02:07 pm
 مسیحی تہذیب کو کرسمس مبارک 

 مسیحی تہذیب کو کرسمس مبارک 

02:07 pm

19 دسمبر1952 ء کو  میری پیدائش فیصل آباد کے مضافات میں واقع گائوں  چک نمبر80 گ ب سیتانہ روڈ میں ہوئی ہے ،اس گائوں میں پرائمری سکول کے ساتھ متصل
19 دسمبر1952 ء کو  میری پیدائش فیصل آباد کے مضافات میں واقع گائوں  چک نمبر80 گ ب سیتانہ روڈ میں ہوئی ہے ،اس گائوں میں پرائمری سکول کے ساتھ متصل ہمارا گھر تھا جس کے پڑوس میں ماسٹر لال دین کا گھرانہ تھا۔ مجھ  معصوم بچے کو جہاں ماسٹر لال دین کی خواتین اٹھائے رکھتی، وہاں اسی گائوں کی عیسائی خاندانوں کی خواتین اور لڑکیاں اکثر اٹھاتی، پیار کرتیں۔ یوں میرے جسم میں جہاں آرائیں ماں باپ کا مسلمان خون ہے وہاں ماسٹر لال دین کے گھرانے کی خواتین کی شفقت اور مسیحی خاندان کی خواتین کی شفقت  و پیار کی آبیاری ہے۔ میں ان مسیحی خاندانوں کا آج شکریہ ادا کرتا ہوں جن کی انسان دوست خواتین نے میری پرورش میں  میری والدہ، دادی کا ہاتھ بٹایا تھا۔ مجھے اچانک یہ بات اس لئے یاد آگئی کہ وہ کس قدر انسان دوست اور معصوم  زمانہ تھا جب سماجی طور پر عیسائی اور مسیحی دین رکھنے والے افراد مسلمان گھرانوں میں سماج کا باعزت حصہ یوں ہوتے تھے کہ مسلمان معصوم بچوں کو مسیحی لڑکیاں، خواتین اپنی شفقت و پیار سے اکثر نوازتی تھی۔ کیا آج ایسا عمدہ، معصوم سماجی و معاشرتی ماحول موجودہے؟ 
جب قیام پاکستان کی تحریک جاری تھی  ، تو ایک عیسائی صحافی قائداعظم ؒسے بہت متاثر تھا۔  دہلی میں وہ قائداعظم کی تقاریر کو اس طرح اہمیت دیتا جیسا کہ ہندو پریس میں گاندھی کو اہمیت  ملتی تھی۔ قائداعظمؒ نے یہ سب یاد رکھا اور جب ایک انگریزی اخباری (ڈان) قائداعظمؒ  نے شروع کروایا تو اس مسلمان پہلے انگریزی روزنامے کا چیف ایڈیٹر اس مسیحی صحافی کو بنایا تھا۔
پنجاب میں یونی نسٹ پارٹی کی حکومت تھی۔ خضر حیات ٹوانہ اس کے آخری وزیراعظم تھے، اس سے پہلے یونی نسٹ پارٹی کی طرف سے لاہور سے سرفضل حسین نے مسلمانوں کے تعلیمی  سماجی ارتقاء کے لئے بہت اہم خدمات سرانجام دی تھیں۔ سکھ، ہندو ، مسلمان زمینداروں کے ساتھ مسیحیوں کو بھی سیاسی بندوبست میں کچھ جگہ مل جاتی تھی۔ یہ سارا بندوبست پنجاب حکومت کی حد تک مولانا ابوالکلام آزاد  کے ذہن رسا کی تخلیق تھی۔ لاہور کے مورخ  اخبار نویس مولانا غلام رسول مہر جو ایڈیٹر روزنامہ انقلاب تھے وہ مولانا  آزاد کے فکری ساتھی تھے۔ یونی نسٹ پارٹی اور مولانا آزاد کی سیاست پشت پناہی یہی روزنامہ انقلاب کرتا تھا۔ جب مولانا عبید اللہ سندھی مکہ مکرمہ میں قیام پذیر تھے تو وہ اپنی نگارشات مولانا غلام رسول مہر کو لاہور ارسال کرتے جنہیں روزنامہ انقلاب میں شائع کیا جاتا تھا۔
جبکہ وہ نظریاتی مسلم لیگ جس کے پنجاب میں صدر علامہ اقبالؒ تھے ، زمینداروں میں یہ نظریاتی مسلم لیگی غیر مقبول تھے کیونکہ یہ صرف مسلمانوں کے لئے سوچتے، لہٰذا  یونی نسٹ پارٹی سماجی طو ر پر بہت مضبوط اور طاقتور سیاسی وجود تھا۔ قائداعظمؒ نے تدبر  و فراست کے ساتھ یونی نسٹ پارٹی کے جاگیردار عہدیداروں سے تعلقات بنائے، انہیں مسلم لیگ میں جگہ دینے کی پیشکش کی۔60 فیصد عہدے، اراکین مجلس عاملہ اور60 فیصد ٹکٹ دینے کی پیشکش کی۔ جو انہوں نے قبول کرلی یوں علامہ اقبالؒ کے حلقہ اثر میں شامل مسلم لیگی مایوس اور ناراض رہنے لگے۔ جب علامہ اقبالؒ نے قائداعظمؒ سے اس پیش رفت کے بارے میں پوچھا تو انہوں نے تسلیم کیا کہ انہوں نے انہی شرائط کے ساتھ یونی نسٹ پارٹی کو مسلم لیگ میں ضم ہو جانے کی پیشکش کر رکھی ہے۔ لہٰذا یہ پنجاب کی یونی نسٹ پارٹی جب مسلم لیگ میں ضم ہوگئی تو کانگرس، مولانا آزاد کا سیاسی ایجنڈا وہ غبارہ بن گیا جس کی ہوا فضا میں نکل گئی۔ اس عالم سیاست میں پنجاب اسمبلی میں پاکستان کے حق اور مخالفت میں طویل بحث ہوئی۔ اسی بحث کے دوران ماسٹر تارا  سنگھ، سکھ پارلیمانی لیڈر نے پنجاب اسمبلی کے باہر کھڑے ہوکر کرپان لہرائی کہ جس نے پنجاب کو تقسیم کرنے کی کوشش کی ، برصغیر کو تقسیم کرنے کی کوشش کی تو سکھ کرپانوں سے لہولہان کر دیں گے۔ جب ووٹنگ ہوئی تو ہر طرف ووٹ برابر تھے کیونکہ یونی نسٹ پارٹی کا سیاسی وجود بہت طاقتور تھا۔ سپیکر پنجاب اسمبلی مسیحی تھے۔ ان کے ساتھ دو مزید اراکین  پنجاب اسمبلی مسیحی تھے۔ ان دو  مسیحی اراکین کے ساتھ ساتھ سپیکر مسیحی رکن اسمبلی نے مسلم لیگ کے حق میں اور کانگرس کے خلاف ووٹ ڈالا، تب جاکر پنجاب میں مسلم لیگ کو تحریک پاکستان کو سیاسی فتح اور مولانا آزاد کی کانگرس پارٹی کو پارلیمانی شکست ہوئی تھی۔
بطو ر پاکستانی مسلمان میں وسیع الظرف ان تین مسیحی اراکین پنجاب اور مسیحی سپیکر پنجاب کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ ان کے سبب پنجاب پاکستان بننے میں کامیاب ہوا۔ متعدد جنگوں میں دفاع وطن کے لئے مسیحی دلیر و جرات مندانہ خدمات کو خرا ج تحسین پیش کرتا ہوں۔
جب مکہ مکرمہ میں آپؐ دعوت توحید دیتے تھے تو  مکی قریشی کفار کا ذہنی اور کاروباری تعلق زرتشتی ایران ایمپائر  سے تھا۔ موجودہ شام و فلسطین و لبنان و اسرائیل جن کو بلاد الشام کہا جاتا   تھا کے وجود پر رومی مسیحی   اور ایرانی آتشی کسریٰ ایمپائر میں لڑائی ہو جاتی تھی۔ آپؐ نے مسیحی روم کی فتح کی پیش گوئی کی جبکہ پہلے مرحلے کی  جنگ  میں ایرانی جیت گئے۔ پھر سور ہ الروم نازل ہوئی اور چند سال بعد فتح خیبر کے وقت، رومی مسیحی جیت  ہوگئی۔ مسیحی خاندان کی جب ماریہ قبطبیہؓ قبول اسلام کے بعد آپؐ کے عقد میں آئیں  تو آپؐ نے صحابہ کرامؓ کو حکم دیا کہ ’’میں تمہیں قبطی عیسائیوں کے ساتھ خیر کی وصیت کرتا ہوں‘‘  دنیا بھر میں مسیحی دین رکھنے والے انسانوں کو ، پاکستانیوں کو  کرسمس کی مبارک باد پیش کرتا ہوں۔



 

تازہ ترین خبریں

الیکشن کمیشن نے ضمنی انتخاب کی تاریخوں کا اعلان کردیا

الیکشن کمیشن نے ضمنی انتخاب کی تاریخوں کا اعلان کردیا

مہنگائی کانیاطوفان آنے کو۔۔۔ڈالر نےاگلے پچھلے تمام ریکارڈ توڑ دیئے،امریکی کرنسی کی قدرمیں کتنااضافہ ہوگیا؟جان کرپریشان ہوجائیں گے

مہنگائی کانیاطوفان آنے کو۔۔۔ڈالر نےاگلے پچھلے تمام ریکارڈ توڑ دیئے،امریکی کرنسی کی قدرمیں کتنااضافہ ہوگیا؟جان کرپریشان ہوجائیں گے

یوٹیوب نے عوام سے کیاگیااپناوعدہ پوراکردیا۔۔۔شاندارسہولت متعارف کر ادی

یوٹیوب نے عوام سے کیاگیااپناوعدہ پوراکردیا۔۔۔شاندارسہولت متعارف کر ادی

 ملک کے بیشتربالائی وسطی علاقوں میں موسم خشک رہے گا

ملک کے بیشتربالائی وسطی علاقوں میں موسم خشک رہے گا

سردیوں کا آغاز ہو گیا۔۔موسم سرما کی پہلی برفباری ۔۔پاکستان کا کون سے اہم ترین علاقے نے برف کی چادر اوڑھ لی ؟جانیے تفصیل

سردیوں کا آغاز ہو گیا۔۔موسم سرما کی پہلی برفباری ۔۔پاکستان کا کون سے اہم ترین علاقے نے برف کی چادر اوڑھ لی ؟جانیے تفصیل

ملک آج بھی کرپشن کے سرطان کی جکڑ میں ہے۔سراج الحق 

ملک آج بھی کرپشن کے سرطان کی جکڑ میں ہے۔سراج الحق 

تحریک انصاف نے قوم پرست جماعتوں سے انتخابی اتحاد کا فیصلہ کرلیا 

تحریک انصاف نے قوم پرست جماعتوں سے انتخابی اتحاد کا فیصلہ کرلیا 

 شہباز شریف اورسلمان شہباز کی بریت کی خبر غلط اور مس رپورٹنگ ہے۔شہزاد اکبر

شہباز شریف اورسلمان شہباز کی بریت کی خبر غلط اور مس رپورٹنگ ہے۔شہزاد اکبر

ایف آئی اے شہباز خاندان کیخلاف ثبوتوں کے 5تھیلے سامنے لے آیا

ایف آئی اے شہباز خاندان کیخلاف ثبوتوں کے 5تھیلے سامنے لے آیا

ربیع الاول کا چاند7اکتوبر بروز جمعرات کو نظرآنے کا امکان ہے ، محکمہ موسمیات 

ربیع الاول کا چاند7اکتوبر بروز جمعرات کو نظرآنے کا امکان ہے ، محکمہ موسمیات 

 میرے دادا کہتے تھے بیٹا عوام کی خدمت ایسے کرو کہ عوام آپ کو یادرکھے۔حمزہ شہباز

میرے دادا کہتے تھے بیٹا عوام کی خدمت ایسے کرو کہ عوام آپ کو یادرکھے۔حمزہ شہباز

 ہم نے خدمت کے ریکارڈ قائم کیے اس لیے قوم نے ہم پر بار بار اعتماد کیا،رانا ثنا اللہ

ہم نے خدمت کے ریکارڈ قائم کیے اس لیے قوم نے ہم پر بار بار اعتماد کیا،رانا ثنا اللہ

چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری ہنگامی دورے پر امریکہ روانہ 

چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری ہنگامی دورے پر امریکہ روانہ 

کورونا کے بعد ڈینگی کے وار جاری ۔۔۔ سندھ اور پنجاب میں سینکڑوں کیسز رپورٹ 

کورونا کے بعد ڈینگی کے وار جاری ۔۔۔ سندھ اور پنجاب میں سینکڑوں کیسز رپورٹ