستاویزات کے بعد ایف آئی نے ایک اور کارروائی کی ہے جس میں ایک منی ایکسچیج کمپنی پر چھاپہ مار کر کمپنی کے مینیجر اور ڈائریکٹر کو گرفتار کیا گیا تھا۔ خیال رہے کہ یہ پہلی مرتبہ نہیں ہے کہ بھارتی خفیہ ایجنسی راء کے ایجنٹس کو پاکستان سے گرفتار کیا گیا ہو۔ کچھ عرصہ قبل بھی اسی طرح کی ایک کارروائی میں کراچی سے را کے 2 ایجنٹس گرفتار کیے گئے تھے۔ بتایا گیا تھا کہ گرفتار ایجنٹ ماجد اور عادل انصاری سرکاری ملازم تھے ۔ ملزمان کو کراچی میں دہشتگردی کا بڑا ٹاسک ملنا تھا۔

تازہ ترین خبریں