02:54 pm
مشتاق احمد نے کیون پیٹرسن کی بدسلوکی کا حیران کن واقعہ سنا ڈالا

مشتاق احمد نے کیون پیٹرسن کی بدسلوکی کا حیران کن واقعہ سنا ڈالا

02:54 pm

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) 1992کے ورلڈ کپ فائنل میں تین وکٹیں لے کر پاکستانی کی کامیابی میں نمایاں کردار ادا کرنے والے مشتاق احمد طویل عرصہ تک انگلینڈ کے بائولنگ کوچ بھی رہ چکے ہیں۔ انگلینڈ کےلئے اپنی کوچنگ کے زمانے کا ایک واقعہ سناتے ہوئے مشتاق احمد کہتے ہیں کہ یہ گورے بڑے بگڑے ہوئے ہوتے ہیں، جب انھیں غصہ آتا ہے تو چیزیں اٹھا اٹھا کر پھینکےہیں ، بال نوچتے ہیں اور شور مچاتے ہیں۔
میں ٹیم کے ساتھ ویسٹ انڈیز میں تھا، انگلینڈ اور ویسٹ انڈیز کا میچ ہورہا تھا۔ میں ڈریسنگ روم میں جا کر عصر کی نماز پڑھنا شروع ہو گیا۔ اسی دورا ن کیون پیٹرسن آئوٹ ہو کر غصے سے بھرا ہوا ڈریسنگ روم میں آیا اور اس نے بلے اٹھا کر ایک طرف پھینکتے ہوئے ٍمنہ سے مغلظات بکنا شروع کردیں۔میں نماز کے دوران ہی اس کی اس حرکت پر پریشان ہو گیا اور دل میں خیال آیاکہ یہ کچھ کوئی ایسی حرکت نہ کردے جس سے میری نماز میں خلل آجائے یا نماز کی بے حرمتی ہوجائے۔خیر میں نے نماز جاری رکھی اور یہ بھی محسوس کیا کہ وہ ایک طرف کھڑا مجھے دیکھ رہا ہے۔ میں نے نماز ختم کی اور تحمل سے پوری توجہ کے ساتھ دعا مانگنی شروع کی وہ اس دوران بھی چپ چپ کھڑا رہا۔ جب میں نماز ختم کرکے اٹھا تو اس سے کوئی بھی بات نہ کرنا مناسب سمجھتے ہوئے باہر کوریڈور میں چلا گیا۔ کچھ دیر بعد وہ میرے پاس آیا اور مجھ سے بار بار معذرت کرتے ہوئے کہا کہ وہ پہلے دیکھ ہی نہیں سکا کہ میں نماز پڑھ رہا ہوں۔میرے دل میں ایک عجیب سے اطمینان ہوا اور میں اللہ تعالیٰ کا شکر بجا لایا کہ دیار غیر میں بھی ایک منکر نماز کے دوران شور شرابہ کرنے پر شرمندہوا اور میری عزت افزائی ہوئی۔

تازہ ترین خبریں