10:19 am
 چاند گرہن کے ممکنہ اثرات 

 چاند گرہن کے ممکنہ اثرات 

10:19 am

16 اور17 جولائی یعنی منگل اور بدھ کی درمیانی رات چاند گرہن ہوگا جو جزوی طور پر برصغیر کے ممالک میں بھی نظر آئے گا۔15جولائی کی شام لاہور سے روحانی وژن شخصیت سے رابطہ ہوا۔ ان کے مطالعہ کے مطابق رات ایک بجے کے قریب گرہن ہوگا۔ دوبجکر31 منٹ پر اس کا عروج ہوگا۔ دورانیہ گرہن تقریباً تین گھنٹے متوقع ہے۔ صبح چار ساڑھے چار بجے یعنی صبح کی نماز تک گرہن موجود رہ سکتا ہے۔ دنیا بھر کے اکثر ممالک میں یہ گرہن دکھائی دے سکتا ہے۔ میں اکثر کالموں میں سورج گرہن اور چاند گرہن کی سنت نبویؐ کے مطابق دو رکعت نماز گرہن پڑھنے کی استدعا کیا کرتا ہوں۔ چند کالم میں نے نجوم اور روحانی وژن کی روشنی میں لکھے ہیں حالانکہ میرا استدراک  یہ ہے کہ نجوم شمس و قمر‘ سیارے‘ ستارے‘ زمین و آسمان یہ سب مخلوق ہوکر بھی قدرت الٰہی کے مظاہر ہیں۔ اللہ تعالیٰ نے اپنی الوھی فیصلہ ساز قوت و حیثیت کو ان سب مخلوقات کے ساتھ وابستہ منفی و مثبت اثرات کے ذریعے حصہ کائنات بنایا ہوا ہے۔ 
اس پر غور کرنا قرآن پاک میں مطلوب مفاہیم کا راستہ ہے ۔ لہٰذا نجوم وغیرہ علم غیب ہرگز نہیں ہیں اگر ہم شاہ ولی اللہ دہلوی کی التفھیمات الالھیتہ پڑھیں یا محی الدین بن عربی کی فتوحات مکیہ اور فصوص الحکم پڑھیں تو وہ افلاک نظام و کائنات میں علوم نجوم کی اصطلاحات کو کیفیات تصوف کے ساتھ ملا کر مخلوق خدا کی رہنمائی کرتے ہیں۔ میں بھی ایسے ہی عظیم مجتہدین صوفیاء کے سبب نجوم وغیرہ کے ذریعے حاصل شدہ استدراکات کا مطالعہ کرتا ہوں۔ ویسے نجومی بذات خود کچھ بھی قوت نہیں ہوتا۔ اس کے پاس تقدیر کو تبدیل کرنے کی ہرگز صلاحیت نہیں ہوتی‘ البتہ روحانیات کے فقراء‘ اپنی صالحیت اور قرب الی اللہ کے سبب‘ اللہ تعالیٰ سے حاصل شدہ قرب و رضاء تجلیات کے سبب اپنی دعا کے ذریعے‘ اپنے مبارک وجود کے ذریعے مخلوق خدا کی اصلاح و خدمت میں زیادہ موثر حیثیت رکھتے ہیں۔ اگر اہل نجوم کا تعلق مذہب سے نہ ہو تو وہ بھی نفسیاتی طور پر خاصے کمزور ثابت ہوتے رہتے ہیں بالکل اسی طرح جیسے ہم سب مشکلات‘ مصائب میں نفسیاتی طور پر کمزور‘ خوف زدہ ہو جاتے ہیں۔ گرہن اگر نقصان کی علامت ہیں تو کبھی کسی کو فائدہ بھی دیتے ہیں۔ گرہن خود کچھ بھی نہیں بلکہ قدرت الٰہی کا کائنات مظہر ہے۔
روحانی وژن: گرہن کے سبب6-8 ستمبر کے درمیان اہم قومی فیصلے ہوں گے۔ نئی قانون سازی‘ آرڈیننس کی توقع رکھنی چاہیے۔ برصغیر میں زیادہ بارشوں کے سبب سیلاب یا زلزلہ یا قدرتی آفات کا نزول ہوسکتا ہے۔ ممکن ہے سندھ کی حکومت پر گرہن کے منفی اثرات ظاہر ہوں۔ عمران خان اور عوام کے لئے مجموعی طور پر گرہن کا معاشی اور سیاسی اثر نومبر میں ظاہر ہونے کا امکان ہے۔ اپوزیشن نومبر تک اپنی اندرونی توڑ پھوڑ ‘ انتشار و خلفشار کے سبب بہت کمزور ہوچکی ہوگی جبکہ وزیراعظم عمران خان کا 15 اگست کے بعد مسائل سے باہر آنا اور نومبر میں سیاسی طور پر بہت مضبوط ہوتے دکھائی دیتے ہیں۔اس کا گزشتہ سورج گوہن سے تعلق ہے کہ فوج پر شدید دبائو ہے۔ اسی سبب کچھ ماہرین نجوم20-21 جولائی تک ان اسباب کا ظہور موجود دیکھتے رہے ہیں جن کے سبب مارشل لاء لگتا ہے۔ 21جولائی کے بعد فوج شدید دبائو سے باہر نکل جائے    جو کچھ مذہبی اسباب کا دبائو رہا ہے وہ بھی ان شاء اللہ 21جولائی کے بعد ختم ہوتا نظر آتا ہے۔ البتہ باقی ماندہ پورا ہفتہ شریف خاندان کے لئے بہت سخت ہے۔ 
ذرا غور کریں شہباز شریف کا برطانیہ کے اخبار کے ذریعے نیاسیکنڈل سامنے آگیا ہے۔ فوج کو بیرون ملک سے جو بھی دبائو اور تشویش ہے ان شاء اللہ22 جولائی کے بعد اس کا خاتمہ ہوگا اور بطور خاص جنرل باجوہ ’’خاص قسم‘‘ کے اندرونی و بیرونی معاملات اور ریاست کے لئے مذہبی شدت پسندی کے سبب پیدا شدہ مسائل سے بھی نجات پائیں گے۔  مریم نواز خود کو بہت زیادہ الجھا چکی ہے جو بھی مدبر اور مستقبل بین مسلم لیگی ہیں وہ مریم نواز اور نواز شریف کے شدت پسند بیانیے سے خود کو الگ کرلیں اور ریاستی اداروں کے معاون بنیں۔ شہباز اور حمزہ کی سیاسی حیثیت بہت حد تک ختم ہے۔ کیا مستقبل میں نئی مسلم لیگ بنے گی؟ اس کا پتہ ستمبر سے دسمبر کے مابین چلے گا۔ آصف زرداری کا ’’جادوگری کے کرتبوں‘‘ پر مبنی سیاسی کھیل ختم ہونے جارہا ہے اگرچہ بلاول کو امریکہ بھجوا کر حسین حقانی کے ذریعے وزیراعظم عمران خان کے دورے کو ناکام بنانے کی کوشش ہو رہی ہے۔ بقول بزرگ ماہر  نجوم‘ بلاول کے پیدائشی زائچے میں اقتدار موجود ہی نہیں ہے۔ ممکن ہے کچھ عرصہ بعد وہ منظر سے خود ہی ہٹ جائیں۔ اسے اپنی زندگی کی زیادہ حفاظت کرنی چاہیے بلکہ عوامی اجتماعات میں جانا بند کر دینا چاہیے۔ عوامی اجتماعات میں جانے کی جو غلطی محترمہ بے نظیر بھٹو نے کی وہ بلاول ہرگز نہ کریں۔میرا مطالعہ و وجدان بتاتا ہے کہ دسمبر تک بہت زیادہ تبدیلیاں متوقع ہیں ممکن ہے ستمبر‘ اکتوبر‘ نومبر میں موجودہ نظام حکومت تبدیل ہوتا ہوا ہمیں دکھائی دے جائے۔ واللہ اعلم بالصواب
چاند گرہن رات کو لگے گا۔ گرہن سے پہلے گھر کے ہر فرد کی طرف سے صدقہ ضرور دیں۔  بے شک دس روپے ہی ہو۔ اگر رات کو جاگ نہ سکیں تو احتیاطاً پیشگی نماز گرہن پڑھ لیں یوں گرہن نماز کی نبویؐ سنت پر عمل ہو جائے گا۔ ۔

تازہ ترین خبریں