گال گدوت کی دوبارہ ’ونڈر وومین‘ بننے کی اہم شرط
  14  ‬‮نومبر‬‮  2017     |      شوبز

واشنگٹن (ویب ڈیسک )اسرائیلی فوج کی سابق اہلکار اور اداکارہ گال گدوت نے اپنی فلم ’ونڈر وومین‘ میں کام کرکے خوب شہرت حاصل کی، تاہم اب انہوں نے فلم کے سیکوئل میں کام کرنے کی ایک شرط مقرر کردی ہے، جسے پورا نہ کیا گیا تو وہ اس فلم کا حصہ نہیں بنیں گی۔گال گدوت نے اعلان کیا ہے کہ وہ ونڈر وومین کے سیکوئل کا حصہ صرف اس وقت دوبارہ بنیں گی جب فلم کی پروڈکشن کمپنی وارنر بروز پروڈیوسر بریٹ ریٹنر سے فلم سے جڑے تمام تعلق ختم کردیں۔ خیال رہے کہ وارنر بروز کمپنی نے بریٹ ریٹنر کی پروڈکشن کمپنی ریٹ پیک انٹرٹینمنٹ کے ساتھ فلم کی مشترکہ پروڈکشن کے حوالے سے معاہدہ کیا تھا جس کا اختتام 2018 میں ہوگا۔ان دونوں کمپنیوں نے مل کر فلم جسٹس لیگ بھی پروڈیوس کی تھی، اس فلم میں بھی گال گدوت نے اہم کردار ادا کیا تھا۔تاہم اب گال گدوت نے بریٹ ریٹنر سے معاہدہ ختم کرنے کی شرط سامنے رکھ دی، جس کے پورا ہونے پر ہی وہ دوبارہ ونڈر وومین کے روپ میں نظر آئیں گی۔یہ شرط اداکارہ نے اس لیے رکھی ہے کہ کیوں کہ حال ہی میں 6 خواتین نے بریٹ ریٹنر پر جنسی طور ہراساں کرنے کا الزام عائد کیا تھا جبکہ ایک خاتون نے یہ بھی الزام لگایا تھا کہ بریٹ ریٹنر نے ان کا ریپ کیا۔ایک رپورٹ میں بتایا گیا کہ اداکارہ گال گدوت نہیں چاہتی کہ ایک ایسی فلم سیریز جس میں خواتین کو بااختیار بنانے کا پیغام دیا جارہا ہو، اس کا فائدہ ایک ایسے شخص کو ہو جو خواتین کو ہی ہراساں کرتا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ ’گال گدوت ایک ہمت والی لڑکی ہیں، وہ جانتی ہیں کہ ایسے لوگوں کو کس طرح نقصان پہنچایا جاسکتا ہے، وہ یہ بھی جانتی ہیں کہ ونڈر وومین کے حوالے سے وارنر بروز کو ان کا ساتھ ہی دینا پڑے گا‘۔گال گدوت نے اس سے قبل بریٹ ریٹنر کے اعزاز میں رکھے کے ایونٹ میں شرکت کرنے سے بھی معذرت کرلی تھی۔خیال رہے کہ گال گدوت کی رواں سال ریلیز ہوئی فلم ’ونڈر وومین‘ سپر ہٹ ثابت ہوئی تھی، فلم نے باکس آفس پر جہاں کئی ریکارڈ بنائے، وہیں کئی بڑی فلموں کے ریکارڈ توڑے بھی تھے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

شوبز

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved