04:57 pm
اب کوئی بھی آپ کو آپ کی مرضی کے بغیرگروپ میں شامل نہیں کرسکے گا،واٹس ایپ کاایک ایسانیافیچر جوآپ کوضرورپسندآئیگا

اب کوئی بھی آپ کو آپ کی مرضی کے بغیرگروپ میں شامل نہیں کرسکے گا،واٹس ایپ کاایک ایسانیافیچر جوآپ کوضرورپسندآئیگا

04:57 pm

واٹس ایپ استعمال کرنیوالوں کواس وقت شدیدکوفت کاسامناکرناپڑ تاہے جب کوئی اچانک انہیں کسی چیٹ گروپ میں شامل کردیتاہے جس کے بعد مروت کے باعث اس سے خودنکلنابھی مشکل ہوجاتاہے۔واٹس ایپ نے ا س مسئلے کوحل کرتے ہوئے نیافیچرمتعارف کرادیاہے۔واٹس ایپ کی جانب سے متعارف کرائے گئے اس فیچر سے صارفین کوگروپس کے حوالے سے زیادہ کنٹرول مل جا ئیگا اس فیچرکی بدولت صارفین کواپنی مرضی کے بغیرکسی گروپ میں شامل کرناممکن نہیں ہوگا۔اس فیچر پر گزشتہ سال سے کام ہورہا تھا اور رواں سال اپریل میں اسے متعارف بھی کرایا گیا
مگر یہ صرف بھارت میں ہی لوگوں کو دستیاب تھا۔اب اسے عالمی سطح پر تمام صارفین کے لیے متعارف کرایا گیا ہے اور یہ کہنا غلط نہیں ہوگا کہ اس سے لوگوں کو ریلیف تو ملے گا ہی اس کے ساتھ اسپام میسجز میں کمی لانے میں بھی مدد مل سکے گی۔اس فیچر کے لیے واٹس ایپ کے پرائیویسی سیکشن میں گروپس کا اضافہ کیا گیا ہے۔یہ فیچر استعمال کرنے کے لیے کے لیے واٹس ایپ اوپن کرکے اوپر دائیں جانب تھری ڈاٹ مینیو پر کلک کرکے سیٹنگز مینیو میں جاکر اکاؤنٹ کو سلیکٹ کریں اور وہاں پرائیویسی اور پھر گروپس کے آپشن میں جائیں۔وہاں آپ کے سامنے 3 آپشن ہوں گے ، ایوری ون، مائی کانٹیکٹس اور مائی کانٹیکٹ ایکسیپٹ۔ایوری ون کو منتخب کرنے کا مطلب ہوگا کہ صارف کو کوئی بھی واٹس ایپ گروپ میں ایڈ کرسکتا ہے۔مائی کانٹیکٹس نامی آپشن سے اس صارف کے کانٹیکٹس میں شامل افراد اسے کسی گروپ کا حصہ بناسکیں گے، جبکہ مائی کانٹیکٹس ایکسیپٹ سے آپ مخصوص افراد کو بلیک لسٹ کرسکیں گے جو آپ کو مختلف گروپس میں شامل کرتے ہوں۔بھارت میں جب اس فیچر کو متعارف کرایا گیا تو تیسرا آپشن مائی کانٹیکٹس ایکسیپٹ کی بجائے نوباڈی تھا، مگر یہ نیا آپشن ممکنہ طور پر زیادہ کارآمد ہے کیونکہ اس سے صارف کو زیادہ کنٹرول مل سکے گا۔ایسے افراد جن کو آپ کو گروپ میں ایڈ کرنے کی اجازت نہیں ہوگی وہ پرائیویٹ چیٹ میں انوائیٹ بھیج سکے گا جس کو قبول کرنا یا مسترد کرنا آپ کی اپنی مرضی ہوگی، دوسری صورت میں 3 دن بعد وہ خودبخود ایکسپائر ہوجائے گا۔

تازہ ترین خبریں