02:26 pm
اگر یہ منافقت نہیں تو پھر کیا ہے؟

اگر یہ منافقت نہیں تو پھر کیا ہے؟

02:26 pm

کھرب پتی مجرموں کو میڈیا ’’ہیرو‘‘ بناکر کب تک پیش کرتا رہے گا؟ جیل سے لے کر ہسپتالوں کے کمروں تک‘ ہسپتالوں سے لے کر عدالتوں تک جب ٹی وی چینلز کے کیمرے کھرب پتی ملزمان اور مجرمان کو لائیو کور کریں گے تو اس ملک میں قانون کی حکمرانی کیا خاک قائم ہوگی؟
 
نواز شریف‘ شہباز شریف‘ سعد رفیق‘ آغا سراج درانی اور ان جیسے دیگر کھرب پتی نیب کے ملزمان کیا کشمیر کے فاتح ہیں کہ جو ہمارا الیکٹرانک میڈیا ان کی عدالتوں‘ جیلوں اور ہسپتالوں میں بھی لائیو کوریج کرکے ملک میں فتنہ و فساد پھیلانے کی کوششیں کرتا رہتا ہے؟پاکستان کی ہر جیل قیدیوں سے بھری ہوئی ہے‘ جن جیلوں میں3 ہزار قیدیوں کی گنجائش ہے وہاں چھ سات ہزار سے زائد قیدی ٹھونسے ہوتے ہیں … ملک بھر کی جیلوں میں بند لاکھوں قیدیوں میں سے جس سے بھی پوچھا جائے وہ اپنی بے گناہی کی دہائیاں دینا شروع کر دیتا ہے مگر الیکٹرانک چینلز نے ان لاکھوں قیدیوں میں سے تو کسی ایک کو بھی ایسی کوریج کا سواں حصہ بھی نہیں بخشا جیسی کوریج نواز و شہباز یا آغا سراج کے حصے میں آتی ہے‘ کیا سال ہا سال سے جیلوں میں قید ان لاکھوں قیدیوں میں میڈیا صرف نواز شریف ‘ شہباز شرف‘ خواجہ برادران‘ شرجیل میمن یا آغا سراج درانی کو ہی انسان سمجھتا ہے؟
اگر قیدیوں کے ’’حق‘‘ میں آواز اٹھانا میڈیا کا منشور ہے تو پھر باقی لاکھوں قیدی اس ’’حق‘‘ سے محروم کیوں؟نواز شریف کی گاڑی جیل ‘ ہسپتال یا عدالت کے احاطے میں داخل ہو یا باہر نکلے  ‘ آغا سراج درانی نیب عدالت میں پیش ہونے کے لئے آئیں یا ان کے گھر میں نیب کے افسران ریڈ کریں‘ ٹی وی چینلز کے کیمرے ہمہ وقت ان پر فوکس رہتے ہیں تو کیوں؟
کوئی ان چینلز کے پالیسی میکرز سے پوچھے کہ کیا پاکستانی قوم کے یہی مسائل رہ گئے ہیں کہ ان کو ہر وقت کرپٹ سیاست دانوں کی جھلکیاں ہی دکھائی جائیں … کاش کہ سپریم کورٹ عدالتوں میں ملزمان کی لائیو کوریج پر پابندی عائد کر دے؟
اے کاش کہ حکومت ہسپتالوں اور جیلوں میں جاتے اور آتے ہوئے نیب ملزمان کی لائیو کوریج پر پابندی عائد کر دے تو نیب کے ان کھرب پتی ملزمان کی ساری اکڑفوں نکل جائے گی۔سپیکر سندھ اسمبلی سراج درانی کی نیب کے ہاتھوں گرفتاری کے بعد پیپلز پارٹی کے قائدین اور راہنمائوں نے ایک قومی ادارے نیب کے خلاف جس طرز عمل کا مظاہرہ کیا اس نے ایک دفعہ پھر پیپلز پارٹی کے چہرے پر پڑا ہوا سیکولر ازم کا نقاب اتار کر اندر سے شدت پسندی کا جن برآمد کرنے کا کارنامہ سرانجام دے  ڈالا‘ یہاں تک کا جارہا ہے کہ نیب کے جن افسران نے آغا سراج درانی کے گھر تلاشی لی تھی ان کے نام بتائے جائیں تاکہ پیپلز پارٹی کی خواتین ان کے گھروں کا گھیرائو کریں۔
وزیر اعلیٰ سندھ نے پریس کانفرنس میں آغا سراج کے گھر مارے جانے والے نیب افسران کے چھاپے کی ایسی مظلومانہ انداز میں تصویر کشی کی کہ جسے دیکھ کر لوگ یہ سوچنے پر مجبور ہوگئے کہ جیسے آصف علی زرداری کے سندھ میں بسنے والے کروڑوں عوام کو پیپلز پارٹی کی حکومت نے سکھ اور چین بخشا ہوا ہے ‘ ہاں البتہ ظلم کا نشانہ صرف سراج درانی ہی بن رہے ہیں؟نیب کے افسران سرچ ورانٹ کے ساتھ اگر آغا سراج درانی کے گھر کی تلاشی لے لیں تو پیپلز پارٹی سیکولر اور لبرل ازم کا لبادہ اتار کر شدت پسندی پر اتر آئے ‘ لیکن چار سو سے زائد انسانوں کو جعلی پولیس مقابلوں میں مارنے والے رائو انوار کو آصف زرداری ’’بہادر بچہ‘‘ قرار دیں تو کسی کے کانوں پر جوں بھی نہ رینگے تو کیوں؟ آغا سراج درانی کے گھر نیب کی تلاشی کے خلاف پریس کانفرنس کھڑکانے والے وزیر اعلیٰ سندھ سے کوئی پوچھے کہ ان کی پولیس‘ کراچی اور سندھ کے کروڑوں شہریوں کے ساتھ جو سلوک کرتی ہے کیا وہ سب درست ہوتا ہے؟
آغا سراج درانی کے گھر نیب اہلکاروں کی تلاشی پر جو طوفان سندھ حکومت نے نیب کے خلاف اٹھانے کی کوشش کی ‘ وہ طوفان! رائو انوار جیسے قاتل کے خلا ف کیوں نہ اٹھایا؟ ہر وز سندھیوں‘ مہاجروں اور دیگر قومیتوں سے تعلق رکھتے بے گناہ شہریوں کے گھروں میں گھس کر پولیس ان کی جو  درگت بناتی ہے ‘ پیپلز پارٹی نے ان کے خلاف کب کب ایکشن لیا؟
سچی بات ہے کہ ہمارے معاشرے کو کرپٹ مافیا نے لفافہ میڈیائی صفات کے ذریعے یرغمال بنا رکھا ہے… نواز شریف کا علاج ہوگیا‘ نواز شریف کا علاج نہیں ہوا‘ وہ ہسپتال چلا گیا‘ و ہ ہسپتال نہیں گیا… بھلا ان معاملات سے اس قوم کو کیا لینا دینا؟ الیکٹرانک میڈیا کے پنڈت  اور پردھان آخر کیوں اس قوم کا وقت برباد کرنے کو تلے بیٹھے ہیں؟
مختلف سیاست دانوں کی ایک دوسرے کو دی جانے والی دھمکیاں‘ ایک دوسرے پر اچھالا جانے والا گند میڈیا لائیو نشر کرکے کس کو فائدہ پہنچا رہا ہے؟ یہ معاشرہ کہ جو پہلے ہی تباہی کے دہانے پر پہنچا ہوا ہے‘ بے حیائی اور فحاشی نے ہر طرف ڈیرے ڈال رکھے ہیں ۔ اس معاشرے کو کرپٹ سیاستدانوں کی حمایت میں کھڑا کرنے کی کوششیں کرنا معاشرے کو مزید تباہ کرنے کے مترادف ہے ۔
سوال یہ ہے کہ اگر نیب مولانا فضل الرحمن سمیت کسی اور عالم دین کے خلاف کیسزز تیار کرکے انہیں گرفتار کرتا  اور نیب افسران ان کے گھروں میں گھس  کر اس طرح تلاشیاں لیتے تو کبھی میڈیا اس طرح سے ان کی کوریج کرتا؟ ہرگز نہیں‘ بلکہ نیب کے شکنجے میں پھنسنے والے ان مولویوں کو بنیاد بناکر نعوذ باللہ مذہب اسلام کو رگیدنے سے بھی گریز نہ کرتا‘ مذہبی کارکن یا مولوی اگر ناموس رسالت کے دفاع کی بات کریں تو پیپلز پارٹی‘ ن لیگ اور ان کا غلام میڈیا مذہبی کارکنوں اور مولویوں پر شدت پسندی کے الزام لگاتا ہے ‘ لیکن اگر ن لیگ اور پیپلز پارٹی اپنے اپنے کریٹ رہنمائوں کے دفاع میں قومی اداروں کے خلاف لڑنے بھڑنے پر آمادہ ہو اور میڈیا ان کی بڑھکوں کو نشر کرے تو یہ پھر بھی اعتدال پسند اور لبرل ہی رہتے ہیں‘ اگر یہ منافقت نہیں تو پھر کیا ہے؟
 

تازہ ترین خبریں

پاکستان پہلےسےکہہ رہاتھاپلوامہ حملہ ڈرامہ ہےبھارت نےگزشتہ 20سال سےدہشتگردی کاڈھونگ رچایاتھا،۔ معید یوسف 

پاکستان پہلےسےکہہ رہاتھاپلوامہ حملہ ڈرامہ ہےبھارت نےگزشتہ 20سال سےدہشتگردی کاڈھونگ رچایاتھا،۔ معید یوسف 

 تحریک انصاف نے سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر کے نام کا فیصلہ کر لیا

تحریک انصاف نے سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر کے نام کا فیصلہ کر لیا

افغانستان میں موجود امریکی فوج 20سالوں کی کم ترین سطح پر آگئی

افغانستان میں موجود امریکی فوج 20سالوں کی کم ترین سطح پر آگئی

تحریک انصاف اور ایم کیو ایم میں معاملات طے پا گئے

تحریک انصاف اور ایم کیو ایم میں معاملات طے پا گئے

سندھ میں چار ہزار افسران اور ملازمین کے خلاف کارروئی شروع

سندھ میں چار ہزار افسران اور ملازمین کے خلاف کارروئی شروع

حکومت نے نعیم بخاری کو چئیرمین پی ٹی وی کےعہدے سے ہٹا دیا

حکومت نے نعیم بخاری کو چئیرمین پی ٹی وی کےعہدے سے ہٹا دیا

کوئٹہ میں دھماکہ، دو افراد نشانہ بن گئے

کوئٹہ میں دھماکہ، دو افراد نشانہ بن گئے

فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ اس لیے نہیں ہو پا رہا کیونکہ کٹہرے میں کھڑے شخص کا نام نواز شریف نہیں ہے بلکہ عمران خان ہے۔ نواز شریف 

فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ اس لیے نہیں ہو پا رہا کیونکہ کٹہرے میں کھڑے شخص کا نام نواز شریف نہیں ہے بلکہ عمران خان ہے۔ نواز شریف 

   انقلابی شاعر کا نالائق بیٹا شبلی فراز شاہی گداگر بن چکا ہے،  شازیہ مری  

   انقلابی شاعر کا نالائق بیٹا شبلی فراز شاہی گداگر بن چکا ہے،  شازیہ مری  

دیر سے آنے پر گاہک کا ڈلیوری بوائے سےکھانا لینے پر انکار

دیر سے آنے پر گاہک کا ڈلیوری بوائے سےکھانا لینے پر انکار

ملائیشیا میں پی آئی اے طیارےکی قبضےکامعاملہ ۔۔ لیز پر لیے گئے طیارے کی کمپنی کا مالک اور ڈائریکٹر بھارتی نکلے

ملائیشیا میں پی آئی اے طیارےکی قبضےکامعاملہ ۔۔ لیز پر لیے گئے طیارے کی کمپنی کا مالک اور ڈائریکٹر بھارتی نکلے

وفاقی وزیر توانائی متحدہ عرب امارت کے اقامہ ہولڈر نکلے ، پیپلز پارٹی نے اقامہ جاری کردیا 

وفاقی وزیر توانائی متحدہ عرب امارت کے اقامہ ہولڈر نکلے ، پیپلز پارٹی نے اقامہ جاری کردیا 

خیبر پختونخوا میں اربوں روپےکی گیس چوری کا انکشاف

خیبر پختونخوا میں اربوں روپےکی گیس چوری کا انکشاف

بھارت کا مکروہ چہرہ ہمیشہ بے نقاب کیا اور کرتے رہینگے ۔۔ معید یوسف 

بھارت کا مکروہ چہرہ ہمیشہ بے نقاب کیا اور کرتے رہینگے ۔۔ معید یوسف