03:48 pm
مریم نواز لاپتہ افرادکے حق میں میدان میں آگئیں  وزیراعظم ،صدر ،آرمی چیف سے کیااپیل کردی؟

مریم نواز لاپتہ افرادکے حق میں میدان میں آگئیں وزیراعظم ،صدر ،آرمی چیف سے کیااپیل کردی؟

03:48 pm

اسلام آباد(روزنامہ اوصاف)مسلم لیگ(ن) کی نائب صدر مریم نواز نے آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی سے اپیل کی ہے کہ ڈی چوک پر بیٹھے آپ ہی کے لوگ ہیں ،آپ کی مائیں اور بیٹیاں ہیں ،ان کا مسئلہ حل کریں ،ان کے پیارے اگر زندہ ہیں تو عدالتوں میں پیش کریں اوراگر وہ مر گئے ہیں تو ان کے بارےمیں بھی صاف بتائیں۔اسلام آباد میں لاپتہ افراد کے لواحقین کی جانب
سے لگائے گئے کیمپ میں گفتگو کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ جن بچوں کو یہ پتہ نہ ہوکہ ہم یتیم ہیں یا والد حیات ہے جس ماں کو یہ پتہ نہ ہوکہ اس کا بیٹا زندہ ہے یا مر گیا ہے،جس بیوی کو یہ پتہ نہ ہو کہ اس کا شوہر زندہ ہے یا مر گیا ہے ،کسی بیٹی کو یہ پتہ نہ ہوکہ اس کے والد زندہ یا نہیں ؟ان کے دلوں پر کیا قیامت گزرے گی ؟آپ سوچیں کہ کتنے سال ہو گئے ہیں یہ لوگ روز اسی کرب سے گزر رہے ہیں ، یہ عزت کیساتھ اپنے گھروں میں رہنے والی خواتین تھیں جو آج اسلام آباد کی سڑکوں پر سخت سردی میں راتیں گزارنے پر مجبور ہیں اور اپنے پیاروں کی خاطر سڑکوں پر کھلے آسمان کے نیچے بیٹھیں ہیں اور ان کا کوئی پرسان حال نہیں ہے ۔انہوں نے کہاکہ ایک شخص اپوزیشن میں تو بڑی بڑی باتیں کرتا تھا اور جب اقتدار مل گیا ہے تو ان کی مجبوریاں سامنے آجاتی ہیں ، میں ان سے پوچھتا چاہتی ہیں کہ کیا آپ کی مجبوریاں فرض سے بڑی ہیں ؟چاہے آپ سلیکٹڈ ہیں اور جس طرح سے بھی آپ کو کرسی پر بیٹھایا گیا ہے لیکن آپ اور ریاست کا فرض ہے کہ اگر آپ لاپتہ افراد کو بازیاب نہیں کراسکتے تو نہ کرائیں لیکن ان کو اتنا تو بتا دیں کہ ان کے پیارے کس ٹارچر سیل میں ہیں یا کہاں پرقید ہیں ؟‎انہوں نے کہاکہ میں اپنے ملک کی ایجنسیوں کے سربراہان سے بھی کہنا چاہتی ہوں کہ آپ کی مائیں اور بہنیں ہیں ،آپ کی بھی اولادیں ہیں ،آپ کے والدین ہیں خدا کے واسطے آپ ان کو یہ بتا دیں کہ ان کے پیارے مر گئے ہیں یا زندہ ہیں ؟اگر آپ ان کو بتا دیں گے تو ان کے دل کو کچھ تو سکون ملے گا ،یہ لوگ آپ کو کچھ نہیں کہتے خدا کیلئے ان کو ان کے پیاروں کا حال بتا دیں ۔انہوں نے کہاکہ وزیراعظم ہائوس یہاں سے زیادہ دور نہیں ہے اور یہ بچیاں کہہ رہی ہیں کہ گزشتہ کئی دنوں سے یہاں بیٹھی ہیں اوروزیراعظم نے آنا تک گوارہ نہیں کیا ۔وزیراعظم سے کہنا چاہتی ہوں کہ آپ نے اللہ کو جواب دینا ہے کسی بندے کو نہیں دینا کم ازکم ان بچیوں کے سروں پر ہاتھ ہی آکر رکھ دیں ان کو کوئی تسلی ہی دیدیں۔مریم نواز نے کہاکہ یہ لاشیں رکھ کر آپ کو بلیک میل نہیں کررہی ہیں بلکہ یہ زندہ لاشیں ہیں اور جیتے جاگتے لوگ ہیں ، ان سے تو آکرمل لیں ،انہوں نے وزیراعظم سے کہا کہ جب آپ کے وزرا کہتے ہیں کہ کچھ لاشوں کے ذریعے وزیراعظم کو بلیک میل کیا جارہا ہے ، کچھ زائد المعیاد شیل پڑے تھے ان کا عوام پر ٹیسٹ کرنا ضروری تھا تو کیا آپ کے دل نہیں کانپتا؟جو مظلوم ہوتا ہے اس کا کوئی صوبہ نہیں ہوتا ،مظلوم مظلوم ہوتا ہے اس کا کوئی صوبہ نہیں ہوتا وفاقی وزرا لوگوں کے زخموں پر نمک نہ چھڑکیں ۔انہوں نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور ڈی جی آئی ایس آئی سے اپیل کہ یہ ڈی چوک پر بیٹھے آپ ہی کے لوگ ہیں ،آپ کی بیٹیاں اور مائیں ہیں ان سے بات کریں اور ان کا مسئلہ حل کریں اور ان کے زندہ لوگوں کو عدالتوں میں پیش کریں اورجو زندہ نہیں ہیں ان کے بارے میں بھی صاف بتائیں ۔موجودہ حکمران حضرت عمر کی مثالیں دیتے ہیں تو حضرت عمر ؓ کا دورہ یاد کرتے ہوئے ان یتیموں ،مظلوموں کے سروں پر ہاتھ رکھیں،کیونکہ اللہ ہاں سب کو جوابدہ ہونا ہے۔‎

تازہ ترین خبریں