پی ایس ایل کا تیسرا سیزن کھیلنے کے لیے غیر ملکی کھلاڑی پرجوش
  12  ‬‮نومبر‬‮  2017     |      سپورٹس

لاہور(ویب ڈیسک)پاکستان سپر لیگ(پی ایس ایل)کا تیسرا سیزن کھیلنے کے لیے غیر ملکی کھلاڑی نہایت پرجوش ہیں۔پاکستان سپر لیگ کے تیسرے ایڈیشن کے لیے ڈرافٹنگ گزشتہ روز لاہور میں ہوئی ۔ اس بار کئی غیر ملکی کرکٹ اسٹارز پی ایس ایل میں ایکشن میں نظر آئیں گے۔تیسرے ایڈیشن کے میچز دبئی اور لاہور کے ساتھ ساتھ ممکنہ طور پر کراچی میں بھی کھیلے جائیں گے جب کہ ڈرافٹنگ کے بعد غیر ملکی کھلاڑیوں نے اپنے بیانات میں کہا ہے کہ وہ بے چینی سے پی ایس ایل کا انتظار کررہے ہیں۔جنوبی افریقا سے تعلق رکھنے والے لاہور قلندرز کے کرکٹر ہاشم آملہ نے لاہور قلندرز کے کھلاڑیوں کے لئے اپنے ٹوئٹر پیغام کے ذریعے نیک خواہشات کا اظہار کیا ہے۔ہاشم آملہ نے لاہور قلندرز کے پلیئرز، فینز اور کوچنگ اسٹاف کے لئے اپنی بھرپور محبت اور سپورٹ کا اظہار بھی کیا

۔آسٹریلوی آل رانڈر شین واٹسن کو پلاٹینم کیٹیگری میں کوئٹہ گلیڈی ایئٹر نے منتخب کیا ہے اور اپنی ڈرافٹنگ کے ساتھ ہی انہوں نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ویڈیو پیغام میں کہا کہ وہ پی ایس ایل کی ڈرافٹگ کی تقریب یوٹیوب پر دیکھ رہے تھے اور وہ پی ایس ایل میں کھیلنے کے لیے کافی پرجوش ہیں۔ویسٹ انڈین ٹی ٹوئنٹی ٹیم کے کپتان کارلوس بریتھ ویٹ بھی ڈائمنڈ کیٹیگری میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کا حصہ بنے ہیں اور ان کا اپنی ٹوئٹ میں کہنا تھا کہ وہ کوئٹہ ٹیم کو جوائن کرنے اور پی ایس ایل کھیلنے کے لیے نہایت پرجوش ہیں۔آسٹریلیا کے فاسٹ بولر مچل جانسن کو ڈائمنڈ کیٹیگری میں کراچی کنگز نے منتخب کیا ہے جس پر انہوں نے بھی اپنی ٹوئٹ میں کہا کہ یہ وقت میرے لیے کافی پرجوش ہے کیوں کہ میں پی ایس ایل کھیل کر اسے یادگار بنانا چاہتا ہوں۔جنوبی افریقہ کے کھلاڑی کولن انگرام کو پلاٹینم کیٹیگری میں کراچی کنگز نے اپنی ٹیم کا حصہ بنایا ہے اور انہوں نے اپنی ٹوئٹ میں کراچی کنگز کا حصہ بننے پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

سپورٹس

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved