12:39 pm
ضمیرکے گورکن لیکن کب تک؟

ضمیرکے گورکن لیکن کب تک؟

12:39 pm

پرنس ہیری برطانیہ کے ولی عہد شہزادہ چارلس اورآنجہانی لیڈی ڈیاناکے دوسرے صاحبزادے اوربرطانیہ کی متوقع بادشاہت میں تیسرے نمبر پرہیں،پرنس ہیری15ستمبر1984 میں پیداہوئے اوران کی والدہ انہیں عام انسان دیکھناچاہتی تھی۔
پرنس ہیری اکتوبر2007کے آخرمیں برطانوی اخبارات کی"کورسٹوریز"اور ٹیلی ویژن کی خبروں میں بھی بری طرح"ان" ہوگئے۔پرنس ہیری کی مشکلات کاپس منظربہت دلچسپ تھا۔ پرنس ہیری نے مشرقی برطانیہ نورفوک میں ملکہ برطانیہ کی بہت بڑی جاگیرکے علاقے نائم سینڈرنگ ہیم کےایک شاہی محل کے ساتھ ایک طویل جنگل میں،اکتوبر کے آخری ہفتے میں لاعلمی میں پرندوں کے شکارپرپابندی کے علاقے میں ایک خاص قسم کی نایاب برائون رنگت  کی مادہ مرغی اوراس کے نرجوخوراک کی تلاش میں پروازکررہے تھے، پردوفائرکئے اور یہ دونوں پرندے زخمی ہوکرگرگئے،سینڈرنگ ہیم کے قرب وجوارمیں اس وقت دوعام شہری اورجنگلی حیات کاایک وارڈن موجودتھے،ان لوگوں نے فوراًپولیس کو اطلاع دی، پولیس فوری طور پر سینڈرنگ موقع پرپہنچی اوراس نے زخمی پرندوں کوقبضے میں لیکرعلاج کیلئے بھیج دیا،جس کے بعد شہزادے سے ابتدائی تفتیش شروع ہوگئی، شہزادے نے اس واقعے سے لاتعلقی ظاہرکی لیکن پولیس نے اسے تفتیش کاحصہ بنالیا،یہ واقعہ دوسرے  دن اخبارات کی شہ سرخی بن گیا، شاہی خاندان کاترجمان یہ اعلان کرنے پرمجبور ہوگیا، اگر شہزادہ قصوروار ثابت ہواتواس کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔برطانوی قانون میں اس پرندے کونقصان پہنچانے کی سزا چھ ماہ قید اورپانچ ہزارپائونڈ جرمانہ ہے،برطانوی قانونی ماہرین نے قومی پریس کوبتایاکہ اگرشہزادے کے خلاف جرم ثابت ہوگیا تو اسے نہ صرف یہ سزابھگتناپڑے گی بلکہ اسے فوج سے بھی فارغ کردیاجائے گا۔پھر دنیا کے تمام باخبرمیڈیا نے اس کارروائی کومانیٹر بھی کیااور برطانیہ کی عدالتی کارروائی کوتحسین کے کلمات سے بھی نوازا۔
آپ پرنس ہیری کے خلاف چھپنے والی تمام رپورٹس کوآج بھی پڑھ لیں،ان میں چارچیزیں نمایاں ہیں،اول برطانیہ میں کوئی رکن اسمبلی،کوئی لارڈ،کوئی جرنیل اورشاہی خاندان کا کوئی فردقانون سے بالاترنہیں،دوم عام شہری سے لیکر جنگلی حیات کے وارڈن تک برطانوی خاندان کے خلاف شکایت کرسکتاہے اورپولیس تفتیش کیلئے شاہی محل میں بھی داخل ہو سکتی ہے، سوم برطانیہ کے شاہی خاندان کے چھوٹے سے چھوٹے جرائم بھی میڈیا میں آجاتے ہیں اورخاندان کا کوئی فردمیڈیاپراثر انداز ہونے کی کوشش نہیں کرتااورچہارم اگر شاہی خاندان کے کسی فردکے خلاف جرم ثابت ہوجائے توبرطانوی عدالتیں فیصلہ سناتے دیرنہیں لگاتیں اوراس فیصلے پرفوراًعمل درآمدہوتاہے۔میں برطانوی معاشرے کی ان خوبیوں کا مطالعہ کرتے ہوئے پاکستانی معاشرے کاجائزہ بھی لے رہاتھا۔
برطانیہ ہماراآقاتھا،وہ ہم پرڈیڑھ سوسال حکومت کرتارہاتھالیکن بعدازاں ہمیں محسوس ہواہم مسلمان ہیں اورمسلمان نظریات،خیالات اورروایات  میں برطانیہ کے کافروں سے بہت آگے ہیں چنانچہ ہم نے1947میں کافروں سے آزادی حاصل کرلی لیکن2007میں ہمارے کافرآقائوں کی اخلاقیات اورقانون پروری کایہ عالم دنیانے ملاحظہ کیاکہ وہاں دوپرندوں کوزخمی کرنے پرنہ صرف پولیس شاہی شکارگاہ میں داخل ہوگئی بلکہ شہزادہ درجنوں مرتبہ شامل تفتیش رہااورشہزادہ میڈیا سے بھی منہ چھپاتارہاجبکہ انہی دنوں ہم جیسے اہل ایمان کے ملک میں پی ایچ ڈی کی مشکوک ڈگری کے ساتھ وزارتِ قانون کا قلمدان سنبھالے وزیرقانون ایک مخصوص چارٹر طیارے کے ذریعے ملک بھرکی بارکونسلزمیں کروڑوں روپے بانٹ کرزرداری حکومت کی خدمت سرانجام دےرہاتھااورجوآج بھی انصاف کے نام پرایوانِ اقتدارمیں آنے والی جماعت میں قانون انصاف کے مشیرکے نام پراقتدارکے مزے لوٹ رہاہے۔
میں سوچ رہا تھا،ایک طرف "کافروں" کے شہزادے دوپرندے زخمی کرنے کے جرم میں قانون کے شکنجے میں آجاتے ہیں جبکہ دوسری طرف اللہ کی محبوب ترین قوم کے حکمران خود کوقانون اورآئین سے بالاترثابت کر دیتے ہیں،قوم نے عدلیہ کی آزادی کیلئے قربانیاں دیں لیکن آج حکمرانوں کے تمام مقدمات کوگہری نیندسلادیاگیا ہے۔ہم اقتدارمیں رہتے ہوئے صرف ایک شخص کو بچانے کیلئے پاکستان کے تمام ادارے تباہ کردینے کی جارحانہ کوشش کر گزرتے ہیں، ہم قانون اور آئین کی دھجیاں بکھیر دیتے ہیں،ہم اللہ کے سامنے کیامنہ لے کر جائیں گے!کیا قیامت کے دن یہ لوگ ہمارامنہ نہیں چڑائیں گے؟
ہمارے حکمرانوں کوکون بتائے دنیاکے تمام مذاہب کی کوئی نہ کوئی ایک بڑی خصوصیت ہے مثلا ہندومت عاجزی کامذہب ہے (بلاشبہ مودی اپنے دھرم کابھی سب سے بڑامجرم ہے )بودھ بے لوث ہوتے ہیں مگرروہنگیامیں انہوں نے خوداپنے ہاتھوں منہ پرکالک مل لی ہے اورعیسائیت قربانی اور یہودیت بالا دستی کادرس دیتی ہے جبکہ اسلام عدل کانام ہے،اگر ہم اسلام سے عدل اورمسلمانوں سے انصاف نکال دیں توپیچھے سوکلوگرام گوشت کاڈھیررہ جاتاہے لیکن آپ ہماری بد قسمتی دیکھئے آج یہودی، عیسائی،بودھ کے پیروکار جانوروں تک سے انصاف کررہے ہیں،ان کے معاشروں میں ملکہ سے لیکر فریادی تک کویکساں حقوق حاصل ہیں،وہاں دوزخمی پرندے زنجیرعدل ہلادیتے ہیں لیکن اللہ کی محبوب قوم کے حکمران ہرروزانصاف،قانون اورعدل سے جوتے صاف کرتے ہیں،اگران کے خلاف کوئی فیصلہ آجائے تواس کی دھجیاں اڑادینے میں ایک لمحہ تاخیرنہیں کرتے۔
ذرادل پرہاتھ رکھ کربتائیےآج اگر برطانیہ کی عدالتیں شاہی خاندان کومحلات خالی کرنے کاحکم دیں توکیاملکہ کے پاس کوئی دوسرا راستہ ہوگا؟اب آپ اللہ کے نام پربننے والے پاکستان کودیکھئے،ہماری سپریم کورٹ کے احکامات کی کس قدرتحقیر ہو رہی ہے۔اس کے فیصلوں پرعمل درآمد کی بجائے دوسرے تاخیری حربوں سے کام لیکراپنے اقتدارکودوام دیا جاتا ہے۔ ایک طرف جعلی ڈگری یافتہ کی تقرری قانون کے ساتھ کھلاکھلواڑہے،عین اس وقت ایوانِ اقتدارمیں مولانا طارق جمیل عدل وانصاف کے موضوع پرلیکچردے رہے ہوتے ہیں۔ 
حضرت علی نے چودہ سوسال پہلے فرمایاتھا ’’دنیامیں کفرکی حکومت قائم رہ سکتی ہے لیکن بے انصافی کی نہیں‘‘اورہم وہ بدنصیب لوگ ہیں جن کی حکومتوں کے سارے پائے بے انصافی کی مٹی سے بنتے ہیں اورصرف وہ لوگ حکومت کرسکتے ہیں جن کے ڈانڈے لمبے ہوتے ہیں یاجواپنے اپنے ضمیرکے گورکن وسوداگرہوتے ہیں لیکن کب تک؟

تازہ ترین خبریں

 وزیراعظم عمران خان 4اگست کو لاہور کا دورہ کریں گے

وزیراعظم عمران خان 4اگست کو لاہور کا دورہ کریں گے

بھارت کو ایک ماہ کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی صدارت کی ذمہ داری۔۔۔دفتر خارجہ کا ردعمل سامنے آگیا

بھارت کو ایک ماہ کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی صدارت کی ذمہ داری۔۔۔دفتر خارجہ کا ردعمل سامنے آگیا

بلاول بھٹو زرداری اور ایمل ولی خان کی ملاقات۔۔۔۔۔سیاسی صورت حال پر تبادلہ خیال

بلاول بھٹو زرداری اور ایمل ولی خان کی ملاقات۔۔۔۔۔سیاسی صورت حال پر تبادلہ خیال

 پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو جیت کیلئے 158 رنز کا ہدف دیدیا۔

پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو جیت کیلئے 158 رنز کا ہدف دیدیا۔

وزیراعظم عمران خان کل عوام سے براہ راست مخاطب ہونگے 

وزیراعظم عمران خان کل عوام سے براہ راست مخاطب ہونگے 

موت تعاقب میں تھی ، پاکستان کے اہم شہر میں امتحان دینے نکلی نویں جماعت کی طالبہ کی افسوسناک موت

موت تعاقب میں تھی ، پاکستان کے اہم شہر میں امتحان دینے نکلی نویں جماعت کی طالبہ کی افسوسناک موت

پاکستان کے اس شہر کے عوام سپر احتیاط کریں، ہفتے کے روز ہونے والی موسلادھار بارش صرف شروعات تھی

پاکستان کے اس شہر کے عوام سپر احتیاط کریں، ہفتے کے روز ہونے والی موسلادھار بارش صرف شروعات تھی

مسٹر زرداری آپ کیا چاہتے ہیں لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن۔اسد عمر کا بلاول کو جواب

مسٹر زرداری آپ کیا چاہتے ہیں لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن۔اسد عمر کا بلاول کو جواب

پاکستان ٹیم کے نام ایک اور عزاز ۔۔۔۔محمد رضوان نے ٹی ٹوئنٹی میں ورلڈ ریکارڈ بنادیا

پاکستان ٹیم کے نام ایک اور عزاز ۔۔۔۔محمد رضوان نے ٹی ٹوئنٹی میں ورلڈ ریکارڈ بنادیا

 تحریک انصاف کے رکن اسمبلی نذیرچوہان کے پروڈکشن آرڈرز۔۔۔ ن لیگ نے بھی سپیکر اسمبلی پرویزالٰہی کی حمایت کافیصلہ کرلیا

 تحریک انصاف کے رکن اسمبلی نذیرچوہان کے پروڈکشن آرڈرز۔۔۔ ن لیگ نے بھی سپیکر اسمبلی پرویزالٰہی کی حمایت کافیصلہ کرلیا

افغانستان سے علاج کیلئے آنے والی خاتون کی ٹانگ سے ایسی چیز برآمد کہ بارڈر پر موجود سیکیورٹی اہلکار بھی ہکا بکا رہ گئے

افغانستان سے علاج کیلئے آنے والی خاتون کی ٹانگ سے ایسی چیز برآمد کہ بارڈر پر موجود سیکیورٹی اہلکار بھی ہکا بکا رہ گئے

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں اضافہ ۔۔۔ وزارت خزانہ کی جانب سے نوٹیفیکشن جاری

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں اضافہ ۔۔۔ وزارت خزانہ کی جانب سے نوٹیفیکشن جاری

 کراچی میں بھارت جیسی صورتحال ہوئی تو وزیراعظم اور ان کے وزرا ذمہ دار ہوں گے۔بلاول بھٹو 

 کراچی میں بھارت جیسی صورتحال ہوئی تو وزیراعظم اور ان کے وزرا ذمہ دار ہوں گے۔بلاول بھٹو 

اوگرانے اگست کیلئے ایل پی جی کی قیمت میں اضافہ کر دیا۔

اوگرانے اگست کیلئے ایل پی جی کی قیمت میں اضافہ کر دیا۔