08:37 am
دوسروں کے کندھوں پر منزل تک پہنچنے کا خواب چکنا چور

دوسروں کے کندھوں پر منزل تک پہنچنے کا خواب چکنا چور

08:37 am

اسلام آباد(نیو زڈیسک) ’’دوسروں‘‘ کے کندھوں پر منزل تک پہنچنے کا خواب چکنا چور ہوگیا جب کہ پاکستانی ٹیم ورلڈکپ سیمی فائنل کی دوڑ سے تقریباً باہر ہو گئی۔سیمی فائنل تک رسائی کی امیدیں برقرار رکھنے کیلیے پاکستان کی نگاہیں چیسٹر لی اسٹریٹ میں کھیلے جانے والے انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے میچ پر مرکوز تھیں،کیویز کی فتح کی صورت میں انگلینڈ کے پوائنٹس 10رہ جاتے اور گرین شرٹس جمعے کو بنگلادیش کیخلاف فتح کے ساتھ سیمی فائنل میں جگہ بنالیتے، میزبان ٹیم نے آسانی سے کامیابی حاصل کرتے ہوئے 12پوائنٹس کے ساتھ ٹائٹل کی جانب پیش قدمی جاری رکھی۔اب بنگلادیش پرفتح سے
پاکستان کے پوائنٹس 11ہوگئے تب بھی سیمی فائنل میں رسائی کا امکان نہ ہونے کے برابر ہوگا،کیویز کے بھی اتنے ہی پوائنٹس ہیں لیکن رن ریٹ میں واضح برتری کی وجہ سے گرین شرٹس کو انگلینڈ کی ٹھنڈی ہوائیں چھوڑ کر گرمی کی گرفت میں آئے وطن میں واپسی کیلیے پرواز پکڑنا ہوگی۔انگلینڈ سے  شکست کے باوجود کیویز کا نیٹ رن ریٹ0.175 جبکہ پاکستان کا منفی 0.792ہے۔ اس فرق کو ایک میچ میں دور کرنا گرین شرٹس کیلیے ناممکنات میں سے ہوگا، اگر بنگلادیش پہلے بیٹنگ کرے تو کوئی چانس باقی رہنے کی توقع نہیں،گرین شرٹس کو ناممکن کو ممکن بنانے کیلیے350رنز اسکور کر کے بنگلادیش کو 39رنز پر آؤٹ کرنا ہوگا، اگر 400 رنز بنائے تو حریف کو 316 رنز سے ہرانا ضروری ہے، پہلے بولنگ کی صورت میں میچ سے قبل ہی سفر تمام ہو جائے گا۔گزشتہ روز چیسٹر لی اسٹریٹ میں 306رنز کے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے نیوزی لینڈ کا آغاز ہی تباہ کن رہا، پہلے اوور میں کرس ووکس نے ہینری نکولس کو کھاتہ کھولنے سے قبل ہی ایل بی ڈبلیو کر دیا،وہ اگر ریویو لیتے تو وکٹ بچا سکتے تھے، جوفرا آرچر نے مارٹن گپٹل(8) کو وکٹوں کے پیچھے جوزبٹلر کا کیچ بنوا کر کیویز کو دوسرا نقصان پہنچایا۔بیٹنگ لائن کے اعتماد کی بحالی کیلیے کوششوں پر اس وقت کاری ضرب لگی جب گیند بولر مارک ووڈ کے ہاتھوں کو چھو کر اسٹمپس پر آلگی اور کپتان کین ولیمسن 27 کو میدان سے باہر جانا پڑا، روس ٹیلر( 28) بھی رن آؤٹ ہوئے تو رہی سہی کسر بھی نکل گئی، مارک ووڈ نے بیلز فضا میں بکھیر کر جمی نیشم کی مزاحمت 19 پر ختم کر دی، بین اسٹوکس نے جوئے روٹ کی مدد سے کولن ڈی گرینڈ ہوم کا قصہ تمام کیا، ٹام لیتھم ( 57) کو لیام پلنکٹ نے جوزبٹلر کا کیچ بنوایا تو ٹیم کا مجموعہ 164 تھا، مارک ووڈ نے مچل سینٹنر(12) کو ایل بی ڈبلیو کرنے کے بعد میٹ ہینری(7)کی بیلز بھی فضا میں بکھیر دیں،آخری وکٹ عادل راشد کے حصے میں آئی۔انھوں نے میٹ ہینری(4) کو اسٹمپڈ کروا دیا، نیوزی لینڈ کی پوری ٹیم 186پر ڈھیر ہوئی،انگلینڈ نے 119رنز سے فتح کو گلے لگایا،مارک ووڈ نے3 وکٹیں حاصل کیں۔ قبل ازیں انگلینڈ نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا، جیسن روئے(60) جونی بیئراسٹو کے ہمراہ 123کی اوپننگ شراکت قائم کرکے آؤٹ ہوئے، انھیں جمی نیشم نے مچل سینٹنر کا کیچ بنوایا، جوئے روٹ24 رنز پر ٹرینٹ بولٹ کی گیند پر وکٹ کیپر ٹام لیتھم کو کیچ دیتے ہوئے رخصت ہوئے۔جونی بیئراسٹو106 رنز کی شاندار اننگز کھیل کر میٹ ہینری کی گیند پر بولڈ ہوئے،تیسری وکٹ 206پرگری، ایک موقع پر ایسا دکھائی دے رہا تھا کہ انگلش ٹیم 350 سے زائد رنز بنالے گی لیکن وکٹیں تسلسل کے ساتھ گرنے سے رنز کی رفتار بھی سست پڑ گئی،جوز بٹلر (11)ٹرینٹ بولٹ اور کین ولیمسن کے گٹھ جوڑ کا شکار ہوئے۔بین اسٹوکس27 گیندوں پر 11 رنز کی سست رفتار اننگز کھیلنے کے بعد سینٹنر کی گیند میٹ ہینری کے ہاتھوں میں دے بیٹھے، ووئکس صرف 4 رنز بنا سکے، انھیں جمی نیشم نے کین ولیمسن کا کیچ بنوایا،کپتان ایون مورگن 42 رنز بناکر رخصت ہوئے، انھیں ہینری نے سینٹنر کی مدد سے دھر لیا، عادل رشید( 16) کو ٹم ساؤدی نے بولڈ کیا، لیام پلنکٹ 15 پر ناٹ آؤٹ رہے، انگلینڈ نے 8وکٹ پر 305کا مجموعہ حاصل کیا، بولٹ، ہینری اور جمی نیشم نے 2، 2 پلیئرز کو پویلین بھیجا۔

تازہ ترین خبریں