09:42 am
بھارت کا سعودی وزیرخارجہ سے بات چیت سے انکار

بھارت کا سعودی وزیرخارجہ سے بات چیت سے انکار

09:42 am

٭امریکہ کی طرف سے پاکستان کو ڈومور (کچھ اور کرو!) کا مطالبہ! ’’تم لوگوں نے دہشت گردی روکنے کے لئے جو کیا، ٹھیک ہے مگر یہ کافی نہیں، مزید کارروائیاں کرو‘‘ امریکی ترجمان جان بولٹن! امریکی ترجمان کے منہ میں نریندر مودی بول رہا ہے۔ بھارتی سفارتکار پاکستان کے خلاف ہر جگہ کارفرما ہیں۔ ایف ٹی ایف، آئی ایم ایف کو پاکستان کے خلاف فرضی شواہد دیئے جا رہے ہیں۔ کسی امریکی وزیر یا ترجمان نے کبھی پاکستان کے حق میں کلمہ خیر نہیں کہا۔ بدقسمتی کہ امریکہ میں آصف زرداری کا چہیتا سابق سفیر حسین حقانی پوری طرح بھارت کی مدد کر رہا ہے۔ اس کی پاکستان دشمنی اس حد تک بڑھ گئی ہے کہ خود پیپلزپارٹی نے اسے غدار قرار دے دیا ہے۔
٭بھارت نے سعودی عرب کے وزیرخارجہ عادل الجبیر سے پاکستان کے ساتھ کشیدگی پر بات کرنے سے انکار کر دیا۔ بھارتی میڈیا کے مطابق سعودی عرب کے وزیرخارجہ دہلی میں صرف پانچ گھنٹے ٹھہرنے کے بعد واپس چلے گئے۔ ان کے دورے سے پہلے ہی ان تک پیغام پہنچا دیا گیا کہ بھارت کو اس معاملہ میں ان کی ثالثی کی پیش کش منظور نہیں نہ ہی وہ ان سے اس موضوع پر کوئی بات چیت کرے گا۔ سعودی وزیرخارجہ نے پاکستان کے بعد اگلے روز دہلی جانا تھا، اس پیغام پر وہ اسلام آباد سے واپس چلے گئے۔ بھارت کے اس ہتک آمیز رویے سے ان کی بہت سبکی ہوئی تھی تاہم سفارتی اور سیاسی مصلحت کے تحت وہ چند روز بعد مختصر دورے پر دہلی چلے گئے (سعودی عرب بھارت میں 44 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کر رہا ہے) دہلی میں ان کی نریندر مودی اور وزیرخارجہ سشما سوراج سے مختصر ملاقاتیں ہوئیں۔ بھارتی حکام نے ان کے ساتھ بات چیت کو صرف سعودی بادشاہ سلمان بن عبدالعزیز کے آئندہ دورہ بھارت تک محدود رکھا جو چند ماہ کے بعد متوقع ہے۔
٭بھارت میں 11 اپریل سے انتخابات شروع ہو رہے ہیں۔ قواعد کے مطابق حکومت کے بیشتر اختیارات الیکشن کمیشن کے پاس جا چکے ہیں۔ اب حکومت کسی بھی افسر کا تقرر یا تبادلہ نہیں کر سکتی، تمام انتظامی مشینری الیکشن کمیشن کے پاس ہے۔ چیف الیکشن کمشنر کسی بھی اعلیٰ افسر کو معطل یا تبدیل کر سکتا ہے، صوبائی حکومتوں کے انتظامی احکام منسوخ کر سکتا ہے۔ انتخابی قوانین کی خلاف ورزی پر سخت سزا دے سکتا ہے۔ 
٭ پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے لاہور کی جیل میں نوازشریف سے ملاقات کی۔ جپھیاں پڑ گئیں۔ نوازشریف نے شکر والی چائے پلائی۔ بہت محبت پیار کی باتیں ہوئیں۔ بلاول نے دکھ کا اظہار کیا کہ تین بار وزیراعظم بننے والا جیل میںہے! اس نے نوازشریف کو اپوزیشن کے ساتھ گرینڈ الائنس بنانے کی تجویز پیش کی۔ نوازشریف نے ہنس کر ٹال دیا۔ مریم نواز نے بلاول کو مدبر سیاسی رہنما قرار دے دیا۔ بلاول نے کراچی میں علاج کی پیش کش بھی کی۔ قارئین کرام! آیئے ذرا پیچھے چلتے ہیں۔ مختصر مختصر چند باتیں!
Oگزشتہ انتخابات کی مہم کے دوران بلاول بھٹو نے کہا کہ میاں نوازشریف کے خلاف اتنے جرائم ہیں، انہیں جیل جانا ہو گا…آصف زرداری نے کہا کہ شریف خاندان کو باہر سے اپنی دولت واپس پاکستان لانا ہو گی …شہباز شریف نے 2013ء کے انتخابات میں کہا ’’ہم آصف زرداری کوسڑک پر گھسیٹیں گے، پیٹ پھاڑ کر ملک کی لوٹی ہوئی دولت واپس لائیں گے …پچھلے انتخابات میں آصف زرداری کا اعلان، ن لیگ سے کوئی اتحاد نہیں ہو سکتا، نوازشریف کے ساتھ کبھی کوئی مذاکرات نہیں ہوں گے…! ذرا اور پیچھے چلیں…نوازشریف کے دور میں آصف زرداری جیل میں تھے، پیپلزپارٹی نے الزام لگایا کہ جیل میں ان پر تشدد ہو رہا ہے، ان کی زبان کاٹ دی گئی ہے … آصف زرداری کی صدارت کے دوران بھوربن (مری) میں نوازشریف کی ملاقات! معطل ججوں کی بحالی کے بارے میں بات چیت۔ خبروں کے مطابق آصف زرداری نے بیچ میں قرآن مجید رکھ کر جج بحال کرنے کا وعدہ کیا۔ پھر ملاقات کے بعد جج بحال کرنے سے یہ کہہ کر انکار کر دیا کہ وعدے کوئی قرآن و حدیث نہیں ہوتے کہ اِنہیں پورا کیا جائے۔ (مذہبی جماعتیں خاموش رہیں)… آصف زرداری صدر تھے، حسین حقانی نے پاک فوج کے خلاف کارروائی کے لئے آصف زرداری کو دکھا کر امریکی وزارت دفاع کے ذریعے امریکی صدر کو مراسلہ بھیجا۔ نوازشریف نے زرداری کے خلاف غداری کے الزام میں سپریم کورٹ میں مقدمہ  دائر کر دیا۔ کالا کوٹ پہن کر خود عدالت عظمیٰ میں گئے…ججوں کو بحال نہ ہونے پر نوازشریف نے اسلام آباد پر لشکر کشی کر دی۔ گوجرانوالہ پہنچے تو جج بحال ہو گئے…بہت سی اور باتیں بھی ہیں۔ چلئے بلاول اور چودھری اعتزاز احسن کی ’ہم خیالی‘ دیکھئے …
O بلاول نے کہا ’’تین بار وزیراعظم رہنے والے کو جیل میںبھیجنا افسوسناک ہے، میاں صاحب آپ کے خلاف سازش کی جا رہی ہے۔ اسی جیل میں میرے نانا اور والد بھی رہ چکے ہیں…‘‘
O پیپلزپارٹی کے سرکردہ سینئر رہنما، سینٹ میں سابق اپوزیشن لیڈر چودھری اعتزاز احسن کا شائع شدہ بیان: ’’نوازشریف حوصلہ ہار چکے ہیں۔ دونوں بھائیوں کو جیل دکھائی دے رہی ہے۔ یہ مجرم لوگ ہیں، کسی طرح چاہتے ہیں کہ انہیں علاج کے لئے لندن بھیجا جائے…! ان کے استقبال کے لئے وہاں فراری کیمپ میں تین مفرور افراد موجود ہیں (حسین نواز، حسن نواز، اسحاق ڈار)… ان کے حوصلے پست ہو گئے ہیں، اسی لئے کہہ رہے ہیں کہ بلاول آ کر ملیں۔ یہ شدید بیماری کا کہتے ہیں مگر علاج نہیں کراتے اورن لیگ مشکل میں ہوتی ہے تو پائوں پکڑ لیتی ہے، مضبوط ہو جائے تو گردن پکڑ لیتی ہے۔‘‘
٭سندھ اسمبلی کے سپیکر آغا سراج درانی کے سارے اہل خانہ، اہلیہ، بیٹا، بیٹیاں اور بہو،امریکہ چلے گئے۔ ان لوگوں کو بھی نیب نے طلب کیا تھا۔ آغا سراج درانی کے خلاف آمدنی سے زیادہ اثاثوں کے بارے میں تحقیقات کررہی ہے۔ ان کے گھر سے بھاری کرنسی وغیرہ کے نکلنے کے بعد مزید انکشاف ہوا ہے کہ ایک نجی بنک کے لاکر سے 10 رولیکس گھڑیاں نکلی ہیں، ہر گھڑی کروڑوں کی مالیت کی ہے۔ نیز ایبٹ آباد میں دو کروڑ 70 لاکھ کی جائیداد کے علاوہ ڈیفنس کراچی میں چار کروڑ کا ایک بنگلہ بھی دریافت ہوا ہے۔ نیب نے ایک بیان میںکہا ہے کہ اس کے لئے آغا درانی سے تحقیقات میں مشکل پیش آ رہی ہے، وہ صبح ناشتہ کر کے اسمبلی میں چلے جاتے ہیں۔ قارئین کرام یہ رویہ ایک ایسے شخص کا ہے جو ایک بڑی قانون ساز اسمبلی کا سپیکر اور قانون سازی کا کسٹوڈین ہے۔
٭ایک خوش خبری: فیصل آباد کے ایوب زرعی تحقیقاتی انسٹی ٹیوٹ نے خوش خبری دی ہے کہ اس نے 10 سال کی مسلسل تحقیق اور کوشش کے بعد ٹماٹرکے ہائبرڈ بیج سے موجودہ سے 15 گنا زیادہ  پیداوار حاصل کر لی ہے۔ اس وقت فی ہیکٹر 20 ٹن ٹماٹر پیدا ہوتا ہے، اب یہ پیداوار 250 ٹن فی ہیکٹر ہو جائے گی۔ اس سے ٹماٹر بہت سستے ہو جائیں گے اوربرآمد بھی ہوں گے۔ بھارت سے جان چھوٹ جائے گی۔
٭ ایک خبر: پنجاب اسمبلی میں سخت ہنگامہ، مچھلی منڈی بن گئی۔ مچھلیاں تو بہت معصوم ہوتی ہیں کبھی نہیں لڑتیں۔ مچھلی کی جگہ ’اود بلائو‘ (لمبی ٹانگوں والا بڑا بگلا) کا حوالہ زیادہ مناسب ہے۔ بہت سے اود بلائو اکٹھے مچھلیوں کا شکار کر کے انہیں ایک جگہ ڈھیر کر دیتے ہیں۔ انہیں تقسیم کرنے کا وقت آتا ہے تو ایک دوسرے سے لڑ پڑتے ہیں اور پھر سے تقسیم شدہ مچھلیوں کو آپس میں گڈمڈ کر دیتے ہیں! ایک روسی کہانی! جانوروں کی عدالت میں کسی جرم پر اودبلائو کو پھانسی کا حکم سنایا گیا۔ اس کی چالاک دوست لومڑی نے مشورہ دیا کہ پھانسی سے زیادہ سخت سزا یہ ہے کہ اسے دریا برد کر دیا جائے۔ اسے دریا میں ڈال دیا گیا۔
 

تازہ ترین خبریں