05:28 pm
جموں شاہراہ 10 روز کے لیے بند، بھارتی کشمیر میں اشیائے خورونوش کی قلت کا خدشہ

جموں شاہراہ 10 روز کے لیے بند، بھارتی کشمیر میں اشیائے خورونوش کی قلت کا خدشہ

05:28 pm

سری نگری(نیوز ڈیسک)وادیٴ کشمیر کو بھارت سے ملانے والی 260 کلو میٹر طویل سرینگر-جموں شاہراہ گزشتہ کئی روز سے بند ہے جس کے نتیجے میں سیکڑوں مال بردار اور مسافر گاڑیاں پھنس کر رہ گئی ہیں۔دوسری جانب وادی کے لیے پٹرولیم مصنوعات اور اشیائے خور و نوش کی قلت

چینلز پر بیٹھ کر تبصرے کرنے والوں کو قانون کا پتہ ہی نہیں ہوتا ۔ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ
پیدا ہو رہی ہے۔ لوگوں کو درپیش مشکلات کے پیشِ نظر مقامی سیاسی جماعتوں اور تاجر برادری نے وادی اور جموں خطے کو ملانے والے متبادل راستوں کو ہر موسم میں قابلِ استعمال بنانے کا مطالبہ دہرایا ہے۔مقامی افراد کا یہ بھی مطالبہ ہے کہ جموں و کشمیر اور بیرونی دنیا کے درمیان رابطوں کو بہتر بنانے کے لیے ایسے تمام قدرتی راستے کھولے جائیں جو کئی دہائیوں سے سیاسی وجوہات کی بنیاد پر بند پڑے ہیں۔شدید برف باری اور بارشوں کے باعث بلند و بالا پہاڑیوں کے درمیان سے گزرنے والی سرینگر۔جموں شاہراہ جگہ جگہ سے دھنس گئی ہے جب کہ مختلف مقامات پر مسافت کو کم کرنے کے لیے تعمیر کی گئی سرنگوں کی مرمت کی وجہ سے آمدورفت میں تعطل ہے۔اب حکام نے اعلان کیا ہے کہ شاہراہ کے رام بن علاقے میں کیلا موڑ کے مقام پر ایک اہم پُل کی دیوار گر گئی ہے اور شاہراہ کو دوبارہ آمدو رفت کے قابل بنانے میں کم سے کم 10 دن لگیں گے۔بھارت کی بارڈر روڈز آرگنائزیشن (بی آر او) کے ایک ترجمان نے وائس آف امریکہ کو بتایا ہے کہ شاہراہ کو دوبارہ گاڑیوں کی آمد و رفت کے قابل بنانے کے لیے کام تیزی سے جاری ہے۔ لیکن پُل کی مرمت میں مزید دس دن درکار ہیں۔اُن کے بقول، "ہو سکتا ہے کہ فوج سے اس جگہ عارضی پل بنانے کی درخواست کی جائے۔"سرینگر۔جموں شاہراہ کے راستے سے ماہانہ کروڑوں روپے کا مال وادیٔ کشمیر پہنچایا جاتا ہے جب کہ شاہراہ کی بندش کے باعث مال خراب ہونے کی شکایات بھی عام ہیں۔راستوں کی بندش کی وجہ سے وادی میں اشیائے خور و نوش کی قلت بھی ہو جاتی ہے۔ اس مرتبہ بھی شاہراہ کے مسلسل کئی روز تک بند رہنے سے وادیٴ کشمیر میں پہلے ہی پیٹرولیم مصنوعات اور اشیائے خور و نوش کی دستیابی اور ان کی قیمتوں کو کنٹرول میں رکھنے کے بارے میں خدشات کا اظہار کیا جا رہا تھا۔کشمیر کے ڈویژنل کمشنر پندورنگ کے پولے نے اس ماہ کے شروع میں کھانا پکانے کے لیے استعمال ہونے والی گیس، پیٹرول، ڈیزل اور غلے کی خرید و فروخت میں توازن رکھنے کے لیے کارروائیاں کی تھیں۔ لیکن اس کے باوجود شاہراہ کی بندش کی خبر سنتے ہی لوگوں نے بڑے پیمانے پر خریداری کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے۔پیٹرول پمپس پر گاڑیوں اور موٹر سائیکلز کی لمبی قطاریں بھی دکھائی دیں۔ تاہم گاڑیوں کو 20 لٹر جب کہ موٹر سائیکلز کو 10 لٹر پیٹرول فراہم کیا جا رہا تھا۔سیاسی جماعتوں اور تاجر برادری نے وادی میں پیٹرولیم مصنوعات اور کھانے پینے کی اشیا کی دستیابی کے بارے میں تشویش کا اظہار کیا ہے۔اُنہوں نے مقامی انتظامیہ اور بھارت کی وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ وادی کے لوگوں کو مشکل صورتِ حال سے باہر لانے کے لیے فوری اقدامات کریں۔سرینگر کے ایک شہری غلام محمد متو نے بتایا کہ "حکومت پیٹرولیم مصنوعات اور اشیائے خور و نوش کی اسٹاک پوزیشن کے بارے میں جو دعوے کر رہی ہے ہمیں ان پر اعتماد کرنے میں احتیاط برتنا ہو گی۔"اُن کا کہنا تھا کہ "پوری وادی برف سے ڈھکی ہوئی ہے اور آمد و رفت کے ذرائع محدود ہیں، جو راستے کھلے ہیں وہاں افراتفری کا عالم ہے۔ سبزیوں اور کھانے پینے کی بعض دوسری چیزیں بازاروں سے غائب ہو رہی ہیں۔ اگر یہ کہیں دستیاب ہیں تو انہیں مہنگے داموں فروخت کیا جا رہا ہے۔"حزبِ اختلاف کی جماعت نیشنل کانفرنس سے تعلق رکھنے والے بھارتی پارلیمان کے دو اراکین جسٹس (ر) حسنین مسعودی اور محمد اکبر لون نے ایک مشترکہ بیان میں سرینگر۔جموں شاہراہ کے مسلسل بند رہنے پر اپنی گہری تشویش کا اظہار کیا ہے۔دونوں اراکین کا الزام ہے کہ حکومت اس سے پیدا شدہ بحران پر قابو پانے میں ناکام ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ "نہ صرف ہزاروں مسافر شاہراہ پر پھنس کر رہ گئے ہیں بلکہ وادی کے لاکھوں مکینوں کے لیے ضروری اشیا کی فراہمی بھی متاثر ہو رہی ہے۔دونوں اراکین کا کہنا تھا کہ حکومت شاہراہ کھلوانے کے لیے سنجیدہ دکھائی نہیں دیتیبعض سیاسی جماعتوں اور تاجر تنظیموں نے مرکزی شاہراہ بند ہونے کے پیشِ نظر وادیٴ کشمیر اور جموں کو ملانے والے متبادل راستوں بالخصوص مغل روڑ کو ہر موسم میں قابلِ استعمال بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔مغل روڑ، سرینگر۔چناب ویلی روڈ اور سرینگر۔کرگل روڑ ہی کی طرح برف باری کی وجہ سے موسم سرما میں بند رہتی ہے۔وادیٴ کشمیر اور خطہ پیر پنجال کے لوگوں کا

تازہ ترین خبریں

ننکانہ صاحب سے لاپتہ ہونے والی بچی کی لاش کھیتوں سے مل گئی

ننکانہ صاحب سے لاپتہ ہونے والی بچی کی لاش کھیتوں سے مل گئی

محکمہ تعلیم سندھ نے صوبے میں میٹرک اور انٹر کے امتحانات کی تاریخوں کا اعلان کردیا

محکمہ تعلیم سندھ نے صوبے میں میٹرک اور انٹر کے امتحانات کی تاریخوں کا اعلان کردیا

والدہ کو قتل کرکے گوشت کتے کو کھلانے والے کو پندرہ سال قید

والدہ کو قتل کرکے گوشت کتے کو کھلانے والے کو پندرہ سال قید

جے ڈاٹ نے صارفین کو اطغرل غازی کے کرداروں سے ملاقات کی پیشکش کر ڈالی

جے ڈاٹ نے صارفین کو اطغرل غازی کے کرداروں سے ملاقات کی پیشکش کر ڈالی

بلوچستان کا 584 ارب کا بجٹ پیش، تنخواہوں میں 10 فیصد اضافہ

بلوچستان کا 584 ارب کا بجٹ پیش، تنخواہوں میں 10 فیصد اضافہ

چین نے مصنوعی پائلٹ تیار کرلیے، کارکردگی انسانوں سے کئی گنا بہتر

چین نے مصنوعی پائلٹ تیار کرلیے، کارکردگی انسانوں سے کئی گنا بہتر

نائیجیریا ؛ اسکول پر حملے میں پولیس اہلکار ہ ل ا ک، اساتذہ سمیت 80 طالبات اغوا

نائیجیریا ؛ اسکول پر حملے میں پولیس اہلکار ہ ل ا ک، اساتذہ سمیت 80 طالبات اغوا

 حکومت ہر معاملے پر نوازشریف کی بیرون ملک سے عدم واپسی کے پیچھے چھپنا چاہ رہی ہے،خرم دستگیر

حکومت ہر معاملے پر نوازشریف کی بیرون ملک سے عدم واپسی کے پیچھے چھپنا چاہ رہی ہے،خرم دستگیر

امریکا نے کابل ایئرپورٹ کی سیکیورٹی ترکی کے حوالے کرنے کا فیصلہ کرلیا

امریکا نے کابل ایئرپورٹ کی سیکیورٹی ترکی کے حوالے کرنے کا فیصلہ کرلیا

تمام ویکسی نیشن سینٹر پر کورونا ویکسین ختم،شہری شدید پریشان

تمام ویکسی نیشن سینٹر پر کورونا ویکسین ختم،شہری شدید پریشان

 گاڑیوں کی رجسٹریشن فیس ایک روپے مقرر کرنے کا فیصلہ

گاڑیوں کی رجسٹریشن فیس ایک روپے مقرر کرنے کا فیصلہ

مسلم لیگ (ن) آزاد کشمیر کے رہنما سردار میر اکبر خان پی ٹی آئی میں شامل

مسلم لیگ (ن) آزاد کشمیر کے رہنما سردار میر اکبر خان پی ٹی آئی میں شامل

بلوچستان اسمبلی میں بجٹ اجلاس سے قبل اپوزیشن اور پولیس میں بدترین تصادم

بلوچستان اسمبلی میں بجٹ اجلاس سے قبل اپوزیشن اور پولیس میں بدترین تصادم

بجلی کی فی یونٹ قیمت کم ہونے والی ہے

بجلی کی فی یونٹ قیمت کم ہونے والی ہے