12:26 pm
بھارت کی دھمکیاںاور دھماکے اور ہمارے رہنما

بھارت کی دھمکیاںاور دھماکے اور ہمارے رہنما

12:26 pm

٭پشاور کے مدرسہ میں دھماکہ، سات افراد شہید،100 زخمی! O فرانس: حضورنبی کریمؐ کے بارے میں گستاخ پوسٹروں اور صدر فرانس کے اسلام مخالف بیان پر پاکستان، ترکی و متعدد ممالک کا شدید احتجاج، فرانسیسی مصنوعات کا بائیکاٹ، پاکستان میں فرانسیسی سفیر کی طلبی، قومی و صوبائی اسمبلیوں کی قراردادیںO بھارت کے سلامتی کے مشیر ’’اجیت دودل، اور نوازشریف کے پاکستان کی حکومت اور فوج کے خلاف یکساں بیانات!! O ’’نریندر مودی فرعون ہے، تاریخی انجام یاد رکھے‘‘ فاروق عبداللہ O لندن میں نوازشریف کے خلاف مظاہرہ، ن لیگ، تحریک انصاف آمنے سامنے، نعرےO کوئٹہ: اپوزیشن کے جلسہ میں محمود اچکزئی کا ریاست کے خلاف بیان O ن لیگ ناقابل اعتبار ہے، شہباز شریف کی گرفتاری پر پتا تک نہیں ہلا: اعتزاز احسن O حکومت جلد ختم ہو رہی ہے، فضل الرحمان، بلاول، مریم نواز O ’’زبان پھسل گئی تھی، آزاد پاکستان کی بجائے آزاد بلوچستان کہہ دیا‘‘ اویس نورانی!!
٭پشاور کی دیر کالونی کے ایک مدرسہ میں صبح درس قرآن کے دوران دھماکہ، ابتدائی خبروں کے مطابق سات افراد  شہید، 100زخمی ہو گئے۔ زخمیوں میں زیادہ تعداد بچوں کی ہے۔ ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ، بتایا گیا ہے کہ ایک شخص نے مدرسہ میں داخل ہوکر فرش پر ایک بیگ رکھا اور دھماکہ ہو گیا۔ تین روز قبل کوئٹہ میں بھی ایسا ہی دھماکہ ہو چکا ہے۔ یہ دھماکے بھارت کے حکمرانوں کی اس دھمکی کے بعد شروع ہوئے ہیں کہ بھارت پاکستان کے خلاف مرضی کی کارروائی کرے گا۔ (کوئٹہ کے جلسے میں نواز شریف اور اویس نورانی کی زہریلی تقریریں کیا پیغام دے رہی ہیں؟)
٭فرانس میں پیغمبر اسلام آنحضور نبی کریمؐ کے بارے میں توہین آمیز خاکوں کی اشاعت اور فرانس کے صدر میکرون کے اسلام دشمن بیانات پر عالم اسلام میں شدید ردعمل پیدا ہوا ہے۔ ترکی کے صدر اردوان اورپاکستان کے وزیراعظم عمران خاں نے ان واقعات پر سخت بیانات دیئے ہیں۔ ترکی نے فرانس میں سفیر کو واپس بلا لیا ہے۔ متعدد مسلم ممالک میں فرانس کے خلاف مظاہرے شروع ہو گئے اور فرانس کی مصنوعات کا بائیکاٹ شروع ہو گیا ہے، ان میں بنگلہ دیش، پاکستان، مصر، لیبیا،کویت، سعودی عرب، الجزائر اور دوسرے ممالک شامل ہیں۔ پاکستان کی قومی و صوبائی اسمبلیوں نے فرانس کی مذمت کی قراردادیں منظور کی ہیں۔ مختلف سیاسی و عوامی سطحوں پر فرانس کے خلاف شدید ردعمل کا اظہار کیا جا رہا ہے۔ فرانس میں ماضی میں بھی ایسی حرکتیں ہوتی رہیں مگر اس بار انتہا کر دی گئی۔ ڈنمارک اور ناروے میں ایسے گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے بعد وہاں تو یہ وبا رک گئی مگر فرانس میں آزادی اظہار کی آڑ میں ان انتہائی اذیت ناک خاکوں کی اشاعت شروع ہو گئی۔ چند روز قبل ایک تعلیمی ادارے کے استاد نے ان خاکوں کو لہرایا تو اس کے ایک افریقی ملک سے تعلق رکھنے والے نوجوان مسلم شاگرد نے اسے قتل کر دیا۔ پولیس نے اس نوجوان کو بھی گولی مار دی۔ اس پر فرانس کے صدر ’میکرون‘ نے اسلام کے خلاف انتہائی زہریلا بیان دے دیا۔
٭اسلام اور دوسرے تمام مذہب میں ایک بڑا فرق انبیائے کرام اور مذہبی پیشوائوں کے ناموں کے احترام اور تکریم کا ہے۔ دنیا بھر میں مسلمان سرور کائنات حضور نبی رحمتؐ کا نام جس احترام، محبت، عقیدت اور تکریم کے ساتھ لیتے ہیں، دوسرے مذاہب میں یہ انداز نہیں ملتا۔ دوسرے مذاہب میں ان کے انبیا اور پیشوائوں کے نام لیتے وقت کسی تکریم کا اظہار نہیں کیا جاتا۔ آنحضور نبی آخر الزماںؐ کے ساتھ اس گہری محبت اور عقیدت کے باعث کوئی بھی مسلمان ان کی شان میں کسی قسم کی گستاخی برداشت نہیں کر سکتا۔ بہت اہم بات کہ خود خدا تعالیٰ نے قرآن مجید میں رسول کریمؐ کا نام بڑی محبت اور احترام کے ساتھ لیا ہے۔ کسی جگہ براہ راست ان کا نام لے کر مخاطب نہیں کیا بلکہ یا النبیؐ ’’رحمۃ اللہ عالمین‘‘ اور دوسرے الفاظ استعمال کئے ہیں۔ مسجد نبوی میںحضور نبی کریمؐ کے روضہ اقدس کی پیشانی پر ایک آئت نمایاں الفاظ کے ساتھ درج ہے کہ ’’اے ایمان والو! اپنی آوازیں نبیؐ کی آواز سے بلند نہ کرو!‘‘ عقیدت و محبت کی اس سرشاری کے ساتھ آقائے محترمؐکی شان میں گستاخی کو برداشت کرنا مشکل ہو جاتا ہے۔ یہ بات مادر پدر آزاد مغربی ممالک کی سمجھ میں نہیں آ رہی۔
٭اب ملکی سیاست کی باتیں! میرے کسی تبصرہ کی بجائے قارئین خود اس بات کا تجزیہ کریں کہ بھارت کے قومی سلامتی کے مشیر’اجیت دودل‘ اور پاکستان کے مفرور، اشتہاری ’مجرم‘ سابق وزیراعظم نوازشریف کے بیک وقت یکساں بیانات میں کیسی مماثلت پائی جاتی ہے۔ اجیت دودل نے پاکستان کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ ’’بھارت نے نئی پالیسی (Doctrine) اختیار کر لی ہے کہ اب اردگرد دشمن علاقوں میں گھس کر اس کی زمین پر اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔‘‘ عین اسی روز کوئٹہ میں اپوزیشن کے جلسے میں پاکستان کے تین بار سابق وزیراعظم نوازشریف کی تقریر میں فوج کے جوانوں کو تلقین کی گئی کہ وہ اپنے سربراہوں (جرنیلوں) کے خلاف بغاوت کر دیں، انتظامی افسروں کو ہدائت کی گئی کہ حکومت کے احکام کی تعمیل نہ کی جائے اور عوام سے کہا گیا کہ وہ حکومت کے خلاف سڑکوں پر نکل آئیں۔ محترم قارئین! بھارتی مشیر اجیت دودل کے پاکستان دشمن بیان کی عمل داری نوازشریف کے الفاظ میں وضاحت کو باربار پڑھیں! ملک و قوم کے خلاف بغاوت اور کیا ہوتی ہے۔ ایک شخص فوجی جرنیلوں کی آغوش میں سیاسی پرورش پاتا ہے، جرنیلوں کے زیر سایہ تختے سے تخت پر پہنچ جاتا ہے، اور پھر احسان ناشناسی، بدمزاجی کا عالم کہ اقتدار کی آخری سیڑھی پر بیٹھ کر فوجی جرنیلوں کے خلاف کارروائیاں شروع کر دیتا ہے۔ وہ جرنیل برطرف، ایک کی پراسرار موت! چیف جسٹس کے خلاف ریفرنس، سپریم کورٹ پر حملہ اور بالآخر صدر مملکت کے ساتھ خود بھی اقتدار کے ایوانوں سے باہر سڑک پر!! بات نحوت و رعونت تک ہی نہیں رہتی، لندن کے انتہائی مہنگے علاقوں میںفلیٹس، عرب امارات اور سعودی عرب میں سٹیل ملیں، دنیا بھر میں پراپرٹی کا وسیع کاروبار!! سپریم کورٹ پوچھتے پوچھتے بالآخر خاموش ہو گئی کہ لندن کے فلیٹس کس آمدنی سے خریدے گئے تھے! اور اب! اقتدار سے محرومی کی اذیت برداشت نہیں ہو رہی اور اجیت دودل کا بیان دہرا دیا۔
٭میرے الفاظ اور بیان کو شائد زیادہ تلخ سمجھا جائے مگر جس شخص نے اپنے خاندان کو پاکستان کی سرحد پر (1947ء) شہید اور زخمی ہوتے دیکھا ہو، وہ ملک و قوم کے خلاف بعض لوگوں کی ہرزہ سرائی پر کیسے خاموش رہ سکتا ہے؟ اور اپوزیشن کا کوئٹہ کا جلسہ! احمد اویس نورانی نام کا ایک شخص سٹیج پر باآواز بلند بلوچستان کو آزاد ریاست قرار دیتا ہے۔ ایک خاتون کھلم کھلا فوج کے خلاف نعرے لگاتی ہے اور محمود اچکزئی نام کا ایک باآواز بلند آواز کے ساتھ کہتا ہے کہ ’’ہم افغانستان کی سرحدپر فوج کی لگائی ہوئی باڑ کو اکھیڑ دیں گے، میں کسی ویزا کے بغیر افغانستان جائوں گا!‘‘ یہ شخص پاکستان کے پورے صوبہ پختونخوا کو افغانستان کا حصہ قرار دیتا ہے اور سٹیج پر بیٹھے مقررین احتجاج تو کیا الٹا ان باتوں سے لُطف لیتے ہیں!!
٭ ایک اور تماشا! حکمرانوں اور اپوزیشن رہنمائوں جو ہر وقت جمہوریت، جمہوریت کا راگ الاپتے رہتے ہیں۔ جمہوریت کے معنی ’عوام‘ کی حکومت کے ہیں۔ جمہوریت میں خاندانی وراثت کی کوئی گنجائش نہیں ہوتی۔ اب ذرا جمہوریت سلطان ابن سلطان قسم کے ’جمہوری‘ نام دیکھئے: ایوب خانی، بھٹو، شریف، زرداری، چودھری، لغاری، مزاری، کھوسہ، کالا باغ، باچا خاں، شیرپائو، ترین، خاقان، خواجہ، قریشی، کس کس خاندان کا نام لیا جائے! ہمیشہ سے قوم کے سروں پر سوار! باپ کے بعد بیٹا، بیٹی، پوتا، پوتی، نواسہ نواسی! اور جمہوریت!! ویسے ’جمہوریت‘ بھی کیسی اذیت ناک چیز ہے! تین دفعہ وزیراعظم ہونے کا دعویدار ایک شخص باپ کے جنازے میں شریک نہ ہوسکا، بیوی آخری سانس لیتے وقت اسے پکارتی رہ گئی، اب لاہور میں 93 سالہ بزرگ والدہ بہت علیل ہے مگر وہ پاکستان نہیں آ رہا! کیا زندگی ہے۔
٭مقبوضہ کشمیر: حال ہی میں رہا ہونے والے سابق وزیراعلیٰ شیخ فاروق عبداللہ نے گزشتہ روز ایک پریس کانفرنس میں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو فرعون قرار دیا اور تاریخ یاد دلائی کہ حضرت موسیٰ کے زمانے میں فرعون کا کیا انجام ہوا تھا! فاروق عبداللہ کو یہ باتیں 72 سال تک بھارت کی غلامی پر ناز کرنے کے بعد اذیت دے رہی ہیں۔ ان صاحب کے والد شیخ عبداللہ نے بھی پنڈت نہرو کے ساتھ ایک معاہدہ کے ذریعے جیل سے رہائی حاصل کی اور کشمیر کوپنڈت نہرو کی جھولی میںڈال دیا تھا! اب شکائت کیسی؟
 

تازہ ترین خبریں

حکومت کی موثر اقتصادی پالیسیوں کے باعث ملکی معیشت استحکام کی جانب گامزن ہے، شفقت محمود

حکومت کی موثر اقتصادی پالیسیوں کے باعث ملکی معیشت استحکام کی جانب گامزن ہے، شفقت محمود

 حاملہ خواتین بھی کورونا ویکسین لگواسکتی ہیں۔ڈاکٹر فیصل سلطان

حاملہ خواتین بھی کورونا ویکسین لگواسکتی ہیں۔ڈاکٹر فیصل سلطان

انسداد دہشتگردی عدالت نے رکن قومی اسمبلی  علی وزیر پر فرد جرم عائد کردی۔

انسداد دہشتگردی عدالت نے رکن قومی اسمبلی  علی وزیر پر فرد جرم عائد کردی۔

انگلینڈ کا دورہ پاکستان کے انکار پر دکھ ہوا. چئیرمین پی سی بی رمیز راجہ 

انگلینڈ کا دورہ پاکستان کے انکار پر دکھ ہوا. چئیرمین پی سی بی رمیز راجہ 

 ملکی سربراہ کو ملنے والے تحائف ماضی کی طرح غائب نہیں ہوتےبلکہ توشہ خانہ میں جمع کروائے جاتے ہیں۔ شہباز گل

ملکی سربراہ کو ملنے والے تحائف ماضی کی طرح غائب نہیں ہوتےبلکہ توشہ خانہ میں جمع کروائے جاتے ہیں۔ شہباز گل

چہلم امام حسینؓ کے موقع پر موبائل فون سروس بند کرنے کا فیصلہ

چہلم امام حسینؓ کے موقع پر موبائل فون سروس بند کرنے کا فیصلہ

قومی کرکٹ ٹیم  کے کھلاڑی 23 ستمبر سے نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ میں جلوہ گر ہوں گے

قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی 23 ستمبر سے نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ میں جلوہ گر ہوں گے

پی ٹی آئی،مسلم لیگ ن اورپاکستان پیپلز پارٹی کاتصادم صرف دکھاوے کی سیاست ہے۔سراج الحق 

پی ٹی آئی،مسلم لیگ ن اورپاکستان پیپلز پارٹی کاتصادم صرف دکھاوے کی سیاست ہے۔سراج الحق 

ڈرائیونگ لائسنس بنوانے والوں کیلئے ایک اور سہولت کا اعلان

ڈرائیونگ لائسنس بنوانے والوں کیلئے ایک اور سہولت کا اعلان

 سواتی صاحب الیکشن کمشنر کس کی گھڑی کس کی چھڑی ہے اس سے ہمیں مطلب نہیں۔ ناصر حسین شاہ

سواتی صاحب الیکشن کمشنر کس کی گھڑی کس کی چھڑی ہے اس سے ہمیں مطلب نہیں۔ ناصر حسین شاہ

ملک کے مختلف شہروں میں تیز بارش ۔۔۔۔ بجلی فراہم کرنے والے متعدد فیڈرز پر فالٹ اور ٹرپنگ جاری

ملک کے مختلف شہروں میں تیز بارش ۔۔۔۔ بجلی فراہم کرنے والے متعدد فیڈرز پر فالٹ اور ٹرپنگ جاری

 اپوزیشن جماعتیں صرف ذاتی مفادات کا تحفظ چاہتی ہیں۔عثمان بزدار

اپوزیشن جماعتیں صرف ذاتی مفادات کا تحفظ چاہتی ہیں۔عثمان بزدار

مریم نواز نے جاتی امرااراضی انتقال منسوخی کیس میں دوبارہ فریق بنانے کی درخواست دائر کردی

مریم نواز نے جاتی امرااراضی انتقال منسوخی کیس میں دوبارہ فریق بنانے کی درخواست دائر کردی

 بی آر ٹی میں سفر کرونا ویکسینیشن سرٹیفکیٹ سے مشروط کر دیا گیا ہے۔

بی آر ٹی میں سفر کرونا ویکسینیشن سرٹیفکیٹ سے مشروط کر دیا گیا ہے۔