09:31 am
نااہل حکومت نے دوسال میں پاکستان کوکہاںسے کہاں پہنچادیا،ہماراہدف عمران خان نہیں بلکہ

نااہل حکومت نے دوسال میں پاکستان کوکہاںسے کہاں پہنچادیا،ہماراہدف عمران خان نہیں بلکہ

09:31 am

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )سابق وزیراعظم میاں نواز شریف نے اے پی سی سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کانفرنس اہم موقع پرمنعقد ہورہی ہے۔دعا ہے اللہ آصف زرداری کوصحت اوربرکت عطافرمائے۔سابق وزیراعظم میاں نواز شریف نے کہاکہ ہرطرح کی مصلحت چھوڑکراپنی تاریخ پرنظرڈالیں اوربےباک فیصلہ کریں۔بلاول سے پرسوں بات کرکے خوشی ہوئی۔فیصلہ کن موڑ پراے پی سی منعقد ہورہی ہے۔ملک کا نظام وہ چلائیں جن کوعوامی کی اکثریت ووٹ دے۔فیصلے آج نہیں کریں گے توکب کریں گے۔سابق وزیراعظم کاکہناتھاکہ رسمی اورروایتی طریقے سے ہٹ کراے پی سی کوبامقصد بنانا ہوگا۔میں وطن سےدورہوتےہوئےجانتا ہوں کہ وطن عزیز کن مشکلات سے دوچار ہے۔میں اسے فیصلہ کن موڑ سمجھتا ہوں۔ایک جمہوری ریاست بنانے کیلئے ضروری ہے کہ ہم مصلحت چھوڑ کر فیصلے کریں۔پاکستان کوجمہوری نظام سے 
مسلسل محروم رکھا گیا ہے۔جمہوریت کی روح عوام کی رائے ہوتی ہے۔جمہوریت پرضرب لگے،ووٹ کی عزت پامال ہوتوسارا جمہوری عمل بےمعنی ہوجاتا ہے۔آج نہیں تو کب کریں گے،مولانا کی سوچ سے متفق ہوں۔پاکستان کو جمہوری نظام سے مسلسل محروم رکھا گیا۔ملک کا نظام وہ لوگ چلائیں جنھیں لوگ ووٹ کے ذریعے حق دیں۔سابق وزیراعظم کاکہناتھاکہ ہماراہدف عمران خان نہیں بلکہ ان کولانے والوں کے خلاف ہے۔دو بار آئین توڑنے والوں کوبرییت کا سرٹیفکیٹ عدالت نے دیا۔ڈکٹیٹرزکوآئین سے کھلواڑکرنے کا اختیاردیا گیا۔جب ڈکٹیٹرکوپہلی بارکٹہرے میں لایاگیا توسب نے دیکھا کیا ہوا۔73 سال کی تاریخ میں وزرائے اعظم کواوسطا دوسال سے زیادہ کا عرصہ شاید ہی ملا ہو۔دوبارآئین توڑنے والے کوایک دن توکیا ایک گھنٹا بھی جیل میں نہیں ڈالا گیا۔جب ووٹ کی عزت کو پامال کیا جاتا ہے توجمہوری عمل بے معنی ہوجاتا ہےانتخابی عمل سے قبل یہ طے کرلیا جاتا ہے کہ کس کو ہرانا کس کو جتانا ہے۔پاکستان کو ایسے تجربات کی لیبارٹری بناکر رکھ دیا گیا ہے۔کس کس طرح سے عوام کو دھوکا دیا جاتا ہے ،مینڈیٹ چوری کیا جاتا ہے۔ان سیاستدانوں کودیکھیں جوعوام کے ووٹ سے وزیراعظم منتخب ہوئے۔اگر کوئی حکومت بن بھی گئی تو اسے پہلے بے اثر پھر فارغ کردیا جاتا ہے۔آئین پرعمل کرنے والے ابھی تک کٹہروں اورجیلوں میں ہیں۔ایک ڈکٹیٹرپرمقدمہ چلاخصوصی عدالت بنی،کارروائی ہوئی،سزا سنائی گئی لیکن کیاہوا؟کیا ڈکٹیٹرکوسزا ملی؟ڈکٹیٹرکوبڑے سے بڑے جرم پر کوئی اسے چھوبھی نہیں سکتا۔سابق چیف الیکشن کمشنر،سابق سیکرٹری الیکشن کمشنرکوجواب دینا ہوگا۔دھاندلی کے ذمےدار افرادکوحساب دینا ہوگا۔نااہل حکومت نے دوسال میں پاکستان کوکہاں پہنچادیا ہے۔پاکستان کی معیشت بالکل تباہ ہوچکی ہے۔2018انتخابات،دھاندلی کیوں اورکس کے کہنے پرکس کےلیے کی گئی۔معاملہ ریاست کے اندرریاست سے اوپرجاچکا ہے،یہ ہمارے مسائل کی جڑ ہے۔آج قوم جن حالات سےدوچارہے اسکی وجہ وہ لوگ ہیں جنہوں نےنااہل لوگوں کوحکومت پرمسلط کیا۔عوام کےحقوق پرڈاکا ڈالنا سنگین جرم ہے۔بچےبچےکی زبان پرہےکہ ایک باربھی منتخب وزیراعظم کو مدت پوری نہیں کرنےدی۔عوامی حمایت سےجمہوری حکومت بن جائے تواس کے ہاتھ پاؤں باندھ کراسکی کردارکشی کی جاتی ہے۔یوسف رضا گیلانی نے ایک مرتبہ کہا تھا ریاست کے اندرریاست ہے جس کوبرداشت نہیں کیا جاسکتا ہے۔متوازی حکومت قائم کی جاتی ہے۔موجودہ حکومت نے کوئی ایک بڑا ترقیاتی منصوبہ شروع نہیں کیا۔خارجہ پالیسی بنانے کا اختیارعوامی نمائندوں کے پاس ہونا چاہیے۔قرضوں میں اضافہ کردیا گیا،ماضی کے تمام رکارڈ ٹوٹ چکے ہیں۔عالمی برادری میں ہماری ساکھ ختم ہو کر رہ گئی ہے۔1کروڑ نوکریوں کا جھانسا دینے والوں نے لوگوں کا روزگار چھین لیا۔کٹھ پتلی حکومت دیکھ کربھارت نے کشمیرکواپنا حصہ بنالیا۔شاہ محمود قریشی نے کن منصوبوں کےتحت بیان دیا جسکی وجہ سے سعودی عرب کی دل آزاری ہوئی۔ہمارے دیرینہ دوست ممالک کیوں دورہوگئے۔سی پیک کے ساتھ پشاورکی بی آرٹی جیسا سلوک کیا جارہا ہے۔جونیب سے بچتا ہے اس کوایف آئی اے کے حوالے کیا جاتا ہے۔جوایف آئی اے سے بچ جاتا ہے اس کواینٹی نارکوٹکس کے حوالےکیا جاتا ہے۔مذموم سازش کےذریعےبلوچستان کی صوبائی حکومت گرائی گئی۔علیمہ خان خیراتی اداروں کی فنڈریزنگ کرتی ہیں کیا نیب انکے بیرون ملک اثاثوں کی تحقیقات کریگا۔ملک کا حکمران این آر اواورکرپشن مافیا کا ڈھنڈورا پیٹتا ہے۔عمران خان نے اربوں روپے کی جائیداد رکھتے ہوئے،دولاکھ 83ہزارروپےٹیکس دیا۔کیا بنی گالا میں زمین کی خرید پرکوئی جے آئی ٹی نہیں بنے گی۔فارن فنڈنگ کیس میں گواہی پی ٹی آئی رہنما دیتے ہیں کیا الیکشن کمیشن کوئی فیصلہ نہیں کریگا۔آج فیصلہ کرنا ہوگا کہ ہم ایک ہیں،قومی مفاد کی خاطرتقسیم کرنےسے انکارکرتے ہیں،کیا نیب اسے گرفتار نہیں کرے گا۔چینی کی قیمت بڑھانے میں عمران خان کی ذات ملوث ہے۔کیا نیب علیمہ خان کے اثاثوں کی چھان بین کرے گا۔میڈیا کی زبان بندی کہاں کا انصاف ہے۔

تازہ ترین خبریں