12:38 pm
اپوزیشن بمقابلہ حکومتی وزراء

اپوزیشن بمقابلہ حکومتی وزراء

12:38 pm

فکری پستی کا یہ عالم ہے کہ کسی ایک غیر ضروری اور غیر اہم مسئلے کو لیکر ہفتوں اس پر بحث کی جاتی ہے۔ ٹی وی چینلز ان غیر اہم مسئلوں پر کئی کئی روز تک ٹاک شوز کرتے ہیں اور سیاسی ماہرین اس انداز میں اس مسئلے کی حمایت میں یا مخالفت میں اپنی دلیلیں پیش کرتے ہیں کہ گویا ملک کے اصل اور حقیقی مسائل یہی ہیں۔ اگر ان پر بحث نہ کی گئی تو بالفاظ دیگر ملک کی ترقی ممکن نہیں۔ عوام بھی اسی بات کی عادی ہوچکی ہے اور ان ٹاک شوز کے ماہرین کو عالم، فاضل اور نجانے کیا کیا سمجھ بیٹھی ہے۔ انہی تبصروں پر تبصرے کرنا عوام کا کام ہے،گھر ہو یا دفتر،دوستوں کی محفل ہو یا رشتہ داروں کی دعوت ہرجگہ ہر مقام پر یہی سیاسی تبصرے مثلاً لاہور کے پی ڈی ایم کے جلسے کو لے لیں۔ 13دسمبر کو جلسہ ہوا اور ابھی تک جلسے کی کرسیاں اور بندے گنے جارہے ہیں۔ جلسہ کامیاب تھا یا ناکام؟مریم نواز نے لاہور سے تعلق رکھنے والے ارکان پارلیمنٹ کی کلاس لے لی۔ افرادی قوت کیوں کم تھی؟کس پارٹی کے لوگ زیادہ تھے؟پی ڈی اے کی تحریک ناکام ہوگئی ہے؟ وغیرہ وغیرہ افسوس تو اس بات پر ہوتا ہے کہ حکومتی وزراء اور مشیران بھی اپنی تمام تر توانائیاں اپنے مخالفین کو ناکام ثابت کرنے پر صرف کر رہے ہیں۔ 
گزشتہ کئی ہفتوں سے لاہور جلسے پر سیاست کھیلی جارہی ہے۔ ہر وزیر، ہر مشیر اپنی اپنی پریس کانفرنس بلا رہا ہے اور ایجنڈا صرف یہی ہے کہ پی  ڈی ایم کے غبارے سے ہوا نکل گئی ہے۔ پی ڈی ایم استعفیٰ دے اور ہم اسے فوری قبول کرتے ہوئے ضمنی الیکشن کروا دیں گے اور اس سے بڑا دکھ یہ ہے کہ عوام حیرت سے دونوں کو دیکھ نہیں رہے بلکہ چسکے لے کر تبصرے کر رہے ہیں۔ انہیں اس بات کی قطعاً فکر نہیں کہ گھر کا نان نفقہ کیسے پورا ہوگا؟ مہنگائی نے ہمارا کیا حشر کر دیا ہے؟ حکومت طبی اور تعلیمی سہولیات دے رہی ہے یا نہیں؟ بلکہ عوام سیاستدانوں کے دھوکے میں آکر بھی مزے لے رہے ہیں۔
میں کبھی کبھی سوچتا ہوں ہمارا یہ کیسا معاشرہ ہے جس کی کوئی سمت متعین نہیں۔ نہ تو حکمرانوں نے اس عوام کو شعور دینے کی کوشش کی ہے اور نہ ہی یہ عوام خود باشعور ہونا چاہتی ہے۔ مجھے ابھی تک یہ بات سمجھ نہیں آئی کہ اس حکومت کو اقتدار حاصل کئے اڑھائی سال ہوچکے ہیں مگر ابھی تک کوئی قابل ذکر مسئلہ حل نہیں ہوسکا۔ اپوزیشن نے شروع دن سے حکومت کے ساتھ آنکھ مچولی شروع کی اور یہ سلسلہ ابھی تک جاری ہے اور امید ہے آئندہ اڑھائی سال بھی یہ سلسلہ اسی طرح جاری و ساری رہے گا۔ جہاں تک اپوزیشن کا معاملہ ہے وہ تو کبھی بھی یہ نہیں چاہے گی کہ حکومت اپنی کوئی کارکردگی دکھا پائے۔ اپوزیشن کا تو کام ہی یہی ہے کہ حقیقی مسئلوں سے توجہ ہٹا کر غیر ضروری معاملوں میں الجھا دیا جائے اور ویسے بھی اگر اپوزیشن  کو عوام سے کسی قسم کی کوئی ہمدردی ہوتی تو تین بار وفاق میں اور چھ بار صوبہ پنجاب میں حکومت کرنے والی جماعت اپنے جلسوں میں وزیراعظم عمران خان کو للکارنے کی بجائے اپنی کارکردگی پیش کرتی اور عوام کی فلاح و بہبود کے لئے شروع کئے گئے منصوبوں کا ذکر کرتی مگر یہی دیکھا گیا ہے کہ وہ ان تمام اپوزیشن پارٹیوں کا نشانہ عمران خان ہیں۔
اپوزیشن سے کیا گلہ؟ اس کا تو کام ہی شور مچانا ہے ہمیں تو گلہ موجودہ حکومت پر ہے جس کے سربراہ حقیقی معنوں میں ایماندار اور لوگوں سے ہمدردی رکھنے والے ہیں۔ وہ تبدیلی کے نام پر ووٹ لیکر اقتدار میں آئے ہیں۔ انہوں نے سابقہ حکمرانوں کو نہ صرف چور کہا ہے بلکہ چور ثابت کیا ہے مگر اس کے باوجود وہ گزشتہ 30ماہ میں عوام کے لئے کچھ بھی نہ کر پائے۔ اگر معاشی اعشاریے درست سمت جارہے ہیں۔ اس سے عوام کو کوئی سروکار نہیں۔ عوام تو یہ دیکھتی ہے کہ اسے اس دوران حکومت کی طرف سے کیا مفاد حاصل ہوا ہے؟ اگر مہنگائی میں اضافہ ہوا ہے تو اسے قبول کیا جاسکتا ہے مگر اس کے ساتھ ساتھ آمدنی میں بھی اضافہ ہونا چاہیے تھا۔ اپوزیشن جو بھی کرتی ہے اسے کرنے دیں مگر وزراء کو چاہیے کہ وہ بیان بازی سے گریز کرتے ہوئے محض کارکردگی دکھانے پر توجہ دیں۔

تازہ ترین خبریں

بھارت کو ایک ماہ کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی صدارت کی ذمہ داری۔۔۔دفتر خارجہ کا ردعمل سامنے آگیا

بھارت کو ایک ماہ کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی صدارت کی ذمہ داری۔۔۔دفتر خارجہ کا ردعمل سامنے آگیا

بلاول بھٹو زرداری اور ایمل ولی خان کی ملاقات۔۔۔۔۔سیاسی صورت حال پر تبادلہ خیال

بلاول بھٹو زرداری اور ایمل ولی خان کی ملاقات۔۔۔۔۔سیاسی صورت حال پر تبادلہ خیال

 پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو جیت کیلئے 158 رنز کا ہدف دیدیا۔

پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو جیت کیلئے 158 رنز کا ہدف دیدیا۔

وزیراعظم عمران خان کل عوام سے براہ راست مخاطب ہونگے 

وزیراعظم عمران خان کل عوام سے براہ راست مخاطب ہونگے 

موت تعاقب میں تھی ، پاکستان کے اہم شہر میں امتحان دینے نکلی نویں جماعت کی طالبہ کی افسوسناک موت

موت تعاقب میں تھی ، پاکستان کے اہم شہر میں امتحان دینے نکلی نویں جماعت کی طالبہ کی افسوسناک موت

پاکستان کے اس شہر کے عوام سپر احتیاط کریں، ہفتے کے روز ہونے والی موسلادھار بارش صرف شروعات تھی

پاکستان کے اس شہر کے عوام سپر احتیاط کریں، ہفتے کے روز ہونے والی موسلادھار بارش صرف شروعات تھی

مسٹر زرداری آپ کیا چاہتے ہیں لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن۔اسد عمر کا بلاول کو جواب

مسٹر زرداری آپ کیا چاہتے ہیں لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن۔اسد عمر کا بلاول کو جواب

پاکستان ٹیم کے نام ایک اور عزاز ۔۔۔۔محمد رضوان نے ٹی ٹوئنٹی میں ورلڈ ریکارڈ بنادیا

پاکستان ٹیم کے نام ایک اور عزاز ۔۔۔۔محمد رضوان نے ٹی ٹوئنٹی میں ورلڈ ریکارڈ بنادیا

 تحریک انصاف کے رکن اسمبلی نذیرچوہان کے پروڈکشن آرڈرز۔۔۔ ن لیگ نے بھی سپیکر اسمبلی پرویزالٰہی کی حمایت کافیصلہ کرلیا

 تحریک انصاف کے رکن اسمبلی نذیرچوہان کے پروڈکشن آرڈرز۔۔۔ ن لیگ نے بھی سپیکر اسمبلی پرویزالٰہی کی حمایت کافیصلہ کرلیا

افغانستان سے علاج کیلئے آنے والی خاتون کی ٹانگ سے ایسی چیز برآمد کہ بارڈر پر موجود سیکیورٹی اہلکار بھی ہکا بکا رہ گئے

افغانستان سے علاج کیلئے آنے والی خاتون کی ٹانگ سے ایسی چیز برآمد کہ بارڈر پر موجود سیکیورٹی اہلکار بھی ہکا بکا رہ گئے

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں اضافہ ۔۔۔ وزارت خزانہ کی جانب سے نوٹیفیکشن جاری

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں اضافہ ۔۔۔ وزارت خزانہ کی جانب سے نوٹیفیکشن جاری

 کراچی میں بھارت جیسی صورتحال ہوئی تو وزیراعظم اور ان کے وزرا ذمہ دار ہوں گے۔بلاول بھٹو 

 کراچی میں بھارت جیسی صورتحال ہوئی تو وزیراعظم اور ان کے وزرا ذمہ دار ہوں گے۔بلاول بھٹو 

اوگرانے اگست کیلئے ایل پی جی کی قیمت میں اضافہ کر دیا۔

اوگرانے اگست کیلئے ایل پی جی کی قیمت میں اضافہ کر دیا۔

بھارت میں مون سون بارشوں نے تباہی مچادی، 230 سے زائد افراد ہلاک ہوگئے 

بھارت میں مون سون بارشوں نے تباہی مچادی، 230 سے زائد افراد ہلاک ہوگئے