01:58 pm
جدیدجنگی ہتھیار۔۔۔’’کے اسٹریٹ‘‘

جدیدجنگی ہتھیار۔۔۔’’کے اسٹریٹ‘‘

01:58 pm

خلیجی ریاستیں اب تک تقریبا100ملین ڈالراس مہم جوئی پرخرچ کرچکی ہیں،جوانہوں نے پچھلے تین سال سے سفارتی تعلقات کے خراب ہونے کے بعدشروع کررکھی ہے۔ امریکی وزیر خارجہ پومپیونے امریکاقطراسٹرٹیجک مذاکرات کاافتتاح کرتے ہوئے اس بات کااعلان کیاکہ خلیجی ریاستوں کے تنازعات اب ماضی کاحصہ ہیں،یہ ریاستیں ایک دوسرے کے خلاف نفرتوں کودفن کرکے سفارتی تعلقات کانئے سرے سے آغازکر چکی ہیں لیکن پومپیو کے بیان کے برعکس 100 ملین ڈالرکی خطیررقم یہ ظاہرکرتی ہے کہ سفارتی تعلقات کی تجدیدمیں ابھی مزید وقت لگے گا۔ اصل موضوع یہ ہے کہ3سال پہلے دوخلیجی ریاستوں کے سفارتی تعلقات ختم ہونے کے بعدسے قطر اورمتحدہ عرب امارات نے مہم جوئی کیلئے واشنگٹن میں کتنی رقم خرچ کی ہے۔رقم کازیادہ حصہ ایک دوسرے کے خلاف لڑائی میں خرچ ہوا۔ ابوظہبی نے دنیاکے سامنے قطرکوایک دہشت گرد بدمعاش ریاست کے طورپر پیش کیاجبکہ دوحہ  نے اپنے دفاع میں خودکوایک بھروسے کے قابل مغربی اتحادی کے طورپرپیش کیا۔
فلاحی بین الاقوامی پالیسی مرکزکے ڈائریکٹر فارن انفلوئینس بن فرامین نے ’’مڈل ایسٹ آئی‘‘ کوبتایاکہ موجودہ حالات میں جتنا میں سمجھ سکاہوں یہ ایک بڑی جنگ ہے،یہ جنگ جون2017ء سے اب تک جاری ہے۔2017ء میں سعودی عرب،بحرین اوردبئی نے قطرپراخوان المسلمون کی مدد کاالزام لگاتے ہوئے اس پرپابندی عائدکردی تھی۔ متحدہ عرب امارات اپنا اثرورسوخ  استعمال کرتے ہوئے اس جنگ میں قائدانہ کردار ادا کررہا ہے،2016ء سے2017 ء تک بالترتیب 410ملین سے421ملین قطرمخالف مہم جوئی میں خرچ کیے گئے ہیں۔قطرنے بھی اپنے مخالفین کی طرف پیش قدمی کرتے ہوئے ٹھیک انہی کی طرح اس مہم جوئی کیلئے اسی مدت کے دوران اپنابجٹ تین گناکردیا،یعنی4ملین سے 12ملین تک لابنگ میں خرچ ہوئے۔ مرکز برائے ذمہ دار سیاست کے مطابق اثرورسوخ کی یہ جنگ اس وقت اپنے عروج پرہے،قطری حکومت نے16 کمپنیوں کی خدمات حاصل کی ہوئی ہیں جبکہ متحدہ عرب امارات نے 8۔ دونوں ریاستوں نے2016ء کے بعد سے5 مزید کمپنیوں کوشامل کیاہے۔ 
واشنگٹن کے تجزیہ نگاراورفائونڈیشن فور ڈیفنس  ڈیموکریزکے سینئرنائب صدرنے کہا کہ  امریکاکی حدتک جب سے میں دیکھ رہا ہوں تب  سے ابھی تک اس جنگ میں مسلسل رقم خرچ کی جارہی ہے۔یہ بات یقینی ہے کہ ساری رقم محض اس مہم جوئی میں خرچ نہیں ہورہی بلکہ اس کا ہدف ایک دوسرے کی مخالفت ہے اوریہ صورتحال مستقبل کی اچھی پیش گوئی نہیں کرتی۔
فرامین جنہوں نے تین ملکوں کی لابنگ پرایک تفصیلی رپورٹ لکھی ہے،ان کے مطابق اس جنگ میں تیزی ٹرمپ کے الیکشن جیتنے کے بعدآئی ہے،ان ملکوں کی کوشش کی وجہ سے بین الاقوامی طورپرقطراکیلارہ گیا،اس کابائیکاٹ کیا گیا اور قطربے آسراکر دیاگیا۔فرامین نے مزیدکہاکہ وہ ایک لمحہ تھاجب ہم نے دیکھاکہ قطرنے اس حقیقت کوجان لیاکہ ان کیلئے امریکامیں مشکلات ہیں، وہ سعودی اورمتحدہ عرب امارات سے اثرورسوخ میں بہت پیچھے ہے،اس کے بعدقطرنے آگے بڑھناشروع کیااورزیادہ سے زیادہ طاقتور فرمز کو مخالفین کے خلاف لابنگ کیلئے اپنی طاقت اور اپناہتھیاربنایا۔ان ملکوں کااثرورسوخ ٹرمپ انتظامیہ کے ساتھ واضح نظرآیا،جب انہوں نے قطرکابائیکاٹ کیااورٹرمپ نے قطرکو کنارے لگاتے ہوئے سعودی عرب کادورہ کیاتاہم ایک سال سے بھی کم عرصے میں وائٹ ہاؤس میں قطرکی ایک اہم شخصیت کی امریکاکے دوست کی حیثیت سے میزبانی کی، وائٹ ہاؤس تک راستہ ہموار کرنے میں قطرلابی نے بہت محنت کی تھی۔
دیکھنے میں آیاہے کہ سعودی عرب سے کہیں چھوٹے ملک امارات نے قطرکے خلاف لابنگ میں سعودی عرب سے بہت زیادہ کامیابی حاصل کی،اس کی وجہ سعودی عرب میں پھیلی افراتفری تھی،جس میں سعودی عرب صحافی جمال خاشقجی کے قتل میں اپنادفاع کرتارہایایمن کی جنگ میں پھنسارہا۔واشنگٹن انسٹیٹیوٹ میں خلیج ریاست کے ایک سینئراسکالرحسین ایبش نے بتایاکہ ان ملکوں کے درمیان جنگ کابنیادی سبب عرب ریاستوں میں سیاسی اسلام کوفروغ دینایااس کی حمایت کرناہے۔قطرکیلئے اخوان المسلمون اور حماس جیسے گروپ انتہاپسندوں کی روک تھام ہے، جبکہ امارات کیلئے یہ انتہا پسندوں کوطاقت فراہم کرتے ہیں اوریہ قطراورامارات کے درمیان نظریاتی جنگ ہے،یہ ایک بڑی جنگ ہے جوکہ سیاسی کلچر کوواضح کرے گی،جبکہ سعودی عرب کے نزدیک یہ جنگ قطرکے روّیے کوواضح کرے گی۔
یادرہے کہ قطری حکومت نے خلیجی جنگ میں امریکاکے ساتھ مشترکہ فوجی کاروائیوں کے بعدالعدیدبیس کی تعمیرپرایک ارب ڈالرخرچ کیے تھے۔جب امریکانے عراق پہ حملہ کیاتو اپنے فضائی جنگی آپریشن کاہیڈکوارٹرسعودی عرب سے العدید بیس پر منتقل کردیاتھااورشام میں امریکی فضائی حملوں کیلئے بھی العدیدبیس ہی جنگی ہیڈکوارٹر تھا۔ گیس کے بے پناہ ذخائر اورامریکا کیلئے اِس کی اسٹرٹیجک اہمیت نے قطرکواِس قابل بنادیا کہ سعودیوں سے آزادانہ طورپراپنے سیاسی وزن کومنواسکے۔عراق جنگ اورخصوصاً 2011ء میں شروع  ہونے والی عرب بہارکے بعدجب سعودی عرب اندرونی طورپر کمزورہوااورخطے میں ایرانی اثررسوخ میں اضافہ ہواتوقطرکواپناآزادانہ کردار ادا کرنے کاموقع مل گیا ۔قطرکا آزادانہ سیاسی کردار اس وقت کھل کرسامنے آگیاتھاجب اس نے مصرمیں محمدمرسی کی حکومت کی مکمل تائید جبکہ سعودی عرب نے شدیدمخالفت کی تھی جبکہ الجزیرہ نیٹ ورک اورمڈل ایسٹ آئی نے اِس مجوزہ ’’تنازعہ اور خطرے کے حق میں‘‘مغرب اور امریکا میں کامیاب پروپیگنڈہ مہم نے قطرمخالفین پرلرزہ طاری کردیاگویاقطرنے الجزیرہ جیسے بین الاقوامی میڈیاکی اسی وقت کیلئے پرورش کررکھی تھی۔ قطری اورسعودی تنازعہ کوہوااس وقت ملی جب 2017  ء میں قطراورایران ایک دوسرے کے بہت قریب آگئے جب دنیا کے سب سے بڑے گیس فلیڈ شمالی پارس پہ دونوں نے گیس نکالنے کامشترکہ آپریشن شروع کیا۔جب قطرپٹرولیم کے چیف ایگزیکٹو سعدالکعبی سے اِس معاملے میں سوال کیاگیاتو انہوں نے کہا’’ہم اس وقت بالکل جدیدعہد میں ہیں،لہٰذاہمیں بھی نئے اقدامات اٹھانے ہوں گیاور مستقبل میں ایران کے ساتھ مزیدبہتر معاملات طے ہوں گے‘‘۔
(جاری ہے) 

تازہ ترین خبریں

اب ہر شہری اپنی گاڑی کا مالک بنے گا، پاکستان کی سستی ترین گاڑی متعارف کرا دی گئی

اب ہر شہری اپنی گاڑی کا مالک بنے گا، پاکستان کی سستی ترین گاڑی متعارف کرا دی گئی

کرائے کے گھروں میں رہنے والے سرکاری ملازمین کو بڑی خوشخبری سنا دی گئی

کرائے کے گھروں میں رہنے والے سرکاری ملازمین کو بڑی خوشخبری سنا دی گئی

آپ نے مجھ سے کیوں نہیں پوچھا؟ڈی جی آئی ایس آئی تقرری پر وزیراعظم نے آرمی چیف سے استفسار کیا تو انہوں نے کیا جواب دیا؟

آپ نے مجھ سے کیوں نہیں پوچھا؟ڈی جی آئی ایس آئی تقرری پر وزیراعظم نے آرمی چیف سے استفسار کیا تو انہوں نے کیا جواب دیا؟

نومبر میں حکومت ختم ہونےکی پیشنگوئی کے بعد پی ٹی آئی حکومت کو پہلا بڑا دھچکا لگ گیا،وزیراعظم کا انتہائی قریبی ساتھی مستعفی ہو گیا

نومبر میں حکومت ختم ہونےکی پیشنگوئی کے بعد پی ٹی آئی حکومت کو پہلا بڑا دھچکا لگ گیا،وزیراعظم کا انتہائی قریبی ساتھی مستعفی ہو گیا

پنجاب نے ٹھُکرا دیا اور سندھ نے اپنا لیا،ممتاز سرائیکی شاعر شاکر شجاع آبادی کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سندھ حکومت نے بڑی پیشکش کر دی

پنجاب نے ٹھُکرا دیا اور سندھ نے اپنا لیا،ممتاز سرائیکی شاعر شاکر شجاع آبادی کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سندھ حکومت نے بڑی پیشکش کر دی

ملک بھر میں پٹرولیم کی شدید بحران۔۔ آئندہ چند دنوں میں کیا ہونےوالاہے؟ایسی خبر جو پاکستانیوں کے ہوش اڑا دے گی

ملک بھر میں پٹرولیم کی شدید بحران۔۔ آئندہ چند دنوں میں کیا ہونےوالاہے؟ایسی خبر جو پاکستانیوں کے ہوش اڑا دے گی

فرانسیسی سفیر کو ملک سے نکالنے کا معاملہ،وفاقی وزیرداخلہ شیخ رشید نے بڑا اسٹینڈ لے لیا

فرانسیسی سفیر کو ملک سے نکالنے کا معاملہ،وفاقی وزیرداخلہ شیخ رشید نے بڑا اسٹینڈ لے لیا

اصل غصہ ہی ہمیں نیوزی لینڈ پر تھا، یہ انڈیا تو راستے میں آگیا" فواد چوہدری کا ایسا بیان کہ پاکستانیوں کے قہقہے رک نہیں رہے

اصل غصہ ہی ہمیں نیوزی لینڈ پر تھا، یہ انڈیا تو راستے میں آگیا" فواد چوہدری کا ایسا بیان کہ پاکستانیوں کے قہقہے رک نہیں رہے

طویل انتظار ختم ہوا، ن لیگی کارکنان تیاری پکڑ لیں ،سابق وزیراعظم کی واپسی کا اعلان کر دیا گیا

طویل انتظار ختم ہوا، ن لیگی کارکنان تیاری پکڑ لیں ،سابق وزیراعظم کی واپسی کا اعلان کر دیا گیا

میں کسی کو چھوڑوں گی نہیں، ثانیہ عاشق نے خود سے منسوب ویڈیوز سے متعلق کیا فیصلہ کر لیا؟ ہلچل مچ گئی

میں کسی کو چھوڑوں گی نہیں، ثانیہ عاشق نے خود سے منسوب ویڈیوز سے متعلق کیا فیصلہ کر لیا؟ ہلچل مچ گئی

نئے ڈ ی جی آئی ایس آئی کا فیصلہ انٹرویوز کے بعد ہوا۔۔۔وزیراعظم ہاؤس کا اعلامیہ

نئے ڈ ی جی آئی ایس آئی کا فیصلہ انٹرویوز کے بعد ہوا۔۔۔وزیراعظم ہاؤس کا اعلامیہ

نادرا نے پاکستانیوں کو بڑی خوشخبری سنا دی، کونسی سروس بالکل مفت ملے گی؟بڑی پریشانی ختم ہو گئی

نادرا نے پاکستانیوں کو بڑی خوشخبری سنا دی، کونسی سروس بالکل مفت ملے گی؟بڑی پریشانی ختم ہو گئی

پنشن و دیگر مراعات کا موجودہ نظام ختم ، حکومت کا سرکاری ملازمین کیلئے پنشن کا نیا سسٹم لانے کا فیصلہ

پنشن و دیگر مراعات کا موجودہ نظام ختم ، حکومت کا سرکاری ملازمین کیلئے پنشن کا نیا سسٹم لانے کا فیصلہ

نواز شریف سے لندن میں ملاقات کرنیوالی بااثر شخصیات کون نکلیں؟ن لیگ نے خود ہی تصدیق کر دی

نواز شریف سے لندن میں ملاقات کرنیوالی بااثر شخصیات کون نکلیں؟ن لیگ نے خود ہی تصدیق کر دی