01:15 pm
پارلیمنٹ کو مفلوج کیا جارہاہے

پارلیمنٹ کو مفلوج کیا جارہاہے

01:15 pm

پاکستان کی سیاست میں ایسے افراد متحرک ہیں، جنہیں ماضی میں غیر مرئی طاقتیںاقتدار میں لائی تھیں اور یہ سوچ کر لائی تھیں کہ یہ افراد ملک اور عوام کی بہتری کے لئے کام کرتے ہوئے شب وروز ایک کردیں گے، ابتدا میں ان افراد نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے معیشت اور معاشرت کو ترقی کی طرف گامزن کرنے کی کوشش کی، لیکن جب انہیں یہ احساس ہوا کہ اقتدار کے ذریعہ دولت بھی کمائی جاسکتی ہے، تو انہوںنے عوام کی خدمت کرنے کے بجائے اپنی خدمت کرنے کو ترجیح دی، بے پناہ کرپشن کرکے نہ صرف اپنا پیٹ بھرا بلکہ اپنے خاندان اور دوستوں کا بھی لیکن کرپشن اور اقرابا پروری کی حد ہوتی ہے، عدلیہ نے ثاقب نثار کی قیادت میں ان افراد پر ہاتھ ڈالا ، اس سے قبل پاناما دستاویز میں پاکستانی سیاست دانوں کے علاوہ تاجروں ، بیورکریٹس اور ریٹائرڈجرنلوں کا نام بھی سامنے آیا، تاہم سب سے زیادہ تکلیف دہ بات یہ تھی کہ جمہوریت کے نام پر سیاست دانوں نے ملکی وسائل کو لوٹنے میں ایک نیا ریکارڈ قائم کیا ہے، جن سیاست دانوں کے نام کرپشن کے سلسلے میں شہرت پاچکے ہیں ان میں میاں نواز شریف ، شہباز شریف اور آصف علی زرداری شامل ہیں، فریال تالپور جو آصف علی زرداری کی بہن ہیں، انہوںنے بھی اپنے بھائی کے ساتھ ملکر غیر معمولی کرپشن کا ارتکاب کیا ہے۔
 ان دونوں کے قریبی ساتھیوں کا کہنا ہے کہ انہیں روپے پیسے کی لت لگ گئی ہے، یہ ایک قسم کا مرض ہے، جو ایسے افراد کے ذہن میں پرورش پاتا ہے، جو اپنے ماضی کو ناجائز دولت کو حاصل کرکے حال اور مستقبل کو بہتر بنانے کی کوشش کرتے ہیں، چنانچہ ان ہی لوگوں کو فہرست میں لانے کی کوشش کی جارہی ہے، لیکن یہ کرپٹ عناصر اتنی آسانی سے اپنے آپکو گرفتاری کے لئے پیش نہیں کریں گے، بلکہ مزاحمت کرتے ہوئے سیاست اور معاشرت میں افراتفری پیدا کرنے کی کوشش کریں گے بلکہ شروع کردی ہے، پس پردہ زرداری، نوازشریف اور شہباز شریف حکومت وقت سے این آر او لینے کی کوشش کررہے ہیں، لیکن موجودہ حکومت عمران خان کی سربراہی میں ایسا نہیں کریگی، عمران خان نے واشگاف الفاظ میں کہہ رہا ہے کہ ان کرپٹ عناصر سے این آر او کرنے کا مقصد ملک میں غداری کرنے کے مترادف ہوگا، چنانچہ اب یہ عناصر پارلیمنٹ میں گڑبڑ کررہے ہیں، تاکہ قانون سازی کا کام نہ ہوسکے، ان کرپٹ عناصر کی ’’ حکمت عملی‘‘ایک خطرناک صورتحال کو جنم دے رہی ہے جسکے نتائج لنگڑی لولی جمہوریت ، ملک اور خودان کرپٹ سیاست دانوں کے لئے مناسب نہیں ہوگی۔
 ابتدا میں ان کرپٹ سیاست دانوں نے قوم کو یہ عندیہ دیا تھا کہ وہ موجودہ حکومت کو پانچ سال پورا کرنے دیں گے، بلکہ حالات ایسے پیدا کریں گے کہ یہ حکومت یکسوئی سے کام کرتے ہوئے عوام کے مسائل کو حل کرنے کی طرف توجہ دے سکے، ان کرپٹ سیاست دانوں کا یہ خیال تھا کہ اسطرح کی پیش کش کرکے موجودہ حکومت ان کے کرپشن کو معاف کردیگی یا پھر تھوڑی بہت رعایت دے گی، عمرا ن خان نے شہباز شریف کو پبلک اکائونٹس کمیٹی کا سربراہ بنا کر انہیں یہ پیغام دیا کہ پاکستان کے موجودہ خراب وخستہ حالات کے پیش نظر ہم سب کو مل کر کام کرنا چاہئے تاکہ ملک کو معاشی استحکام کی طرف لے جایا جائے ،لیکن شہباز شریف نے پارلیمنٹ میں جو تقریریں کی تھیں ان سے یہ اندازہ لگانا زیادہ مشکل نہیں تھا کہ وہ پارلیمنٹ کو چلنے نہیں دیں گے، بلکہ عمران خان کی حکومت کو بے دست وپا کرکے اسکو ختم کرنے کی کوشش کریں گے۔
 چنانچہ اس وقت یہ تینوں کرپٹ سیاست دان پارلیمنٹ کو مفلوج کرکے جہاں قانون سازی کے عمل کو روکنے کی کوشش کررہے ہیں، وہیں وہ عوام میں جمہوریت اور گورنس کے سلسلے میں مایوسی پھیلا رہے ہیں، ان کی یہ کوشش اس محاورے پر پوری اترتی ہے کہ ’’نہ کھیلیں گے اور نہ کھیلنے دیں گے‘‘ یہ کرپٹ سیاست دان مسلسل جھوٹ بول کر عوام کو یہ تاثر دے رہے ہیں کہ انہوںنے ایک پیسے کی بھی کرپشن نہیں کی ہے، موجودہ حکومت ان سے سیاسی انتقام لے رہی ہے ، حالانکہ ان کرپٹ سیاست دانوں کے خلاف کرپشن کے کیسز ماضی میں بنے تھے اور کمزور معیشت کی طرح یہ کیسزبھی موجود ہ حکومت کو ورثے میں ملے ہیں۔
 بہر حال اب باشعور لوگوں کو یہ احساس ہوگیا ہے کہ یہ کرپٹ عناصر پارلیمنٹ کو مفلوج کرکے ملک میں ایک آئینی بحران پیدا کرنا چاہتے ہیں، تاکہ سیاسی ومعاشرتی افراتفری پیدا ہونے کی صورت میں یہ لوگ صاف بچ جائیں گے، لیکن یہ ان کی خام خیالی کے ساتھ ساتھ منفی تباہ کن سوچ ہے، جو خود ان کے لئے اور ان کے حواریوں کے لئے غیر معمولی مصائب کا سبب بن سکتی ہے، کیا یہ کرپٹ عناصر اپنی ناجائز دولت اور اثاثوں کو بچانے کے لئے ملک کی سا  لمیت کو دائو پر لگا رہے ہیں؟ کم از کم مجھے تو ایسا ہی محسوس ہورہاہے، کیونکہ جس طرح جان بوجھ کر یہ عناصر پارلیمنٹ کی عزت اور اہمیت کو کھلے بندوں بے توقیر کررہے ہیں ان کا یہ طرز عمل صاف صاف ملک دشمنی پر مبنی ہے، ویسے بھی پاکستان کے اندر ایسے عناصر بہ درجہ اتم موجود ہیں جو پاکستان کا بھلا نہیں چاہتے ہیں، بلکہ ان کی خواہش ہے کہ کسی طرح پاکستان کو نقصان پہنچ جائے۔
 ان کرپٹ سیاست دانوں کی ڈور بھارت، اسرائیل اور افغانستان سے ہلائی جاتی ہے، جن میں کچھ این جی اوز بھی شامل ہیں جنہیں مغربی ممالک سے خیرات کا پیسہ ملتا ہے، جو اس پیسے سے بہتر کام انجام دینے کے بجائے پاکستان کے خلاف استعمال کررہے ہیں، تاکہ پاکستان کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کا بھارتی، اسرائیلی ایجنڈا پورا ہوسکے، اس پس منظر میں پاکستان کے باشعور افرار کو چاہئے کہ وہ ایسی کالی بھیڑوں کو اپنی صفوں میں نہ گھسنے دیں، اور ہر جگہ ان کے قول وفعل پر نظر رکھیں اوران کا سوشل بائیکاٹ کریں، نیز کرپٹ سیاست دانوں کی پارلیمنٹ کو مفلوج بنانے کی مذموم حرکتوں کو بھی بے نقاب کرنے کی کوشش کرنے کی اشدضرورت ہے، اگر پارلیمنٹ اس ہی طرح مفلوج رہی تو دوسرا’’نظام‘‘ معرض وجود میں آسکتاہے، جو ایسے تمام وطن دشمن عناصر کو ٹھکانے لگا کر ایک صاف اور شفاف طریقہ کار وضع کریگا جہاں قائد اعظم کے افکار کی روشنی میں پاکستان کو ہر گذرتے دن کے ساتھ مضبوط بنانے کی کوشش کی جائے گی، اس ہی ایکشن پلان میں پاکستان کی سا  لمیت اور خودمختاری کا راز مضمر ہے، ذراسوچئے۔

 

تازہ ترین خبریں

 رنگ روڈتحقیقاتی رپورٹ میں زلفی بخاری اور غلام سرور خان کا کوئی ذکر نہیں، فواد چوہدری

رنگ روڈتحقیقاتی رپورٹ میں زلفی بخاری اور غلام سرور خان کا کوئی ذکر نہیں، فواد چوہدری

 عمرا ن خان حکومت نے ایک روپیہ قرضہ واپس نہیں کیا،مفتاح اسماعیل

عمرا ن خان حکومت نے ایک روپیہ قرضہ واپس نہیں کیا،مفتاح اسماعیل

چوہدری پرویزالہٰی کیخلاف غیرقانونی بھرتیوں کی انکوائری بند کردی گئی

چوہدری پرویزالہٰی کیخلاف غیرقانونی بھرتیوں کی انکوائری بند کردی گئی

 ملک بھر میں بورڈ امتحانات ہر صورت ہوں گے ،این سی او سی

ملک بھر میں بورڈ امتحانات ہر صورت ہوں گے ،این سی او سی

وزیر خز انہ نے ای سی سی کا اجلاس کل طلب کرلیا

وزیر خز انہ نے ای سی سی کا اجلاس کل طلب کرلیا

ملک کو تباہ کردیا گیا ہے،ایسی بدترین حکومت آج تک نہیں دیکھی،شہبازشریف

ملک کو تباہ کردیا گیا ہے،ایسی بدترین حکومت آج تک نہیں دیکھی،شہبازشریف

چوہدری نثار کااسمبلی کی نشست چھوڑنے کا فیصلہ انکی جگہ کون الیکشن لڑیگا؟ممکنہ نام سامنے آگیا

چوہدری نثار کااسمبلی کی نشست چھوڑنے کا فیصلہ انکی جگہ کون الیکشن لڑیگا؟ممکنہ نام سامنے آگیا

عبدالعلیم خان کو دوبارہ صوبائی کابینہ میں شامل کرنے کا فیصلہ

عبدالعلیم خان کو دوبارہ صوبائی کابینہ میں شامل کرنے کا فیصلہ

وزیراعظم کل ایک روزہ دورہ پر پشاور جائیں گے

وزیراعظم کل ایک روزہ دورہ پر پشاور جائیں گے

ساڑھے 7 ہزار والے بانڈز پرپابندی کیخلاف درخواست پر فیصلہ آگیا

ساڑھے 7 ہزار والے بانڈز پرپابندی کیخلاف درخواست پر فیصلہ آگیا

حکومت جاتے ہی وزراءپہلی رات جہاز سے بھاگ جائیں گے،شاہد خاقان عباسی

حکومت جاتے ہی وزراءپہلی رات جہاز سے بھاگ جائیں گے،شاہد خاقان عباسی

شاہد خاقان عباسی کی ایئر لائن عالمی وبا کے مریضوں کو پاکستان لانے میں ملوث،اجازت نامہ منسوخ

شاہد خاقان عباسی کی ایئر لائن عالمی وبا کے مریضوں کو پاکستان لانے میں ملوث،اجازت نامہ منسوخ

شہدا پیکج کے تحت کورونا سے جاں بحق ہیلتھ ورکرز کے ورثا میں چیک تقسیم

شہدا پیکج کے تحت کورونا سے جاں بحق ہیلتھ ورکرز کے ورثا میں چیک تقسیم

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس،اہم فیصلے متوقع

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس،اہم فیصلے متوقع