انجلیناجولی کا ہالی ووڈ پروڈیوسر پرجنسی طورپرہراساں کرنے کا الزام
  11  اکتوبر‬‮  2017     |      شوبز

لاس اینجلس(مانیٹرنگ ڈیسک) نامورامریکی اداکارہ انجلینا جولی اورگیونتھ پالٹرونے ہالی ووڈ کے معروف پروڈیوسر ہاروی وائن اسٹین پر جنسی طور پرہراساں کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔بین الاقوامی میڈیا کے مطابق گزشتہ چند دنوں کے دوران ہالی ووڈ کی کئی اداکاراؤں نے

فلم پروڈیوسر ہاروی وائن اسٹین پر ہراساں کرنے کا الزام لگایا ہے اور اب ان میں انجلینا جولی کانام بھی شامل ہوگیا ہے، جولی کا کہنا ہے کہ کیرئیر کے ابتدائی دنوں میں ہاروی نے انہیں جنسی طور پرہراساں کیا تھا۔جولی نےاپنی ای میل میں لکھا ہے کہ ’میرا ہاروی وائن اسٹین کے ساتھ کام کرنے کا تجربہ بہت برا تھا اوراسی بنا پر میں نے ان کے ساتھ دوبارہ کبھی کام نہیں کیا اور دوسروں کو بھی ان کے بارے میں خبردار کیا، کسی بھی ملک اور کسی بھی شعبے میں خواتین کے ساتھ یہ رویہ ناقابل قبول ہے‘۔اس خبرکوبھی پڑھیں: انجلینا جولی کا اپنی زندگی کے حوالے سے اہم انکشاف دوسری جانب ہالی ووڈ اداکارہ گیونتھ پالٹرو نے اپنی ای میل میں لکھا ہے کہ ایما کے کردارمیں کاسٹ کرنے کے بعد وائن اسٹین نے انہیں ہوٹل کے کمرے میں بلایا اور ان کے ساتھ نازیبا حرکت کرنے کی کوشش کی، انہوں نے کہا ’’میں کم عمر تھی اور اس وقت میں بہت زیادہ خوفزدہ ہوگئی تھی‘‘، اس واقع کے بارے میں گیونتھ نے اپنے بوائے فرینڈ بریڈ پٹ کو بتایا جس کے بعد انہوں نے ہاروی سے بات کی۔اس کے علاوہ 1996 میں آسکرایوارڈ جیتنے والی اداکارہ میرا سوروینو نے بھی ہاروی پرالزام عائد کرتے ہوئے کہا تھا کہ ہاروی نے انہیں جنسی طور پرہراساں کیاتھا۔یہ الزامات سامنے آنے کے بعد پروڈکشن ہاؤس وائن اسٹین نے ہاروی کو نوکری سے نکال دیا ہے جب کہ ان کی اہلیہ جورجینا تو اتنی زیادہ دلبرداشتہ ہوئی ہیں کہ انہوں نے ہاروی کو چھوڑنے کا اعلان کردیا ہے، اپنے ایک انٹرویو میں جورجینا نے کہا کہ میرا دل ان تمام خواتین کے لیے بہت افسردہ ہےجو اس تکلیف سے گزری ہیں، ہاروی کا یہ اقدام معافی کے قابل نہیں ہے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

شوبز

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved