01:17 pm
پولیس اہلکار نے خوبرو گرل فرینڈ ماڈل پر تشدد کی انتہا کر دی

پولیس اہلکار نے خوبرو گرل فرینڈ ماڈل پر تشدد کی انتہا کر دی

01:17 pm

اسلام آباد(نیو زڈیسک) پاکستانی عوام ابھی لاہور کے پوش علاقے ڈیفنس میں خاتون پر اُس کے خاوند کی جانب سے کیے جانے والے تشدد کا معاملہ نہیں بھُولے تھے کہ کراچی میں خاتون ماڈل پر تشدد کا ایک نیا معاملہ سامنے آ گیا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ماڈل گرل فرح نظام کو تشدد کا نشانہ بنانے والا اُس کا بوائے فرینڈ کوئی عام شخص نہیں تھا، بلکہ قانون کا رکھوالا اے ایس آئی جان شیر خان ہے۔خاتون ماڈل فرح نے اپنے دوست پر گن پوائنٹ پر اغوا اور اس کے بعد تشدد کا الزام لگا دیااور اس کے خلاف مقامی تھانہ میں مقدمہ درج کرا دیا ۔
ماڈل گرل فرح نظام کے دعویٰ کے مطابق اُسے اغوا کے بعد تشدد کا نشانہ بنا گیا۔ فرح نظام کے مطابق جان شیر خان نامی شخص نے 4مئی کی رات گھر جاتے ہوئے گن پوائنٹ پراُسے ٹیکسی سے زبردستی اُتارا اور اغوا کر کے نارتھ ناظم آباد اپنے گھر لے گیا۔ملزم ٹیکسی میں سوار فرح کو شاہراہ فیصل سے لے کر نارتھ ناظم آباد تک مسلسل زد و کوب کرتا رہا۔فرح نے بتایا کہ راستے میں تشدد کے بعد جب میں ملزم کے گھر بند کمرے میں پہنچی تو وہاں بھی اس نے مجھ پر بہت زیادہ تشدد کیا۔جان شیر خان نے مجھے کہا کہ اگر تم شور مچاؤ گی پھر بھی یہاں پر کوئی نہیں آئے گا۔ خاتون نے واقعے کا نارتھ ناظم آباد تھانے میں مقدمہ درج کرا دیا۔ فرح نظام کے مطابق جان شیر خان سے اُن کی دوستی چھ ماہ قبل ہوئی تھی۔ اور اب وہ اُسے ماڈلنگ کرنے سے منع کر رہا تھا۔ ملزم محکمہ پولیس میں اے ایس آئی ہے۔متاثرہ ماڈل کی جانب سے اپنے چہرے اور گردن پر تشدد کے نشانات بھی دکھائے گئے۔

تازہ ترین خبریں