01:37 pm
عثمان بزدارکوہٹائےجانے کی افواہیں ،کون کون سے صحافی پیش  پیش تھے

عثمان بزدارکوہٹائےجانے کی افواہیں ،کون کون سے صحافی پیش پیش تھے

01:37 pm

اسلام آباد(ویب ڈیسک )سینئر تجزیہ کار ہارون الرشید نے کہا ہے کہ کل پروگرام میں کہا تھا کہ عثمان بزدار کہیں نہیں جارہے کیونکہ مجھے معلوم ہوگیا تھا کہ اس کی ساری پلاننگ ن لیگ نے کی ہے ،ڈس انفارمیشن پلانٹ کی جاتی ہے اور بعض لوگ چکمے میں آجاتے ہیں،مجھے یہ بات معلوم تھی کہ تاجروں کو بھی متحرک ن لیگ نے کیا ہےہارون رشید کا مزید کہنا تھا کہ تاجروں نے کشمیر روڈ بند کی اور ہارن بجائے ،ہارن سے حکومت نہیں جاگتی،تاجروں کو ٹیکس دینا ہوگا۔ہارون رشید نے کہا چودھر ی تو عثمان بزدار کو ہٹانے کے حق میں نہیں ہیں،عمران خان بھی عثمان بزدار کے حق میں ہیں،عثمان بزدار کے جانے کی خبریں کس کس نے پھیلائیں؟عثمان بزدار کے جانے کی خبریں
پھیلانے میں پیش پیش صحافی جنگ، جیو سے تعلق رکھنے والے سہیل وڑائچ تھے جو ایک نہیں کئی پروگرام میں تواتر سے دعویٰ کررہے ہیں کہ عثمان بزدار کی چھٹی ہونیوالی ہے۔حامد میر بھی عثمان بزدار کے جانے کی خبریں پھیلانے والوں میں شامل تھے۔ کچھ دن پہلے حامد میر نے عارف نطامی کے پروگرام میں دعوی کیا تھا کہ وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار کا متبادل تیار ہوگیا ہے۔جس روز اشارہ ہوا اس دن چوہدری برادران سپورٹ کریں گے اور ہوسکتا ہے کہ نون لیگ اور پیپلزپارٹی والے بھی سپورٹ کریں۔محمد مالک بھی اپنے متعدد پروگرامز میں یہ دعویٰ کرچکے ہیں کہ عثمان بزدار کا جانا ٹھہر گیا ہے اور ان سے استعفیٰ لینے کی تیاری ہورہی ہے۔ایک اور صحافی وجاہت کاظمی نے بھی کچھ دن پہلے دعویٰ کیا کہ عثمان بزدار کو ہٹانے کی تیاری ہورہی ہے اور انکی جگہ جنرل افضل کو وزیراعلیٰ پنجاب بنایا جارہا ہے۔اسکے علاوہ جی این این کے صحافی عارف حمید بھٹی، عمران ریاض بھی ایسی ہی خبریں پھیلاتے لیکن ساتھ ہی اگلی خبر میں اس سے متضاد بات کرتے لیکن ان خبروں میں ہوا دینے میں پیش پیش رہتے۔خیال رہے کہ عاصمہ شیرازی نے عثمان بزدار کی تبدیلی سے متعلق اگرچہ کھل کر دعویٰ نہیں کیا لیکن انہوں نے عثمان بزدار کو ہٹائے جانے کی افواہوں پر ڈھیروں پروگرام کر ڈالے۔۔