08:06 am
   ناریل  اور لیموں کی شکتی  والا  جنگی  طیارہ  

   ناریل  اور لیموں کی شکتی  والا  جنگی  طیارہ  

08:06 am

 سوشل میڈیا نہ ہوا کوئی چاق و چوبند جاسوس ہوا جو ہر وقت اپنے ہدف کی تاک میں لگا رہتا ہے۔ ہر حرکت پر نگاہ جمائے بیٹھا ہے ۔ ادھر ذرا بھول چوک ہوئی اُدھر سوشل میڈیا پر بھد اُڑنی شروع ہو گئی۔ بھارتی رکشھا منتری شری راج ناتھ سنگھ نے رافیل طیارے وصول کرتے ہوئے فرانس میں جو پوجا پاٹ کی وہ سوشل میڈیا پر تصاویر اور ویڈیو کلپ کی صورت نہایت سرعت سے پھیلتی چلی گئی۔پہلے تو یہ جان لیں کہ رکھشا منتری کا مطلب ہے وزیر دفاع! بعض احباب ہندی لفظ رکھشا کو دو چشمی ھ کے بغیر پڑھتے یا ادا کرتے ہیں تو صوتی اعتبار سے یہ لفظ رکشا بن جاتا ہے۔ بندے کا دھیان چنگ چی یا آٹو رکشا کی طرف چلا جاتا ہے اور یہ محسوس ہونے لگتا ہے گویا شری راج ناتھ سنگھ بھارت میں آٹو رکشا سے متعلق امور کے وزیر ہیں۔ ایسا بالکل نہیں ہے۔دراصل شری راج ناتھ سنگھ وہ مہاشے ہیں جو مہان دیش بھارت کی رکھشا یعنی حفاظت پر مامور ہیں۔اس ناطے بھارت کی تمام سینائیں یعنی مسلح افواج منتری جی کی عملداری میں ہیں۔منتری جی خود بھی آر ایس ایس راشٹریہ سوائم سیوک سنگھ کے سپاہی یعنی رنگروٹ رہ چکے ہیں ۔
 ہندو شدت پسند تنظیم میں رنگروٹی سے ترقی کرتے کرتے رکھشا منتری بننے سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ مہاشے لائق اور محنتی ہیں۔ اپنی لیاقت کا مظاہرہ وہ اکثر پاکستان کو تڑیاں لگا کر دیتے رہتے ہیں۔حال ہی میں منتری جی نے اپنی سینا کو پاکستان کے ساتھ مہا یدھ یعنی بھر پور جنگ کی تیار ی کا آدیش دیا ہے۔ منتری جی کی آشا ہے کہ بھارت کسی نہ کسی طرح رو دھو کر پاکستان کے ٹکڑے ٹکڑے کر ہی ڈالے۔ 
گزشتہ مودی سرکار میں شری راج ناتھ سنگھ داخلہ امور کے منتری تھے۔مقبوضہ کشمیر میں پتھرائو کرنے والے نوجوانوں پر گولیاں برسانے کی پالیسی کے حق میں پارلیمان میں لمبے چوڑے بھاشن دیا کرتے تھے۔ پلوامہ حملے کے ڈرامے اور بالا کوٹ پر بھارت کے ناکام ہومیو پیتھک سرجیکل سٹرائیک کا نتیجہ یہ نکلا کہ پاکستان نے یکا یک دو بھارتی جنگی طیارے ڈھیر کر کے ایک فائٹر پائلٹ بھی گرفتار کر لیا ۔ مودی اور اُس کے شاطر منتریوں کی عیاری کی داد دینی چاہئے کہ جنہوں نے پاکستان کے ہاتھوں ہونے والی اس ذلت آمیز شکست کو بھی الیکشن جیتنے کے لیے اپنے حق میں استعمال کر لیا۔ بھارتی ووٹر یہ سمجھتے رہے کہ بھارتی ائیر فورس نے بالا کوٹ میں ساڑھے تین سو آتنک وادی مار ڈالے ہیں اور بھارت کے جنگی جہاز نے پا کستانی ایف سولہ بھی مار گرایا ہے۔ حقیقت آشکار ہو گئی کہ نہ تو پاکستان کا کوئی ایف سولہ طیارہ تباہ ہوا اور نہ ہی بالا کوٹ میں کوئی انسانی جان ضائع ہوئی۔ ایک کوا اور چند درخت گرا کر بھارت نے پاکستان کے خلاف یدھ میں وجے کا اعلان کر کے ووٹر کے جذبات کا آتش فشاں ایسا بھڑکایا کہ مودی جی دوبارہ چنائو جیت کرپردھان منتری بن بیٹھے۔اس سارے معاملے میں مودی جی اور اُن کے منتریوں نے ایک اور باریک واردات کر ڈالی جس کا علم بھارتی جنتا کو پوری طرح نہیں ہو سکا ۔چنائو سے پہلے مودی سرکار کے خلاف فرانس سے خریدے جانے والے رافیل جنگی طیاروں کے سودے میں گھپلا کر کے لمبا مال بنانے کا الزام لگ چکا تھا اور تحقیقات بھی جاری تھیں۔اس سنگین مالی گھپلے میں مودی کا ساتھ امیر کبیر بھارتی تاجر انیل امبانی نے دیا ہے۔ 
پاکستان کے خلاف پلوامہ حملے کی آڑ لے کر جنگی جنون پیدا کرتے ہوئے دو بھارتی طیاروں کی تباہی کو بنیاد بنا کے روسی ساختہ ایس یو 30 جنگی طیاروں میں تکنیکی کیڑے نکال نکال کر بھارتی جنتا کو یہ باور کروایا جاتا رہا کہ بھارتی ائیر فورس کو فرانسیسی ساختہ جدید رافیل طیاروں کی اشد ضرورت ہے۔یہ طیارے خرید کر مودی نے پاک فضائیہ کی تکنیکی برتری کو ختم کرنے والا فیصلہ کُن اقدام اُٹھایا ہے۔ جنگی جنون اور پاکستان پر عسکری برتری کی تکرار اس مہارت سے کی گئی کہ رافیل طیاروں کے سودے میں گھپلا کر کے مال پانی بنانے والے جرم سے لوگوں کا دھیان بٹ گیا۔ کانگریسی نیتائوں خصوصاً راہو ل گاندھی نے چنائو مہم کے دوران یہ مدعا اُٹھایا لیکن اپنی جماعت کی پتلی حالت کی بدولت وہ عوامی توجہ حاصل نہ کر پائے۔ 
دوسری جانب بی جے پی اور آر ایس ایس نے اپنے زر خرید میڈیا اور ذیلی تنظیموں کی غنڈہ گردی کے بل پر بھارت میں ایسی فضا بنا رکھی تھی کہ جو فرد یا جماعت بھی مودی پر تنقید کرتا اُس کو دیش دروھی یا غدار کہہ کر پاکستان کا ایجنٹ قرار دے دیا جاتا۔ جن جنگی طیاروں کے سودے میں مودی نے انیل امبانی کے ساتھ مل کر پیسوں کا گھٹالا کیا تھا انہی طیاروں کو وصول کرنے رکھشا منتری شری راج ناتھ سنگھ فرانس پدھارے تھے۔ ہندی زبان میں غالباً جنگی طیاروں کو پرمانو ومان کہتے ہیں۔رافیل نامی پرمانو ومان کی بلایئں لیتے ہوئے اپنے دھرم کے مطابق شری راج ناتھ سنگھ نے ناریل پھوڑا اور اگلے دو پہیوں کے نیچے کنگ سائز کے لیموں بھی رکھے۔ بڑی عقیدت سے طیارے پر اوم بھی لکھا ۔یہ اُن کے دھرم کا معاملہ ہے نیز بھارت نے طیاروں کے دام بھی چکائے ہیں لہٰذا رکھشا منتری ان طیاروں کے ساتھ جو چاہیں سلوک کریں۔ 
البتہ مذہبی جوش و خروش سے جنگی طیارے پر ناریل پھوڑنے اور ٹائر کے نیچے لیموںپچکانے والی ویڈیو دیکھ کر ایک مرتبہ پھر بھارتی نیتائوں اور جنتا کا دھیان اُس مال پانی کی طرف چلا گیا ہے جو مودی چوکیدار اور انیل امبانی نے گھٹالا کر کے ہڑپ کر لیا ہے۔لیموں کی طاقت والا واشنگ پائوڈر تو مارکیٹ میں دستیاب تھا لیجیے اب بھارتی رکھشا منتری شری راج ناتھ سنگھ نے ناریل اور لیموں کی شکتی والا جنگی طیارہ بھی میدان میں اُتار دیا ہے۔