12:35 pm
قونصلر رسائی، اہم حقائق!

قونصلر رسائی، اہم حقائق!

12:35 pm

٭کل بھوشن کیس، قونصلر رسائی، تیاریاں شروعO شاہد خاقان عباسی، مریم نواز عدالت میںO جج کیس۔ ویڈیو فرانزک لیبارٹری میںO لاہور تعلیمی بورڈ میں آگ، جماعت نہم کی 15 ہزار امتحانی کاپیاں جلا دی گئیںO رانا ثناء اللہ سارے اکائونٹس منجمدO وزیراعظم کمرشل طیارے پر امریکہ جائیں گےO عمران ٹرمپ ملاقات میں عافیہ صدیقی پر بات ہو گی، ٹرمپ کے مشیر کا بیانO سپریم جوڈیشل کونسل: جسٹس فائز کو شوکاز نوٹس۔
 
٭17 جولائی کو عالمی عدالت نے ’کل بھوشن‘ کو قونصلر رسائی کا فیصلہ دیا اور اگلے ہی روز پاکستان کی حکومت نے اس کی عملی تیاریاں شروع کر دیں۔ کچھ حلقوں نے اس جلد بازی پر حیرت کا اظہار کیا ہے۔ عالمی عدالت نے اس عمل کے لئے کوئی مدت عائد نہیں کی، اسے کچھ عرصہ تک ملتوی رکھا جا سکتا تھا مگر معاملہ کا رخ یوں ہے کہ وزیراعظم پاکستان عمران خان 21 جولائی کو امریکہ کے سرکاری دورے پر جا رہے ہیں۔ اس سے پہلے پاکستان کو امن پسند، قانون پسند اور انسان دوست قرار دینے کے کچھ فوری ثبوت ساتھ لے جانے ہیں۔ اعلان ہوا تھا کہ بھارت کے لئے پاکستان کی فضا 27 جولائی تک بند رہے گی مگر اسے دس دن پہلے، اچانک 17 جولائی کو کھول دیا گیا۔ امریکی صدر ٹرمپ کے مطالبہ پر حافظ سعید کو گرفتار کر لیا گیا ( میں دو سال سے مطالبہ کر رہا تھا۔ ٹرمپ)۔ قونصلر رہائی کے بارے میں عالمی عدالت کے فیصلہ کی ابھی سیاہی خشک بھی نہ ہوئی تھی کہ ہم نے اس پر عمل شروع کر دیا۔ کشکول برداری کی بھی کیا کیا مجبوریاں ہیں! عدالتی فیصلے میں قونصلر رسائی کے بارے میں وی آنا (آسٹریا) کنونشن کی دفعہ 36 کا حوالہ دیا گیا ہے۔ آیئے، اس دفعہ کا جائزہ لیں۔ وی آنا کنونشن کی مختصر تاریخ یہ ہے کہ 18 اپریل 1961ء کو آسٹریا کے شہر وی آنا میں اقوام متحدہ کے 60 ملکوں کا ایک اجلاس منعقد ہوا۔ اس میں اقوام متحدہ کے رکن ممالک میں سفارت کاروں کے تحفظ اور سہولتوں کے بارے میںایک چارٹر تیار کیا گیا۔ اس کے مطابق کسی ملک کے سفیر اور دوسرے طے شدہ سفارت کاروں کی آمد پر ان کی اور ان کے سامان کی کوئی چیکنگ نہیں ہو سکتی، کسی قانون شکنی پر گرفتار نہیں کیا جا سکتا وغیرہ۔ بعد میں خیال آیا کہ کسی ملک کے سفارت خانے کو اس ملک میں اپنے ملک کے قیدیوں کے تحفظ اور ان کے خلاف مقدموں کی پیروی کی بھی اجازت ہونی چاہئے۔ اس پر دو سال بعد آسٹریا ہی کے شہر ’نیوہوف بوف، میں اقوام متحدہ کا ایک اور کنونشن منعقد ہوا۔ اس میں 18 اپریل 1963ء کو قونصلر رسائی کے بارے میں باقاعدہ دفعہ 36 منظور کی گئی۔ اس کنونشن کے چارٹر پر 60 ملکوں (اب 192) ملکوں نے دستخط کئے۔ یہ دفعہ24 اپریل 63ء کو منظور ہوئی مگر قانون کے مطابق اس پر مختلف ملکوں کے الگ الگ دستخطوں میں چار سال لگ گئے اور بالآخر 19 مارچ 1967ء کو یہ کنونشن موثر قرار دے دیا گیا۔ دفعہ 36 بہت مختصر اور سادہ سی ہے۔ یہ جب منظور کی گئی تو اس میں ایک خامی رہ گئی کہ اس میں کسی ملک میں دوسرے ملک کے قیدی باشندوں تک قونصلر رسائی کی بات تو ہوئی ہے مگر جیلوں میں بند اور سزا یافتہ افراد کے ساتھ رسائی کا کوئی ذکر نہیں۔ اس بات کی طرف عالمی عدالت میں پاکستان کے نمائندہ ایڈہاک جج جسٹس (ر) تصدق حسین نے اپنے اختلافی نوٹ میں ذکر کیا ہے کہ اس شق کا ڈرافٹ بنانے والوں کے ذہن میں غالباً جاسوسوں اور دہشت گردوں کا دھیان نہیں آیا ہو گا! دفعہ 36 بہت مختصر ہے، اسے سمجھنے کے لئے انگریزی میں چند سطریں پڑھئے:
"36-Counceller officers will be free to communicate with the nationals of the sending State and to have access to them"
اس کا ترجمہ یوں ہے کہ ’’کسی ملک کے قونصلر افسروں کو یہ آزادانہ حق حاصل ہو گا کہ وہ اپنے ملک کے باشندوں کے ساتھ رابطہ اور رسائی رکھ سکیں۔‘‘
اس مختصر عبارت میں قونصلر رسائی کی کوئی مدت مقرر نہیں کی گئی، رسائی کا مطلب محض بات چیت اور اپنے شہریوں کی دیکھ بھال اور انہیں تحفظ اور قانون کی یقین دہانی حاصل کرنا ہے۔ اس قسم کی رسائی عام طور پر دوسرے ملک کے سفیر یا سفارت خانے کا کوئی نامزد افسر کرتا ہے۔ یہ رسائی بالکل خلوت میں نہیں ہو سکتی۔ میزبان ملک کا کوئی نمائندہ بھی موجود ہوتا ہے۔ عام طور پر قونصلر اور مذکورہ شخص کے درمیان ملاقات شیشے کی دیوار کے آر پار ہوتی ہے۔ بات چیت کا رابطہ ٹیلی فون کے ذریعے ہوتا ہے اور ساری بات چیت باقاعدہ ریکارڈ ہوتی ہے۔ اس قسم کی بات ’’کل بھوشن یادیو‘‘ اور اس کی والدہ کے درمیان کرائی جا چکی ہے۔ اب کچھ دوسری خبریں:
٭پاکستان کے دو سابق صدر، چھ وزرائے اعظم عدالتوں میں! ایک اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی بھی جیل پہنچ گیا۔ ناجائز اختیارات، ملک کو سخت نقصان پہنچانے کا الزام! اس سے قبل چھ سابق وزرائے اعظم گرفتاری اور جیل جانے  کی زد میں آ چکے ہیں۔ ان میں حسین شہید سہروردی پھر، ذوالفقار علی بھٹو، بے نظیر بھٹو، نوازشریف، یوسف رضا گیلانی اور اب شاہد خاقان عباسی شامل ہیں۔ حسین شہید سہروردی ایک سال وزیراعظم رہے۔ ان پر مارشل لا کو چیلنج کرنے کا الزام تھا۔ بھٹو پر نواب محمد رضا خاں کے قتل کا الزام لگا۔ بے نظیر بھٹو، نوازشریف، یوسف رضا گیلانی اور خاقان عباسی پر اختیارات کے ناجائز استعمال، کرپشن یا خزانے کو نقصان پہنچانے کے الزامات کا سامنا کرنا پڑا۔ یہ سلسلہ ابھی بند نہیں ہوا۔ ایک اور سابق وزیراعظم راجا پرویز اشرف کے خلاف بھی اسی قسم کا مقدمہ چل رہا ہے۔ پاکستان غالباً واحد ملک ہے جس کے دو سابق صدر آصف زرداری اور پرویز مشرف اور چھ سابق وزیراعظم سنگین الزامات کے تحت مقدمے بھگت رہے ہیں۔ دو سابق وزرائے خزانہ اسحاق ڈار اور مفتاح اسماعیل بھی سنگین بدعنوانیوں کی زد میں آ چکے ہیں۔ ایک سابق گورنر عشرت العباد قتل کے مقدمہ میں ملوث ہے، باہر بھاگ گیا ہوا ہے۔ بھارت کو جتنا مرضی برا کہہ لیں مگر اس کے کسی صدر یا وزیراعظم کے خلاف آج تک کرپشن وغیرہ کا کوئی کیس نہیں بنا کسی نے بیرون ملک اثاثے نہیں بنائے۔ پنڈت نہرو 17 برس وزیراعظم رہے، ایک پیسے کی کرپشن کا الزام نہ لگا۔ واجپائی کے گھٹنوں کا آپریشن لندن یا امریکہ کی بجائے ممبئی کے ایک ہسپتال میں ہوا۔ بھارت کے ایٹم بم کے بانی، ایک صدر عبدالکلام کرائے کے ایک کمرے میں رہتے تھے۔ صدر بنا دیا گیا تو ایک چھوٹے اٹیچی کیس میں چند کپڑے اور ایوان صدر میں آ گئے۔ پانچ سال کی صدارت  کے بعد اسی اٹیچی کیس کو اٹھا کر اپنے کرائے والے پرانے کمرے میں آ گئے!! اور یہاں!! استغفار باہر سے اربوں کھربوں کی امداد آتی گئی اور دبئی، فرانس، لندن، امریکہ میں محل، پلازے اور فلیٹس بنتے گئے! برسوں کی عدالتی تفتیش کے باوجود آج تک پتہ نہ چل سکا کہ شریف اور زرداری خاندانوں نے بیرون ملک کھربوں کے اثاثے کیسے بنائے؟ مگر پھر قدرت کی سخت تعزیریں! ہتھکڑیاں، گرفتاریاں، قید، جرمانے، جیلیں، سزائیں! اکبر الٰہ آبادی کا مشہور کلام کہ ایک شخص کی کسی کھوپڑی کو ٹھوکر لگ گئی۔ اس میں سے آواز آئی کہ ’’ارے او بے خبر! دیکھ کے چل، میں بھی کبھی کسی  کا سرِ پُرغرور تھا!‘‘
٭لندن سے ایک اثرانگیز خبر: پشاور آرمی سکول میں تاریخ کے ہولناک ترین سانحہ کی زد میں آنے والا ایک زخمی طالب علم ’ولید‘ شدید زخمی ہوا، چہرے اور ٹانگوں پر گولیاں لگیں۔ دو سال پاکستان میں زیر علاج رہا پھر والدین لندن لے گئے۔ وہاں شفا یاب ہو کر برمنگھم کے ایک سکول میں او لیول کی کلاس میں داخل ہو گیا۔ اس کا چہرہ گولیوں کے نشانات سے  عجیب لگ رہا تھا۔ طلبا اس سے اس کی وجہ پوچھتے تھے وہ بار بار بتاتے بتاتے تنگ آ گیا۔ سکول کی انتظامیہ نے اس کی مشکل دور کرنے کے لئے سکول کے تمام اساتذہ اور طلبا کو ہال میں جمع کیا ولید نے مائیک پر اپنی دلگداز داستان سنائی۔ اس کی بات ختم ہوئی تو اس نے دیکھا کہ بہت سے طلبا رو رہے تھے۔

تازہ ترین خبریں

پاک بھارت ٹاکرا ، وزیر اعظم پاکستان بھی پر جوش ، عمران خان نے اہم اعلان کر دیا

پاک بھارت ٹاکرا ، وزیر اعظم پاکستان بھی پر جوش ، عمران خان نے اہم اعلان کر دیا

ماہرین کی لرزہ خیز پیشن گوئی ، پاکستان میں زلزلے سے کس بڑ ے شہر کے 2ٹکڑے اور پاکستان کے کئی شہر صفحہ ہستی سے مٹ جائیں گے؟ جانیں 

ماہرین کی لرزہ خیز پیشن گوئی ، پاکستان میں زلزلے سے کس بڑ ے شہر کے 2ٹکڑے اور پاکستان کے کئی شہر صفحہ ہستی سے مٹ جائیں گے؟ جانیں 

ڈی جی آئی ایس آئی کی وزیراعظم کے ہمراہ سعودی عرب روانگی کی اطلاعات، حہقیقت منظر عام پر

ڈی جی آئی ایس آئی کی وزیراعظم کے ہمراہ سعودی عرب روانگی کی اطلاعات، حہقیقت منظر عام پر

مہوش حیات کا وزیر اعظم عمران خان بارے حیران کن بیان ، عوام سے کیا درخواست کر دی ؟ 

مہوش حیات کا وزیر اعظم عمران خان بارے حیران کن بیان ، عوام سے کیا درخواست کر دی ؟ 

ایک بار پھر شدید بارش اور ژالہ باری ۔۔ پاکستان کے کون کون سے شہر جل تھل ایک ہو رہے ہیں ؟ جانیے تفصیل

ایک بار پھر شدید بارش اور ژالہ باری ۔۔ پاکستان کے کون کون سے شہر جل تھل ایک ہو رہے ہیں ؟ جانیے تفصیل

یا اللہ خیر ! پولیس کے 30ہزار جوان اسلام آباد طلب کر لیے گئے ، کیا ہونے والا ہے ؟ جانیں 

یا اللہ خیر ! پولیس کے 30ہزار جوان اسلام آباد طلب کر لیے گئے ، کیا ہونے والا ہے ؟ جانیں 

اللہ پاک کی قدرت ، چھپکلی اپنی دم خود کیوں توڑ دیتی ہے؟ حیران کن وجہ

اللہ پاک کی قدرت ، چھپکلی اپنی دم خود کیوں توڑ دیتی ہے؟ حیران کن وجہ

دودھ کی قیت میں دس، بیس یا تیس نہیں بلکہ اکٹھے کتنے روپے اضافہ کیا جا رہا ہے ؟ پاکستانی جان لیں 

دودھ کی قیت میں دس، بیس یا تیس نہیں بلکہ اکٹھے کتنے روپے اضافہ کیا جا رہا ہے ؟ پاکستانی جان لیں 

پٹرول کی قیمت میں 20 روپے کمی کر دی گئی مگر اصل قیمت سے 20 روپے کم پٹرول صرف کن پاکستانیوں کو مل سکے گا ؟ جانیں 

پٹرول کی قیمت میں 20 روپے کمی کر دی گئی مگر اصل قیمت سے 20 روپے کم پٹرول صرف کن پاکستانیوں کو مل سکے گا ؟ جانیں 

کن پاکستانیوں کو پٹرول اصل قیمت سے 20روپے کم قیمت پر ملے گا ؟ پٹرولیم ڈویژن حکام نے عوام کو بڑی خوشخبری سنا دی

کن پاکستانیوں کو پٹرول اصل قیمت سے 20روپے کم قیمت پر ملے گا ؟ پٹرولیم ڈویژن حکام نے عوام کو بڑی خوشخبری سنا دی

وزیر اعظم کے ترجمان کی خاتون صحافی عاصمہ شیرازی کیساتھ ایسی حرکت کہ بات شہباز گل کی گرفتاری تک جا پہنچی ، آج کی بڑی خبر

وزیر اعظم کے ترجمان کی خاتون صحافی عاصمہ شیرازی کیساتھ ایسی حرکت کہ بات شہباز گل کی گرفتاری تک جا پہنچی ، آج کی بڑی خبر

نواز شریف اچھا یا عمران خان ؟  مہنگائی بڑھے تو سمجھ لینا حکمران چور ہے! عمران خان بیان دے کر پھنس گئے؟ ویڈیو دیکھیں

نواز شریف اچھا یا عمران خان ؟  مہنگائی بڑھے تو سمجھ لینا حکمران چور ہے! عمران خان بیان دے کر پھنس گئے؟ ویڈیو دیکھیں

مسلم لیگ ن کی کم عمر ترین رہنما ثانیہ عاشق کی نازیبا ویڈیو بھی آگئی ، حقیقت کیا ہے؟  جانیں 

مسلم لیگ ن کی کم عمر ترین رہنما ثانیہ عاشق کی نازیبا ویڈیو بھی آگئی ، حقیقت کیا ہے؟  جانیں 

پاکستان کے ان علاقوں کا انٹر نیٹ بند کر دو ، وزارت داخلہ نے منظوری دیدی، پاکستانی جان لیں 

پاکستان کے ان علاقوں کا انٹر نیٹ بند کر دو ، وزارت داخلہ نے منظوری دیدی، پاکستانی جان لیں