09:07 am
پی سی بی کا نیاشاندار کرکٹ اسٹیڈیم تعمیر کرنےکا فیصلہ، اسٹیڈیم کس شہر میں تعمیر کیا جائےگا

پی سی بی کا نیاشاندار کرکٹ اسٹیڈیم تعمیر کرنےکا فیصلہ، اسٹیڈیم کس شہر میں تعمیر کیا جائےگا

09:07 am

لاہور(نیوز ڈیسک) پاکستان کرکٹ بورڈ کا اعلیٰ سطحی وفد 26 جولائی کو بگٹی اسٹیڈیم کوئٹہ کا دورہ کرے گا۔ وفد اسٹیڈیم کے اردگردکمرشل سہولیات کےمواقع پیدا کرنے کا جائزہ لے گا۔ دورہ پی سی بی بورڈ آف گورنرز کے اجلاس کے نتیجے میں کیا جارہا ہے۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا تھا کہ اسیڈگیم میں کمرشل سہولیات پیدا کرنے کے لیے اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔فیملیز اور نوجوانوں کے لیے صحت مندانہ سرگرمیاں پیدا کرنے سے روزگار کے ساتھ ساتھ پی سی بی کی آمدن بھی بڑھائی جاسکتی ہے۔
بگٹی اسیڈ یم کے اردگرد کمرشل سہولیات کے مواقع بڑھانے سے پیدا ہونے والی آمدن کو ریجنل کرکٹ کی ترقی پر خرچ کیا جائے گاجوپی سی بی کی حکمت عملی کے تحت الحاق شدہ یونٹس کی صلاحیتیں اور روزگار کے مواقع بڑھانے میں مدد دے گا۔وفد میں وزارتِ بین الصوبائی رابطہ کے سیکرٹری، اکبر درانی، شاہ دوست اور پی سی بی کے نمائندگان شامل ہوں گے۔ بی او جی نے اپنے گذشتہ اجلاس میں ایک ورکنگ گروپ کا قیام کیا تھا جس میں ایم ڈی پی سی بی وسیم خان، چیف آپریٹنگ آفیسر سبحان احمد، چیف فنانشل آفیسر بدر منظور خان اور ڈائریکٹر انفراسٹرکچر اینڈ رئیل اسٹیٹ خیام قیصر شامل ہیں۔ ورکنگ گروپ کے متعدد نمائندگان بھی وفد میں شامل ہوں گے۔دورے کے دوران ،پی سی بی کے کنسلٹنٹ ،نیشنل انجینئرنگ سروسز پاکستان کے نمائندگان وفد کو بریفنگ دیں گے۔ نیشنل اسیڈریم کراچی، قذافی اسٹیڈیم لاہور اور ملتان کرکٹ اسٹیڈیم کی طرح بگٹی اسٹیڈیم بھی پاکستان کرکٹ بورڈ کی ملکیت ہے۔ اس موقع پر سبحان احمد کا کہنا ہے " پی سی بی کا نظریہ صرفبلوچستان کی عوام کو کرکٹ کی بہتر سہولیات فراہم کرنا نہیں بلکہ ان کے لیے روزگار، آمدن اور تفریح کے مزید مواقع پیدا کرنا بھی ہماری ترجیح ہے۔" " بگٹی اسڈیایم کی مرمت کا پہلا مرحلہ مکمل ہوچکا۔ اب دوسرے مرحلے میں اسےکمرشلائز کیا جارہا ہے۔ یہ قدم بگٹی اسٹیڈیم کے وسائل مکمل کرنے کے لیے لیا جارہا ہے۔ جو خطے میں کرکٹ کی سرگرمیاں بڑھانے کے ساتھ ساتھ مقامی افراد کے لیے روزگار اور آمدن کے ذرائع بھی بڑھائے گا۔" سبحان احمد کا مزید کہنا ہے " پی سی بی کو یقین ہے کہ اس نئی حکمت عملی سے مقامی فیمیلز کو بگٹی اسٹیڈیم لانے میں مدد ملے گی۔" دوسری جانب ملک بھر کے اسٹیڈیمز کے انفراسٹرکچر میں جدت لانے کے لیےپی سی بی کے ویژن کے مطابق اعلیٰ افسران پر مشتمل ایک ٹیم نے 18 جولائی بروز جمعرات کو پنڈی کرکٹ اسٹیڈیم کا دورہ کیا۔ ٹیم شائقین ، کھلاڑیوں ، میچ آفیشلز ، میڈیا رائٹ ہولڈرز ، میڈیا نمائندگان اور کمرشل پارٹنرز کو دی گئی سہولیات کا جائزہ لے گی۔ اس دورے کا مقصد اسٹیڈیم کو نیسپاک نمائندگان کے باہمی تعاون سے مکمل کرکے سیزن 2019 تا 2020 سے قبل مرمتی کام مکمل کرنا ہے۔پی سی بی ایونٹس ٹیم جلد ملتان کرکٹ اسٹیڈیم کا دورہ بھی کرےگی۔ جس کے بعد ٹیم اپنی سفارشات مرتب کر کے نیسپاک کے حوالے کرے گی تاکہ پی سی بی کی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے اسٹیڈیم کی اپ گریڈیشن کا یہ عمل بڑے میچز سے قبل مکمل کرلیا جائے۔ پی سی بی کی جانب سے انفراسٹرکچر کی اپ گریڈیشن کا یہ عمل درجہ بدرجہ جاری ہے۔ جوقذافی اسٹیڈیم لاہور کی مرمت سے شروع ہونے والا یہ عمل ملتان کرکٹ اسٹیڈیم کی مرمت سے مکمل ہوگا۔