02:28 pm
 ہائیبرڈ وار: پاکستان کو کیا کرنا چاہیے؟

ہائیبرڈ وار: پاکستان کو کیا کرنا چاہیے؟

02:28 pm

ایک جانب جہاں عالمگیریت کی بنیاد پر  دنیا کے مختلف  لوگوں کو یک جا کیا گیا ، وہیں مختلف ممالک نے اسی تصور کے تحت گروہ بندی کرکے دنیا پر اپنی بالادستی جمانے کے لیے اس تصور کا بے دریغ استعمال کیا۔ شام، عراق، افغانستان اور یمن میں ہم طاقت کے لیے کھینچ تان کو اس کی مثال کے طور پر دیکھ سکتے ہیں۔ اکثر اب روایتی جنگیں ’’ہائبرڈ جنگ‘‘ کے ساتھ نہیں چل پاتیں اور اس وقت دنیا کو اپنی لپیٹ میں لیے ہوئے ہیں۔ 
 
ہائبرڈ وار فیئر کی حکمت عملی میں اقتصادی، سیاسی اور سفارتی حربوں کا استعمال ہوتے ہیں، جن کے تحت پابندیاں اور کسی ملک کے سیاسی عمل میں مداخلت شامل ہے۔ اسی طرح روایتی جنگی حربوں کے ساتھ اس کا امتزاج تیار کرنے کے لیے حزب اختلاف کے گروہوں کو مسلح کیا جاتا ہے، سائبر حملے اور دیگر ہتھیار بھی اس حکمت عملی میں شامل ہوتے ہیں۔ خبروں میں جعل سازی، مسخ شدہ خبریں، سوشل میڈیا اور خفیہ اداروں کی کارروائیاں بھی اس کے اہم ہتھیار ہیں۔ ٹیکنالوجی کی ترقی کی وجہ سے مختلف مقاصد کے لیے ان ہتھیاروں کو یک جا کرکے استعمال کرنا آسان ہوگیا ہے، بیک وقت مختلف حربے استعمال کیے جاسکتے ہیں اور درپیش صورت حال سے ان کی مطابقت بھی پیدا کی جاسکتی ہے۔پاکستان جیسے ممالک کے لیے اس میں بالخصوص یہ خطرہ ہے کہ یہاں دہشت گردی کو اس جنگ کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ یہ ایک معلوم حقیقت ہے کہ اسامہ بن لادن القاعدہ کے عفریت کو پیدا کرنے والوں کے قابو سے باہر ہونے سے پہلے سوویت یونین کے خلاف مغرب کے آلہ کار کے طور پر استعمال ہوا۔ یہ بھی سب جانتے ہیں کہ عراق پر امریکی جارحیت کے لیے جعلی خبروں کو بنیاد بنایا گیا جس کے نتیجے میں صدام حسین کی حکومت کا  تختہ الٹایا  گیا اور شیعہ مسلح تحریکوں کو کچلنے کے لیے اس کی سنّیوں کی اکثریت رکھنے والی فوج کے افسران اور سابق اہل کاروں پر مشتمل داعش جیسی تنظیم کھڑی کی گئی۔  
خفیہ مداخلت جنگی حربوں میں کوئی نیا طریقہ نہیں۔ سوشل میڈیا ، انٹرنیٹ کی مدد سے حاصل ہونے والی کثیر معلومات کے ذریعے پروفائلنگ اور صارفین کی پسندو ناپسند تک رسائی کے بعد اس کی رفتار میں اضافہ ہوا۔ اس معلومات  سے  استعمال کنندگان کا سیاسی رجحان معلوم کرنا اب مشکل نہیں۔ پاکستان کو 1980ء سے ہائیبرڈ جنگ کا سامنا ہے لیکن بظاہر ہم نے اس کے مقابلے کے لیے کوئی حکمت عملی ترتیب نہیں دی۔ اس کی مختلف وجوہ ہیں۔ بنیادی ترین وجہ تو یہ ہے کہ برصغیر میں سمجھ بوجھ کا استعمال کرنے کے بجائے افواہوں اور افسانوں پر کان دھرنے کا رجحان عام ہے، اس کے ساتھ ہمارے ہاں عوام میں آگاہی کی بہت کمی ہے، وہ اسٹیٹ بینک آف پاکستان، خزانہ و خارجہ کی وزارتوں وغیرہ جیسے  سرکاری اداروں اور مناصب کی عوام مفاد سے متعلق اہمیت کا ادارک نہیں رکھتے۔
پاکستان کی جانب سے کسی بھی دہشت گردی سے خود کو دور رکھنے اور افغانستان میں امن عمل کی حمایت کے فیصلے نے ہمارے لیے عالمی برادری میں بہتر تعلقات کیلئے نئے در وا کیے۔ اس مثبت پیش رفت کے باوجود ہائبرڈ جنگ کا خطرہ ٹلا نہیں بلکہ اس میں شدت آتی جارہی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ پاکستان پر ان جنگی حربوں کے ذریعے ہونے والے حملوں کو روکنے کیلئے باقاعدہ حکمت ترتیب دینی پڑے گی۔ مگر یہ کیسے ممکن ہوگا؟ ظاہر ہے کہ سب سے پہلے  سرکاری اداروں اور عوامی سطح پر ہائبرڈ وارفیئر سے متعلق آگاہی عام کی جائے۔ یہ جنگ صرف فوج یا قومی سلامتی کے ادارے تنہا نہیں لڑ سکتے، اس کیلئے اجتماعی آگاہی اور اقدامات کی ضرورت ہوگی۔ اس کے لیے حکومت کا اعتماد بحال کرنے کی ضرورت ہے اور میڈیا کو تصدیق شدہ معلومات کی فراہمی یقینی بنانا چاہیے۔ جھوٹ اور اشتعال انگیزی کو بے نقاب کرنے اور اس پر فوری سزاؤں میں کوئی رعایت نہیں دینا چاہیے۔ سرکاری اور ریاستی اداروں کو خطرات اور انسدادی حکمت عملی سے متعلق آگاہ رکھا جائے۔ اگر کسی ایسے کمپیوٹر وائرس کی تشخیص ہوجائے جو نجی معلومات یا اداروں کے پروگرامز کو متاثر کرسکتے ہوں، یا کرنسی کی قدر میں ردوبدل کے لیے کی جانے والی خفیہ چالبازی سے متعلق معلومات حاصل ہوں تو انھیں عوام کے سامنے لانا چاہیے، اس کے لیے نہ صرف انتباہ جاری ہو بلکہ انسداد کے لیے حکمت عملی بھی وضع کی جائے۔     ( جاری ہے)

تازہ ترین خبریں

نویں اور بارہویں جماعت کے طلبا کو لازمی مضامین میں اضافی نمبر دیے جائیں گے

نویں اور بارہویں جماعت کے طلبا کو لازمی مضامین میں اضافی نمبر دیے جائیں گے

شادی کی تقریب پر آسمانی بجلی گرنے سے16افراد ہلاک

شادی کی تقریب پر آسمانی بجلی گرنے سے16افراد ہلاک

 جس وقت کشمیر فروشی کی جارہی تھی اس وقت کہا گیا ورلڈ کپ جیت کر آئے۔ مریم اورنگزیب 

 جس وقت کشمیر فروشی کی جارہی تھی اس وقت کہا گیا ورلڈ کپ جیت کر آئے۔ مریم اورنگزیب 

وزیر اعظم کو آزاد کشمیر کےلئے لکی نمبر اور لکی نیم بتایا گیا

وزیر اعظم کو آزاد کشمیر کےلئے لکی نمبر اور لکی نیم بتایا گیا

ملک بھر کے تعلیمی ادارے کھلے رکھنے کا فیصلہ

ملک بھر کے تعلیمی ادارے کھلے رکھنے کا فیصلہ

ن لیگ دو ٹکروں میں تقسیم ۔۔ آزاد کشمیر انتخابات ہارنےکےبعد قیادت کے راستے جدا ہوگئے ہیں ۔ فرخ حبیب

ن لیگ دو ٹکروں میں تقسیم ۔۔ آزاد کشمیر انتخابات ہارنےکےبعد قیادت کے راستے جدا ہوگئے ہیں ۔ فرخ حبیب

کراچی میں منی ایکسچینج کیش وین پر فائرنگ ۔۔۔۔ دو افراد جاں بحق ہوگئے

کراچی میں منی ایکسچینج کیش وین پر فائرنگ ۔۔۔۔ دو افراد جاں بحق ہوگئے

کورونا کے بڑھتے کیسز کا معاملہ ۔۔۔۔ پنجاب کے چار اضلاع میں مزارات بند کرنے کا فیصلہ

کورونا کے بڑھتے کیسز کا معاملہ ۔۔۔۔ پنجاب کے چار اضلاع میں مزارات بند کرنے کا فیصلہ

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا بلو چ رجمنٹ ایبٹ آباد کاد ورہ

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا بلو چ رجمنٹ ایبٹ آباد کاد ورہ

ملک بھر میں مزید بارشوں کی پیشگوئی ۔۔۔۔ محکمہ موسمیات نے رپورٹ جاری کردی 

ملک بھر میں مزید بارشوں کی پیشگوئی ۔۔۔۔ محکمہ موسمیات نے رپورٹ جاری کردی 

 سول سوسائیٹیز اور انسانی حقوق کی تنظیمیں بھارتی ریاستی دہشت گردی کو بے نقاب کریں۔ شاہ محمود قریشی

سول سوسائیٹیز اور انسانی حقوق کی تنظیمیں بھارتی ریاستی دہشت گردی کو بے نقاب کریں۔ شاہ محمود قریشی

کراچی میں منی ایکسچینج کیش وین پر فائرنگ ۔۔۔۔ دو افراد جاں بحق ہوگئے

کراچی میں منی ایکسچینج کیش وین پر فائرنگ ۔۔۔۔ دو افراد جاں بحق ہوگئے

کے پی ایل نے ثابت کیاہے کہ ہندوستان اور مودی سرکار کی دم پر پاؤں رکھا ہے۔ عمر ایوب

کے پی ایل نے ثابت کیاہے کہ ہندوستان اور مودی سرکار کی دم پر پاؤں رکھا ہے۔ عمر ایوب

نذیر چوہان نے ترین گروپ کو خیرباد کہہ دیا 

نذیر چوہان نے ترین گروپ کو خیرباد کہہ دیا