01:07 pm
گریٹراسرائیل کی جانب سفر

گریٹراسرائیل کی جانب سفر

01:07 pm

یواے ای اوربحرین کااسرائیل کو تسلیم کرنے کے بعدٹرمپ کی طرف سے جلدہی خطے کے مزید دس ملکوں کااسرائیل کوتسلیم کرلینے کاعندیہ ٹرمپ کاانفرادی فعل نہیں بلکہ امریکہ
یواے ای اوربحرین کااسرائیل کو تسلیم کرنے کے بعدٹرمپ کی طرف سے جلدہی خطے کے مزید دس ملکوں کااسرائیل کوتسلیم کرلینے کاعندیہ ٹرمپ کاانفرادی فعل نہیں بلکہ امریکہ کی پالیسیوں کے تسلسل کاحصہ ہے۔امریکہ کے سابق صدور خواہش کے باوجود مصلحتوں کی وجہ سے جس پرعمل نہیں کرسکے۔ ٹرمپ نے اپنی الیکشن مہم میں کم ازکم10 وعدے کیے تھے جن میں اوباماکی غریب نوازصحت پالیسی کے خاتمے سے لیکر میکسیکواورامریکہ کے درمیان دیوارکی تعمیرتک شامل تھی۔ان میں سے مسلمانوں کی بربادی اوراسرائیل کی بہبود کے سوا انہوں نے کسی وعدے کی تکمیل نہیں کی۔امریکی سفارت خانہ تل ابیب سے منتقل کرنے کاحکم دیتے ہوئے ٹرمپ نے کہاتھا’’میں نے القدس کواسرائیل کادارالحکومت تسلیم کرنے کا اپناوعدہ پوراکردیا ہے‘‘ گویااسی دن گریٹراسرائیل کی بنیادرکھ دی گئی تھی۔
ہرامریکی حکمران نے یہودیوں کے ’’گریٹراسرا ئیل‘‘کی تائیدمیں ایسے اقدامات کئے جس کا بہرحال نقشہ اب سامنے آرہاہے۔عراق پر امریکہ کاحملہ بھی دراصل گریٹراسرائیل کی طرف پیش رفت تھی۔امریکہ اقوام متحدہ کوہمیشہ یہودی ریاست کی توسیع کیلئے اپنی خواہشات کے مطابق استعمال کرتا رہاہے۔امریکانے اقوام متحدہ کی ان قراردادوں پرسختی سے عمل کراتے ہوئے جون1967ء کی جنگ میں غصب کردہ فلسطینی علاقے اورشام کی گولان کی پہاڑیوں پراسرائیل کے قبضے کویقینی بنایاتاکہ نصف کروڑمظلوم فلسطینیوں کوان کے چھنے ہوئے علاقے اورحقوق واپس نہ مل سکیں۔
سابق صدرریگن کے دورمیں ان کے نائب وزیرخارجہ کیسپروائن برگرنے گریٹراسرائیل بنانے کیلئے ایک اچھوتافارمولاپیش کیاکہ مغربی ایشیاء کے دواہم ملکوں کوآپس میں لڑادیا جائے جن میںسے ایک عراق ضرورہو۔امریکی یہودی جیمزواربرگ نے17  فروری1950ء کوامریکی سینیٹ پرواضح کیاتھاآپ پسند کریں یانہ کریں دنیامیں ایک عالمی یہودی طاقت قائم ہوکررہے گی۔سوال صرف یہ رہ گیاہے کہ یہ باہمی رضامندی سے ہوگایاجنگی فتح سے۔ 17جنوری1962ء  واربرگ نے ’’لائف‘‘ کوانٹرویودیتے ہوئے کہا کہ اگلے25برس یعنی1987ء تک سردجنگ ختم ہوجائے گی۔کمیونسٹ روس میں جمہوریت رائج ہوگی۔ مشرقی اورمغربی یورپ باہم مل جائیں گے اور بالآخر یروشلم، بیت المقدس میں ایک نئی حقیقی اقوام متحدہ قائم ہوگی جوساری دنیاکیلئے سپریم کورٹ کا کام کرے گی اورانسانیت کیلئے آخری عدالت بن جائے گی۔چنانچہ اس عالمی یہودی ریاست کے قیام کیلئے 1980 ء میں عراق ایران جنگ کروائی گئی جس نے آٹھ سال میں ایران کے ساتھ ساتھ عراق اوراس کے تین بڑے اتحادی سعودی عرب،کویت اوریواے ای کے بیشتر وسائل تباہ کر دیئے۔اس کے2سال بعدامریکی سفیرایریل گلاسپی نے صدام سے عشوہ طرازملاقاتیں کرکے اسے کویت پر حملے کیلئے اکسایااورکویت پرعراقی قبضہ کرواکے دوسری خلیجی جنگ میں جہاں عراق کوبربادکرکے رکھ دیاوہاں کویت اور سعودی عرب سے 1500بلین ڈالرجنگی اخراجات وصول کرنے کے علاوہ وہاں مستقل اپنے فوجی اڈے بھی بنالئے۔اس کے بعد عرب بہارکے نتیجے میں مصر، شام،لیبیااورپورے مشرق وسطیٰ کوجہنم کادہانہ بنادیاگیا۔امریکہ کے پے درپے اقدامات اور اسرائیل کی مدد کے نتیجہ میں آج فلسطین محض22فی صد حصے تک محدود ہوکررہ گیاہے۔آج مشرق وسطی عرب ایران جنگ کی وجہ سے بدامنی کی آگ میں جل رہاہے اوراسرائیل مشرق وسطی کی واحد طاقت ہے جس کے آگے مشرق وسطی کے تمام اسلامی ممالک ہاتھ باندھے کھڑے ہیں۔
ٹرمپ پہلے امریکی صدرنہیں جواسرائیل کی خوشنودی اورحمایت حاصل کرنے کے خواہاں ہیں۔ سابق صدرجمی کارٹرنے یہود نوازی کامظاہرہ کرتے ہوئے کہاتھامیں بائبل کے دینی علوم کا ماہرہوں اوراپنی بصیرت کی بناپرکہتاہوں کہ اسرائیل کاقیام بائبل کی پیشگوئی کی تکمیل ہے۔اس طرح رونالڈریگن نے ایک چرچ میں تقریرکرتے ہوئے کہاتھا میرا عقیدہ ہے کہ آخری بڑی جنگ، آرما گیڈن،یروشلم میں لڑی جائے گی جس میں کم ازکم 24کروڑفوج مشرق سے مسلمانوں کی آئے گی اور کروڑوں فوج مغرب سے عیسائیوں کی آئے گی اوربالآخریسوع مسیح آکرفتح حاصل کریں گے اوردنیامیں ایک خدائی حکومت قائم کریں گے۔ ریگن ہرہفتے ایک یہودی صومعہ میں عبادت کیلئے حاضری دیاکرتاتھاجہاں اسرائیل کیلئے مزیدزمین کے حصول کیلئے دعا کی جاتی تھی۔بل کلنٹن نے بھی خواہش ظاہرکی تھی کہ وہ اسرائیل کے دفاع کیلئے مورچہ لگاکرلڑنے کی سعادت حاصل کرناچاہتاہے ۔ بش نے عراق پرحملے کے وقت اسے ایک مذہبی جنگ قراردیتے ہوئے ’’کروسیڈ‘‘کالفظ استعمال کیاتھا۔
مقبوضہ بیت المقدس ڈیڈ سی کے مغربی کنارے پرآبادشہرہے جومسلمانوں،مسیحیوں اوریہودیوں کیلئے قابل احترام اورمقدس ہے، جہاں ان تینوں مذاہب سے تعلق رکھنے والے لوگ زیارت کیلئے جاتے ہیں۔یہیں پریہودیوں کی مقدس دیوارگریہ بھی ہے اور مسلمانوں کاقبلہ اول بھی ہے۔فلسطینی اور اسرائیلی، دونوں دعویٰ کرتے ہیں کہ مقبوضہ بیت المقدس ان کا حقیقی اورقانونی دارالحکومت ہے مگراسرائیل کااس پرمکمل قبضہ ہے اوروہاں اس نے اپنی حکومت کے قریباًتمام اداروں کے مراکز بنالیے ہیں۔ برطانیہ کے وزیرخارجہ آرتھربیلفور نے 1917 ء میں مشرقی وسطیٰ کاجغرافیہ بدلنے کی بات کی تھی اورایک ایسا تنازع کھڑاکیا جوسوسال سے مشرق وسطیٰ کواپنی لپیٹ میں لیے ہوئے ہے۔
گریٹراسرائیل کاشیطانی منصوبہ چارنکاتی ایجنڈے پراستوارہے جس پریہودیوں اور قدامت پسندمسیحیوں نیوکانزکاکامل اتفاق ہے جس کی تکمیل کیلئے وہ سردھڑکی بازی لگانے پر تلے ہیں۔اوّل سب سے خوفناک اوربڑی جنگ، دوسرے نمبرپر مسلمانوں کے دو اہم ترین مقدس مقامات کاانہدام، تیسرے نمبرپرمعبدکی تعمیراور چوتھے نمبرپرحضرت داؤدکی تاج پوشی کیلئے استعمال ہونے والے پتھر(تھرون آف ڈیوڈ)کو نوتعمیرشدہ معبدمیں رکھاجاناہے۔
پروٹوکولزآف زائیان1897ء میں بنے تھے اورگریٹراسرائیل کانقشہ تیارہواتھا۔اس نقشہ میں ایک سانپ ان تمام علاقوں کواپنی گرفت میں لئے ہوئے ہے۔دنیابھرمیں کل ڈیڑھ کروڑیہودی ہیں جس میں سے صرف35لاکھ وہاں آئے ہیں۔انہوں نے تمام یہودیوں کو اسرائیل لاکرآبادکرناہے۔اس کیلئے انہیں جگہ چاہئے۔
(جاری ہے)
 

تازہ ترین خبریں

اسلام آباد کی سڑک پر 50کے نوٹ بکھرتے ہی راہگیر ٹوٹ پڑے

اسلام آباد کی سڑک پر 50کے نوٹ بکھرتے ہی راہگیر ٹوٹ پڑے

پنجاب میں ٹرانسپورٹ چلانے کی تاریخ میں توسیع

پنجاب میں ٹرانسپورٹ چلانے کی تاریخ میں توسیع

شوال المکرم کا چاند دیکھنے کےلئے رویت ہلال کمیٹی کا اجلاس  طلب

شوال المکرم کا چاند دیکھنے کےلئے رویت ہلال کمیٹی کا اجلاس طلب

سندھ میں چھ بجتے ہی شاپنگ کےلئے دی گئی مہلت ختم

سندھ میں چھ بجتے ہی شاپنگ کےلئے دی گئی مہلت ختم

سابق چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ کی جانب سے فنڈز کے ناجائز استعمال کا انکشاف

سابق چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ کی جانب سے فنڈز کے ناجائز استعمال کا انکشاف

بھارت سے آنے والے طیارے کی پاکستان میں ایمرجنسی لینڈنگ،

بھارت سے آنے والے طیارے کی پاکستان میں ایمرجنسی لینڈنگ،

اسلام آباد میں حساس ادارے کاسابق آفیسر فائرنگ سے قتل

اسلام آباد میں حساس ادارے کاسابق آفیسر فائرنگ سے قتل

سعودی عرب پاکستان کو 500ملین ڈالرز دے گا، وزیر خارجہ

سعودی عرب پاکستان کو 500ملین ڈالرز دے گا، وزیر خارجہ

حکومت کا شہبازشریف کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کےفیصلے کے خلاف عدالت جانے کا اعلان

حکومت کا شہبازشریف کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کےفیصلے کے خلاف عدالت جانے کا اعلان

ملک بھر میں تعلیمی اداروں کی بندش کی تاریخ آگے بڑھا دی گئی

ملک بھر میں تعلیمی اداروں کی بندش کی تاریخ آگے بڑھا دی گئی

والدین کو گھر سے نکالنا پاکستان میں قابل سزا جرم قرار

والدین کو گھر سے نکالنا پاکستان میں قابل سزا جرم قرار

ضلع مہمند میں ٹینک کی دیوار گرنے سے سات بچے جاں بحق

ضلع مہمند میں ٹینک کی دیوار گرنے سے سات بچے جاں بحق

یا اللہ خیر۔۔۔ پورے گاوں میں ماتم۔۔۔ایک ساتھ سات بچے جاں بحق۔۔۔وجہ کیا بنی؟

یا اللہ خیر۔۔۔ پورے گاوں میں ماتم۔۔۔ایک ساتھ سات بچے جاں بحق۔۔۔وجہ کیا بنی؟

راستہ جلدی کیوں نہیں دیا ، جدہ ٹاون میں کار سواروں کی فائ ر نگ۔۔۔۔۔ایک ہلاک ۔۔۔ زخمیوں کی اطلاعات

راستہ جلدی کیوں نہیں دیا ، جدہ ٹاون میں کار سواروں کی فائ ر نگ۔۔۔۔۔ایک ہلاک ۔۔۔ زخمیوں کی اطلاعات