01:46 pm
نوازشریف اور امام خمینی!!

نوازشریف اور امام خمینی!!

01:46 pm

٭اشتہاری!! ہر تھانے میں ہوائی اڈوں پر نوازشریف کی تصویر لگے گیO سپریم کورٹ: جرنیلوں اور ججوں کو زمین دینے کا اختیار کالعدمO امین فہیم کے بیٹے جلیل الرحمن نے ہالہ میونسپل کمیٹی کے ڈیڑھ کروڑ روپے ذاتی اکائونٹ میں ڈال لئے، واپس کرنا پڑےO ’’نواز شریف پاکستان کا امام خمینی ہے‘‘ محمد زبیرO کرونا، بھارت بدترین حالات، 68 لاکھ مریض، روزانہ 1000 سے زیادہ ہلاکتیں، پاکستان میں 493 مریضوں کی حالت تشویش ناک O نیب: شہباز شریف خاندان، 14 کمپنیاں، 401 بنک اکائونٹس، 31 ارب کے اثاثے!!O امریکہ: صدارتی امیدواروں، ٹرمپ و بائیڈن کا مباحثہ سے انکار O دوائوں کی قیمتوں میں مزید17 فیصد اضافہ، بجلی مزید80 پیسے یونٹ مہنگی، آٹا و گیس بھی مہنگےO نیب، کیپٹن صفدر کو گرفتار کرنے کا فیصلہ O نوازشریف کو واپس لانے میں تین سال لگ سکتے ہیں، برطانیہ میں مقدمہ کا امکان ہے: قانونی ماہرین۔
٭ پرانا محاورہ ہے، ’بد سے بدنام بُرا‘! نیب نے ایف آئی اے اور ملک بھر کی پولیس کو سرکاری طور پر مطلع کیا ہے کہ نوازشریف کو اشتہاری قرار دیا جا رہا ہے، ہر تھانے اور ہوائی اڈوں پر تصویر والا اشتہار لگے گا۔ اس سرکلر کے تحت نوازشریف کو ہوائی اڈے پر اترتے ہی گرفتار کر لیا جائے گا اور ملک سے باہر جانے پر پابندی ہو گی! تاریخ ایسے بے شمار واقعات سے بھری پڑی ہے۔ نائیجیریا کا صدر ملک سے بھاگ گیا، بیوی سامان کے 40 بکسوں سمیت ہوائی اڈے پر پکڑی گئی۔ اٹلی کا آمر مسولینی اتنا طاقت ور تھا کہ سکولوں اور کالجوں میں طلبا صبح اسمبلی میں گایا کرتے تھے کہ ’’مسولینی ہمیشہ درست کہتا ہے، درست کرتا ہے‘‘ انقلاب آیا تو مسولینی نے جان بچانے کے لئے ایک جرمن فوجی سپاہی کی وردی پہن کر ملک سے فرار ہونے کی کوشش کی مگر سرحد پار نہ کر سکا اور پکڑا گیا۔ اسے واپس لا کر پھانسی دی گئی اور لاش ایک پٹرول پمپ پر لٹکا دی گئی، جو سات دن لٹکی رہی۔ پہلے روز ایک عورت آئی، اس نے یہ کہتے ہوئے لاش کو چھ گولیاں ماریں کہ اس شخص نے اس کے چھ بیٹوں کو قتل کیا تھا۔ ہٹلر کی تنہائی میں خودکشی! بہت سی مثالیں ہیں۔ تاریخ میں درج ہیں۔ عراق کا صدر صدام، لیبیا کا آمر کرنل قذافی، انڈونیشیا کا صدر جنرل سوہارتو، چلی کا آمر پنوشے!!…یہ لوگ تخت پر تھے تو جبر و استبداد کی انتہا پر تھے۔ ہزاروں لاکھوں مخالفین مروا دیئے اور جب انقلاب آیا تو صدام حسین اوار کرنل قذافی منتیں کرتے رہ گئے کہ ’’مجھے ٹھڈے نہ مارو!‘ نوازشریف کا معاملہ دوسرا سہی مگر دو صدر، تین جرنل، ایک چیف جسٹس فارغ کئے…اور…اب؟!!!
٭نوازشریف کا معاملہ مختلف ہے مگر اشتہاری قرار پا کر تھانوں اور ہوائی اڈوں پر باتصویر اشتہار زیادہ اذیت نام معاملہ ہے۔ زندگی زیادہ غیر محفوظ ہو جاتی ہے۔ عدالت کا فیصلہ ہے کہ ’ملزم‘ 30 روز تک حاضر نہ ہوا تو گھرکے باہر اس کے اشتہاری ہونے کی ڈھول بجا کر منادی کی جائے گی۔ ویسے ن لیگ کے کچھ ذرائع نے ذاتی طور پر مشورہ دیا ہے کہ نوازشریف کو واپس آ کر مقدمات کا سامنا کرنا چاہئے۔ احتساب جج محمد ارشد کی بدعنوانی کے الزام میں برطرفی ان کے لئے ریلیف کا باعث بن سکتی ہے۔ وہ نہ آئے تو ہمیشہ کے لئے اشتہاری قرار پا سکتے ہیں پھر کسی قسم کا کوئی ریلیف نہیں مل سکے گا!۔ ان کے بعض ساتھی بار بار کہہ رہے ہیں کہ تین بار کے وزیراعظم کو سزا دی جا رہی ہے۔ یہ مضحکہ خیز بات ہے، کوئی شخص 30 بار بھی وزیراعظم رہا ہو تو کیا اس کے ہاتھوں سرزد ہونے والے سنگین جرائم خود بخود ختم ہوجاتے ہیں؟ پاکستان کے آئین کی دفعہ 248 کے مطابق صدر، وزیراعظم، وزرائے اعلیٰ  اور وزرا جب تک اقتدار میں رہیں، ان کے خلاف کوئی فوجداری مقدمہ درج نہیں ہو سکتا، مگر اقتدار سے پہلے والے مقدمات ختم نہیں ہو سکتے، اقتدار کے بعد پھر شروع ہو جاتے ہیں۔ اقتدار کے دوران بھی سول مقدمات، جائیداد کی تقسیم، شادی طلاق وغیرہ کے مقدمات قائم ہو سکتے ہیں۔ اس وقت اپوزیشن، خاص طور پر مریم نواز کی ساری سیاسی کارروائیاں کس طرح نوازشریف کی رہائی اور جان بچانے کے لئے کی جا رہی ہیں۔ نوازشریف کے خلاف سارے مقدمے ختم ہو جائیں، باعزت واپس بھی آ جائیں مگر اس دُکھ کا ازالہ کیسے ہو گا کہ پاکستان میں والد کے جنازے میں اور لندن میںعمر بھرکی وفادار بیگم کے آخری لمحات میں شریک نہ ہو سکے!!
٭قدم بوسی، چاپلوسی کی ایک مثال: شریف خاندان کے ترجمان، سابق گورنر سندھ، محمد زبیر نے نوازشریف کو پاکستان کا امام خمینی قرار دیا ہے۔ خمینی نے فرانس میں بیٹھ کر ایران میں انقلاب کی قیادت کی تھی۔ یہی سرگرمی لندن میں نوازشریف سے منسوب کی گئی ہے۔ ان دونوں میں ایک دو باتیں یکساں ہیں مگر سیاسی اور ذاتی طور پر زمین آسمان کا فرق ہے۔ یکساں باتیں تو یہ ہیں کہ دونوں نے جیل کاٹی، سزائے موت بھی ہوئی۔ خمینی کو سزائے موت سے بچانے کے لئے وہاں کے علما نے آئت اللہ کا خطاب دے دیا۔ ایران میں آئت اللہ کو سزائے موت نہیں دی جا سکتی۔ خمینی بچ کر فرانس چلے گئے۔ نوازشریف کی سزائے موت کو ایک عدالت نے ختم کیا، اب وہ ساڑھے سات سال کی قید میں تھے، کسی طرح لندن چلے گئے وہاں سے ملک میں ’انقلاب‘ لا رہے ہیں۔ مگر ان دوباتوں کے سوا امام خمینی اور نوازشریف کی ذاتی زندگی میں کوسوں کا فرق ہے۔ خمینی انقلاب سے پہلے اور پھر ملک کا مقتدر ترین حاکم بننے کے بعد بھی تہران میں دس مرلے کے معمولی سے مکان میں مقیم رہے۔ میں نے یہ مکان اور رہائشی کمرہ دیکھا ہے۔ تقریباً دس فٹ، آٹھ کا ایک سادہ کمرہ، سونے کے لئے لکڑی کا تخت پوش (پلنگ)، اوپر سادہ سا بستر، ایک کمبل، کمرے میں کوئی صوفہ، کوئی کرسی نہیں۔ جنرل ضیاء الحق اردن کے بادشاہ اور ترکی کے وزیراعظم کے ساتھ ایران عراق جنگ رکوانے گئے تو چاروں نے کمرے میں زمین پربچھی چٹائی پر بیٹھ کر مذاکرات کئے۔ وہیں سادہ سبزی اور روٹی کھائی۔ (مذاکرات ناکام رہے، ایران اور عراق سات سال کی جنگ کے بعد تھک گئے، سارا اسلحہ ختم ہو گیا تو جنگ خود ہی رک گئی!) خمینی نے ملک کے اندر اور باہر کوئی اثاثے نہیں بنائے، بیرون ملک علاج نہیں کرایا۔ کسی مالی بدعنوانی، منی لانڈرنگ کا کوئی الزام نہیں، بیٹے احمد خمینی کو ملک کا وزیراعظم بنایا گیا، خمینی نے تقرری منسوخ کر دی۔ نہائت سادہ زندگی! اور نوازشریف!! قارئین سب کچھ جانتے ہیں، تفصیل کی ضرورت نہیں، مگر محمد زبیر کی چاپلوسی! حیرت ہے! اس سوچ کا شخص ایک صوبے کا گورنر بنا رہا!!
٭غریب عوام پر ایک اور قیامت! بجلی مزید80 پیسے فی یونٹ مہنگی اور دوائوں میں 300 فیصد سے زیادہ اضافہ کے بعد بھی ’تجوریوں‘ کا پیٹ نہیں بھرا، جان بچانے والی دوائیں مزید 17 فیصد مہنگی!! صحت کے سابق مشیر نے 300 فیصد سے زیادہ مہنگی کیں، نئے مشیر نے پہلے 262 فیصد اور اب مزید 17 فیصد اضافہ کر دیا! ایک گورکن پر الزام لگا کہ مُردوں کے کفن بیچ دیتا ہے، دوسرا گورکن آیا اس نے مردوں کی ہڈیاں بھی بیچنی شروع کر دیں! نتھا سنگھ اینڈ پریم سنگھ، وَن اینڈ دی سیم تھنگ! (ایک ہی چیز ہیں!) مزید ستم! میں نے گزشتہ روز شیشوں میں بند کچھ دوائیں منگوائیں، ڈبیاں غائب شیشیاں آدھی خالی!! علامہ اقبال کا مصرع یاد آتا ہے کہ ’’رو لے اب دل کھول کر اے دیدۂ خوننابہ بار!!‘‘ اپوزیشن کو مشورہ دینا چاہتا ہوں کہ اتحاد وغیرہ کی سرگرمیوںکی کوئی ضرورت نہیں، حکومت جِس شاخ پر بیٹھی ہے اسے خود ہی کاٹ رہی ہے!
٭لاہور کے ’معروف‘ کوتوال (سی سی پی او) عمر شیخ نے تجویز دی ہے کہ پولیس کے بدعنوان افسروں اور اہلکاروں کا فوج کی طرح کورٹ مارشل ہونا چاہئے۔ کیسے لوگ کیسے کیسے عہدوں پر پہنچ گئے! لاہور شہر کے سب سے بڑے پولیس افسر کو یہ علم نہیں کہ ’مارشل‘ ایک عسکری اصطلاح ہے اور کورٹ مارشل فوجی عدالت میں ہی ہو سکتا ہے! پرانا شعر کہ ’’کیسے کیسے اَیسے، ویسے ہو گئے! اور کیسے کیسے وَیسے، ایسے ہو گئے!‘‘
٭نیب کا انکشاف! شہباز شریف خاندان، 31 ارب کے اثاثے، 14 کمپنیاں، 401 بنک اکائونٹس!! امام خمینی کی مثال دے چکا ہوں وہ جیل سے تخت پر اور یہ تخت سے جیل میں!!
٭اپوزیشن ایک طرح سے اسمبلیوں سے استعفوں کا شور مچا رہی ہے مگر استعفے دیئے نہیں جا رہے، محض دھمکیاں! آئین کہتا ہے کہ مستعفی ارکان کے ضمنی انتخابات ہوں گے۔ اس طرح موجودہ حکومت مزید مضبوط ہو جائے گی! میراثی کا بیٹا دیوار پر بیٹھا ماں کو دھمکیاں دے رہا تھا کہ مجھے پیسے نہ دیئے تو نیچے کود جائوں گا۔ ماں ہاتھ جوڑ کر منتیں کر رہی تھی کہ ایسا نہ کرنا! گھر میں میراثی داخل ہوا۔ بیٹے کی دھمکیاں سُنیں تو اسے گالی دے کر بولا کہ ’’جلدی کر لگا چھلانگ!‘‘ بیٹا بولا کہ ابا! یہ ماں بیٹے کا مسئلہ ہے تو بیچ میں کیوں آتا ہے!؟
٭صدر مملکت نے پھر سیاسی بیان دیا کہ ’’صدر کے طور پر غیر جانبدار ہوں مگر عمران خاں کے ساتھ ہوں!!‘‘ کیا لکھوں!
٭پلی بارگیننگ!! امین فہیم مرحوم کے بیٹے جلیل الرحمن نے ’ہالہ‘ میونسپل کمیٹی کے ڈیڑھ کروڑ روپے اپنے اکائونٹ میں منتقل کر لئے، واپس کر کے باعزت رہا!! سرکاری پیسے کی خوردبردسنگین جرم ہے، اس کی سنگین سزا ہے مگر ملزم ایک بڑا سیاسی شخص ہے، اس لئے باعزت رہا!! نیب والو! کچھ خدا کا خوف!! یہ ملک تم لوگوں کی ذاتی ملکیت نہیں، شریعت میں ایسے جرم کی کوئی معافی یا رعائت نہیں، تم لوگ کس طرح خدائی فوجدار بن گئے؟
      
 

تازہ ترین خبریں

عوام بڑے جھٹکے کیلئے ہو جائے تیار،یوٹیلیٹی اسٹورز پر کئی اشیائے ضروریہ کی قیمتیں بڑھانے کی تیاریاں

عوام بڑے جھٹکے کیلئے ہو جائے تیار،یوٹیلیٹی اسٹورز پر کئی اشیائے ضروریہ کی قیمتیں بڑھانے کی تیاریاں

انا للہ وانا الیہ راجعون!  جج کادورانِ سماعت عدالت میں ہی انتقال ہو گیا

انا للہ وانا الیہ راجعون! جج کادورانِ سماعت عدالت میں ہی انتقال ہو گیا

بارشیں یا موسم خشک؟آئندہ چوبیس گھنٹے موسم کیسا رہے گا؟محکمہ موسمیات کی تازہ ترین پیشنگوئی آگئی

بارشیں یا موسم خشک؟آئندہ چوبیس گھنٹے موسم کیسا رہے گا؟محکمہ موسمیات کی تازہ ترین پیشنگوئی آگئی

نواز شریف اور جہانگیر ترین کی تاحیات نا اہلی ختم ہو سکتی ہے یا نہیں؟ اعتزاز احسن کا موقف بھی آگیا

نواز شریف اور جہانگیر ترین کی تاحیات نا اہلی ختم ہو سکتی ہے یا نہیں؟ اعتزاز احسن کا موقف بھی آگیا

شادی کیلئے شریک حیا ت کا انتخاب کرتے ہوئے کن خصوصیات کو مدِ نظر رکھنا چاہئے ؟ محققین کی نئی تحقیق

شادی کیلئے شریک حیا ت کا انتخاب کرتے ہوئے کن خصوصیات کو مدِ نظر رکھنا چاہئے ؟ محققین کی نئی تحقیق

سابق وزیراعظم نوازشریف اور جہانگیرترین کی نااہلی ختم  کرنے کے حوالے سے سپریم کورٹ سے بڑی خبر آگئی

سابق وزیراعظم نوازشریف اور جہانگیرترین کی نااہلی ختم کرنے کے حوالے سے سپریم کورٹ سے بڑی خبر آگئی

کیا اوورسیز پاکستانی وزیراعظم عمران خان کی حکومت سےمطمئن ہیں یا نہیں؟ حیران کن ردِعمل آگیا

کیا اوورسیز پاکستانی وزیراعظم عمران خان کی حکومت سےمطمئن ہیں یا نہیں؟ حیران کن ردِعمل آگیا

6.2شدت کا خوفناک زلزلہ ،مرکز کہا ں تھا؟ شہریوں میں شدید خوف و ہراس

6.2شدت کا خوفناک زلزلہ ،مرکز کہا ں تھا؟ شہریوں میں شدید خوف و ہراس

ہر خاندان کیلئے 10لاکھ روپے سالامانہ حکومت نے بڑی سہولت کا اعلان کر دیا

ہر خاندان کیلئے 10لاکھ روپے سالامانہ حکومت نے بڑی سہولت کا اعلان کر دیا

فروری کے پہلے ہفتے میں بارشیں ہی بارشیں، محکمہ موسمیات نے بارشوں کے نئے سسٹم کی پیشنگوئی کر دی

فروری کے پہلے ہفتے میں بارشیں ہی بارشیں، محکمہ موسمیات نے بارشوں کے نئے سسٹم کی پیشنگوئی کر دی

موبی لنک جاز کی غیر معیاری سروسز اور صارفین سے بلا وجہ ٹیکس وصولیوں پرپی ٹی اے نے سخت ایکشن لے لیا

موبی لنک جاز کی غیر معیاری سروسز اور صارفین سے بلا وجہ ٹیکس وصولیوں پرپی ٹی اے نے سخت ایکشن لے لیا

کورونا کیسز میں اضافہ ہونے پر والدین نے تعلیمی ادارے میں ایک ہفتے کی چھٹیوں کا مطالبہ کر دیا

کورونا کیسز میں اضافہ ہونے پر والدین نے تعلیمی ادارے میں ایک ہفتے کی چھٹیوں کا مطالبہ کر دیا

اب نکاح کیلئے لازمی شرط کیا ہو گی؟  نکاح نامے میں بڑی تبدیلی کی منظوری دیدی گئی

اب نکاح کیلئے لازمی شرط کیا ہو گی؟ نکاح نامے میں بڑی تبدیلی کی منظوری دیدی گئی

وزیراعظم عمران خان کی شیخ رشید کیساتھ کیا ناراضگی ہے؟وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے اندر کی بات بتا دی

وزیراعظم عمران خان کی شیخ رشید کیساتھ کیا ناراضگی ہے؟وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے اندر کی بات بتا دی