01:39 pm
 شوپیاں کے سیب باغ میں تین نوجوان کیسے قتل ہوئے؟

 شوپیاں کے سیب باغ میں تین نوجوان کیسے قتل ہوئے؟

01:39 pm

(گزشتہ سے پیوستہ)
 فوج نے اعتراف کیا کہ فوج نے بدنام زمانہ کالے قانون افسپا (AFSPA) کے تحت حاصل خصوصی اختیارات سے تجاوز کیا ہے،لہٰذا با اختیار انضباطی اتھارٹی نے حکم دیا ہے کہ فوجی قانون کے تحت ان لوگوں کیخلاف کارروائی کی جائے جو ابتدائی تحقیقات کے دوران جوابدہ پائے گئے ہیں‘‘۔یہ پہلا موقع نہیں کہ بھارتی فوج نے کشمیریوں کے خلاف اعلان جنگ کر رکھا ہے۔وہ ماورائے عدالت سنگین جنگی جرائم میں ملوث ہے۔یہ بھی پہلا موقع نہیں کہ آپریشن کرنے والی فورسز کو خصوصی اختیارات سے تجاوز کرتے ہوئے پایا گیا ہو۔
 
فوج افسپا کے تحت حاصل خصوصی اختیارات سے مسلسل تجاوز کر رہی ہے ۔بھارتی فورسز  اپنے قواعد و ضوابط کی بھی خلاف ورزی کر رہی ہے۔ با اختیار انضباطی اتھارٹی کی ہدایات نام نہاد ہیں۔کشمیر میں جنگل کا قانون ہے۔ فوجی قانون کے تحت نظم شکنی کی پاداش میںجنگی جرائم میں ملوث اہلکاروں کے خلاف کبھی کوئی  کارروائی نہیں کی گئی۔ شواہداور تحقیقات کے لئے انکوائری کمیٹیاں بنتی ہیں ۔وہ ذمہ داروں کی نشاندہی کرتی ہیں۔ مگر معاملات ہمیشہ گول کر دیئے جاتے ہیں۔ راجوری کے تین نوجوانوں کے قتل میں ملوثین کیخلاف کورٹ آف انکوائری کے لئے شہری گواہوں کو بھی طلب کیا گیا جن میں وہ لوگ شامل تھے جو مقامی فوج کیلئے ’مخبر‘ کے طور پر کام کرتے ہیں۔ مگر بھارتی فوج نے اپنے اہلکاروں کو بچانے کے لئے سارا قصوروار ان مخبروں کو ٹھہرادیا ہے۔ اس بار کچھ اشارے مل رہے تھے کہ مزدوروں کے قاتل فوجی اہلکاروں کے خلاف ایف آئی آر درج ہو گی۔ ان پر قتل کا مقدمہ قائم ہو گا۔لگتا ہے اس بار پھر بھارتی فوجی اہلکاروں کو بچانے کے اقدامات ہو رہے ہیں۔
فوجی افسران اور اہلکاروں کا کبھی کورٹ مارشل نہ ہو گا۔مزدوروں کے ڈی این اے نمونے حاصل کرنے کے 40روز بعد25ستمبر کوانسپکٹر جنرل آف پولیس کشمیر زون،وجے کمار نے اعتراف کیا کہ راجوری کے تین کنبوں کے ڈی این اے نمونوں کی جانچ رپورٹ حاصل ہو گئی ہے جو اْن تین نوجوانوں کے اہل خانہ سے ملتی ہے، جو امشی پورہ شوپیان میں مارے گئے تھے۔اب یہاں سے ایک نئی کہانی شروع ہوتی ہے۔30ستمبر کوامشی پورہ شوپیان فرضی انکائونٹر معاملے میںپولیس نے 2مقامی نوجوانوں کو گرفتار کیا۔ ان پر الزام عائد کیا گیا کہ انہوں نے مبینہ طور پر راجوری کے تین مزدوروں کے بارے میں فوج کو غلط اطلاعات فراہم کی تھیں۔ دونوں نوجوانوں کو چیف جوڈیشل مجسٹریٹ شوپیان کی عدالت میں پیش کیا گیا جہاں پولیس نے دونوں کی 8روزہ جسمانی ریمانڈ حاصل کی۔ یہ دونوں افراد فورسز کے لئے کام کرتے ہیں اور ان کاتعلق شوپیان کے دو مضافاتی دیہات سے ہے۔ ہیر پورہ شوپیان پولیس سٹیشن میں دونوں کی خلاف ایف آئی آر درج کی گئی۔اب راجوری سے تعلق رکھنے والے 3 مزدوروں کی نعشیں حکام نے لگ بھگ ا ڑھائی ماہ بعد اہل خانہ کی حوالے کردیں۔ایک عینی شاہد نے بتایا کہ75روز بعد بھی لاشیں اچھی حالت میں پائی گئیں اور لاشوں میں کوئی بدبونہیں تھی۔ 2014 ء سے لے کر اب تک گانٹھ مولہ میں200 سے زیادہ گولیوں سے چھلنی لاشوں کو دفن کیا گیاہے جن میں راجوری کے یہ تین مزدور بھی شامل ہیں اور  یہ پہلی بار ہوا ہے جب لاشوں کو نکالا گیا ۔رواں سال اپریل سے پہلے صرف غیر ملکی جنگجوئوں کی لاشیں اس قبرستان میں دفنائی جاتی رہی ہیںلیکن پھرمقامی مجاہدین کی لاشوں کو بھی کوروناکے پیش نظریہاں سپرد خاک کرنا شروع کیا۔
مزدوروں کے لواحقین مجرموں کو پھانسی دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ شہداء کے لواحقین کا کہنا ہے کہ اگرچہ اس دنیا کا کوئی قانون ہمارے بچوں کو واپس نہیں لاسکتا لیکن ملزمان کے خلاف کارروائی ہمارے زخموں پر مرہم ہوگی، ہمارے لئے یہ سکون ہے کہ ہمارے بیٹوں کی نعشیں اب کسی نامعلوم جگہ پر نہیں ہیں بلکہ آبائی قبرستان میں ہیں۔انہیں بھارت سے انصاف کی کوئی امید نہیں۔ بلکہ انسانی حقوق کے عالمی اداروں سے انصاف دلانے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔متاثرہ کنبوں نے فوج کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرنے اورغریب نوجوانوں کے قتل کے اس جرم میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ان کے لواحقین کہتے ہیں کہ آخر کار ہمیں اپنے معصوم لڑکوں کی نعشیں مل گئیںلیکن اب ہماری اگلی جدوجہد اس جعلی مقابلے کے ملزموں کو سلاخوں کے پیچھے دھکیلنا ہے۔جو کہ بھارتی فوجی ہیں۔ بھارتی فوج اب الزام اپنے مخبروں پر ڈال کر انصاف سے راہ فرار اختیار کر رہی ہے۔ بھارتی فوج ہی کشمیریوں کی قاتل ہے۔ نہتے اور معصوم کشمیریوں کو بھارتی فوج فرضی جھڑپوں میں یا حراست میں لے کرمیڈلز اور پرموشن کے لئے قتل کر رہی ہے۔جو کہ انسانیت کے خلاف سنگین جنگی جرائم ہیں۔ بھارتی فورسز کے خلاف انسانیت کے خلاف سنگین جنگی جرائم کا مقدمہ چلایا جائے۔ 



 

تازہ ترین خبریں

پاکستان ڈیموکریٹک اجلاس ۔۔۔۔۔ رہنماوں کے درمیان تلخ کلامی ۔۔۔ اختلافات سامنے آگئے 

پاکستان ڈیموکریٹک اجلاس ۔۔۔۔۔ رہنماوں کے درمیان تلخ کلامی ۔۔۔ اختلافات سامنے آگئے 

26 مارچ کو لانگ مارچ ہوگا ۔۔ ملک سے غیر آئینی اور غیر جمہوری حکومت کے خاتمے کیلئے قوم اپنا کردار ادا کرے ۔ مولانا فضل الرحمان 

26 مارچ کو لانگ مارچ ہوگا ۔۔ ملک سے غیر آئینی اور غیر جمہوری حکومت کے خاتمے کیلئے قوم اپنا کردار ادا کرے ۔ مولانا فضل الرحمان 

معلومات تک رسائی کے قوانین کے نفاذ کا تجزیہ کے موضوع پر ایک روزہ سیمینار کا انعقاد

معلومات تک رسائی کے قوانین کے نفاذ کا تجزیہ کے موضوع پر ایک روزہ سیمینار کا انعقاد

وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کے حوالے سے اجلاس

وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کے حوالے سے اجلاس

 ایئر پورٹ سیکیورٹی فورس پہلی بار یوم پاکستان پریڈ میں شرکت کرے گی

ایئر پورٹ سیکیورٹی فورس پہلی بار یوم پاکستان پریڈ میں شرکت کرے گی

پی ڈی ایم اجلاس۔۔۔۔ ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے امیدوار کون ہونگے؟ اہم خبر سامنے آگئی

پی ڈی ایم اجلاس۔۔۔۔ ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے امیدوار کون ہونگے؟ اہم خبر سامنے آگئی

وزیراعظم کی زیر صدارت حکومتی ترجمانوں کا اجلاس۔۔ چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے انتخابات کی حکمت عملی پر بھی مشاورت

وزیراعظم کی زیر صدارت حکومتی ترجمانوں کا اجلاس۔۔ چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے انتخابات کی حکمت عملی پر بھی مشاورت

 لانگ مارچ سے قبل ہوم ورک ضروری ہے، ہم ناکامی کے متحمل نہیں ہوسکتے۔یوسف رضا گیلانی

لانگ مارچ سے قبل ہوم ورک ضروری ہے، ہم ناکامی کے متحمل نہیں ہوسکتے۔یوسف رضا گیلانی

پاک بحریہ کی جانب سے ریجنل میری ٹائم سیکیورٹی پیٹرول کے دوران دوطرفہ بحری مشقوں کا انعقاد کیاگیا۔

پاک بحریہ کی جانب سے ریجنل میری ٹائم سیکیورٹی پیٹرول کے دوران دوطرفہ بحری مشقوں کا انعقاد کیاگیا۔

شہر قائد میں رشوت کے عوض ڈرائیونگ لائنسز بنانے کا انکشاف ۔۔۔ اہلکار معطل

شہر قائد میں رشوت کے عوض ڈرائیونگ لائنسز بنانے کا انکشاف ۔۔۔ اہلکار معطل

بٹگرام میں تین ماہ سے مسلسل گونگی بہری لڑکی سےبد فعلی کرنے والا سفاک ملزم گرفتار

بٹگرام میں تین ماہ سے مسلسل گونگی بہری لڑکی سےبد فعلی کرنے والا سفاک ملزم گرفتار

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد کی ملاقات

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد کی ملاقات

بلاول بھٹو کسی ایک ایم این اے بارے بتائیں جو غیر حاضر تھا،اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کابلاول بھٹو زرداری کو چیلنج

بلاول بھٹو کسی ایک ایم این اے بارے بتائیں جو غیر حاضر تھا،اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کابلاول بھٹو زرداری کو چیلنج

سعودی عرب میں پاک میڈیا جنرنلسٹس فورم کی جانب سے خواتین کے عالمی دن کی مناسبت سے خصوصی ویبنار کا انعقاد

سعودی عرب میں پاک میڈیا جنرنلسٹس فورم کی جانب سے خواتین کے عالمی دن کی مناسبت سے خصوصی ویبنار کا انعقاد