12:54 pm
قرآن:دنیاکے مصائب کاعلاج

قرآن:دنیاکے مصائب کاعلاج

12:54 pm

سطحِ ارضی کے ہرخطے اورخطے کی ہرہرزبان میں بے شمارکتابیں لکھی گئیں،جنہیں شمارمیں نہیں لایا جا سکتا ۔ان بے شمار کتابوں کی موجودگی میں آخر صرف قرآن ہی وہ کتاب کیوں ہے جس کاپڑھنا، سمجھنااورپھرسمجھ کرعمل کرناہرفرد نوع انسانی پر لازم قرارپائے؟ آخرہم قرآنِ کریم کامطالعہ کیوں کریں؟یہ ایک ایسافطری سوال ہے جس کاجواب علمِ عقلی اور فطرتِ طبعی کے مطابق مطلوب ہے تاکہ دنیاکے موجودہ مصائب سے نجات حاصل کرنے کے دعویٰ کی بھی تصدیق ہوسکے۔ مذہب اورعقیدہ انسان کی فطری ضرورت ہے۔ایساکوئی انسان نہیں جوکسی مذہب کاپابنداورکسی مخصوص عقیدے کاحامل نہ ہو ۔ حتیٰ کہ جولوگ کسی مذہب کونہیں مانتے اورکسی معبودکی عبادت نہیں کرتے،غورکریں توان کاکسی مذہب کونہ ماننااورکسی معبودکی بارگاہ میں جبینِ نیازکانہ جھکانابھی ایک عقیدہ اورمذہب ہی ہے ۔
 
دنیاکے تمام وابستگانِ مذاہب اپنی اپنی کتابوں کووہی درجہ دیتے ہیں جومسلمان قرآنِ کریم کو۔ یسوع مسیح کونجات دہندہ سمجھنے والا ایک عیسائی، پتھروں کے تراشیدہ صنم کدے میں سرجھکانے والاایک ہندو،نسل دادسے ظہورپانے والے نجات دہندہ کا منتظرایک یہودی،آتشی شراروں کومقام تقدیس پرفائزکرنے والاایک آتش پرست، نروان کی تلاش میں سرگرداں ایک بدھ اور حضرت لازوکی تعلیمات کی روشنی میں اپنی زندگی گزارنے والا مذہبِ تاکاایک پیروکاریہ کہنے میں حق بجانب ہے کہ نسلِ انسانی سے تعلق رکھنے والا فردقرآنِ کریم ہی کیوں پڑھے؟اس کیلئے لازم ہے کہ وہ عہدِ نام جدید،وید،بھوت گیتا،عہدنام قدیم ،اوستا،تری پتاکا،تاتے‘کنگ کامطالعہ کیوں نہ کرے؟یہ تمام کتابیں ہروابستگانِ مذہب کیلئے ایسی ہی مقدس اورالہامی ہیں جیسی مسلمانوں کے لیے قرآنِ کریم لیکن اگردنیامیں مذاہب سے وابستہ ان الہامی کتابوں کامطالعہ ضروری ہی قرارپائے تب بھی صرف قرآنِ کریم ہی وہ واحد معجزاتی کتاب ہے جس کا مطالعہ لازمی ہے۔بایں وجہ کہ ان تمام مقدس کتابوں میں یہ کہیں نہیں لکھاکہ یہ انسانیت کیلئے نازل کی گئی ہے۔
تاہم اللہ نے ہدایت کیلئے جوکتابیں نازل کیں ان میں قرآن سب سے آخری کتاب ہے لیکن اپنے اثرات کے لحاظ سے اس کامقام سب سے آگے ہے۔ انسانوں نے جوکتابیں تصنیف کیں ان کاتوشمارہی نہیں کیاجاسکتا۔ان میں سے بعض کتابوں کااثربھی،اس میں شک نہیں،دنیا نے قبول کیالیکن قرآن سے اس کی کوئی نسبت نہیں ہے۔ اس طرح کی ہر انسانی تصنیف نے ایک محدود دائرے میں اپنے اثرات چھوڑے، لیکن قرآن نے ایک عالم کوبدل کررکھ دیا۔اس نے دنیا کو نئے  افراددئیے،نیاسماج دیااورنیا طرزِحکومت عطاکیا۔ کسی فردکوبدلنادنیاکا مشکل ترین کام ہے۔ قرآن نے فردکوخطاب کیااوراس کے ذہن وفکراورسیرت وکردارہی کانہیں،اس کے جذبات واحساسات تک کا رخ موڑ دیا۔اس نے طہارتِ فکرونظراوراخلاق وکردارکی اساس پرایک پاکیزہ معاشرہ کاتصوردیا اوراس طرح کامعاشرہ قائم کرکے دکھادیا۔
اس نے کہا کہ ریاست کوحریتِ فکروعمل،عدل وانصاف اورمساوات کی اساس پرقائم ہوناچاہیے اورانسانی حقوق کااحترام اس کافرض ہے۔دنیاکو اس کے ذریعہ اس ریاست کاتجربہ ہوگیا۔دنیا تغیرات کی آماج گاہ ہے۔یہاں چھوٹی بڑی تبدیلیاں ہوتی ہی رہتی ہیں،لیکن قرآن کے ذریعہ اس نے ایک ہمہ جہت تبدیلی کامشاہدہ کیا۔یہ تبدیلی ہمیشہ کیلئے نمونہ بن گئی۔جب بھی انسان خیروفلاح کاوسیع تصور کرے گایہ نمونہ اس کے سامنے ہوگا۔
یہ عظیم انقلاب کسی ایک خطہ زمین تک محدود نہیں رہابلکہ دنیاکے بڑے حصے نے اس کااستقبال کیا اور بخوشی اس تبدیلی کو قبول کیا۔اس کی بہت سی توجیہات کی جاسکتی ہیں۔ایک توجیہ یہ کی جاتی ہے کہ یہ اس وقت کے عالمی اورخاص طورپرعرب کے ناگفتہ بہ حالات کاردِعمل تھا۔پوری دنیاایک طرح کے سیاسی انتشارمیں مبتلاتھی۔ایک طرف مذہب کے ماننے والوں کاغیر عقلی رویہ،ان کے باہمی نزاعات اوردوسری طرف بادشاہوں اورامیروں کی عیش کوشی،عوام کی معاشی بدحالی،طبقاتی کشمکش ، عدم مساوات،جنسی آوارگی اور اخلاقی بندشوں سے آزادی نے دنیاکونڈھال کررکھا تھا۔اس کاردِعمل بھی کہیں کہیں ہوالیکن حالات اس سے بڑے ردِعمل کاتقاضاکررہے تھے۔جہاں تک جزیر العرب کاتعلق ہے، حالات اس سے کہیں زیادہ ابترتھے۔ وہاں کوئی مضبوط سیاسی نظام نہیں تھا۔مختلف قبائل اپنے دائرے میں آزادتھے۔وہ اصنام پرستی میں مبتلاتھے،لیکن ہرقبیلہ کابت الگ تھا۔ان کے درمیان تعصب اورعداوت کی دیواریں حائل تھیں۔خانہ جنگی،جہالت،معاشی بدحالی اوراخلاقی بگاڑنے انہیں اپنے نرغے میں لے رکھاتھا۔قرآن اسی کاردِعمل تھا اوریہ ردِعمل کامیاب رہااورعرب سے نکل کرعالمی سطح پربھی اثراندازہوا۔زبوں حال دنیانے اس کاساتھ دیا،جیسے وہ اس کی منتظرتھی۔
ردِعمل کے اس فلسفہ میں اس حقیقت کو نظرانداز کردیاجاتاہے کہ ردِعمل انتقام کے جذبہ سے سرشار اور حدودوقیودسے آزادہوتاہے۔ اس کے نتیجہ میں کوئی مثبت اوربڑی تبدیلی واقع نہیں ہوتی۔قرآن کے ذریعے جوانقلاب آیااس کاامتیاز یہ ہے کہ وہ اخلاق وقانون کا پابنداورعدل وانصاف کاحامی اور محافظ تھا۔اسے ردِعمل قراردیناناواقفیت کی دلیل ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ قرآن کے ذریعے جوانقلاب آیا اس کے اسباب خارج میں نہیں،بلکہ اس کے اندرموجودتھے جس کی وجہ سے لوگ اس کی طرف کھنچے چلے آرہے تھے۔دشمنوں کے دلوں میں وہ اپنی جگہ بنارہاتھااور مخالف صفوں میں پیش قدمی کررہاتھا۔ان ہی میں سے بعض اسباب کایہاں ذکرکیاجارہاہے۔
اللہ تعالیٰ کے وجودکاتصورانسان کی فطرت میں ہے۔دنیاکے تمام ہی مذاہب نے اس کی تائید اور تصویب کی ہے،لیکن یہ آلودہ شرک بھی رہاہے۔اللہ کے رسولوں نے توحیدکی دعوت دی اوراسی پراپنی تعلیمات کی بنیادرکھی،لیکن وقت گزرنے کے ساتھ یہ چشمہ صافی گدلاہوتاچلاگیا۔قرآن نے اسے نکھارکر رکھ دیااوراب وہ بے آمیزاورخالص شکل میں دنیاکے سامنے تھا۔ قرآن نے پوری تفصیل سے عقیدہ توحید پیش کیاکہ اللہ کی ذات وحدہ لاشریک ہے۔پوری کائنات،جس کی وسعت کاانداز ہ نہیں کیا جا سکتا،تنہا اس کی پیداکردہ ہے۔اس کی تخلیق میں کوئی دوسرا شریک نہیں ہے۔وہی اس کامالک اورفرماں رواہے ، کسی اورکااس میں ذرہ برابردخل نہیں ہے۔     ( جار ی ہے)

تازہ ترین خبریں

شاہ محمود قریشی نے حکومت کے ساتھ کسی بھی قسم کا کوئی معاہدہ طے پانے کی خبروں کی تردید کردی

شاہ محمود قریشی نے حکومت کے ساتھ کسی بھی قسم کا کوئی معاہدہ طے پانے کی خبروں کی تردید کردی

عمران خان کو کسی بھی صورت اسلام آباد نہیں آنے دیں گے، رانا ثناءاللہ نے اپنے عزائم بتادیئے، کیا کرنےوالے ہیں؟بڑی خبر

عمران خان کو کسی بھی صورت اسلام آباد نہیں آنے دیں گے، رانا ثناءاللہ نے اپنے عزائم بتادیئے، کیا کرنےوالے ہیں؟بڑی خبر

تحریک انصاف کا آزادی مارچ، کنٹرول رینجرز کو دیدیا گیا، بڑی خبر

تحریک انصاف کا آزادی مارچ، کنٹرول رینجرز کو دیدیا گیا، بڑی خبر

لانگ مارچ: دفعہ 144 نافذ، اسلام آباد جانے والے راستے بند،میٹرو رک گئی،سکولوں میں چھٹی

لانگ مارچ: دفعہ 144 نافذ، اسلام آباد جانے والے راستے بند،میٹرو رک گئی،سکولوں میں چھٹی

بڑے اسلامی ملک کاشام میں نئے فوجی آپریشن کااعلان،عالم اسلام میں ہلچل مچ گئی

بڑے اسلامی ملک کاشام میں نئے فوجی آپریشن کااعلان،عالم اسلام میں ہلچل مچ گئی

جسٹس (ر) ناصرہ اقبال کے گھر پر چھاپہ، معافی مانگتا ہوں، اقتدار کیا چھن گیا،وزیردفاع خواجہ آصف نے معافی مانگتے ہوئے بڑی بات کہہ دی

جسٹس (ر) ناصرہ اقبال کے گھر پر چھاپہ، معافی مانگتا ہوں، اقتدار کیا چھن گیا،وزیردفاع خواجہ آصف نے معافی مانگتے ہوئے بڑی بات کہہ دی

شاہ محمود قریشی کو ایک بار پھر فون آ گیا

شاہ محمود قریشی کو ایک بار پھر فون آ گیا

میری جان کو خطرہ ہے پھر بھی جہاد سمجھ کر نکل رہا ہوں، تحریک جاری رہے گی عوام سے کہتا ہوں کہ۔۔کپتان نے بڑااعلان کردیا

میری جان کو خطرہ ہے پھر بھی جہاد سمجھ کر نکل رہا ہوں، تحریک جاری رہے گی عوام سے کہتا ہوں کہ۔۔کپتان نے بڑااعلان کردیا

اسلام آباد پولیس نے ڈی چوک پہنچنے والے تحریک انصاف کے کتنے کارکنوں کوگرفتارکرلیا،شہراقتدار سے بڑی خبرآگئی

اسلام آباد پولیس نے ڈی چوک پہنچنے والے تحریک انصاف کے کتنے کارکنوں کوگرفتارکرلیا،شہراقتدار سے بڑی خبرآگئی

وزیرِاعظم کوبلوچستان کے جنگلات میں آگ پرقابوپانے کیلئے جاری آپریشن پربلوچستان حکومت کی جانب سےتفصیلی رپورٹ پیش کردی گئی

وزیرِاعظم کوبلوچستان کے جنگلات میں آگ پرقابوپانے کیلئے جاری آپریشن پربلوچستان حکومت کی جانب سےتفصیلی رپورٹ پیش کردی گئی

سونے کے خریداروں کیلئے بڑی خبر ، قیمت کو گیئر لگ گئے

سونے کے خریداروں کیلئے بڑی خبر ، قیمت کو گیئر لگ گئے

شہید کی توہین کسی صورت مناسب نہیں، پنجاب پولیس کا پرویزالٰہی کے بیان پر ردعمل

شہید کی توہین کسی صورت مناسب نہیں، پنجاب پولیس کا پرویزالٰہی کے بیان پر ردعمل

جڑواں شہروں کے باسیوں کےلیے بری خبر،میٹروسروس بندکردی گئی،بندش کتنے دن رہے گی ،بڑی خبرآگئی

جڑواں شہروں کے باسیوں کےلیے بری خبر،میٹروسروس بندکردی گئی،بندش کتنے دن رہے گی ،بڑی خبرآگئی

روپیہ مزیدگراوٹ کا شکار، ڈالرکی اونچی اڑان کا سلسلہ جاری،امریکی کرنسی کی قدر میں کتنااضافہ ہوگیا،پریشان کردینے والی خبرآگئی

روپیہ مزیدگراوٹ کا شکار، ڈالرکی اونچی اڑان کا سلسلہ جاری،امریکی کرنسی کی قدر میں کتنااضافہ ہوگیا،پریشان کردینے والی خبرآگئی