06:54 am
سکولز کی بند کرنے کی تیاریاں۔۔۔ حکومت آج کیا کرنےوالی ہے؟بچوں اور والدین کیلئے شاندار خبر

سکولز کی بند کرنے کی تیاریاں۔۔۔ حکومت آج کیا کرنےوالی ہے؟بچوں اور والدین کیلئے شاندار خبر

06:54 am

کراچی(نیوز ڈیسک) پاکستان میں کرونا وائرس کی دوسری لہر اور کیسز میں اضافے کے بعد کراچی سمیت سندھ کے تعلیمی اداروں کو کھلے رکھنے یا بند کرنے کا فیصلہ آج محکمہ تعلیم سندھ کے اجلاس میں ہوگا۔سندھ اسٹیرنگ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی کریں گے۔ اہم سیشن میں نجی اسکولوں کے نمائندے بھی شریک ہونگے۔ اجلاس میں سندھ میں تعلیمی ادارے کھلے یا بند رکھنے سے متعلق تجاویز پر غور ہوگا، جب کہ وفاقی حکومت کی جانب سے دی گئی تجاویز پر بھی مشاورت ہوگی۔اسٹیرنگ کمیٹی کی تجاویز پیر 23 نومبر کو بین الصوبائی وزرائے تعلیم کے اجلاس میں پیش کی جائیں گی۔ کرونا کیسز میں اضافے کے سبب تعلیمی اداروں سےمتعلق 
مختلف آپشنز زیرغور ہیں۔ہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ پاکستان میں لاک ڈاؤن میں کمی کے بعد تعلیمی اداروں کو 15 ستمبر سے مرحلہ وار تعلیمی سرگرمیوں کا آغاز ہوا اور تعلیمی اداروں کو کھولا گیا۔ اس موقع پر این سی او سی کی جانب سے تمام تعلیمی اداروں کو سختی سے کرونا ایس او پیز پر عمل درآمد کی ہدایت کی گئی، تاہم اس دوران متعدد اداروں میں کرونا کیسز رپورٹ ہونے پر انہیں سیل کیا گیا۔بلوچستانواضح رہے کہ محکمہ تعلیم بلوچستان کی جانب سے 20 نومبر کو صوبے بھر کے اسکولوں میں امتحانات ملتوی کرنے کا نوٹی فیکیشن جاری کیا گیا ہے۔یکریٹری تعلیم بلوچستان کی جانب سے جاری نوٹی فیکیشن کے مطابق صوبے بھر میں کرونا کیسز میں اضافے کے بعد صوبائی محکمہ تعلیم نے سالانہ امتحانات ملتوی کردیئے ہیں۔ رواں ماہ نومبر کے آخر میں ہونے والے پہلی جماعت سے مڈل کے امتحانات اگلے سال 10 مارچ کو ہونگے۔سیکریٹری تعلیم شیرجان بازئی کا کہنا تھا کہ اسکولوں کے ریزلٹ پر مڈل امتحانات کے سرٹیفکیٹ جاری کئے جائیں گے۔ سالانہ امتحانات کے فورا بعد نئے تعلیمی سال کا آغاز کردیا جائے گا۔شادی ہالزقبل ازیں پنجاب حکومت کی جانب سے 20 نومبر بروز جمعہ سے شادی ہالز ميں تقریبات پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔ تاہم کھلی جگہ پر تقریبات کی اجازت ہوگی۔ اس سلسلے میں ایس او پیز پر عمل درآمد لازمی ہوگا۔ نئی احکامات کے مطابق تقریبات میں 300 افراد کو شرکت کی اجازت ہوگی۔ شادی اور دیگر تقریبات کی اجازت صرف کھلی جگہوں پر ہوگی۔ پابندی کا نوٹی فکیشن جاری کردیا گيا ہے۔مرحلہ وار اسکولز بند ہوسکتے ہیںوفاقی وزیر اطلاعات و نشریات شبلی کا کہنا ہے کہ وباء بڑھ گئی تو ایسی صورت حال پیدا ہو جائے گی کہ اسپتالوں میں جگہ نہ ہو۔ یہ قومی ایشو ہے، ہمیں ذمہ داری کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔ اسکولوں کو بھی مرحلہ وار بند کرنے کی طرف جا سکتے ہیں۔