12:25 pm
گستاخ فرانس‘ اور ڈوب مرنے کا مقام

گستاخ فرانس‘ اور ڈوب مرنے کا مقام

12:25 pm

ملعون صدر میکرون کی قیادت میں فرانس کے شیطانوں نے ناموس محمد مصطفیﷺ پر حملہ کیا..... اسلامی دنیا کے عوام تو تڑپ رہے ہیں..... مگر ستاون اسلامی ملکوں کی فوجیں اور حکمران کہاں ہیں؟ کیا اسلامی ممالک کے حکمرانوں کے صرف مذمتی بیانات اور قراردادوں سے فرانسیسی شیطان عزت رسولﷺ پر حملہ آور ہونے سے باز آجائیں گے؟
شیخ الاسلام مفتی تقی عثمانی نے ٹویٹ کیا ہے کہ ’’سرور دوجہاںﷺ کے خلاف فرانس اور اس کے صدر کی کمینگی کے بعد کیا ہم اب بھی فرانس کی مصنوعات کی خرید وفروخت‘ استعمال اور درآمد جاری رکھیں گے؟ ان دولت کے پجاریوں کو سبق اسی وقت ملے گا..... جب عالم اسلام ان کی  مصنوعات کا بائیکاٹ کرے گا‘ یہ کم سے کم ردعمل ہے جو  ہم دے سکتے ہیں‘‘ مبلغ اسلام مولانا طارق جمیل نے بھی اس معاملے پر  اپنے ٹویٹ میں لکھا ہے کہ  ’’رسول اکرمﷺ کی  شان اطہر میں گستاخی  سے ہر مسلم  کا دل غم و غصہ سے بھرا ہوا ہے..... امت مسلمہ سے گزارش ہے کہ بائیکاٹ کی تحریک کا حصہ بن کر ہر صاحب ایمان ان مادہ پرستوں کی معیشت پر اک کاری ضرب کا حصہ بنے‘ اپنے دائرے میں ہر فرد فرانس کی مصنوعات کے بائیکاٹ کو یقینی بنائے۔‘‘
مولانا فضل الرحمن نے کوئٹہ پی ڈی ایم کے بڑے عوامی جلسے میں فرانس کے حکمران کی گستاخانہ حرکتوں کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ’’ہم ایسے حکمرانوں کے چہرے پر تھوکتے ہیں۔‘‘
وزیراعظم عمران خان‘ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی‘ قومی‘ صوبائی اسمبلیوں اور سینٹ کی طرف سے مذمتی بیانات اور مذمتی قراردادیں.....فرانسیسی سفیر کی طلبی اور اس کے سامنے احتجاج یہ سب اقدامات اپنی اپنی جگہ پر درست‘ لیکن وزیراعظم عمران خان سمیت دیگر اسلامی ممالک کے حکمرانوں کو اس سے ابھی بہت بڑھ کر کرنے کی ضرورت ہے..... یاد رکھیے انبیاء کرام علیہ السلام بالخصوص محسن انسانیتﷺ کی شان اقدس میں گستاخی سے بڑا جرم کوئی اور نہیں ہے..... مسلمان زندہ ہوں‘ ان کے پاس حکومتیں ہوں..... ان کی مسلح افواج بھی ہوں..... اور پھر بھی خاتم النبیینﷺ کی شان اقدس کے خلاف کتوں سے بھی بدتر شیطان بھونکیں..... یہ نہیں  ہوسکتا بقول امیر شریعت سید عطاء اللہ شاہ بخاریؒ گستاخی کرنے والی زبان  نہیں رہنی چاہیے یا پھر گستاخی سننے والے کان..... پاکستان میں جس اینٹ کو اٹھائو نیچے سے کوئی نہ کوئی  بین المذاہب ہم آہنگی کا ’’ماما‘‘  ’’چاچا‘‘ نکل آتا ہے ان میں سے کسی کی روٹی‘ جرمنی‘ کسی کی فرانس اور دیگر یورپی ممالک کی این جی اوز کے کھاتوں سے لگی ہوئی ہے۔ اسلام آباد میں فرانس کا سفارت خانہ بھی اس حوالے سے یہاں متحرک رہتا ہے مگر سوال یہ ہے کہ جب حکومتی سطح پر فرانس ناموس محمد مصطفیﷺ پر حملہ آور ہوگا تو پھر ’’بین المذاہب ہم  آہنگی کی باتیں کس کھوکھاتے میں جائیں گی؟‘‘
میرا یہ دعویٰ رہا کہ دنیا ئے عیسائیت ہو‘  دنیا ئے یہودیت ہو‘ یا ہندومت‘ ان ’’دنیائوں‘‘ میں مسلمانوں کے لئے انصاف نام کی کوئی شے نہیں ہے..... جو لندن‘ امریکہ اور یورپی دنیا کے انگریزوں کے لئے یہ جملے کہتے نہیں تھکتے کہ ’’وہ سچ بولتے ہیں‘‘ وہ ’’ظلم کے خلاف کھڑے ہو جاتے ہیں‘‘ ’’ وہاں انصاف اور قانون کی حکمرانی قائم ہے‘‘ یہ پروپیگنڈہ کرنے والے اب کہاں ہیں؟
 بولتے کیوں نہیں؟ اگر امریکہ‘ لندن اور یورپی دنیا کے پاس محسن انسانیتﷺ کی ناموس کے معاملے پر ’’انصاف‘‘ نہیں ہے؟ تو کیوں؟ جس معاشرے میں کائنات کے سب سے عظیم اور افضل انسان‘ محبوب خدا ﷺکے لئے ’’انصاف‘‘ نہیں ہے اس معاشرے کو سچا کہنا‘ اپنے چند ٹگوں کی خاطر اس معاشرے کی تعریفیں کرنا بذات خود ایک مجرمانہ فعل ہے۔
جو ملعون صدر میکرون آقا و مولیٰ ؐ کا گستاخ ہے  اور جو حکمران اس کی اس بے غیرتی پر خاموش ہیں   انہیں مسلمانوں کا خیر خواہ کیسے تسلیم کیا جاسکتا ہے؟
امریکہ اور یورپ نے اسامہ بن لادن کو دہشت گرد کہا..... ہمارے امریکی کٹھ پتلیوں اور دانش فروشوں نے امریکہ کی ہاں میں ہاں ملاتے ہوئے ..... اسامہ کو دہشت گرد قرار دے دیا‘ امریکہ نے افغانستان کے حکمران ملا محمد عمر مجاہد کو دہشت گرد قرار دیا..... تو ہمارے حکمرانوں اور دانش فروشوں نے ملا محمد عمر کے خلاف باں‘ باں شروع کر دی..... امریکہ اور بھارت نے حافظ محمد سعید کو دہشت گرد قرار دیا..... ہم نے اسے گرفتار کرلیا‘ بھارت اور امریکہ مولانا محمد مسعود ازہر  کے پیچھے ہاتھ دھو کر پڑے‘ ہم نے ان کے خلاف آپریشن کئے..... ان کے ساتھی گرفتار کئے..... امریکہ کے دبائو پر ہم نے پاکستانی  جہادیوں اور مذہبی جماعتوں کو کالعدم ڈکلیئر کیا۔ ہم نے تمام بین الاقوامی اور اخلاقی ضابطوں کو پامال کرکے..... افغان سفیر ملا ضعیف کو ’’بابجولاں’’ امریکہ کے حوالے کر دیا..... آج کہ ’’جب وزیراعظم عمران خان یہ کہتے ہیں کہ صدر میکرون نے  جان بوجھ کر مسلمانوں کو اشتعال دلایا اور یہ کہ فرانسیسی صدر نے اسلام پر حملہ کیا‘‘ تو کیا امریکہ ملعون صدر میکرون کو دہشت گردی اور شدت پسندی کو بڑھاوا دینے کے جرم میں دہشت گرد قرار دے گا؟
2006ء سے لے کر اب تک چودہ سال ہوگئے..... فرانس بار‘ بار حضرت محمد کریمﷺ کی ناموس پر حملہ آور ہو رہا ہے..... ان چودہ سالوں میں پاکستان سمیت دنیا بھر کے مسلمانوں نے سڑکوں پر نکل کر احتجاج کیا‘ فرانس کے جھنڈے جلائے‘ لیکن نتیجہ کیا نکلا‘ کچھ نہیں‘ کچھ بھی تو نہیں۔ کدھر ہیں یہودیت سے مستعار ’’دانش‘‘ لینے والے وہ دانش فروش کہ جو صبح و شام جہاد مقدس کے خلاف طوفان اٹھائے رکھتے تھے؟ اگر جہاد کرنے کی طاقت نہیں ہے تو کیا مسلم میڈیا‘ مسلم ممالک کے حکمرانوں کی یہ ذمہ داری نہیں ہے کہ وہ ریاستی سطح پر ..... فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کا اعلان کریں..... فرانس کے سفیروں کو اپنے اپنے ملکوں سے واپس بجھوا کر ..... فرانس کا مکمل اقتصادی بائیکاٹ کریں؟ ایک عام مسلمان بھی گستاخ رسول کے خلاف سڑکوں پر نکل کر احتجاج کرے..... اور مسلم حکمران بھی..... محض مذمتی بیانات دے کر اور قراردادیں منظور کرکے..... ہاتھ پہ ہاتھ دھرے بیٹھ جائیں گے تو ایک عام شخص اور حکمران میں فرق کیا رہے گا؟ جب ہم اپنا نبی اور رسولﷺ کے حوالے سے یہ کہتے ہیں کہ ..... وہ چودہ سو بیالیس سال قبل دنیا میں تشریف لائے تھے..... تو ہمیں گستاخ رسول کا علاج بھی اسی طریقے  پر کرنا پڑے گا‘ جس طریقے پر چودہ سو سال پہلے صحابہ کرامؓ کیا کرتے تھے..... یعنی گستاخ رسول کی سزا ..... سر تن سے جدا‘ سر تن سے جدا‘ مسلمانوں‘ یہ مت سوچو کہ فلاں مسلمان نے گستاخان رسول کے خلاف کیا کیا؟ فلاں نے کیوں نہیں کیا؟ ہم سب کو اپنے اپنے گریبان میں جھانک کر دیکھنا چاہیے کہ ہم نے تحفظ ناموس رسالتؐ اور دفاع ختم نبوتؐ کے لئے کون سا کارنامہ سرانجام دیا؟ اگر ہم اپنے علاقوں‘ محلوں اور شہروں میں گستاخ فرانس کی مصنوعات کا بھی بائیکاٹ نہیں کرسکتے..... اور کہلاتے  اپنے آپ کو عاشق رسول ہیں سچی بات ہے کہ یہ ہم سب کے لئے ڈوب مرنے کا مقام ہے۔


 

تازہ ترین خبریں

سپریم کورٹ نے پراسیکیوشن کو ہائی پروفائل کیسز واپس لینے سے روک دیا

سپریم کورٹ نے پراسیکیوشن کو ہائی پروفائل کیسز واپس لینے سے روک دیا

آپ کی شکل اچھی ہو تو آپ کے مرد ساتھی ۔۔۔پی ٹی آئی کی خاتون رہنما زرتاج گل کا معنی خیز بیان آگیا

آپ کی شکل اچھی ہو تو آپ کے مرد ساتھی ۔۔۔پی ٹی آئی کی خاتون رہنما زرتاج گل کا معنی خیز بیان آگیا

حکومت قائم رہے گی یا اسمبلیاں تحلیل ہوں گی؟ اگلے دو دن انتہائی اہم قرار۔۔وزیراعظم شہباز شریف کو کس کی یقین دہانی کا انتظار ہے؟

حکومت قائم رہے گی یا اسمبلیاں تحلیل ہوں گی؟ اگلے دو دن انتہائی اہم قرار۔۔وزیراعظم شہباز شریف کو کس کی یقین دہانی کا انتظار ہے؟

حمزہ شہباز عہدے پر برقرار رہیں گے یا نہیں؟  حکومتی اتحادیوں نے فیصلہ سنا دیا

حمزہ شہباز عہدے پر برقرار رہیں گے یا نہیں؟ حکومتی اتحادیوں نے فیصلہ سنا دیا

وزیراعلیٰ بلوچستان عبدالقدوس بزنجونےتحریک عدم اعتماد پر دستخط  کرنے والے ارکان کیخلاف انتہائی اقدام اٹھانے کا اعلان کر دیا

وزیراعلیٰ بلوچستان عبدالقدوس بزنجونےتحریک عدم اعتماد پر دستخط کرنے والے ارکان کیخلاف انتہائی اقدام اٹھانے کا اعلان کر دیا

عمران خان سے متعلق ہوشربا انکشافات، فرح گوگی اور مانیکاخاندان کے پول کھول کر رکھ دیئے

عمران خان سے متعلق ہوشربا انکشافات، فرح گوگی اور مانیکاخاندان کے پول کھول کر رکھ دیئے

 اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمر سرفراز چیمہ کو بڑا جھٹکا دیدیا

اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمر سرفراز چیمہ کو بڑا جھٹکا دیدیا

بطورگورنر پنجاب عہدے سے برطرفی کیخلاف درخواست، اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمر سرفراز چیمہ کو بڑا جھٹکا دیدیا

بطورگورنر پنجاب عہدے سے برطرفی کیخلاف درخواست، اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمر سرفراز چیمہ کو بڑا جھٹکا دیدیا

آئندہ دو روز موسم کیسا رہے گا؟ محکمہ موسمیات نے پیشنگوئی کر دی

آئندہ دو روز موسم کیسا رہے گا؟ محکمہ موسمیات نے پیشنگوئی کر دی

ہنگامہ خیز واپسی، عامر لیاقت نے سوشل میڈیا پر شدید تنقید کے بعد نئی ویڈیو جاری کر دی، حیران کن دعویٰ کر دیا

ہنگامہ خیز واپسی، عامر لیاقت نے سوشل میڈیا پر شدید تنقید کے بعد نئی ویڈیو جاری کر دی، حیران کن دعویٰ کر دیا

10کلو آٹے کا تھیلا کتنے سو روپے کا ملے گا؟ حکومت نے بڑی خوشخبری سنا دی

10کلو آٹے کا تھیلا کتنے سو روپے کا ملے گا؟ حکومت نے بڑی خوشخبری سنا دی

رواں سال کی پہلی پری مون سون بارشوں کا سلسلہ شروع، کن کن شہروں میں بارش ہو گی؟ محکمہ موسمیات نے پیشنگوئی کر دی

رواں سال کی پہلی پری مون سون بارشوں کا سلسلہ شروع، کن کن شہروں میں بارش ہو گی؟ محکمہ موسمیات نے پیشنگوئی کر دی

لندن سے راتوں رات پاکستان آمد، ن لیگی کارکنان مین میں خوشی کی لہر دوڑ گئی

لندن سے راتوں رات پاکستان آمد، ن لیگی کارکنان مین میں خوشی کی لہر دوڑ گئی

ڈالر نے پاکستانی معیشت کی کمر توڑ ڈالی، تاریخ کی نئی بلند ترین سطح پر جا پہنچا

ڈالر نے پاکستانی معیشت کی کمر توڑ ڈالی، تاریخ کی نئی بلند ترین سطح پر جا پہنچا