12:53 pm
 عبداللہ عبداللہ کا افغانستان اور طالبان

 عبداللہ عبداللہ کا افغانستان اور طالبان

12:53 pm

 عبداللہ عبداللہ‘ ایک افغانستانی اہم کردار‘ پچھلے دنوں اسلام آباد میں تھے۔ وہ صدر عارف علوی‘ وزیراعظم عمران خان‘ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی‘ چیئرمین سینٹ صادق سنجرانی‘ آرمی چیف جنرل باجوہ سے ملاقاتیں کرتے رہے۔ اسلام آباد میں انہیں مفاہمت پیدا کرتے کردار کے طورپر بھی دیکھا گیا۔ ماضی بعید میں عبداللہ عبداللہ پاکستانی مخالف موقف بھی اپناتے رہے تھے۔ مگر اسلام آباد میں موجود فیصلہ ساز تدبر و فراست نے افغانستان کے حوالے سے کبھی خود غرضی‘ اناپرستی‘ مطلب پرستی کا راستہ نہیں اپنایا‘ تازہ منظر میں افغانستان کے لئے ویزوں کا حصول بھی کافی آسان بنا دیاگیا ہے۔ یہ بات اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے بتائی ہے۔ کیا عبداللہ عبداللہ خود کو ماضی بعید کے متنازعہ کردار سے بلند تر عملاً ثابت کر سکیں گے؟ اگر وہ ایسا کر سکے تو پاکستان کی افغانستان میں امن و سلامتی لانے کی کوششوں میں ’’برکت‘‘ ہوگی۔ پاکستان سے یہ توقع رکھنا‘ امید کرنا کہ وہ صرف طالبان پر شدید دبائو ڈالے کہ وہی ہر حال میں‘ غیر مشروط طور پر ہتھیار رکھ دیں‘ صدر اشرف غنی اور عبداللہ عبداللہ کی حکومت کو تسلیم کرلیں۔ یہ سوچ تو بہت ہی سادہ لوحی ہے۔ طالبان ماضی بعید کی افغان حکومت کا نام ہے۔ انہوں نے ہی امریکی  وناٹو افواج کے سامنے استقامت‘ صبر‘ عزیمت پیش کی ہے‘ ویسے بھی ملا عمر کا عہد اقتدار‘ کچھ جزوی غلط باتوں کے سوا اکثر پرامن اقتدار کا عرصہ تھا جس میں افیون کی کاشت کو بہت کم کیا گیا‘ افیون سے نشہ آور مواد کی تیاری کو کچل دیا گیا۔ مگر جونہی طالبان کی حکومت ختم کی گئی۔ اقتدار صدر کرزئی اور امریکی جنرلز کے پاس آیا تو پھر سے معدوم ہوچکی ہیروئن کی تیاری‘ نشہ آور مواد کی تیاری‘ فراوانی سے دیکھی گئی۔ ایسے محسوس ہوتا رہتا تھا کہ صدر کرزئی اور امریکی جنرلز مل کر افغانستان کی سرزمین کو ’’خیر‘‘ سے زیادہ ’’شر‘‘ کی سرزمین میں تبدیل کرنا چاہتے  ہیں۔ صدر کرزئی کے  بھائی پر الزام لگتے رہے کہ وہ نشہ مافیاء سے قرب رکھتے ہیں۔
افغانستان اور پاکستان لازم و ملزوم ہیں۔ برصغیر اور افغان سرزمین کا گہرا تعلق اس وقت سے موجود ہے۔ جب موجودہ افغانستان نہیں تھا بلکہ یہ علاقہ خراسان کہلاتا تھا۔ برصغیر میں جو ترک مغل آئے‘ محمود غزنوی آئے اور جو جو صوفیائے کرام آئے‘ خواہ وہ نقشبندی ہوں‘ چشتی ہوں‘ سہروردی ہوں‘ یہ سب مسلمان فاتحین دین و دنیا افغانستان ہی سے برصغیر میں آتے رہے ہیں۔ امیر تیمور ہوں‘ بابر ہوں‘ غلامان سربراہان ہوں‘ غرضیکہ برصغیر  کے ساتھ خراسان یا افغانستان کا تعلق تو بہت گہرا رہا ہے۔ اگر افغانستان میں امن نہیں ہوگا تو برصغیر میں بھی امن نہیں ہوگا نہ ہی پاکستان میں‘ علامہ اقبالؒ  کو افغانستان سے شدید محبت رہی۔ ان کی شاعری میں افغانوں کے لئے شدید محبت‘ پیار موجود ہے اور بہت سی نصیحتیں بھی موجود ہیں جن میں آپس کا اتفاق بہت اہم نصیحت ہے۔
امریکی افواج‘ ناٹو حمایتیوں کے ساتھ بے پناہ تبانی مچانے‘ اخراجات کرنے کے باوجود سادہ لوح عام سے مسلمان افغانیوں کو شکست نہیں دے سکی تو عبداللہ عبداللہ کو چاہیے کہ وہ صدر اشرف غنی کو سمجھائیں کہ افغانستان میں مفاہمت کی منزل پانے کے لئے طالبان کو شرکت اقتدار کریں۔ عملاً جب تک طالبان شریک اقتدار نہیں ہوتے تب تک افغانستان میں امن کا حصول ناممکن رہے گا۔ طالبان نے بہت اچھا کیا کہ ماضی بعید کا القاعدہ سے تعلق اپنے ہاتھوں سے ختم کر دیا۔ اب داعش کو کچھ امریکی‘ کچھ بھارتی جنگ و جدل میں استعمال کر رہے ہیں تاکہ افغانستان غیر مستحکم رہے اور غیر مستحکم افغانستان  پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کا راستہ بنانا ہے۔ کیا امریکی بھی سوویت یونین آف رشیاء کی طرح اچانک‘ افغانی اقوام میں معاہدہ کروائے بغیر اپنی افواج کو نکالیں گے؟ سوویت یونین آف رشیاء نے جو ظلم کیا تھا کیا امریکہ بھی یہی ظلم کریں گے؟
عبداللہ عبداللہ‘ کیا بھارتی اہداف اور مقاصد افغانستان کی سرزمین سے معدوم رکھتے ہیں جو بھارت پاکستان کے خلاف ماضی بعید سے رکھتا رہا ہے؟ افغانستان کے تاجک ازبک ہوں‘ افغانی ہوں‘ ہزارہ ہوں‘ یا دوسرے قبائل‘ انہیں ہمیشہ افغانستان میں رہنا ہے۔ اگر وہ مل جل کر مفاہمت کے ساتھ افغانستان میں امن کے خواہش مند نہیں بنیں گے تو ان کی اگلی نسلیں انہیں ہدف تنقید بناتی رہیں گی۔ اپنی اگلی نسلوں کے لئے ’’خیر‘‘ تلاش کرنا تب ہی ممکن ہوگا جب طالبان بھی ماضی بعید کے شمالی اتحاد والوں سے مفاہمت کا راستہ اپنائیں گے۔ درگزر اورعفو کے قرآنی احکامات پر عمل پیرا ہونگے۔  طالبان کو بھی معاصر دنیا کے تقاضوں‘ مطالبوں پر ہمدردانہ غور کرنا چاہیے کہ دنیا ان سے کیا تواقع رکھتی ہے؟
افغانستان کی تاریخ بتاتی ہے کہ جب بیرون ملک سے ان پر یلغار اور حملہ ہوتا رہا ہے۔ خواہ یہ برطانیہ عظمیٰ کا تھا‘ خواہ یہ سوویت یونین آف رشیاء کا حملہ تھا‘ خواہ امریکہ اور ناٹو افواج کا تھا‘ تو حملہ آوروں کو ہمیشہ ناکامی ہوئی۔ افغان سرزمین کبھی مفتوح نہیں بنی‘ مگر یہ بھی تلخ تاریخ ہے کہ جونہی بیرونی قوتیں شکست سے دوچار ہوکر  واپس جاتی  ہیں تو افغانستان میں بستی اقوام  اور قبائل آپس میں طویل جنگوں میں مشغول ہو جاتے ہیں۔ یوں پڑوسی ممالک‘ پاکستان و ایران بھی‘ شدید متاثر ہوتے ہیں۔ بہرحال ہمیں امید رکھنی چاہیے کہ عبداللہ عبداللہ کا قیام اسلام آباد افغانستان میں قیام امن کے حوالے سے دوررس اور مفید نتائج پیدا کرے گا۔ انشاء اللہ۔

 

تازہ ترین خبریں

شہباز شریف بڑے سمجھدار ہیں، وہ قدم پھونک پھونک کر رکھیں گے، وزیر داخلہ

شہباز شریف بڑے سمجھدار ہیں، وہ قدم پھونک پھونک کر رکھیں گے، وزیر داخلہ

پرانا وقت دوبارہ لوٹ آیا ۔۔۔۔۔اب سحر و افطار کا اعلان صدیوں پرانی توپ سے ہو گا۔

پرانا وقت دوبارہ لوٹ آیا ۔۔۔۔۔اب سحر و افطار کا اعلان صدیوں پرانی توپ سے ہو گا۔

ملک بھر کی شاہراہوں پر اس وقت کیا چل رہا ہے ؟؟؟ فواد چوہدری نے خوشخبری سنادی

ملک بھر کی شاہراہوں پر اس وقت کیا چل رہا ہے ؟؟؟ فواد چوہدری نے خوشخبری سنادی

حکومت اور اپوزیشن کا ڈیڈ لاک برقرار ۔۔اپوزیشن نے کیا مانگ لیں جس پر حکومت نے صاف انکار کردیا

حکومت اور اپوزیشن کا ڈیڈ لاک برقرار ۔۔اپوزیشن نے کیا مانگ لیں جس پر حکومت نے صاف انکار کردیا

آئی جی پنجاب ہسپتال پہنچ گئے ۔۔۔ وجہ کیا بنی؟ ۔۔ انتہائی اہم خبر سامنے آگئے

آئی جی پنجاب ہسپتال پہنچ گئے ۔۔۔ وجہ کیا بنی؟ ۔۔ انتہائی اہم خبر سامنے آگئے

ویکسین سے خون جمنے لگا ۔۔۔۔ عارضی طور پر فراہمی روک دی گئی ۔۔۔انتہائی اہم خبر سامنے آگئی

ویکسین سے خون جمنے لگا ۔۔۔۔ عارضی طور پر فراہمی روک دی گئی ۔۔۔انتہائی اہم خبر سامنے آگئی

ویکسین سے خون جمنے لگا ۔۔۔۔ عارضی طور پر فراہمی روک دی گئی ۔۔۔انتہائی اہم خبر سامنے آگئی

ویکسین سے خون جمنے لگا ۔۔۔۔ عارضی طور پر فراہمی روک دی گئی ۔۔۔انتہائی اہم خبر سامنے آگئی

کورونا کی تیسری لہر ۔۔۔۔ ملک کا ایسا صوبہ بھی ہے جہاں 24 گھنٹوں میں کوئی ہلاکت نہیں ہوئی ۔۔۔ جان کر آپ بھی خوش ہوجائنگے

کورونا کی تیسری لہر ۔۔۔۔ ملک کا ایسا صوبہ بھی ہے جہاں 24 گھنٹوں میں کوئی ہلاکت نہیں ہوئی ۔۔۔ جان کر آپ بھی خوش ہوجائنگے

آئندہ مالی سال کا بجٹ کتنا ہوگا ۔۔۔۔انتہائی اہم خبر سامنے آگئی

آئندہ مالی سال کا بجٹ کتنا ہوگا ۔۔۔۔انتہائی اہم خبر سامنے آگئی

قیدیوں کو لے کر آنے والی وین کو حادثہ، دو پولیس اہلکار جاں بحق

قیدیوں کو لے کر آنے والی وین کو حادثہ، دو پولیس اہلکار جاں بحق

پاکستان میں سیاست مفادات کا ٹکرائو، سیاسی جماعتیں ایک دوسرے کو استعمال کرتی رہیں، تجزیہ کار

پاکستان میں سیاست مفادات کا ٹکرائو، سیاسی جماعتیں ایک دوسرے کو استعمال کرتی رہیں، تجزیہ کار

جہانگیر ترین جانتے ہیں کہ ان کے خلاف کارروائی کے پیچھے خود عمران خان ہیں،حامدمیر

جہانگیر ترین جانتے ہیں کہ ان کے خلاف کارروائی کے پیچھے خود عمران خان ہیں،حامدمیر

آرمی چیف سے امریکی وزیرخارجہ کا رابطہ،دو طرفہ تعاون پر تبادلہ خیال

آرمی چیف سے امریکی وزیرخارجہ کا رابطہ،دو طرفہ تعاون پر تبادلہ خیال

کابینہ میں تبدیلی ۔ کون کون سی 3وزرا کی چھٹی ہوئی ہے ؟وزیراعظم نے تصدیق کردی۔۔ آج کی بڑی خبر

کابینہ میں تبدیلی ۔ کون کون سی 3وزرا کی چھٹی ہوئی ہے ؟وزیراعظم نے تصدیق کردی۔۔ آج کی بڑی خبر