08:23 am
تعزیتی ماتم…اور جشن مرگ!

تعزیتی ماتم…اور جشن مرگ!

08:23 am

٭نیوزی لینڈ، دُنیا بھر میں سوگ، تعزیتی تقریبات، پاکستان کے سٹیڈیم میں جشن، ناچ گانا،ڈھول ڈھمکےO نیوزی لینڈ میںپہلے دن، پاکستان میں چوتھے دن قومی پرچم سرنگوںO جان دے کر دوسروں کو بچانے والے نعیم رشید کے لئے پاکستان کا سول ایوارڈ O پرویز مشرف ہسپتال میں دُعا کی اپیل O ڈیرہ جمالی، ٹرین حادثہ 5 جاں بحق، 12 زخمی O نوازشریف کو لندن جانے کیلئے پلی بارگیننگ کی پیش کش O محکمہ خزانہ پنجاب: دفاتر میں اونچابولنے، خارش کرنے، کھانسنے، آہیں بھرنے، موبائل سننے پر پابندی O دبئی: نئی پرفیوم، قیمت فی شیشی 16 کروڑ روپے!! O آصف زرداری، 100 سوالات۔
 
٭ڈیرہ مراد جمالی روہڑی کوئٹہ ریلوے لائن پر ایک اور بم دھماکہ، جعفر ایکسپریس کی 5 بوگیاں الٹ گئیں، 400 فٹ پٹڑی تباہ ہو گئی۔ اس لائن پر پہلے بھی ایسے عام حادثات ہوتے رہے ہیں۔ نیا حادثہ زیادہ سنگین ہے۔ عجیب ’سانحہ‘ ہے کہ جب سے ریلوے کی وزارت تبدیل ہوئی، صرف کوئٹہ ریلوے لائن ہی نہیں، لاہور کراچی اور راولپنڈی میانوالی لائن پر بھی اس قسم کے متعدد حادثے ہو چکے ہیں۔ وزیر ریلوے آج تک کسی جائے وقوعہ پر نہیں گئے، ہر تیسرے چوتھے دن پریس کانفرنس کے علاوہ ان کے اعصاب پر آج کل بلاول زرداری فوبیا سوار ہے۔
٭نیوزی لینڈ میں 15 مارچ کو ایک وحشی کی فائرنگ سے 51 نمازی شہید ہوئے۔ گزشتہ روز (17 مارچ) نیوزی لینڈ کے بڑے شہر ولنگٹن میں تمام مذاہب کے باشندوں کی بہت بڑی تقریب منعقد ہوئی۔ اس میں وزیراعظم کے علاوہ ہر مذہب کے ہزاروں باشندے شریک ہوئے، اس انتہائی دل سوز واقعہ پر غم کا اظہار کیا اور تعزیتی دُعائیں مانگی گئیں۔ ایسی تقریبات دنیا بھر میں منعقد ہوئیں، تعزیتی ریلیاں، اور اسی روز اسی تاریخ کو کراچی کے نیشنل سٹیڈیم میں کرکٹ کے ایک فائنل مقابلے سے پہلے ایک بڑی سٹیج پر کرکٹ کا بھرپور جشن منایا گیا، بینڈ باجے، موسیقی، ڈھول ڈھمکے، کچھ مرد اور خاتون گلوکارو ںنے ’پرفارم‘ کیا، کبھی سٹیج پر، کبھی سٹیڈیم میں گھوم پھر کر مٹک مٹک کر گانے گائے۔ تقریب سے پہلے اعلان ہوا کہ نیوزی لینڈ والے الم ناک واقعہ کے پیش نظر فائنل میچ سے پہلے موسیقی کی تقریب منسوخ کر دی گئی ہے اور صرف قومی ترانے گائے جائیں گے۔ پھر موسیقی کا بھرپور مظاہرہ ہوا، ایک معروف بینڈ اور گلوکاروںنے پورے جوش و خروش اور ڈھول ڈھمکے کے ساتھ مشہور گانے گائے۔ ایک گلوکار نے کئی برس پہلے وفات پانے والی ایک گلوکارہ کی یاد میں پُرسوز گانا گا کر سوگ منایا! ہر بات کا ایک موقع ہوتا ہے، بڑے بڑے موسیقاروں اور گلوکاروں کے گھر میں کوئی میت پڑی ہو تو اس کے غم میں دُعائیں مانگی جاتی ہیں، گانے نہیں گائے جاتے۔ ایک مختصر واقعہ: کچھ عرصہ پہلے ایک اخباری ڈیوٹی کے لئے ایک ٹیم کے ساتھ ساہیوال سے دس بارہ کلو میٹر دور ایک گائوں میں گیا۔ تقریباً بارہ بجے دوپہر کا وقت تھا،وہاں ایک پرانا دوست بھی مقیم تھا۔ میں نے بے تکلفی سے کہا کہ ناشتہ بھی نہیں کیا ہوا، کچھ کھانے پینے کا انتظام کرو۔ اس نے کہا کہ شاہ صاحب! چار بجے تک انتظار کرنا پڑے گا۔ صبح گائوں میں ایک شخص (محنت کش!) کا انتقال ہو گیا ہے، چار بجے جنازہ ہے۔ اس وقت تک پورے گائوں میں کوئی چولہا نہیں چلے گا! اور…اور، کیا کہا جائے؟ جس روز نیوزی لینڈ میں قیامت برپا ہوئی تھی اسی روز پاکستان میں تمام میچ اور دوسری تقریبات منسوخ یا چند روز کے لئے ملتوی کر دینی چاہئے تھیں! نیوزی لینڈ میں اسی روز قومی پرچم سرنگوں کر دیا گیا، ادھر پاکستان میں کرکٹ کے جشن کے بعد چوتھے دن پرچم سرنگوں کرنے کا رسمی اعلان کیا گیا! نیوزی لینڈ کی خاتون وزیراعظم نے سیاہ لباس پہنا، سر پر دوپٹہ اوڑھا اور شہید ہونے والوں کے ایک ایک گھر میں جا کر غم زدہ خواتین کو گلے لگایا، دلاسہ دیا اور ہر قسم کی معاونت کا یقین دلایا۔ حد یہ کہ نیوزی لینڈ میں تمام ثقافتی تقریبات منسوخ کر دی گئیں۔ کرائسٹ چرچ میں مسلمانوں کی مساجد عارضی طور پربند کر دی گئیں (اب کھل گئی ہیں) تو عیسائی حضرات نے مسلمانوں کو عبادت کے لئے اپنے گرجا گھر پیش کر دیئے، اور …!!! ہمارے وزیراعظم آج تک سانحہ ساہیوال کے غم زدہ خاندان کے پاس نہ جا سکے!
٭تازہ خبر: نیب نے اثاثوں کی تحقیقات کے سلسلے میں آصف زرداری اور بلاول زرداری کو 100 سوالات کی فہرست پیش کر دی ہے! 100 سوالات! ملک کی تاریخ میں آج تک کسی ’ملزم‘ کے خلاف الزامات کی اتنی طویل فہرست سامنے نہیں آئی ہے۔ بڑے آدمیوں کی بڑی باتیں! اَیرے غیرے نتھو خیرے تو دو تین الزامات کی محض پوچھ گچھ کے لئے مدتوں جیلوں میں پڑے رہتے ہیں! 100 الزامات!! میرے ذہن میں ایک بات آ رہی ہے کہ 87 سوالات تو الگ الگ ان 87 اثاثوں کے بارے میں پوچھے جا سکتے ہیں جن کی فہرست انٹرنیٹ پر موجود ہے۔ ایک سوال آصف زرداری کے خلاف منی لانڈرنگ کے الزام میں امریکی سینٹ کی منظور کردہ قرارداد کے بارے میں پوچھا جا سکتا ہے۔ یہ قرارداد بھی انٹرنیٹ پر موجود ہے۔ باقی رہ گئے بارہ سوال! تو یہ کوئی اتنے زیادہ نہیں۔ ممکن ہے ایک سوال یہ بھی ہو کہ موصوف جب ملک کے صدر تھے تو انہیں کون سی ایسی بیماری لاحق ہو گئی تھی جس کا، (نوازشریف کی طرح) پاکستان میں علاج ممکن نہیں تھا اور اس کے ’علاج‘ کے لئے دبئی کے ایک عالی شان بڑے ہوٹل کا ایک پورا فلور بک کرایا گیا، اس کے کروڑوں کے اخراجات پاکستان کے سرکاری خزانے سے ادا کئے گئے! اس نادر قسم کی بیماری کا پھر کبھی کوئی ذکر سامنے نہیں آیا؟ چلیں، جس نے کیا وہ بھگتے! یہ دُنیا بھی عجیب ہے، کبھی شادیانے، کبھی ماتم!کل تخت آج تختہ۔!
٭پیپلزپارٹی نے عجیب اعلان کیا ہے کہ وزیر ریلوے شیخ رشید  نے پارٹی کے چیئرمین بلاول زرداری کے خلاف سخت کلامی بند نہ کی تو پنجاب کے تمام شہروںمیں کچرے کے ڈھیروں پر موصوف کے نام کی تختیاں لگا دی جائیں گی۔ یہ انوکھا اقدام دلچسپ ہو سکتا ہے مگر بہت مشکل اس لئے لگتا ہے کہ سینکڑوںشہروں میں کچرے کے ہزاروں لاکھو ںڈھیر جمع ہیں، ان کے سامنے کراچی کے کچرے کے ڈھیر ماند پڑ گئے ہیں۔ پیپلزپارٹی والے اتنی تختیاں کہاں سے لائیں گے؟ ویسے ایک مشورہ ہے کہ تختیوں پر پورا نام شیخ رشید احمد نہ لکھیں، احمد بلکہ رشید نام کی بھی توہین ہو گی، اس کی بجائے صرف ’وزیر ریلوے‘ لکھ دیں یہ بھی کافی ہو سکتا ہے! ان کالموں میں موصوف کو مشورہ دیا جاتا رہا ہے کہ وہ بڑھکیں مارتے وقت پورا منہ نہ کھولا کریں، عجیب سا لگتا ہے، مگر کوئی اثر نہیں ہوا۔
٭ایک چھوٹی سی خبر: محکمہ خزانہ پنجاب کا باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری ہوا کہ آئندہ محکمہ کے دفتر میں موبائل فون سننے کے علاوہ اونچی آواز، خارش کرنے، کھانسنے، بلکہ آہیں بھرنے پر بھی پابندی عائد کر دی گئی ہے! بہت اہم اور ضروری پابندی ہے۔ دوسرے دفاتر میں بھی عائد ہونی چاہئے البتہ ان میں چھینکیں مارنے پر پابندی عائد نہیں کی گئی، شائد اس لئے کہ چھینک کو روکا نہیں جا سکتا، مگر خارچ کو کیسے روکا جا سکتا ہے؟
 ٭سابق خود ساختہ صدر جنرل مشرف کی اچانک حالت بگڑ گئی، انہیں ہسپتال میں داخل کرا دیا گیا ہے۔ بیوی اور بیٹی پاس ہیں! انہوں نے دُعا کی اپیل کی ہے۔ کیا زندگی ہے! کبھی وہ شان و شوکت اور آج کسمپرسی کہ غیر زمین پراکیلی ماں بیٹیاں صحت کی دُعائوں کی اپیل کر رہی ہیں!اطلاع یہ ہے کہ حالت کافی خراب ہے۔
 

تازہ ترین خبریں