03:12 pm
 صحت کے لئے سب سے خطرناک ہوتا ہے

صحت کے لئے سب سے خطرناک ہوتا ہے

03:12 pm

لندن(ویب ڈیسک) یوں تو زیادہ ٹی وی دیکھنا عمر کے کسی بھی حصے میں فائدہ مند نہیں ہو سکتا تاہم اب نئی تحقیق میں سائنسدانوں نے عمر کا وہ حصہ بتا دیا ہے جس میں زیادہ ٹی وی دیکھنا پوری زندگی میں سب سے زیادہ خطرناک ہوتا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوںنے تحقیقاتی نتائج میں بتایا ہے کہ ادھیڑ عمری میں زیادہ ٹی وی دیکھنا سب سے زیادہ خطرناک ہوتا ہے
اور ایسے شخص دماغی کمزوری، یادداشت کی کجی اور ڈپریشن جیسے امراض میں زیادہ مبتلا ہوتے ہیں اور ان کو ڈیمنشا(Dementia)لاحق ہونے کا خطرہ بھی بہت زیادہ ہوتا ہے۔اس تحقیق میں یونیورسٹی کالج لندن کے سائنسدانوں نے 18سے 60سال کی عمر کے 3600مردوخواتین کی ٹی وی دیکھنے کی عادت اور ان کے طبی ریکارڈ کا تجزیہ کرکے نتائج مرتب کیے۔ اس کے علاوہ ان لوگوں کے یادداشت کے بھی ٹیسٹ لیے گئے۔ نتائج میں یہ بات سامنے آئی کہ 45سے 60سال کی عمر کے وہ لوگ جو ساڑھے تین گھنٹے روزانہ ٹی وی دیکھنے تھے ان کی یادداشت کم ٹی وی دیکھنے والوں کی نسبت10فیصد تک زیادہ کمزور تھی۔ ان لوگوں کو کچھ الفاظ یاد کرنے کو دیئے گئے اور جب انہیں وہ الفاظ زبانی دہرانے کو کہا گیا تو ساڑھے تین گھنٹے روزانہ ٹی وی دیکھنے والوں نے 10فیصد کم کارکردگی دکھائی۔یہ تجربات پہلی بار 2008-09ءمیں کیے گئے اور دوبارہ انہی افراد پر 2014-14ءمیں یہ عمل دہرایا گیا۔ دوسری بار کم عمر لوگوں پر زیادہ ٹی وی دیکھنے کے بہت کم مضر اثرات سامنے آئے۔ اس کے برعکس بڑی عمر کے لوگوں میں ان سالوں کے دوران زیادہ ٹی وی دیکھنے کے نقصانات واضح طور پر کھل کر سامنے آگئے۔تحقیقاتی ٹیم کی سربراہ ڈیزی فینکورٹ کا کہنا تھا کہ ”اب تک ٹی وی دیکھنے کے نقصانات پر بہت زیادہ تحقیقات کی گئیں تاہم ان میں سے زیادہ تر میں بچوں پر ٹی وی کے مضراثرات کو موضوع بنایا گیا، تاہم ہماری تحقیق میں یہ حقیقت سامنے آئی ہے کہ ادھیڑ عمر کے لوگ سب سے زیادہ اس چیز سے متاثر ہوتے ہیں۔

تازہ ترین خبریں