07:24 pm
 پاکستان پیپلزپارٹی کا پولیس اسٹیشنوں اور پوشیدہ حراستی مراکز میں تشدد کی رپورٹس کے باوجود انسداد تشدد قانون کے نہ ہونے پر سخت تشویش کا اظہا

 پاکستان پیپلزپارٹی کا پولیس اسٹیشنوں اور پوشیدہ حراستی مراکز میں تشدد کی رپورٹس کے باوجود انسداد تشدد قانون کے نہ ہونے پر سخت تشویش کا اظہا

07:24 pm

اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان پیپلزپارٹی نے پولیس اسٹیشنوں اور پوشیدہ حراستی مراکز میں تشدد کی رپورٹس کے باوجود انسداد تشدد قانون کے نہ ہونے پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ جلد ہی ایسی قانون سازی کی جائے جس سے تشدد کو جرم قرار دیا جا سکے۔ یہ بات پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے سیکریٹری جنرل سا بق سینیٹر فرحت اللہ بابر نے تشدد کے عالمی دن کے موقعے پر اپنے بیان میں کہی۔ انہوں نے کہا کہ تشدد کے خلاف کنونشن کی توثیق پاکستان پیپلزپارٹی کے دور حکومت میں 2010ءمیں کی گئی تھی اور یہ لازمی تھا کہ پاکستان میں بھی اس پر قانون سازی کی جائے۔ سینیٹ میں مارچ 2015ءمیں اس
 بارے متفقہ طور پر ایک قرارداد پیش کی گئی تھی لیکن اب تک اس پر کوئی پیش رفت نہیں ہوسکی حالانکہ گذشتہ تین سالوں میں حکومت متعدد مرتبہ یقین دہانی کروائی کہ یہ قانون سازی کی جائے گی۔ ہم مسلسل انکاری ہیں جو سرکاری رپورٹیں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کی تنظیموں میں جمع کرائی جاتی ہیں ان میں حراستی مراکز میں تشدد سے انکار کیا جاتا ہے۔ جب نیشنل کمیشن برائے انسانی حقوق نے 2019ءمیں اس بات سے انکار کیا اور کہا کہ ان رپورٹوں میں غلط بیانی کی گئی ہے اور حراستی مراکز میں تشدد ہوتا ہے تو اس کے بعد اس کمیشن کو بھی بے عمل کر دیا گیا۔ عالمی طور پر تسلیم کئے جانے کے مطابق جو بل سینیٹ نے پاس کیا تھاکہ جنگ، جنگ کے خطرات، عالمی سطح پر سیاسی عدم استحکام یا اس قسم کی کوئی اور وجہ تشدد کے حق میں نہیں دی جا سکتی حالانکہ سینیٹ کی انسانی حقوق کی کمیٹی کے اجلاس میں پتہ چلا کہ حکومت کو اس کے بارے تحفظات ہیں۔ اگر بل میں یہ بات شامل نہیں کی گئی تو اس پر قانون سازی کا مقصد فوت ہو جائے اور سارے ملک میں حراستی مراکز کے بارے میں سوالات اٹھیں گے۔ فرحت اللہ بابر نے کہا کہ تشدد کے ذریعے اعترافی بیانات لئے جاتے ہیں۔ اکتوبر 2018ءمیں پشاور ہائی کورٹ نے حراستی مراکز میں قید 70لوگوں کی سزائیں اسی بنیاد پر ختم کر دی تھیں کہ یہ اعترافی بیانات متنازعہ تھے۔ اس کے بعد سپریم کورٹ نے پشاور ہائی کورٹ کے اس حکم کو معطل کر دیا تھا۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ اس بات کی آزادانہ تحقیقات کرائی جائے کہ تمام حراستی مراکز میں ریاستی عناصر تشدد میں ملوث ہیں۔

تازہ ترین خبریں

لاہور کے سکولوں میں ماحولیاتی مسائل پر اضافی کلاسیں لگائی جائیں ، لاہور ہائیکورٹ کا حکم

لاہور کے سکولوں میں ماحولیاتی مسائل پر اضافی کلاسیں لگائی جائیں ، لاہور ہائیکورٹ کا حکم

پاکستان  ہی میرے لیے سب کچھ ہے، نگراں وزیراعظم انوارالحق کاکڑ کا بیان سامنے آ گیا 

پاکستان  ہی میرے لیے سب کچھ ہے، نگراں وزیراعظم انوارالحق کاکڑ کا بیان سامنے آ گیا 

پی ٹی آئی کا 3 مارچ کو انٹرا پارٹی الیکشن کرانے کا اعلان، شیڈول بھی جاری کر دیا گیا 

پی ٹی آئی کا 3 مارچ کو انٹرا پارٹی الیکشن کرانے کا اعلان، شیڈول بھی جاری کر دیا گیا 

پنجاب یونیورسٹی میں تصادم، 9 طلباء زخمی،تفصیلات جانیں خبر میں 

پنجاب یونیورسٹی میں تصادم، 9 طلباء زخمی،تفصیلات جانیں خبر میں 

رمضان ریلیف پیکج آج وفاقی کابینہ میں پیش،دیکھیں تفصیل 

رمضان ریلیف پیکج آج وفاقی کابینہ میں پیش،دیکھیں تفصیل 

 مجھ پر پولیس نے تشدد کیا،خواجہ آصف نے پولیس کے ساتھ مل کر ٹھپے لگائے، ریحانہ ڈار کے انکشافات

مجھ پر پولیس نے تشدد کیا،خواجہ آصف نے پولیس کے ساتھ مل کر ٹھپے لگائے، ریحانہ ڈار کے انکشافات

آئی ایم ایف کے 26 میں سے 25 اہداف پر عمل درآمد مکمل ہو گیا

آئی ایم ایف کے 26 میں سے 25 اہداف پر عمل درآمد مکمل ہو گیا

سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں کی درخواست، الیکشن کمیشن کا اہم اجلاس طلب  کر لیا  گیا

سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں کی درخواست، الیکشن کمیشن کا اہم اجلاس طلب کر لیا گیا

صدر اور وزیراعظم کے نام فائنل ہونے کے بعد آئینی عہدوں کے لیے لابنگ کا آغاز

صدر اور وزیراعظم کے نام فائنل ہونے کے بعد آئینی عہدوں کے لیے لابنگ کا آغاز

 اللہ تعالیٰ مجھے اپنی مخلوق کی بہترین انداز میں خدمت کرنے کی توفیق عطا فرمائے، وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز

اللہ تعالیٰ مجھے اپنی مخلوق کی بہترین انداز میں خدمت کرنے کی توفیق عطا فرمائے، وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز

 موجودہ دورکے ڈرامے تو۔۔۔ سینئر اداکارہ  بشریٰ انصاری  نےاہم معاملے پر کڑی نقید کر ڈالی 

 موجودہ دورکے ڈرامے تو۔۔۔ سینئر اداکارہ  بشریٰ انصاری  نےاہم معاملے پر کڑی نقید کر ڈالی 

کیا واقعی شیخ وقاص اکرم  پی ٹی آئی چھوڑ کر پھر سے ن لیگ میں شامل ہو گئے ہیں ؟ جانیں اس خبر میں 

کیا واقعی شیخ وقاص اکرم  پی ٹی آئی چھوڑ کر پھر سے ن لیگ میں شامل ہو گئے ہیں ؟ جانیں اس خبر میں 

پی ٹی آئی کا 2 ہفتوں میں انٹرا پارٹی الیکشن کرانے کا فیصلہ

پی ٹی آئی کا 2 ہفتوں میں انٹرا پارٹی الیکشن کرانے کا فیصلہ

پی ٹی آئی کے 287 ارکان اسمبلی سنی اتحاد کونسل میں شامل ، دیکھیں تفصیل 

پی ٹی آئی کے 287 ارکان اسمبلی سنی اتحاد کونسل میں شامل ، دیکھیں تفصیل