ناپسندیدہ ویڈیوز کی روک تھام کیلئے کمپنی نے اہم اعلان کردیا
  7  دسمبر‬‮  2017     |     سائنس/صحت

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)گوگل نے اب ایک ایسے مسئلے کا اعتراف کیا ہے جو کم از کم روبوٹس ٹھیک نہیں کر سکتے۔ گوگل کی ویڈیو اسٹریمنگ سروس یو ٹیوب کا کہنا ہے کہ وہ ناپسندیدہ اور جارحانہ ویڈیوز کی روک تھام کیلئے آئندہ سال کم از کم 10؍ ہزار نئے ملازمین بھرتی کرے گا۔کمپنی کے مطابق یوٹیوب کی ویب

سائٹ پر موجود کئی ناپسندیدہ ویڈیوز اس ویب سائٹ کیلئے طاعون بن چکی ہیں۔ گزشتہ ہفتے اس بات کا انکشاف ہوا تھا کہ ویب سائٹ پر بچوں کے ساتھ بدفعلی کے مرتکب جرائم پیشہ افراد (Pedophiles) مختلف ویڈیوز پر ناقابل قبول تبصرے شائع کر رہے ہیں۔یہ چیخ و پکار ایک ایسے موقع پر سامنے آئی تھی جب رواں سال کے آغاز میں یوٹیوب کی جانب سے نسل پرست رہنما ڈیوڈ ڈیوک کی ویڈیوز پوسٹ کرنے کے بعد کئی مشتہرین نے کمپنی میں سرمایہ نہ لگانے کا فیصلہ کیا تھا۔یوٹیوب کی چیف ایگزیکٹو افسر سوزن ووچکی نے مسئلے کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں ایک ایسی حکمت عملی اختیار کرنے کی ضرورت ہے جس میں مختلف چینل اور ویڈیوز اشتہارات کی اہلیت حاصل کر سکیں جو موجودہ صورتحال میں ممکن نہیں۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

سائنس/صحت

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved