03:04 pm
 ہوجاتے تواندرجانے کی ہمت نہیں ہوتی تھی،سکرپٹ نہیں پڑھتا صرف کردار کی تفصیلات سن کر ذہن میں اس سے متعلق نقش بنالیتا ہوں

ہوجاتے تواندرجانے کی ہمت نہیں ہوتی تھی،سکرپٹ نہیں پڑھتا صرف کردار کی تفصیلات سن کر ذہن میں اس سے متعلق نقش بنالیتا ہوں

03:04 pm

لاہور( آن لائن )اداکار نعمان اعجاز نے کہا ہے کہ میں سکرپٹ نہیں پڑھتا، صرف کردار کی تفصیلات سن کر ذہن میں اس سے متعلق نقش بنالیتا ہوں۔انہوں نے ایک انٹرویو میں کہا کہ سمجھدار لوگوں کے ساتھ کام کرنا میری کامیابی کی وجہ ہے، 1988 میں ٹی وی پر کام کرنا شروع کیا تو عارفہ صدیقی، خالدہ ریاست اور قوی خان جیسے سینئر فنکاروں کے ساتھ کام کرنے کا موقع ملا اور سب سے ہی مجھے بہت عزت اور پیار ملا
جس کی وجہ سے میرا سب کا احترام کرنا تھا۔ مجھے فن اداکاری سکھانے اور اس انڈسٹری میں متعارف کروانے والے نصرت ٹھاکر ہیں۔انہوں نے آج کل کے فنکاروں کے بارے میں کہاکہ آج کل کے فنکار سینئرز کی عزت اتنی نہیں کرتے جتنی ہمارے زمانے میں ہوتی ہے میرے خیال سے ایکٹرکوبہت زیادہ سمارٹ ہوناچاہیے کیونکہ اس نے اپناکردارتونبھاناہوتاہے لیکن ساتھی اداکارکوبھی ساتھ لیکرچلناپڑتاہے ،ہمارے زمانے میں سینئرز کااحترام کیاجاتاتھاایک دفعہ میں ٹریفک کی وجہ سے لیٹ ہوگیاتونصرت ٹھاکرصاحب اندردوسرے فنکاروں کے ساتھ میٹنگ کررہے تھے میری ہمت نہیں ہورہی تھی کہ میں اندرجائوں۔

تازہ ترین خبریں