12:41 pm
قصہ ایک غریب صدر مملکت کا

قصہ ایک غریب صدر مملکت کا

12:41 pm

٭ماسکو میں شنگھائی تعاون تنظیم کا اجلاس، وزیراعظم عمران خاں وڈیو لنک سے خطاب بجلی مزید مہنگیO کرونا مزید تیز، اسلام آباد، گوجرانوالہ، کراچی میں مریضوں میں اضافہ، ایک روز میں 1688 مریض، 23 اموات O جوبائیڈن، دنیا بھر سے مبارکباد!شکست نہیں مانوں گا، ٹرمپ O کراچی: مزار قائداعظم کی بے حرمتی کا مقدمہ ختم، کوئی واقعہ نہیں ہوا، پولیس O پنجاب اسمبلی ہنگامہ، گندم 2000 روپے قیمت خرید، متفقہ قراردادO شہباز فیملی، منحرف گواہوں کے سنسنی خیز انکشافات O کیپٹن صفدر، قمر الزمان، کرونا میں مبتلا، گلگت سے واپس O چین، جوبائیڈن کو مبارکباد سے گریزO سعودی عرب: قرضوں کی واپسی میں رعائت سے انکارO گلگت: وزراء ارکان اسمبلی کو سیاسی سرگرمیوں کی اجازت!!O نوازشریف کی جائیداد قرق کرنے کا حکم۔
٭قارئین محترم! کچھ ناقابل یقین مگر سامنے کی واضح، آن ریکارڈ باتیں!! امریکہ کا بھاری اکثریت سے جیتنے والا نیا صدر جوبائیڈن ایک غریب خاندان میں پیدا ہوا۔ دادا کارخانوںکی چمنیوں کی صفائی کرتا تھا۔ والد بھی محنت کش تھا۔ جوبائیڈن جس کالج اور یونیورسٹی میں پڑھتا تھا وہاں دفاتر اور کلاس روموں کی کھڑکیاں صاف کر کے تعلیمی اخراجات پورے کرتا۔ وہ 1942ء میں پیدا ہوا۔ 1973ء میں سینیٹر بن گیا۔ امریکی تاریخ کی واحد مثال کہ پچھلے 36 سال سے اب تک مسلسل سینیٹر چلا آ رہا ہے۔ اس دوران آٹھ سال مسلسل امریکہ کا نائب صدر، سینٹ کا چیئرمین اور سینٹ کی خارجہ کمیٹی کا چیئرمین بھی رہا۔ دنیا بھرکے سربراہوں اور بڑے بڑے مالیاتی اداروں سے قریبی تعلقات تھے۔ اب ذرا  دل تھام کے سنئے۔ جوبائیڈن کا بڑا بیٹا کینسر کی زد میں آ گیا۔ بہت مہنگا علاج تھا۔ نائب صدر بائیڈن کے پاس اس کے علاج کے لئے پیسے ختم ہوگئے۔ وہ اپنا بارہ مرلے کا مکان بیچنے پر مجبور ہو گیا۔ ایک پراپرٹی ڈیلر سے معاملہ طے ہو گیا۔ پیسے ملنے میں دو دن باقی تھے، کہ صدر اوباما کو بائیڈن کی پریشانی کا علم ہو گیا۔ اس نے فوری طور پر اپنے پاس سے پیسے دے کرمکان فروخت ہونے سے بچا دیا۔ بیٹے کے علاج کے لئے بھی کچھ پیسے بچ گئے مگر وہ جانبر نہ ہو سکا! قارئین محترم! یہ ساری تحریک ایک بار پھر پڑھئیے!! 36 سال مسلسل سینٹ کا رکن، آٹھ سال مسلسل امریکہ کا نائب صدر، دنیا بھرکے بڑے بڑے سربراہوں، بنکوں اور مالیاتی اداروں کے مالکان سے گہرے ذاتی روابط! اس کے ایک اشارے پر اربوں ڈالروں کے ڈھیر لگ سکتے تھے، منی لانڈرنگ کے ذریعے لندن، فرانس میں اربوں کھربوں کی جائیدادیں اور محلات خرید سکتا تھا۔ بیٹے کا سرکاری خرچ پراعلیٰ ترین علاج کرا سکتا تھا۔ مگر…مگراس کی جیب میں بیٹے کے علاج کے لئے پیسے نہیں تھے۔ تنخواہ کے سوا آمدنی کا کوئی دوسرا ذریعہ نہیں تھا، وہ اپنا بارہ مرلے کا چھوٹا سا گھر بیچنے پرمجبور ہو گیا!…اور…اور پھر جب اس نے صدارتی الیکشن لڑا تو کئی فائیو سٹار ہوٹلوں، بنکوں اور 20 سے زیادہ بڑی بڑی کمپنیوں کے کھربوں ڈالروں کی دولت کے مالک ٹرمپ کو امریکی تاریخ کے سب سے زیادہ ریکارڈووٹوں سے شکست دی!! میں کیا تبصرہ کروں؟ اپنی ایک پرانی غزل یاد آ رہی ہے۔ اسے پڑھ لیجئے: اپنے اردگردکے حالات پر یہی میرا تبصرہ ہے:
غزل
مال و متاع و کوچہ و بازار بِک گئے
عہدِ ہَوَس میں علم کے مینار بِک گئے
قصرِ شہی میں جُبّہ و دستار بِک گئے
نیلام گھر میں قافلہ سالار بِک گئے
جِنس وفا خریدنے آئے تھے شہر میں
بولی لگی تو سارے خریدار بِک گئے
شب بھر رہی فضا میں وفاداریوں کی گونج
سورج چڑھا تو سارے وفادار بِک گئے
وُہ زور تھا خریداریٔ علم و ہُنر کا آج
میں خُود بھی بِک گیا، میرے افکار بِک گئے
ہوش و حواس، عہدِ وفا، سجدہ و قیام
اے عِشق، تیرے سارے شاہکار بِک گئے!!
٭آئی ایم ایف کی ہدائت پر بجلی 48 پیسے مزیدمہنگی کر دی گئی۔ ناقابل فہم بات کہ گھریلو صارفین پر مزید بوجھ اور صنعتوںکو25 فیصد چھوٹ!!
٭گلگت بلتستان کی سپریم اپیل کورٹ نے وزرا اور ارکان اسمبلی کو 15 نومبر کو ہونے والے انتخابات میں سیاسی سرگرمیوں کی اجازت دے دی۔ چیف کورٹ گلگت نے پابندی عائد کی تھی۔ بلاول زرداری نے اس پابندی کو سپریم کورٹ میںچیلنج کیا تھا۔ گلگت بلتستان میں پیپلزپارٹی، ن لیگ اور تحریک انصاف کے جلسے جاری ہیں۔ پاکستان میں بھی جگہ جگہ اپوزیشن کے علاوہ تحریک انصاف کے بھی بڑے بڑے جلسے ہو رہے ہیں ان کی وجہ سے ملک بھر میں کرونا کی وبا تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ روزانہ ہلاک ہونے والوں کی تعداد 30 تک چلی گئی ہے۔ گزشتہ روز1688 نئے مریضوں کا اضافہ ہو گیا۔ بدقسمتی کہ کرونا پر قابوپانے والا ادارہ بار بار انتباہ کر رہا ہے کہ جلسے جلوسوں پر پابندی لگائی جائے مگر خود حکومت ہی خلاف ورزیوں پر اُتر آئی ہے۔ بلاول کے سوا تمام سیاسی مقررین ماسک کے بغیر تقریریںکر رہے ہیں، خود وزیراعظم بھی ماسک لگانا گوارا نہیں کرتے۔ جلسوں کے حاضرین بھی ماسک کے بغیر اور ایک دوسرے سے جُڑ کر بیٹھتے ہیں۔ بیماری کی وبا کسی کی ذات پات یا اس کا عہدہ نہیں دیکھتی۔ متعدد بڑے نام کرونا کی زد میں آ چکے ہیں۔ نئے ناموںمیں کیپٹن صفدر اور قمرالزمان کائرہ شامل ہیں۔ دونوں گلگت میں انتخابی سرگرمیاں چھوڑ کر واپس آ گئے ہیں اور قرنطینہ میں چلے گئے ہیں۔
٭سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف کی عدم پیشی پر ان کے خلاف ناجائز الاٹ منٹوںکے ایک اور مقدمے میں لاہورکی احتساب عدالت نے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری، انہیں مفرور اور اشتہاری قرار دینے اور ان کی جائیداد قرق (ضبط) کرنے کاحکم جاری کر دیا ہے۔ اسی نوعیت کے عدالتی احکام دوسرے مقدمات میں بھی جاری ہو چکے ہیں۔ لندن اور پاکستان میں ان کی رہائش گاہوں پراشتہاری ہونے کے نوٹس چسپاں کئے جا چکے ہیں۔ لندن میں ہائی کمشن کے ذریعے ان کی رہائش گاہ پر بھی احکام پہنچائے جا چکے ہیں۔ برطانیہ کی حکومت کو بار بار خطوط بھی بھیجے جا چکے ہیں مگر کوئی فرق نہیں پڑا۔ لاہورمیں انہیں شدید علیل بتایا جا رہا تھا مگر لندن میں ایک سال کے دوران کبھی ہسپتال نہیں گئے، کوئی علاج نہیں کرایا، لاہور سے روانہ ہوتے وقت ان کے جسم میں پلیٹ لیٹس کی تعداد 23 ہزار ظاہر کی گئی تھی جسے نہائت خطرناک قرار دیا گیا۔ لندن پہنچتے ہی پلیٹ لیٹس کی تعداد بڑھ گئی، اس وقت پلیٹ لیٹس دو لاکھ 20 ہزار سے زیادہ بتائے جا رہے ہیں جو اچھی صحت کی علامت ہیں۔لاہور میں نوازشریف کے میڈیکل معائنہ کے لئے ایک بار سے زیادہ بورڈ بنے۔ ان سب کی رپورٹوں میں میں مریض کی حالت انتہائی نازک بتائی گئی۔ (شیریں مزاری رو پڑیں) پنجاب کی وزیر صحت یاسمین راشد نے حال ہی میں بار بار اصرار کیا ہے کہ رپورٹیں بالکل درست تھیں مگر حال ہی میں بعض تحقیقات میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ان میڈیکل بورڈوں کے بیشتر ڈاکٹر نوازشریف کے دورمیں مقرر کئے گئے اور ان کا شریف خاندان سے قریبی تعلق رہا ہے! چلیں یہ معاملات نوازشریف، حکومت اور عدالتیں جانیں۔
مگر قارئین کرام! بار بار اس بدقسمتی کا کیا ذکر کیا ہے کہ ایک شخص باپ کے جنازے میں شریک نہ ہو سکا، بیوی بستر مرگ پر اسے پکارتی چلی گئی۔ اور اب 94 سالہ والدہ شدید علیل ہے بیٹے کو پکار رہی ہے اور بیٹا اپنی جان بچانے کے لئے ماں کے پاس آنے سے انکار کر رہا ہے اور ماں!! کیسی بدنصیبی! ایک بیٹا وفات پا گیا، دوسرا اپنے بیٹے سمیت جیل میں، تیسرا ملک سے باہر۔ مفرور اشتہاری!! اور پوتی!! بزرگ 94 سالہ علیل دادی کی خبر گیری کی بجائے جلسوں میں تالیاں بجواتی پھر رہی ہے۔ قارون کی دولت کے ڈھیر، سینکڑوں کنالوں پر قائم محل، بیرون ملک کھربوں کی جائیدادیںکس کام کی؟ اقتدار اور دولت جمع کرنے کی ہوس پھر بھی ختم نہیں ہو رہی۔ 
 

تازہ ترین خبریں

 ریلوے سے 4 ہزار ملازمین کو نکالنے کا فیصلہ ،اعظم سواتی نے وجہ بھی بتا دی

ریلوے سے 4 ہزار ملازمین کو نکالنے کا فیصلہ ،اعظم سواتی نے وجہ بھی بتا دی

’’ اب حکومت بڑا  این آراو دینے جارہی ہے‘‘اعجاز الحق کا انکشاف

’’ اب حکومت بڑا این آراو دینے جارہی ہے‘‘اعجاز الحق کا انکشاف

اللہ کرے اسٹیبلشمنٹ کا ملکی سیاست سےکردار ختم ہونے کی بات درست ہو، شاہد خاقان عباسی

اللہ کرے اسٹیبلشمنٹ کا ملکی سیاست سےکردار ختم ہونے کی بات درست ہو، شاہد خاقان عباسی

ٹی20ورلڈ کپ:پاکستان کابھارت میں کھیلنے کیلئے تحریری یقین دہانی کا مطالبہ

ٹی20ورلڈ کپ:پاکستان کابھارت میں کھیلنے کیلئے تحریری یقین دہانی کا مطالبہ

عظیم سماجی رہنما عبدالستار ایدھی کا یوم پیدائش

عظیم سماجی رہنما عبدالستار ایدھی کا یوم پیدائش

بھارہ کہو میں تین افراد کا قتل:جے یو آئی کا میتوں کے ہمراہ مری روڈ پر دھرنا

بھارہ کہو میں تین افراد کا قتل:جے یو آئی کا میتوں کے ہمراہ مری روڈ پر دھرنا

سرگودھا کینو ذائقے کے اعتبار سے بہترین ہے،صدرمملکت

سرگودھا کینو ذائقے کے اعتبار سے بہترین ہے،صدرمملکت

بلاول بھٹو زرداری کی سید عالم شاہ بخاری کی والدہ کے انتقال پر تعزیت

بلاول بھٹو زرداری کی سید عالم شاہ بخاری کی والدہ کے انتقال پر تعزیت

اٹارنی جنرل آف پاکستان خالد جاوید کورونا وائرس کا شکار ہو گئے

اٹارنی جنرل آف پاکستان خالد جاوید کورونا وائرس کا شکار ہو گئے

کورونا ویکسین نہ لگوانے والے طبی عملے کیخلاف سخت ایکشن ہوگا، پمز انتظامیہ

کورونا ویکسین نہ لگوانے والے طبی عملے کیخلاف سخت ایکشن ہوگا، پمز انتظامیہ

اپوزیشن ملکی مفادات کے مخالف ایجنڈے پر چل رہی ہے،عثمان بزدار

اپوزیشن ملکی مفادات کے مخالف ایجنڈے پر چل رہی ہے،عثمان بزدار

’’غنڈہ گردی و کرپشن بے تاج بادشاہ بھٹکتا پھررہا ہے‘‘

’’غنڈہ گردی و کرپشن بے تاج بادشاہ بھٹکتا پھررہا ہے‘‘

’’جب ٹوئٹ کرتا ہوں توباجی مریم کا پیڈگالی گلوچ بریگیڈ گالیاں دینا شروع ہوجاتا  ہے‘‘شہباز گل

’’جب ٹوئٹ کرتا ہوں توباجی مریم کا پیڈگالی گلوچ بریگیڈ گالیاں دینا شروع ہوجاتا ہے‘‘شہباز گل

اے این پی رہنما اسد خان اچکزئی کا قاتل گرفتار

اے این پی رہنما اسد خان اچکزئی کا قاتل گرفتار