مختصر فارمیٹ میں غلطی کی کوئی گنجائش نہیں:سرفراز احمد
  13  جون‬‮  2018     |      سپورٹس

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان اور اسکاٹ لینڈ کے درمیان پہلا ٹی ٹوئنٹی میچ آج کھیلا جائے گااور قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے وارننگ دے دی ہے کہ مختصر فارمیٹ میں غلطی کی کوئی گنجائش نہیں ہوتی۔قومی کپتان سرفراز

احمد نے کہا ہے کہ میزبان سکاٹ لینڈ کی ٹیم نے انگلینڈ کو شکست دے کر خطرے کی گھنٹی بجا دی ،اس معرکے سے قبل بھی اسکاٹش ٹیم کو آسان قطعی نہیں سمجھ رہے تھے، بیس اوورز کی کرکٹ میں کوئی بھی ٹیم کسی وقت خطرناک حریف بن سکتی ہے ،افغانستان نے حال ہی میں جس انداز سے بنگلہ دیش کو ہرایا وہ سب کے سامنے ہے ،شارٹ فارمیٹ کی کرکٹ آسان نہیں لہٰذا گرین شرٹس بھی حالیہ میچوں کو پوری سنجیدگی کے ساتھ کھیلیں گے۔۔گزشتہ روز اسکاٹ لینڈ کیخلاف پہلے میچ سے قبل ہونے والی میڈیا کانفرنس کے دوران سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ وہ انگلینڈ کیخلاف فتح پر اسکاٹ لینڈ کو مبارکباد دینا چاہتے ہیں کیونکہ انہوں نے جس انداز سے انگلش ٹیم کیخلاف بہترین کھیل پیش کیا وہ غیر معمولی اور درحقیقت یہ ان کا ہی دن تھا۔ قومی کرکٹ ٹیم کے پریکٹس سیشن کے بعد سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ اسکاٹ لینڈ نے انگلش حریفوں کو اچھے کھیل کی بدولت شکست سے دوچار کیا اور جس انداز سے اسکاٹش پلیئرز نے بیٹنگ ،بالنگ اور فیلڈنگ میں عمدہ کھیل پیش کیا اس کی بدولت جیت کا سہرا پوری ٹیم کے سر جاتا ہے ۔واضح رہے کہ گزشتہ روز پاکستان کا تین گھنٹے کا بھرپور پریکٹس سیشن رکھا گیا تھا تاہم بارش کی وجہ سے صرف وارم اپ سیشن ہی ممکن ہو سکا اور پاکستانی کھلاڑی بیٹنگ ،بالنگ اور فیلڈنگ کی مشقوں سے محروم رہے ۔ایک سوال پر سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ وہ انگلینڈ اور اسکاٹ لینڈ کے میچ سے قبل بھی حریف ٹیم کو آسان نہیں لے رہے تھے کیونکہ ٹی ٹوئنٹی فارمیٹ میں غلطی کی قطعی کوئی گنجائش نہیں ہوتی اور پلک جھپکتے میں کھیل کا توازن بگڑ سکتا ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ افغانستان نے حال ہی میں جس انداز سے بنگلہ دیش کو تین، صفر سے ہرایا وہ سب کے سامنے ہے اور اسی وجہ وہ سمجھتے ہیں کہ ٹی ٹوئنٹی کرکٹ آسان نہیں جس میں جیتنے کیلئے اچھا کھیلنا پڑتا ہے ۔ گرین شرٹس کے قائد کا کہنا تھا کہ اس سے فرق نہیں پڑتا کہ حریف ٹیم نمبر ون سائیڈ ہے یا نمبر آٹھ کیونکہ جس دن جو اچھا کھیلے گا وہی مقابلے میں فاتح ہو گا کیونکہ ذرا سی غفلت یا کوتاہی سے میچ کا پورا نقشہ بدل کر رہ جاتا ہے ۔سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ اسکاٹش ٹیم کیلئے یہ خوش آئند امر ہے کہ وہ انگلینڈ اور پاکستان جیسی ٹیموں کیخلاف کھیل رہی ہے جس کو بخوبی اندازہ ہو جائے گا کہ انٹرنیشنل کرکٹ کیسے کھیلی جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ابھی تک اسکاٹ لینڈ کی ٹیم آئی سی سی کوالیفائرز اور ایسوسی ایٹ ٹیموں کیخلاف کھیلتی رہی ہے جسے مضبوط ٹیموں کیخلاف کھیلنے کا موقع ملے گا تو ان کے معیار میں وقت کے ساتھ بہتری آتی چلی جائے گی۔ایک سوال پر سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ آئی سی سی کی پالیسی پر بات کرنا ان کے دائرہ اختیار میں نہیں لیکن اگر آئی سی سی کے ایونٹس میں زیادہ ٹیمیں شامل کی جاتی ہیں تو اس سے چھوٹی ٹیموں کو بہت زیادہ فائدہ ہوتا ہے اور مقابلے کے رجحان میں بھی اضافہ ہوتا ہے ۔ انہوں نے عالمی کپ 1992ء کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ اس ایونٹ میں دس ٹیمیں شریک تھیں اور ہر ٹیم نے گروپ میں نو،نو میچز کھیلے یوں سب کو بھرپور چانس ملا۔قومی کپتان نے مزید بتایا کہ محمد عامر فٹ ہیں اور وہ اسکاٹ لینڈ کیخلاف پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ کیلئے بھی دستیاب ہوں گے اور چونکہ انہیں اس بات کا بخوبی علم ہے کہ اسکاٹ لینڈ کی ٹیم کو اس کی اپنی کنڈیشنز میں کھیلنا ہے تو گرین شرٹس کو اس کیخلاف بھرپور کارکردگی کا مظاہرہ کرنا ہو گا۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

سپورٹس

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved