01:14 pm
کشمیر میںعالمی قوانین کی خلاف ورزیاں

کشمیر میںعالمی قوانین کی خلاف ورزیاں

01:14 pm

بھارتی فوج نے کشمیر کی جنت نظیر وادی کو ایک جیل کی شکل دے رکھی ہے جہاں کسی قسم کی کوئی آزادی نہیں۔لاک ڈائون، کرفیو اور ذرائع ابلاغ کی مکمل پابندی 5 اگست 2019ء سے جاری ہے۔مودی حکومت نے آرٹیکل 370اور 35-Aکو منسوخ کرکے کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کر دیا ہے اور وہاں پر دن رات غیر کشمیریوں کو لالاکر آباد کیا جا رہاہے تاکہ آبادی کا تناسب ہندوئوں کے حق میں کیا جاسکے۔ مودی کی اس غیر جمہوری، غیر آئینی اور غیر اخلاقی چال نے کشمیر میں مسلمانوںکی زندگی اجیرن کر رکھی ہے جہاں مسلمانوں پر ظلم و بر بریت اور دہشت کے پہاڑ توڑنے جا رہے ہیں۔پیلٹ گن کے اندھا دھند استعمال کے ساتھ ساتھ آنسو گیس اور دستی بموں کے بے دریغ استعمال نے سیکولر بھارت کے مکروہ اور منحوس چہرے سے نقاب اتار دیاہے اور آر ایس ایس سے متاثر بی جے پی کی توسیع پسندانہ پالیسیاں کھل کر سامنے آگئی ہیں۔دنیا کو پتہ چل گیا ہے کہ انتہا پسند ہندوئوں کی سیاست نفرت سے شروع ہوتی ہے اور کشمیری مسلمانوں کی نسل کشی پر آ کر ختم ہوتی ہے۔ معصوم بیٹوں کی آنکھوں کے سامنے ان کے باپوں کو قتل کیا جا رہاہے۔آر ایس ایس کے غنڈے دن دیہاڑے عورتوں کی عصمتیں لوٹتے ہیں اسلحے کے زور پر گھروں کی تلاشی کے بہانے چادر اور چاردیواری کا تقدس پامال کیا جاتاہے۔بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزیاںہو رہی ہیں جس سے کشمیر ایک جہنم کا سماں پیش کرتا ہے۔یہ ساری کارروائی اس لئے کی جا رہی ہے تاکہ مسلمانوں کی زبان بندی کی جا سکے جنہوں نے آئین کی ان غیر قانونی تبدیلیوں کو ماننے سے انکار کر دیاہے۔ابھی تک 8 ہزار سے زیادہ نوجوانوں کو گرفتار کر کے جیلوں میں ڈال دیا گیا ہے۔
کشمیریوںکے تقریباًتمام رہنما یا تو بھارتی قید میں ہیں یا انہیں گھروں میں نظر بند کیا جا چکا ہے۔اسی طرح میڈیا کے لوگوں کو بھی غیر قانونی حراست میں رکھاگیا ہے۔اقوام متحدہ اور دیگر ادارے یہ سارا ظلم و ستم دیکھ رہے ہیں اور خاموش ہیں۔یہ خاموشی کب تک چلے گی۔کروناوائرس کے بعد بھارت کا فرض بنتا تھا کہ بین الاقوامی انسانی حقوق کی آرگنائزیشنر کوجموں کشمیر میں دورہ کرنے کی اجازت دیتا لیکن بھارت نے ایسا کرنے سے صاف انکار کردیا۔15اگست 2020ء کو ہیومن رائٹس واچ نے بتایا ہے کہ بھارت کی طرف سے اظہار رائے پر ناجائز پابندیوں، ذرائع ابلاغ ہر بے جا قدغنوں، صحت اور صفائی کی سہولیات کی عدم دستیابی اور تعلیمی سرگرمیوں کے نہ ہونے کی وجہ سے کرونا وائرس میں اضافہ ہو اہے۔بھارت کو چاہیے کہ اپنے زیر تسلط علاقے میں آرٹیکل 56/ 55اور جنیوا کنو نشن IVکے مطابق صحت، خوراک اور طبی سہولیات بہم پہنچائے۔بھارت یونائٹیڈنیشن سیکیورٹی کونسل کی قرارداد نمبر2532کی بھی خلاف ورزی کرتے ہوئے کرونا وائرس سے متاثرہ علاقوں میں جنگ بندی نہیں کر رہا۔انٹرنیشنل کمیٹی آف ریڈ کراس کو بین الاقوامی قوانین اس بات کی اجازت دیتے ہیں کہ وہ بین الاقوامی جھگڑوں کے علاقے میں جاکر امدادی کارروائیاں سرانجام دے سکے لیکن بھارت نے ان کو بھی اس سے زبردستی روک رکھا ہے۔ آرٹیکل 126،143 جنیوا کنونشن IIIاور IVکی بھی خلاف ورزی کرنے ہوئے بھارت نے ریڈ کراس کو علاقے میں آپریٹ کرنے سے روک رکھاہے۔ کوئی ان سے پوچھے کہ بھارت کس قانون کے تحت بین الاقوامی قوانین کی دھجیاں اڑا رہاہے۔یہ اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کے لئے بھی ایک امتحان ہے کہ وہ بھارت کی اس سفاکیت کو روکے۔
15اگست 2019ء کو بھارت کے اس یک طرفہ اقدام نے کشمیریوں سے ان کی ریاست چھین لی ہے۔ اور کشمیریوں کی خصوصی حیثیت کو ختم کر دیا ہے۔بیک جنبش قلم کشمیریوں سے شادی بیاہ، اعلی تعلیم، نوکریوں، وظائف اور جائیدادیں خریدنے کی مراعات واپس لے لی گئی ہیں۔غیر کشمیری ہندوئوں کو کشمیر کے ڈومیسائل بنوانے،زمین اور جائیداد خریدنے اور مقامی نوکریاں حاصل کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ اسی طرح کی کارروائیاں کرنے کے لئے وادی میں ایک سال سے سخت ترین کرفیو نافذ ہے جس کی وجہ سے زندگی معطل ہے۔لوگ گھروں میں قیدہیں۔جو باہر نکلتاہے اسے مار دیا جاتا ہے یاقید کرلیا جاتا ہے۔تعلیمی ادارے بند پڑے ہیں کشمیر کے عوام مختلف قسم کی ذہنی بیماریوں میں مبتلا ہورہے ہیں۔ایک سال سے کاروبار اور سیاحت بند ہے جس کی وجہ سے معاشی طور پر کشمیر کو 5ارب ڈالر کا نقصان ہو چکا ہے جبکہ5لاکھ سے زیادہ لوگ بے روزگاری کا شکار ہو چکے ہیں۔کھانے پینے کی اشیاء اور ادویات عوام کی رسائی سے باہر ہیں۔بھوک، بیماری اور موت کشمیریوں کا مقدر بنتی جا رہی ہے۔اس موقع پر عمران خان حکومت نے اپنا حق ادا کرتے ہوئے اقوام متحدہ اور دنیا کے چیدہ چیدہ رہنمائوں سے رابطہ کیا ہے تا کہ کشمیر میں ہونے والی زیادتیوں سے دنیا کو باخبر رکھا جا سکے۔عمران خان نے کشمیریوں کے حق خودارادیت کا مقدمہ دنیا کے سامنے کھول کر بیان کیا ہے اور بتایا ہے کہ کشمیر کی وجہ سے دو ملکوں کے درمیان ایٹمی جنگ چھڑنے کے امکانات بڑھتے جا رہے ہیں۔
عمران خان نے کشمیریوں سے وعدہ کیا ہے کہ اگر بھارت نے جنگ کا راستہ اختیار کیا تو پاکستان آخری گولی اور خون کے آخری قطرے تک لڑے گا۔عمران خان کی انتھک کو ششوں کی وجہ سے کشمیر کا مقدمہ دنیا کے سامنے اجاگر ہوا ہے جس کی وجہ سے اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل میں کشمیر کا معاملہ تین دفعہ زیر بحث آچکا ہے۔اسی طرح اقوام متحدہ کا بنیادی انسانی حقوق کمیشن کشمیر کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر دورپورٹیںجاری کر چکا ہے۔وقت آچکا ہے کہ اقوام متحدہ سمیت دنیا کے تمام ادارے بھارت کی زیادتیوں کا نوٹس لیں۔UNHRHCنے کشمیر پر دو رپورٹیں شائع کی ہیں جن میں یہ مطالبہ کیا گیا ہے کہ کشمیر میں فوری طور پر امن قائم کرایا جائے اور کشمیر میں ہونے والی بنیادی انسانی حقوق کی پامالیوں کی تحقیقات کرائی جائیں۔ایمنسٹی انٹر نیشنل نے بھی کشمیریوں میں ہونے والی عصمت دریوں، دہشت گردی اور لوگوں کو دن دیہاڑے غائب کردینے کے واقعات کا سخت ترین نوٹس لیا ہے۔اسی طرحGenocide Watchنے بھی اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا ہے کہ بھارت کو قتل وغارت گری سے روکے۔بھارت کے اندر بھی نریندر مودی کے خلاف آوازیں اٹھنا شروع ہو گئی ہیں۔پہلی دفعہ ایسا ہوا ہے کہ دنیا کا میڈیا بشمول بی بی سی اورالجزیرہ بھی بھارت کے کشمیر میں ظلم و ستم پر بول اٹھا ہے۔بھارت کو کشمیر میں ظلم بند کرنا ہی پڑے گا جس کے بعد کشمیری آزادی کی فضا میں سانسیں لے سکیں گے۔

تازہ ترین خبریں

شادی ہالز کھولنے کا فیصلہ واپس لینے پر غور،کیاسکولز بھی دوبارہ بندہونیوالے ہیں؟شہراقتدار سے بڑی خبرآگئی

شادی ہالز کھولنے کا فیصلہ واپس لینے پر غور،کیاسکولز بھی دوبارہ بندہونیوالے ہیں؟شہراقتدار سے بڑی خبرآگئی

لیاری، فائرنگ سے چینی شہری سمیت 2 افراد زخمی

لیاری، فائرنگ سے چینی شہری سمیت 2 افراد زخمی

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے امریکی جنرل سرنکولس پیٹرک کارٹر کی ملاقات

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے امریکی جنرل سرنکولس پیٹرک کارٹر کی ملاقات

کورونا کےبڑھتےکیسز،گجرات کے مختلف علاقوں میں سمارٹ لاک ڈاؤن نافذ

کورونا کےبڑھتےکیسز،گجرات کے مختلف علاقوں میں سمارٹ لاک ڈاؤن نافذ

گلگت بلتستان اسمبلی میں خطے کو صوبہ بنانے کی تاریخی قرارداد منظور

گلگت بلتستان اسمبلی میں خطے کو صوبہ بنانے کی تاریخی قرارداد منظور

شاطر پیپلزپارٹی پی ڈی ایم کو بلیک میل کررہی ہے ،فردوس عاشق اعوان

شاطر پیپلزپارٹی پی ڈی ایم کو بلیک میل کررہی ہے ،فردوس عاشق اعوان

اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس کل طلب

اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس کل طلب

26مارچ کو لانگ نہیں’’ کوئیک ‘‘مارچ ہوگا،فرخ حبیب

26مارچ کو لانگ نہیں’’ کوئیک ‘‘مارچ ہوگا،فرخ حبیب

وفاق کے بعد پنجاب میں بھی اپوزیشن کو بدترین شکست ہو گی ، عثمان بزدار

وفاق کے بعد پنجاب میں بھی اپوزیشن کو بدترین شکست ہو گی ، عثمان بزدار

احتساب عدالت: شاہد خاقان عباسی کیخلاف ایل این جی ریفرنس کی سماعت جمعہ تک ملتوی

احتساب عدالت: شاہد خاقان عباسی کیخلاف ایل این جی ریفرنس کی سماعت جمعہ تک ملتوی

فوک گلوکار استاد پٹھانے خان کو مداحوں سے بچھڑے 21 برس بیت گئے

فوک گلوکار استاد پٹھانے خان کو مداحوں سے بچھڑے 21 برس بیت گئے

الیکشن کمیشن یوسف رضا گیلانی کی نااہلی سے متعلق درخواست کی سماعت آج کریگا

الیکشن کمیشن یوسف رضا گیلانی کی نااہلی سے متعلق درخواست کی سماعت آج کریگا

سندھ ہائیکورٹ نے فیصل واوڈاکیخلاف اسلام آبادہائیکورٹ کا فیصلہ طلب کرلیا

سندھ ہائیکورٹ نے فیصل واوڈاکیخلاف اسلام آبادہائیکورٹ کا فیصلہ طلب کرلیا

پاکستان ڈیموکریٹک اجلاس ۔۔۔۔۔ رہنماوں کے درمیان تلخ کلامی ۔۔۔ اختلافات سامنے آگئے 

پاکستان ڈیموکریٹک اجلاس ۔۔۔۔۔ رہنماوں کے درمیان تلخ کلامی ۔۔۔ اختلافات سامنے آگئے