09:39 pm
بلوچستان کے تمام معاملات اسٹیبلشمنٹ چلارہی ہے، سردار اختر مینگل

بلوچستان کے تمام معاملات اسٹیبلشمنٹ چلارہی ہے، سردار اختر مینگل

09:39 pm

کوئٹہ(مانیٹرنگ ڈیسک)بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ سرداراخترجان مینگل نے کہاہے کہ بلوچستان ہمیشہ سیاسی مقاصد کے حصول اور وسائل کے لوٹ مار کے طور پر استعمال کیاگیاہے،بلوچستان نیشنل پارٹی کی اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کرنے باپ پارٹی بنائی گئی بلوچستان عوامی پارٹی کا نام پہلے پاکستان عوامی پارٹی تجویز کیا گیا لیکن پھر اس کو بنانے 
والوں کو احساس ہوا کہ یہ تو پاپ کہلائی گی اس لئے پھر اسکو باپ بنا دیابلوچستان میں اس پارٹی کو ووٹ فرشتوں نے دیا اور الیکشن میں دھاندلی سے جتوایاصوبوں کی سطح پر پارٹیاں قوم پرستانہ ہوتی ہے لیکن بی اے پی میں تو قوم پرستی کی آدا بھی نہیں ہے،بلوچستان کے تمام معاملات اسٹیبلشمنٹ چلارہی ہے حتی کہ یہاں کی حکومت سازی کااختیار بھی وفاق کے پاس نہیں،لاپتہ افراد کے معاملے پر جب بھی میری ملاقات عمران خان اور ان کے منسٹرز سے ہوتی تھی تو وہ مجھے آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی کے طرف بھیج دیتے تھے ہم عمران خان کی حکومت میں اسلئے شامل ہوئے کیونکہ ہم لاپتہ افراد کی بازیابی چاہتے تھے۔ میں نے 5128 لاپتہ لوگوں کی لسٹ پارلیمنٹ میں جمع کروائی۔ ان میں سے 450 کے قریب بازیاب ہوئے لیکن 1500 اور اٹھائے گئے اور یہ سلسلہ ابھی تک جاری ہے۔ اسلئے ہم نے حکومت سے علیحدگی اختیار کی۔ان خیالات کااظہار انہوں نے گزشتہ روز ساؤتھ ایشاء پریس کو دئیے گئے خصوصی انٹرویو میں کیا۔ سرداراخترجان مینگل نے کہاکہ بلوچستان کے مسئلے کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ایک زمانہ میں صرف پی ٹی وی یا محدود اخبارات کے ذریعے خبریں ملتی تھی لیکن جدید دور میں سوشل میڈیا کے ذریعے بلوچستان کے حالات سے سب باخبر ہے،بلوچستان کی بدحالی میں نہ صرف معاشی صورتحال بلکہ سیاسی حالات بھی شامل ہیں اوریہ سلسلہ آج کا نہیں بلکہ 1947سے چلا آرہاہے ہر آنے والے حکمران نے بلوچستان کو اہمیت دینے کی بجائے اپنے مقاصد حاصل کی مقاصد کا مطلب بلوچستان کے وسائل لوٹے اور استعمال کئے لیکن مقامی باشندہ کو مسلمان اپنی جگہ لیکن انسان بھی نہیں سمجھا گیا یہ ایک عرصے سے لاوا پک رہاہے اورلاوا اس حد تک پہنچ چکاہے کہ سکولوں میں پاکستان کا ترانا بھی لوگ بجانا پسند نہیں کرتے تھے موجودہ حکومت ہو یا اس سے پہلے کی حکومت بارہابلوچستان کے مسئلوں پر توجہ دلانے کی کوشش کی گئی لیکن یہاں چاہے جمہوری حکومت ہو یا آمروں کی حکومت ان کی جانب سے بلوچستان کو نظرانداز کیاگیاہے سیاست کا رواج ہے کہ ہر کوئی اپنے مقصد کیلئے سیٹوں کواستعمال کرتاہے ہم نے حکومت سے بلوچستان کے مسائل کے حل کیلئے معاہدہ کیا جن میں پہلا مطالبہ لاپتہ افراد، افغان مہاجرین کی وطن واپسی،معدنیات کو بلوچستان کے حوالے کرنا، گوادر میں مقامی لوگوں کو اقلیت میں تبدیل ہونے سے بچانے کیلئے قانون سازی سمیت دیگر مسائل حکومت کے سامنے رکھے، ہم نے اس وقت واضح کیاتھا کہ چھ نکات سے بلوچستان کے مسائل کا حل ایک راستہ ہے اور مختلف اوقات میں ہم وزیراعظم سے لیکر کمیٹی ممبران تک کو معاہدے کی یقین دہانی کراتے رہے،انہوں نے کہاکہ قومی اسمبلی میں پہلی لسٹ جو مہیا کی گئی تھی میں 5ہزار 128کے قریب لاپتہ افراد لوگوں کی تفصیل تھی جن میں سے ڈھائی سال کے عرصے میں ساڑھے چار سو لوگ بازیاب ہوگئے تھے لیکن ان ڈھائی سالوں میں 15کے قریب اور بھی لوگ لاپتہ ہوگئے بازیابی کا سلسلہ بند لیکن اٹھانے کا سلسلہ جاری تھا،حکمرانوں کی طرف سے مثبت رسپانس نہیں ملا ٹرخانے کیلئے کبھی دو تو کبھی چار لوگ چھوڑ دئیے جاتے تھے جہاں ہمارے ووٹوں کی ضرورت تھی تو پھر لوگوں کو چھوڑ دیاجاتا تھا،الیکشن کمپین میں کسی نے ہم سے سڑکوں اور ترقی کامطالبہ نہیں کیا ہر علاقہ انڈر ڈویلپ ہے لیکن لوگ اپنے بچوں کی واپسی کامطالبہ کرتے تھے اس لئے ہم نے یہ مطالبہ سر فہرست رکھا،حکومت کی جانب سے ٹرخانے پر ہم نے حکومت کو خیرا ٓباد کہہ دیا،سرداراخترجان مینگل نے کہاکہ لاپتہ افراد کا مسئلہ سنگین مسئلہ ہے عمران خان کو چھوٹے معاملات میں اختیارات حاصل نہیں ان سے جب بھی ملاقات ہوتی تو وہ ہمیں اسٹیبلشمنٹ کی طرف ڈائیورٹ کرتے اور کہتے کہ آئیں ہم آپ کی آرمی چیف،ڈی جی آئی ایس آئی سے ملاقات کراتے ہیں اور یہ مسئلہ حل کرتے ہیں،ان کے باڈی لینگویج اور ان کے عمل سے ثابت ہوگیاتھاکہ وہ اختیارات کے مالک تھے اور نہ ان سے پہلے بلوچستان کے معاملات پر اسٹیبلشمنٹ کی جانب سے کسی کو اختیار دیاگیاہے،چاہے وہ لاپتہ افراد ہو سی پیک ہو یا کوئ

تازہ ترین خبریں

یا اللہ رحم۔۔کراچی میں شدید بارشیں اور آندھی۔۔کتنے افراد جاں کی بازی ہار گئے۔۔ خبر نے دل چیر دیئے

یا اللہ رحم۔۔کراچی میں شدید بارشیں اور آندھی۔۔کتنے افراد جاں کی بازی ہار گئے۔۔ خبر نے دل چیر دیئے

نفیسہ شاہ اور شیریں مزاری آمنے سامنے۔۔۔۔  ایک دوسرے پر نقل کرنے کا الزام لگادیا

نفیسہ شاہ اور شیریں مزاری آمنے سامنے۔۔۔۔  ایک دوسرے پر نقل کرنے کا الزام لگادیا

عمران خان نے ریحام خان سے جان چھڑوانے کےلئے جہانگیر ترین سے مدد مانگی تھی

عمران خان نے ریحام خان سے جان چھڑوانے کےلئے جہانگیر ترین سے مدد مانگی تھی

 سندھ سے انتہائی بری خبر ۔۔۔۔۔ 11 افراد جاں بحق ہوگئے 

 سندھ سے انتہائی بری خبر ۔۔۔۔۔ 11 افراد جاں بحق ہوگئے 

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

ذاتی رنجش پر مخالفین نے زمیندار کی بھینس کر زہردے کر مار ڈالا

ذاتی رنجش پر مخالفین نے زمیندار کی بھینس کر زہردے کر مار ڈالا

ماروی سرمد کے حیران کن ماضی سے پردہ اٹھا دینے والی تحریر

ماروی سرمد کے حیران کن ماضی سے پردہ اٹھا دینے والی تحریر

پی ڈی ایم کو دوبارہ فعال کرنے کی تیاریاں

پی ڈی ایم کو دوبارہ فعال کرنے کی تیاریاں

پاکستانیوں کیلئے ایک اوربڑی خوشخبری۔۔صوبہ بلوچستان میں گیس کے نئے ذخائر دریافت کرلیے گئے۔

پاکستانیوں کیلئے ایک اوربڑی خوشخبری۔۔صوبہ بلوچستان میں گیس کے نئے ذخائر دریافت کرلیے گئے۔

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ 

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ 

رنگ روڈ میگا سیکنڈل پر پیپلزپارٹی نے وزیراعظم سمیت اسکینڈل میں ملوث وزراء سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا

رنگ روڈ میگا سیکنڈل پر پیپلزپارٹی نے وزیراعظم سمیت اسکینڈل میں ملوث وزراء سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

سابق وزیراعظم نواز شریف کی ضبط شدہ جائیدادوں کو نیلام کرنے کا فیصلہ۔۔۔بولی کی تاریخ بھی مقر ر 

سابق وزیراعظم نواز شریف کی ضبط شدہ جائیدادوں کو نیلام کرنے کا فیصلہ۔۔۔بولی کی تاریخ بھی مقر ر