01:38 pm
ٹرمپ ‘ جوبائیڈن اور ایک ریڑھی پر کئی غدار

ٹرمپ ‘ جوبائیڈن اور ایک ریڑھی پر کئی غدار

01:38 pm

امریکی صدر ٹرمپ اپنے حریف صدارتی امیدوار جوبائیڈن کے بارے میں کہتا ہے کہ ’’جوبائیڈن ایک بدعنوان سیاست دان ہیں...جو امریکی معیشت کو تباہ کر دیں گے۔ اس طرف ’’جوبائیڈن‘‘ نے ڈونلڈ ٹرمپ کو امریکی تاریخ کا بدعنوان ترین نسل پرستانہ صدر قرار دیا ہے۔‘‘
میں نے ان دونوں حریفوں کو ایک دوسرے پر لگائے جانے والے الزامات کو بارہ بار پڑھا۔ اور تلاش کرنے کی کوشش کی کہ ان دونوں میں سے کسی نے دوسرے کو ’’غدار‘‘... شاہ سلمان بن عبدالعزیز  پرنس محمد بن سلمان‘ عمران خان‘ نریندر مودی کا یار  یا اسرائیل کا وفادار قرار دینے کی کوشش کی ہو۔ ابھی تک میرے علم میں ایسی کوئی بات نہیں آئی۔ سوال یہ ہے کہ یہ سارے  ’’غدار‘‘ اور دوسرے ممالک کے حکمرانوں کے وفادار ہمارے ہاں ہی کیوں تھوک کے حساب  سے پائے جاتے ہیں؟ آج ہمارے وزیراعظم وزیر اطلاعات سے لے کر دیگر وفاقی وزیروں تک... جس طرح سے تھوک کے حساب سے غداری کے سرٹیفکیٹ تقسیم کر رہے ہیں... پارلیمنٹ کے ایوانوں میں جس طرح سے ایک دوسرے پر ’’غدار‘‘ ’’غدار‘‘ کی ہوٹنگ کی جارہی ہے۔ جس طرح سے گلی‘ گلی‘ سڑکوں اور چوراہوں پر... میر جعفر اور میر صادق کے بینر لہرائے جارہے ہیں۔ انہیں دیکھ کر یوں گمان ہوتا ہے کہ جیسے حکمران پارٹی میر صادق‘ میر جعفر کا دن منا رہی ہو۔ یاد رہے کہ مجھے شریفوں یا ن لیگ سے ذرا برابر بھی ہمدردی نہیں ہے... لیکن 3دفعہ حکومت کرنے والوں کو ذرا‘ ذرا سی باتوں پر ’’غدار‘‘ قرار دینا بھی پاکستانیت کی توہین  ہے... دنیا بھی کیا سوچتی ہوگی کہ جنہیں  حکمران غدار قرار دے رہے ہیں... وہ اپنے بنگلوں  میں کیا کرتے ہیں؟ کیا پاکستان میں قانون کی حکمرانی قائم ہے؟ اگر نہیں تو پھر دنیا آپ پر اعتماد کیسے کرے گی؟ اور اگر جواب ہاں میں ہے تو پھر کوئی ’’غدار‘‘ کھلے عام پریس کانفرنسوں سے خطاب کیسے  کر سکتا ہے؟ خدا کے لئے  ’’غدار‘‘ لفظ کو اتنا عام نہ کرو... کہ کل اگر کوئی خدانخواستہ حقیقی ’’غدار‘‘ پیدا ہو جائے... اور تم اس کی ’’غداری‘‘ قوم سے منوانا چاہو... تو قوم ماننے کے لئے ہی تیار نہ ہو۔
موجودہ حکومت کی برکت سے ’’غدار‘‘ لفظ اتنا عام ہوچکا ہے کہ گزشتہ روز یہ خاکسار‘ قائد آباد سے پیدل گزر رہا تھا... دائود چورنگی سے تھوڑا پہلے دائیں طرف سبزی اور فروٹ کی بہت سی ریڑھیاں کھڑی تھیں... جیسے ہی میں ایک ریڑھی کے پاس سے گزرا... تو ریڑھی والے بھائی نے خالص پٹھانی اردو میں آواز لگائی۔ ’’غدار‘‘ لے لو۔ ’’غدار‘‘ لے لو... تین‘ چار گاہک اس کی ریڑھی پر کھڑے تھے... میں بھی رک گیا... اور اس سے پوچھا کہ خان‘ کون سا غدار کس بھائو ہے؟ وہ بولا‘ صاحب! غدار ٹماٹر  دو سو روپے‘ غدار پیاز اسی روپے کلو‘ غدار دھینے کی چھوٹی گڈی بیس روپے اور غدار پودینہ کی گڈی بھی 20روپے کی ہے... میں نے خریدنا تو کچھ نہیں تھا... صرف مزہ لینے کے لئے اسے مزید چھیڑتے ہوئے پوچھا کہ اتنے سارے ’’غدار‘‘ تم نے ایک ریڑھی پر اکٹھے کیسے کرلئے؟ وہ بولا صاحب! جس ملک کا سابق وزیراعظم غدار رہ چکا ہو‘ جس ملک کی نیشنل اسمبلی کا سابق اسپیکر غدار ہو چکا ہو‘ جس ملک کی پچھلی حکومت  میں وزراء کے عہدے انجوائے کرنے والے غدار بن چکے ہوں‘ جس ملک میں آٹا مہنگا‘ چینی مہنگی‘ دالیں اور دوائیاں مہنگی مگر ’’غدار‘‘ سستے ہوں‘ وہاں تین‘ چار ’’غداروں‘‘ کو  ایک ریڑھی پر اکٹھا کرکے بیچنا کون سا مشکل ہے؟ میں ’’غدار‘‘ لے لو‘ غدار لے لو کہہ کر ایک تو گاہکوں کو اپنی طرف متوجہ کرلیتا ہوں... اور دوسرا عمران حکومت سے اس بات پر اظہار یکجہتی کرتا ہوں کہ چلو‘ عمران خان اپنے ڈھائی سالہ دور میں عوام کو ریلیف تو نہیں دے سکا... مگر اس نے اپنے مختصر سے دور میں غداروں کی لائنیں تو لگا دی ہیں۔
 یہ آخری جملہ کہہ کر وہ گاہکوں کی طرف متوجہ ہوگیا... میں  اسے سوچتی ہوئی نگاہوں سے دیکھتے ہوئے وہاں سے جلدی سے آگے بڑھ گیا... ’’تبدیلی‘‘ آنہیں رہی... واقعی آچکی ہے جہاں ریڑھی لگانے والا بھی... ٹماٹروں‘ پیاز‘ دھینا اور پودینے کو غدار کہہ کر ... گاہکوں کی توجہ حاصل کرنے میں کامیاب ہو جاتا ہو... وہاں پورے’’ٹبر‘‘ بلکہ  گیارہ سیاسی جماعتوں کے لیڈروں پر غدار‘ غدار کی پھبتیاں کسنے والوں کو ’’کس‘‘ ’’کس‘‘ کی توجہ حاصل نہیں ہوتی ہوگی؟
بات چلی تھی ٹرمپ اور جوبائیڈن کے ایک دوسرے پر لگائے جانے والے الزامات سے... امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ 19ریاستوں میں ری پبلکن امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ اور 16ریاستوں میں ڈیموکریٹک امیدوار بائیڈن کو برتری حاصل کئے‘ جبکہ 16ریاستوں کے نتائج آنا ابھی باقی ہیں... اب تک کی اطلاعات کے مطابق ڈیموکرٹیک امیدوار جو بائیڈن آگے اور ٹرمپ پیچھے ہیں... میں امریکہ میں ہونے والے صدارتی انتخابات کی تفصیل میں اس لئے نہیں جانا چاہتا... کیونکہ میرے نزدیک اس کا میرے ملک اور قوم کو کوئی فائدہ نہیں ہے... ٹرمپ آئے یا جوبائیڈن؟قصر سفید میں جو بھی آیا... اس نے مسلمانوں اور عالم اسلام کو معاف نہیں کرنا... امریکہ کے منہ کو جو مسلمانوں کے لہو کا چسکا لگا ہے... تو اب اس کی پیاس خون سے ہی بجھتی ہے... وہ لیبیاء کے مسلمانوں کا خون ہو‘ عراق کے مسلمانوں کا لہو ہو‘ شام یا فلسطین کے مسلمانوں کا... جارج ڈبلیو بش ہو‘ کلنٹن ہو‘ بارک اوبامہ ہو‘ ٹرمپ ہو یا جوبائیڈن... انہیں مسلمانوں میں سے  ’’غلام‘‘ چاہئیں۔ ایسے ’’غلام‘‘ کہ جو امریکی چرنوں پر... انسانوں کی بھینٹ چڑھاتے ہوئے یہ بھی نہ دیکھیں کہ بھینٹ چڑھنے والا‘ بچہ ہے‘جوان ہے‘ عورت ہے‘ مرد ہے یا بوڑھا؟ ’’امریکہ‘‘ کو پاکستان میں کسی ایسے کی تلاش ہے کہ جو اس کے  لئے پرویز مشرف ثابت ہو‘ دیکھ لیجئے اگر اپنے دور اقتدار میں رسواکن ڈکٹیٹر نے امریکہ سے وفا کی تو امریکہ نے بھی اس ڈکٹیٹر سے وفاداری نبھانے کا حق ادا کر دیا... سن لیجئے اگر ٹرمپ ہار جائے اور جوبائیڈن جیت بھی جائے... تب بھی امریکہ کی پالیسیوں میں تبدیلی نہیں آئے گی... پاکستان پھر بھی امریکہ کا ٹارگٹ رہے گا‘ یہ خاکسار چونکہ عرصہ دراز سے ہر چینل کو دیکھنے کی نحوست سے بچا ہوا ہے... اس لئے ساتھی فون کرکے پوچھتے ہیں کہ ہمارا الیکٹرانک میڈیا امریکی انتخابات پر یوں شور بپا کئے ہوئے ہے... جیسے یہ انتخابات اسلام آباد میں ہو رہے ہوں؟ میں نے ساتھیوں کی خدمت میں عرض کیا کہ بیگانوں کی  شادیوں میں ناچنے والوں کے ’’ناچ‘‘ سے اور کچھ ہو نہ ہو... مگر ان کی اصلیت کا پتہ ضرور لگ جاتا ہے... باقی آپ سب سمجھدار ہیں۔

 

تازہ ترین خبریں

حکومت کی موثر اقتصادی پالیسیوں کے باعث ملکی معیشت استحکام کی جانب گامزن ہے، شفقت محمود

حکومت کی موثر اقتصادی پالیسیوں کے باعث ملکی معیشت استحکام کی جانب گامزن ہے، شفقت محمود

 حاملہ خواتین بھی کورونا ویکسین لگواسکتی ہیں۔ڈاکٹر فیصل سلطان

حاملہ خواتین بھی کورونا ویکسین لگواسکتی ہیں۔ڈاکٹر فیصل سلطان

انسداد دہشتگردی عدالت نے رکن قومی اسمبلی  علی وزیر پر فرد جرم عائد کردی۔

انسداد دہشتگردی عدالت نے رکن قومی اسمبلی  علی وزیر پر فرد جرم عائد کردی۔

انگلینڈ کا دورہ پاکستان کے انکار پر دکھ ہوا. چئیرمین پی سی بی رمیز راجہ 

انگلینڈ کا دورہ پاکستان کے انکار پر دکھ ہوا. چئیرمین پی سی بی رمیز راجہ 

 ملکی سربراہ کو ملنے والے تحائف ماضی کی طرح غائب نہیں ہوتےبلکہ توشہ خانہ میں جمع کروائے جاتے ہیں۔ شہباز گل

ملکی سربراہ کو ملنے والے تحائف ماضی کی طرح غائب نہیں ہوتےبلکہ توشہ خانہ میں جمع کروائے جاتے ہیں۔ شہباز گل

چہلم امام حسینؓ کے موقع پر موبائل فون سروس بند کرنے کا فیصلہ

چہلم امام حسینؓ کے موقع پر موبائل فون سروس بند کرنے کا فیصلہ

قومی کرکٹ ٹیم  کے کھلاڑی 23 ستمبر سے نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ میں جلوہ گر ہوں گے

قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی 23 ستمبر سے نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ میں جلوہ گر ہوں گے

پی ٹی آئی،مسلم لیگ ن اورپاکستان پیپلز پارٹی کاتصادم صرف دکھاوے کی سیاست ہے۔سراج الحق 

پی ٹی آئی،مسلم لیگ ن اورپاکستان پیپلز پارٹی کاتصادم صرف دکھاوے کی سیاست ہے۔سراج الحق 

ڈرائیونگ لائسنس بنوانے والوں کیلئے ایک اور سہولت کا اعلان

ڈرائیونگ لائسنس بنوانے والوں کیلئے ایک اور سہولت کا اعلان

 سواتی صاحب الیکشن کمشنر کس کی گھڑی کس کی چھڑی ہے اس سے ہمیں مطلب نہیں۔ ناصر حسین شاہ

سواتی صاحب الیکشن کمشنر کس کی گھڑی کس کی چھڑی ہے اس سے ہمیں مطلب نہیں۔ ناصر حسین شاہ

ملک کے مختلف شہروں میں تیز بارش ۔۔۔۔ بجلی فراہم کرنے والے متعدد فیڈرز پر فالٹ اور ٹرپنگ جاری

ملک کے مختلف شہروں میں تیز بارش ۔۔۔۔ بجلی فراہم کرنے والے متعدد فیڈرز پر فالٹ اور ٹرپنگ جاری

 اپوزیشن جماعتیں صرف ذاتی مفادات کا تحفظ چاہتی ہیں۔عثمان بزدار

اپوزیشن جماعتیں صرف ذاتی مفادات کا تحفظ چاہتی ہیں۔عثمان بزدار

مریم نواز نے جاتی امرااراضی انتقال منسوخی کیس میں دوبارہ فریق بنانے کی درخواست دائر کردی

مریم نواز نے جاتی امرااراضی انتقال منسوخی کیس میں دوبارہ فریق بنانے کی درخواست دائر کردی

 بی آر ٹی میں سفر کرونا ویکسینیشن سرٹیفکیٹ سے مشروط کر دیا گیا ہے۔

بی آر ٹی میں سفر کرونا ویکسینیشن سرٹیفکیٹ سے مشروط کر دیا گیا ہے۔