12:27 pm
مطلوب ارتقاء دینی مدارس میں ریاستی و حکومتی کردار

مطلوب ارتقاء دینی مدارس میں ریاستی و حکومتی کردار

12:27 pm

اوصاف کو مبارکباد کہ دینی مدارس کے ارتقاء‘ استحکام‘ ریاست سے مفاہمت و قرب پر مبنی منفرد خبر بدھ18 جولائی کو صرف ہمارے اخبار نے شائع کی تھی ۔ برادرم عمر فاروق کی خبر میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے17 جولائی کو ثقہ علمائے کرام اور دینی مدارس کے وفاقوں کے مدارالمہاموں نے ملاقات کی تھی۔ ثقہ علمائے کرام اور وفاق المدارس کے فیصلہ ساز نمایاں جن علماء کرام نے جنرل باجوہ سے ملاقات کی تھی اس کی تفصیل17 جولائی کے اوصاف میں موجود ہے۔ جنرل باجوہ نے علماء کرام کو یقین دہائی کروائی کہ مدارس کے خلاف کوئی اقدام نہیں ہوگا‘ علماء کرام انہیں اپنا ضامن سمجھیں۔
 
میں خود درس نظامی کے 7 سالہ نصاب تعلیم کا فیض یافتہ ہوں اور مدرسہ کی چٹائیوں پر بیٹھ کر اساتذہ کرام کے سامنے مودب زانو تلمذ کے ساتھ رویہ اپنایا ہوا ہے۔ یقینا دینی مدارس کے طریقہ اور نصاب تعلیم میں بہت ٹھوس علم ہے مگر یہ ٹھوس علم ماضی بعید کا ہے جس سے روزی روٹی‘ سماجی عزت ہرگز نہیں ملتی۔ میں ذاتی تجربے سے آسانی سے کہہ سکتا ہوں کہ دینی مدارس میں درس نظامی کے بعد فاضل عربی آسانی سے ہو جاتا ہے مگر اصل علم کے لئے اس میں بھی کچھ مزید جدید  درسگاہوں میں علم حاصل کرنا پڑتاہے۔ فاضل دینی مدارسہ ہونے اور فاضل عربی کرنے کے بعد اگر میں گورنمنٹ کالج فیصل آباد میں گریجویشن کے لئے باضابطہ طالبعلم نہ بنتا‘ بعد ازاں نیشنل یونیورسٹی آف ماڈرن لینگوئجز اسلام آباد میں ایم اے عربی کے لئے عربی زبان میں عرب یونیورسٹیوں کے طریقہ تعلیم کے عین مطابق عرب اساتذہ سے تعلیم حاصل نہ کرتا تو یقینا میں ہرگز نہ تجزیہ نگار بنتا‘ نہ مشرق وسطیٰ کے امور پر رائے دینے کے قابل ہوتا۔ ذاتی تجربہ و مشاہدہ اس لئے لکھا ہے کہ ہمارے مدارس زمانہ قدیم سے اس شدید اعتراض سے معتوب رہے ہیں کہ وہ اپنے طلبہ کو معاصر علوم اور معاصر دنیا کے سامنے کھڑے ہونے کی صلاحیت فراہم کرنے سے قاصر ہیں۔ 
قیام پاکستان سے پہلے یہ اعتراض عربی زبان و ادب کے جدید و قدیم مصری اسلوب کے مفکر مولانا اسلم  جیراج پوری پروفیسر جامعہ ملیہ کی طرف سے ہوتا تھا۔ اندازہ لگائیں مولانا اسلم جیراج پوری کس عہد میں ‘ قیام پاکستان سے پہلے دینی مدارس کے فرسودہ نصاب‘ طریق کار اور مقصدیت کو شدید تنقید کرتے ہوئے اسے غیر مفید‘ ناقص‘ طلبہ کی صلاحیتوں کو بے ثمر بناتاطریقہ تعلیم قرار دیا کرتے تھے؟ میر ے مطالعے کے مطابق مولانا اسلم جیراج پوری چونکہ برصغیر میں نمایاں ترین عالم دین اور استاد تھے جو جامعہ ازہر کے اسلوب تعلیم سے حقیقی طور پر بہرہ ور تھے اور ڈاکٹر طہ حسین کے اسلوب فکر سے بھی وابستہ تھے۔ دوسری طرف مصر کی اسی جامعہ ازہر قاہرہ  کے مدمقابل ڈاکٹر  طہ حسین مصری ‘نابینا دانشور‘ مصنف‘ تجزیہ نگار ‘مورخ‘ فکری تلوار لیکر جامعہ ازہر پر حملہ آو ر تھے کہ وہ بوسیدہ ‘ غیر مفید‘ ناقص‘ بے ثمر تعلیمی طریقے سے مصری نوجوان قوم کو تباہ کررہی ہے  چنانچہ اسی کشمکش کا نتیجہ نکلا کہ جامعہ ازہر قدیمی تعلیمی درس گاہ کے مدمقابل دارالعلوم جدید علوم۔ عمرانیات‘ سماجیات کا زیادہ طاقتور تعلیمی ادارہ بن کر طلوع ہوا تھا میں نے مصر میں جامعہ ازہر اور ڈاکٹر طہ حسین کے مابین بھرپور کشمکش کا جو ذکر کیا ہے وہ دینی مدارس کے منتظمین کے لئے ہے۔ آج تو دنیا بہت زیادہ تبدیل ہوچکی ہے۔ ضرورت ہے کہ دینی مدارس معاصر علوم ‘ سائنسی علوم‘ ریاضی علوم سے اپنے طلبہ کو نوازیں۔ مجھے یقین ہے کہ اگر دینی مدارس کی ریاست سے جنرل قمر جاوید باجوہ کے ذریعے طے پاتی مفاہمت کو مکمل اخلاص اور حسن نیت سے پایہ تکمیل تک  پہنچا دیں  گے تو دینی مدارس پر فرسودہ  نظام دین کا الزام ہمیشہ کے لئے ختم ہو جائے گا۔ آ ج بدقسمت صورت یہ ہے کہ اکثر دینی مدارس سے فارغ ہونے والے کسی نہ کسی طریقے سے مسجدیں بناتے ہیں تاکہ وہاں چھوٹا سا دینی مدرسہ یا حفظ قرآن کا مدرسہ قائم کرکے مسلمانوں کے صدقات و خیرات حاصل کرکے روزی روٹی کماسکیں۔ کس قدر ناقدری ہے یوں فارغ التحصیل علماء کی؟ پاکستان میں اب پہلا باضابطہ  موقع ہے کہ دینی مدارس کے ارتقاء میں علماء کرام کی عزت و توقیر کے حقیقی اضافے میں ریاستی کردار کے حوالے سے قابل اعتماد اور قابل تحسین  فضاطلوع ہو رہی ہے۔ ماشاء اللہ۔ فوج پوری طرح سے دینی مدارس کے ساتھ مددگار کے طور پر کھڑی ہو رہی ہے۔ علماء کرام اس نادر موقع کو بے بنیاد خدشات‘ شبہات‘ وسوسوں کا شکار ہوکر ضائع نہ کریں۔ اوپر کی تحریر تو میں نے 18 جولائی کو شائع ہونے والی اوصاف کی بنیاد پر لکھی ہے جبکہ18 جولائی کو علمائے کرام کی دوسری اہم ملاقات حکومت پاکستان سے وزیر تعلیم شفقت محمود کے ساتھ ہوچکی ہے۔ یوں دو  روزہ ریاست و حکومت کے ساتھ دینی مدارس کے حوالے سے ہونے والے مذاکرات ماشاء اللہ کامیابی سے ہمکنار ہوچکے ہیں۔19 جولائی کے اخبارات نے وفاقی وزیر تعلیم اور وفاق المدارس علماء کرام میں جو معاہدہ ہوا ہے اس کی تفصیل شائع کرچکے ہیں۔
میں درس نظامی کے فیض یافتہ ہونے کے سبب ریاست و حکومت میں موجود مفاہمانہ فضا پر بہت مطمئن ہوں۔ مزید نہایت ادب سے گزارش ہے کہ دینی طلبہ کو جو عربی زبان پڑھائی جاتی ہے وہ سرے سے موجودہ عہد کی عربی زبان کا شعور ہی نہیں دیتی۔ لہٰذا نصاب تعلیم مرتب کرتے ہوئے عرب دنیا میں غیر عرب طلبہ کے لئے جو عربی زبان کی تعلیم و تدریس  کا موجودہ طریقہ کار  اور نصاب موجود ہے اسے فی الفور اپنایا جائے ہر فاضل دینی مدرسہ کو تو عربی زبان‘ گفتگو‘ تحریر و تقریر پر اتنا عبور حاصل ہونا چاہیے کہ وہ کسی بھی عرب ملک کے سفیر‘ اسکالر‘ حکمران سے دلیرانہ طور پر عربی میں گفتگو کرکے اپنا مافی الضمیر بیان کرکے سننے والے کو اپنے موقف کے حق میں تبدیل شدہ انسان بناسکے۔ جنرل ضیاء الحق کے عہد میں علماء کرام کو بہت زیادہ اہمیت ملی تھی۔ دینی مدارس کی سندکو ایم اے کے مساوی بنایا گیا تھا۔ اس سند کی بنیاد پر علماء کرام کو ملازمت ملنا شروع ہوئی تھی۔ مگر آج تو‘ ریاست‘ حکومت اس سے بہت آگے جاکر دینی مدارس کو مکمل جدید تعلیمی اداروں کے ہم پلہ بنانے کی طرف گامزن ہے کہ ان مدارس سے فیض یاب کیوں نہ جنرل‘ بیورو کریٹ‘ ڈاکٹر‘ انجینئر بنیں؟ کچھ جدید تعلیمی ادارے منشیات‘ غیر اخلاقی گند کی آماجگاہ بن چکے ہیں جبکہ دینی مدارس میں ایسی گندی فضا یا منشیات کا استعمال نہیں نہ ہی  دینی طلبہ اساتذہ کی توہین  کرتے ہیں جو  جدید تعلیمی اداروں‘ یونیورسٹیوں کی پہچان بن رہی ہیں۔ لہٰذا اگر دینی مدارس ریاست کا دست و بازو بن جائیں تو قوم کی تقدیر بدل سکتی ہے۔

تازہ ترین خبریں

اب ہر شہری اپنی گاڑی کا مالک بنے گا، پاکستان کی سستی ترین گاڑی متعارف کرا دی گئی

اب ہر شہری اپنی گاڑی کا مالک بنے گا، پاکستان کی سستی ترین گاڑی متعارف کرا دی گئی

کرائے کے گھروں میں رہنے والے سرکاری ملازمین کو بڑی خوشخبری سنا دی گئی

کرائے کے گھروں میں رہنے والے سرکاری ملازمین کو بڑی خوشخبری سنا دی گئی

آپ نے مجھ سے کیوں نہیں پوچھا؟ڈی جی آئی ایس آئی تقرری پر وزیراعظم نے آرمی چیف سے استفسار کیا تو انہوں نے کیا جواب دیا؟

آپ نے مجھ سے کیوں نہیں پوچھا؟ڈی جی آئی ایس آئی تقرری پر وزیراعظم نے آرمی چیف سے استفسار کیا تو انہوں نے کیا جواب دیا؟

نومبر میں حکومت ختم ہونےکی پیشنگوئی کے بعد پی ٹی آئی حکومت کو پہلا بڑا دھچکا لگ گیا،وزیراعظم کا انتہائی قریبی ساتھی مستعفی ہو گیا

نومبر میں حکومت ختم ہونےکی پیشنگوئی کے بعد پی ٹی آئی حکومت کو پہلا بڑا دھچکا لگ گیا،وزیراعظم کا انتہائی قریبی ساتھی مستعفی ہو گیا

پنجاب نے ٹھُکرا دیا اور سندھ نے اپنا لیا،ممتاز سرائیکی شاعر شاکر شجاع آبادی کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سندھ حکومت نے بڑی پیشکش کر دی

پنجاب نے ٹھُکرا دیا اور سندھ نے اپنا لیا،ممتاز سرائیکی شاعر شاکر شجاع آبادی کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سندھ حکومت نے بڑی پیشکش کر دی

ملک بھر میں پٹرولیم کی شدید بحران۔۔ آئندہ چند دنوں میں کیا ہونےوالاہے؟ایسی خبر جو پاکستانیوں کے ہوش اڑا دے گی

ملک بھر میں پٹرولیم کی شدید بحران۔۔ آئندہ چند دنوں میں کیا ہونےوالاہے؟ایسی خبر جو پاکستانیوں کے ہوش اڑا دے گی

فرانسیسی سفیر کو ملک سے نکالنے کا معاملہ،وفاقی وزیرداخلہ شیخ رشید نے بڑا اسٹینڈ لے لیا

فرانسیسی سفیر کو ملک سے نکالنے کا معاملہ،وفاقی وزیرداخلہ شیخ رشید نے بڑا اسٹینڈ لے لیا

اصل غصہ ہی ہمیں نیوزی لینڈ پر تھا، یہ انڈیا تو راستے میں آگیا" فواد چوہدری کا ایسا بیان کہ پاکستانیوں کے قہقہے رک نہیں رہے

اصل غصہ ہی ہمیں نیوزی لینڈ پر تھا، یہ انڈیا تو راستے میں آگیا" فواد چوہدری کا ایسا بیان کہ پاکستانیوں کے قہقہے رک نہیں رہے

طویل انتظار ختم ہوا، ن لیگی کارکنان تیاری پکڑ لیں ،سابق وزیراعظم کی واپسی کا اعلان کر دیا گیا

طویل انتظار ختم ہوا، ن لیگی کارکنان تیاری پکڑ لیں ،سابق وزیراعظم کی واپسی کا اعلان کر دیا گیا

میں کسی کو چھوڑوں گی نہیں، ثانیہ عاشق نے خود سے منسوب ویڈیوز سے متعلق کیا فیصلہ کر لیا؟ ہلچل مچ گئی

میں کسی کو چھوڑوں گی نہیں، ثانیہ عاشق نے خود سے منسوب ویڈیوز سے متعلق کیا فیصلہ کر لیا؟ ہلچل مچ گئی

نئے ڈ ی جی آئی ایس آئی کا فیصلہ انٹرویوز کے بعد ہوا۔۔۔وزیراعظم ہاؤس کا اعلامیہ

نئے ڈ ی جی آئی ایس آئی کا فیصلہ انٹرویوز کے بعد ہوا۔۔۔وزیراعظم ہاؤس کا اعلامیہ

نادرا نے پاکستانیوں کو بڑی خوشخبری سنا دی، کونسی سروس بالکل مفت ملے گی؟بڑی پریشانی ختم ہو گئی

نادرا نے پاکستانیوں کو بڑی خوشخبری سنا دی، کونسی سروس بالکل مفت ملے گی؟بڑی پریشانی ختم ہو گئی

پنشن و دیگر مراعات کا موجودہ نظام ختم ، حکومت کا سرکاری ملازمین کیلئے پنشن کا نیا سسٹم لانے کا فیصلہ

پنشن و دیگر مراعات کا موجودہ نظام ختم ، حکومت کا سرکاری ملازمین کیلئے پنشن کا نیا سسٹم لانے کا فیصلہ

نواز شریف سے لندن میں ملاقات کرنیوالی بااثر شخصیات کون نکلیں؟ن لیگ نے خود ہی تصدیق کر دی

نواز شریف سے لندن میں ملاقات کرنیوالی بااثر شخصیات کون نکلیں؟ن لیگ نے خود ہی تصدیق کر دی