ساڑھے 17ہزار بچے اینٹی ڈپریشن گولیاں لینے پر مجبور
  5  دسمبر‬‮  2017     |     سائنس/صحت

بلجیم میں 17ہزار 600 بچے اینٹی ڈپریشن کی گو لیاں لے رہے ہیں، اس کی وجہ تعلیم کے لیے والدین کا بچوں پر دبائو ڈالنا ہے۔بلجیم میں بچوں کی نفسیات کے ڈاکٹر سوینن نے مقامی ٹی وی کو انٹرو یو دیتے ہو ئے بتا یا کہ ہمارے سماج میں 11 سے 15 سال کی عمر کے بچے

شدید ذہنی دبائو کا شکار ہیں، جس کی اہم وجہ والدین کی طرف سے بچوں پر تعلیم کے لیے بہت زیادہ دبائو اور سوشل میڈیا کا زیادہ استعمال بھی ہے۔بلجیئن والدین اپنے بچوں پر ہم عصروں سے آگے نکلنے کے لیے بہت زیادہ دبائو ڈالتے ہیں اور ہر وقت پڑھائی پر تو جہ دینے کی ترغیب دیتے رہتے ہیں ، جبکہ سوشل میڈیا کے استعمال پر تصاویر پر لائیکس نہ آنا اور ناگوا ر کمنٹس بھی ان بچوں کی شخصیت کو مسخ کر دیتے ہیں۔ڈاکٹر کا کہنا تھا کہ اسی وجہ سے 11سے 15 سال کی عمر کے ساڑھے 17 ہزر بچوں کو ڈپریشن کی گو لیاں دی جا رہی ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ان میں کچھ نو جوان 15 سے 20 سال کی عمر کے بھی ہیں جنہیں ماں باپ کی علیحدگی نے بھی تکلیف دی ہے۔ڈاکٹر کے مطابق اینٹی ڈپریشن ادویات کے استعمال کرنے والوں کی یہ تعداد گزشتہ سال کے مقابلے میں 8 اعشاریہ 4 فیصد زیادہ ہے


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

سائنس/صحت

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved