بیٹھ کر کام کرنے کے بڑے نقصانات
  11  فروری‬‮  2018     |     سائنس/صحت

فرانس(نیوز ڈیسک )طبی ماہرین نے دفاتر میں بیٹھ کر کام کرنے والے افراد کو متنبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر آپ صحت مند زندگی گزارنا اور موٹاپے سے نجات حاصل کرنا چاہتے ہیں تو زیادہ سے زیادہ کھڑے ہوکر کام کریں۔تفصیلات کے مطابق یورپ میں ہونے والی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ دفاتر یا گھروں میں زیادہ وقت بیٹھنے سے جسم میں موجود کیلوریز ختم نہیں

ہوتیں جس کے باعث صحت خراب اور موٹاپہ بڑھ جاتا ہے۔ماہرین کے مطابق اگر کوئی شخص موٹاپے سے عاجز ہے اور وہ اضافی وزن کو کم کرنا چاہتا ہے تو دن میں زیادہ سے زیادہ وقت کھڑے ہوکر کام کرے کیونکہ اس عمل سے ہر منٹ میں 0.15 فیصد اضافی کیلوری جسم سے ختم کی جاسکتی ہے۔مطالعہ میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ انسانی جسم میں کیلوریز کے بڑھ جانے سے ہارٹ اٹیک، ذیابیطس کے امراض لاحق ہونے کے خطرات زیادہ ہوتے ہیں اس لیے کھڑے ہو کر روزمرہ یا دفتر کے امور سرانجام دیں تاکہ کیلوریز کو کنٹرول کیا جاسکے۔محققین کا یہ بھی کہنا ہے کہ اگر 65 کلو گرام وزن کا حامل انسان روزانہ 6 گھنٹے کھڑے ہوکر کام کرتا ہے تو وہ اس طرح سال میں تقریبا ڈھائی کلو گرام تک وزن کم کرسکتا ہے ساتھ میں اُسے خوراک کا توازن بھی برقرار رکھنا ہے۔تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ کھڑے ہوکر کام کرنے والوں کی نہ صرف پیداواری صلاحیتوں میں اضافہ ہوتا ہے بلکہ وہ ہرمسئلے کا حل بھی نکال لیتا ہے۔ماہرین کے مطابق صحت کی بہتری اور وزن کی کمی کے لیے یہ حل مستقل تو نہیں البتہ اس کی اہمیت سے انکار نہیں کیا جاسکتا ساتھ ہی ڈاکٹرز کا یہ بھی ماننا ہے کہ کام کرنے والوں کو ہر تھوڑی دیر میں کھڑے ہوکر اپنے آپ کو متحرک کرنا ضروری ہے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

سائنس/صحت

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved